12:54 pm
سندھ کے کالجز میں قابل اعتراض کتب

سندھ کے کالجز میں قابل اعتراض کتب

12:54 pm

نیشنل بک فائونڈیشن 1972ء میں قائم ہوا تھا اس کی ضرورت تعلیمی نظام کو نہ صرف بنانا تھا بلکہ تعلیمی لحاظ سے ایک فلاحی ادارہ کے طور پر کام کرنے کی ضرورت تھی اور یہ پارلیمنٹ کی منظوری کے بعد قائم ہوا تھا تاکہ طالب علموں کو آسان رقم پر معیاری کتابیں مہیا کی جا سکیں۔ اس کا ہیڈ آفس اسلام آباد اور برانچ آفس ہر صوبوں میں موجود ہیں اور برانچ آفسوں میں کتابوں کی دکانیں قائم کی ہوئی ہیں۔ اس کا باقاعدہ بورڈ آف گورنرز ہے اور اس کے چیئرمین وفاقی وزیر تعلیم ہوتے ہیں اور اس کی چیف ایگزیکٹو منیجنگ ڈائریکٹر ہوتے ہیں۔
اس کی کتابوں کے باقاعدہ کلب قائم ہیں جہاں طالب علموں کے علاوہ اہلِ علم خواتین و حضرات کتابوں کو شوق سے پڑھتے ہیں لیکن اب یہ سلسلہ ختم ہو گیا ہے۔ نیشنل بک فائونڈیشن اب دیہاتوں میں بک کلب قائم کر رہی ہے اور مختلف قسم کے فلاحی کلبس قائم کئے ہیں اس کے علاوہ اس کی طرف سے پاکستانی سفارت خانوں کو پوری دُنیا میں پاکستانی ثقافت و تہذیب پر مبنی کتابیں بھیجی جاتی ہیں۔ اس کے علاوہ بچوں کے لئے علیحدہ کتابیں تحریر کی جاتی ہیں اور بچوں کو فری کتابیں سپلائی کرنے کا اہتمام کیا جاتا ہے اور صدر پاکستان کو خصوصی انعام ان مصنفین کو دیا جاتا ہے جو بچوں کے لئے قائد اعظمؒ، علامہ اقبالؒ اور پاکستان کے بارے میں تحریر کرتے ہیں۔ اس کے علاوہ معذور اور نابینا بچوں کی تعلیم کے لئے خصوصی کتابیں جس میں قرآن پاک اس کا اُردو ترجمہ مہیا کیا جاتا ہے۔اسے بانگِ درا اور بالِ جبرئیل سمیت 108 کتابیں شائع کرنے کا اعزاز حاصل ہے ۔
سندھ میں سرکاری خرچہ پر صوبہ بھر کے کالجز میں 11 کتابوں کے سینکڑوں سیٹ پہنچایئے ہیں۔  ریجنل ڈائرکٹر کالجز کراچی کی جانب سے کالجز کو حکم دیا گیا تھا کہ طے شدہ بجٹ سے نیشنل بک فائونڈیشن سے کتابیں خریدیں اور لائبریریوں میں رکھیں  لیکن مذکورہ کتابوں کے بھیجنے کے بعد ڈائرکٹر جنرل کالجز عبدالحمید چنڑ نے پرنسپلز کی شکایات کے بعد کتابوں کو فی الفور ہٹانے کا حکم جاری کر دیا ہے۔
 حکومت سندھ کی جانب سے کالجز کے فنڈز روکنے کے بعد کالجز انتظامیہ کو از خود ہی کتابوں کو پورا کرنے کے احکامات دیئے گئے   ریجنل ڈائریکٹر کالجز ڈاکٹر حافظ عبدالباری اندھڑ کی جانب سے ایک لیٹر تمام پرنسپلز کو جاری کیا گیا تھا کہ کالجز کے سینکشن بجٹ کے اندر اندر نیشنل بک فائونڈیشن سے کتابیں خرید کر لائبریریوں  میں رکھیں۔ اس لیٹر کے ساتھ ساتھ ایک لیٹر باقاعدہ نیشنل بک فائونڈیشن کے ریجنل ڈائرکٹر سیّد رضا شاہ کو بھی لکھا گیا تھا جس کے بعد نیشنل  بک فائونڈیشن نے از خود ہی کتابیں کالجز میں پہنچانا شروع کر دی ہیں۔ تاہم بعض پرنسپلز کی جانب سے واپس ڈائرکٹر جنرل اور ریجنل ڈائرکٹر کالجز کو خط لکھ کر کہا گیا کہ وہ پالیسی پر غور کریں کیونکہ جو کتابیں طلبہ کو درکار ہیں وہ یا تو نیشنل بک فائونڈیشن کے پاس ہیں ہی نہیں اور اگر بعض کتب موجود بھی ہیں تو ان کی حالت یعنی بائنڈنگ وغیرہ بالکل معیاری اور قابل استعمال نہیں ہے۔ 
ان میں ایسی کتب بھی ہیں۔ جن  کے ذریعے سے قادیانیت نوازی کی  شکایت بھی سامنے  آئی ہیں۔ اس حوالے سے ڈائرکٹر جنرل کالجز سندھ عبدالحمید چنڑ سے متعدد بار رابطہ کیا گیا تو ان کا کہنا تھا کہ مجھے شکایات آئی ہیں کہ نیشنل بک فائونڈیشن نے از خود کتابیں بھیجی ہیں جبکہ ہم نے کالجز کو وہاں سے اپنی مرضی سے کتابیں خریدنے کا کہا تھا۔ ہم نے ایسی کتابوں کو فی الفور ہٹانے کا حکم دیا ہے اور ہم اس کی انکوائری کریں گے کہ کس نے اس طرح کی حرکت کیوں ہے اور اس پر نیشنل بک فائونڈیشن کی حکام سے بھی پوچھیں گے۔ واضح رہے کہ اس سے قبل کراچی کے ایک کالج میں قادیانی خاتون لیکچرر کی جانب سے قادیانت کا پرچارکرتے ہوئے پکڑا گیا تھا جس کی انکوائری کو دبا دیا گیا تھا جس کے بعد سندھ کریکیولم کونسل کی جانب سے نویں جماعت کی انگریزی کی کتاب میں حضور صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم  کے نام نامی اسم گرامی کے ساتھ موجود ’’خاتم النبیینؐ ‘‘ کا لفظ ہٹایا گیا تھا اور خلیفہ اوّل بلا فصل سیّدنا صدیق اکبر رضی اللہ عنہ کا نام بھی حذف کر دیا گیا تھا جس کی انکوائری رپورٹ بھی دو ماہ بعد سامنے نہیں آئی اور نہ ہی کسی ملوث شخص کے خلاف کارروائی کی گئی ہے۔ معلوم رہے کہ سابق ریجنل ڈائریکٹر کالجز معشوق بلوچ کے دور میں کالجز کو ایک لیٹر لکھ کر حکم دیا گیا تھا کہ وہ کالجز کی لائبریریوں میں بجٹ سے کتابیں ہر سال لازمی خریدیںاور اس کل بجٹ میں سے 20 فیصد بجٹ نیوز پیپر کے لئے ، 80 فیصد بجٹ کتابوں کے لئے ہوتا ہے اور اخبارات کے لئے کم از کم سال میں 12 ہزار روپے مختص ہیں۔
 وزیر اعظم پاکستان عمران خان شروع دن سے ریاست مدینہ کی باتیں کرتے ہیں ۔ ہم توقع رکھتے ہیں کہ وہ اس بات کی تحقیقات ضرور کروائیں گے اور ایک قومی ادارہ  کس نے کس طرح سے اپنے مقاصد کے لئے استعمال کرلیا۔



 

تازہ ترین خبریں

 وزیراعظم عمران خان 4اگست کو لاہور کا دورہ کریں گے

وزیراعظم عمران خان 4اگست کو لاہور کا دورہ کریں گے

بھارت کو ایک ماہ کے لیے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی صدارت کی ذمہ داری۔۔۔دفتر خارجہ کا ردعمل سامنے آگیا

بھارت کو ایک ماہ کے لیے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی صدارت کی ذمہ داری۔۔۔دفتر خارجہ کا ردعمل سامنے آگیا

بلاول بھٹو زرداری اور ایمل ولی خان کی ملاقات۔۔۔۔۔سیاسی صورت حال پر تبادلہ خیال

بلاول بھٹو زرداری اور ایمل ولی خان کی ملاقات۔۔۔۔۔سیاسی صورت حال پر تبادلہ خیال

 پاکستان نے ویسٹ انڈیز کو جیت کیلئے 158 رنز کا ہدف دیدیا۔

پاکستان نے ویسٹ انڈیز کو جیت کیلئے 158 رنز کا ہدف دیدیا۔

وزیراعظم عمران خان کل عوام سے براہ راست مخاطب ہونگے 

وزیراعظم عمران خان کل عوام سے براہ راست مخاطب ہونگے 

موت تعاقب میں تھی ، پاکستان کے اہم شہر میں امتحان دینے نکلی نویں جماعت کی طالبہ کی افسوسناک موت

موت تعاقب میں تھی ، پاکستان کے اہم شہر میں امتحان دینے نکلی نویں جماعت کی طالبہ کی افسوسناک موت

پاکستان کے اس شہر کے عوام سپر احتیاط کریں، ہفتے کے روز ہونے والی موسلادھار بارش صرف شروعات تھی

پاکستان کے اس شہر کے عوام سپر احتیاط کریں، ہفتے کے روز ہونے والی موسلادھار بارش صرف شروعات تھی

مسٹر زرداری آپ کیا چاہتے ہیں لاک ڈاؤن، لاک ڈاؤن، لاک ڈاؤن۔اسد عمر کا بلاول کو جواب

مسٹر زرداری آپ کیا چاہتے ہیں لاک ڈاؤن، لاک ڈاؤن، لاک ڈاؤن۔اسد عمر کا بلاول کو جواب

پاکستان ٹیم کے نام ایک اور عزاز ۔۔۔۔محمد رضوان نے ٹی ٹوئنٹی میں ورلڈ ریکارڈ بنادیا

پاکستان ٹیم کے نام ایک اور عزاز ۔۔۔۔محمد رضوان نے ٹی ٹوئنٹی میں ورلڈ ریکارڈ بنادیا

 تحریک انصاف کے رکن اسمبلی نذیرچوہان کے پروڈکشن آرڈرز۔۔۔ ن لیگ نے بھی سپیکر اسمبلی پرویزالٰہی کی حمایت کافیصلہ کرلیا

 تحریک انصاف کے رکن اسمبلی نذیرچوہان کے پروڈکشن آرڈرز۔۔۔ ن لیگ نے بھی سپیکر اسمبلی پرویزالٰہی کی حمایت کافیصلہ کرلیا

افغانستان سے علاج کیلئے آنے والی خاتون کی ٹانگ سے ایسی چیز برآمد کہ بارڈر پر موجود سیکیورٹی اہلکار بھی ہکا بکا رہ گئے

افغانستان سے علاج کیلئے آنے والی خاتون کی ٹانگ سے ایسی چیز برآمد کہ بارڈر پر موجود سیکیورٹی اہلکار بھی ہکا بکا رہ گئے

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں اضافہ ۔۔۔ وزارت خزانہ کی جانب سے نوٹیفیکشن جاری

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں اضافہ ۔۔۔ وزارت خزانہ کی جانب سے نوٹیفیکشن جاری

 کراچی میں بھارت جیسی صورتحال ہوئی تو وزیراعظم اور ان کے وزرا ذمہ دار ہوں گے۔بلاول بھٹو 

 کراچی میں بھارت جیسی صورتحال ہوئی تو وزیراعظم اور ان کے وزرا ذمہ دار ہوں گے۔بلاول بھٹو 

اوگرانے اگست کیلئے ایل پی جی کی قیمت میں اضافہ کر دیا۔

اوگرانے اگست کیلئے ایل پی جی کی قیمت میں اضافہ کر دیا۔