01:00 pm
قصہ پاکستانی سفارت خانہ اسرائیل کو فروخت کرنے کا!

قصہ پاکستانی سفارت خانہ اسرائیل کو فروخت کرنے کا!

01:00 pm

حکومت پاکستان کی لندن میں اپنا سفارت خانہ اسرائیل کو فروخت کرنے کی ہوش ربا داستان، ذاتی چشم دید رپورٹ٭نواز شریف کے اسرائیل جانے والے وفد میں میں بھی شامل تھا۔ مولانا اجمل قادری!٭ ’’میں نے عمران خان کو شکنجے میں کس لیا ہے۔‘‘ مولانا فضل الرحمان.....’’مولانا کے لئے حکومت کا پنجہ بھی سخت ہوگیاہے۔‘‘ ٭ مولانا سمیع الحق کے مولانا فضل الرحمان کے خلاف مزید انکشافات ٭ کرونا، مزید85ہلاک 2500کی تشویش ناک حالات ٭ ضمنی انتخابات، اپوزیشن اتحاد تقسیم،2جنوری کو فیصلہ ہوگا۔٭کوئی طاقت پاکستان کو ختم نہیں کر سکتی، جنرل باجوہ٭ دہلی،کسانوں کا محاصرہ، ایک ماہ مکمل، ملک بھر میں سڑکیں، ٹرینیں بند٭ گھی مزید مہنگا255 سے 265 روپے لٹر.....مقامی چینی بدستور 110روپے کلو٭ حکومت مذاکرات کے لئے پہلے استعفیٰ دے، انتخابات کرائے، فضل الرحمان٭ سینٹ الیکشن، فارغ  52میں سے 32ارکان اپوزیشن کے ہونگے! ’’آئی جی اغواء نہیں ہوتا تھا۔‘‘ سندھ حکومت کی رپورٹ، ٭ کوئی مذاکرات نہیں ہونگے، نوازشریف۔
محترم قارئین! آج  کل پاکستان  اور اسرائیل کا نام بہت چل رہاہے۔ عجیب انکشافات ہو رہے ہیں۔ کیا  اس بات کا یقین کیا جاسکتا ہے کہ پاکستان نے لندن میں اپنا سفارت خانہ اسرائیل کو فروخت کر دیا تھا! میں نے یہ خبر اخبار میں شائع کی اور اس کی تصدیق بھی ہوگئی تو بات دب گئی۔ اس وقت نواز شریف وزیراعظم، گوہر ایوب وزیر خارجہ، محمد سمیع برطانیہ میں پاکستان کے سفیر (ہائی کمشنر تھے) میری اس بارے میں محمد سمیع سے تفصیلی بات بھی ہوئی۔ یہ 1998ء کا دور تھا۔ میں 1995ء میں لندن میں تھا۔ ایک روز پاکستانی سفارت خانہ میں جانے کا اتفاق ہوا۔ حیرت ہوئی کہ پاکستان اور اسرائیل کے سفارت خانے، ایک دوسرے کے ہمسایہ تھے۔ بیچ میں دو دیوارتیں تھیں، اور دونوں سفارت خانوں کے سفارت کار آزادانہ، ایک دوسرے کے ہاں آتے جاتے تھے۔ 1998ء میں مجھے اطلاع ملی کہ  پاکستان نے اپنا سفارت خانہ اسرائیل کو فروخت کر دیا ہے۔ میں نے اخبار میں جلی سرخیوں کے ساتھ یہ خبر چھاب دی۔ اس پر تہلکہ مچ گیا۔ نواز شریف کے ذاتی دوست، بہت بڑے صنعت کار محمد سمیع ان دنوں لندن میں ہائی کمشنر اور گوہر ایوب وزیر خارجہ تھے۔
خبر میں یہ اطلاع بھی شامل تھی کہ پاکستان کے اس عام اخراجات والے سفارت خانہ کو بیچ کر لندن شہر کے باہر، کافی دور ایک کئی گنا وسیع رقبہ والی بڑی شاندار عمارت خرید لی گئی ہے۔ محمد سمیع بڑے صنعت کار تھے اور لاہور چیمبر آف کامرس میں اپنا شاندار دفتر تھا۔ نواز شریف کے خاص ’’عزیز‘‘ دوست تھے۔  وہ چند ماہ بعد ہائی کمشنر کے عہدہ سے فارغ ہوگئے۔ لاہور میں آئے ان کی بیگم صاحبہ نے گھر سے مجھے فون کیا۔ بہت برہم تھیں۔ پھر سمیع صاحب فون پر آئے وہ بھی سخت برہم! مجھے چیمبر آف کامرس میں اپنے دفتر میں ملاقات کی دعوت دی! میں گیا۔ کہنے لگے کہ یہ عمارت، بہت بوسیدہ ہوتی تھی اوراب استعمال کے قابل نہیں رہی تھی جبکہ ساتھ والے اسرائیل کے سفارت خانہ کی نئی عمارت بن چکی تھی مگر انہیں مزید جگہ چاہیے تھی۔ ہم نے اپنے سفارت خانہ کی عمارت فروخت کرنے کا اشتہار دیا تو اسرائیلی سفیر نے مجھ سے رابطہ کیا اور پیشکش کی کہ یہ عمارت اسرائیل کو فروخت کر دی جائے۔ اتفاق سے وزیر خارجہ گوہر ایوب لندن  آئے ہوئے تھے۔ انہوں نے نواز شریف کے مشورہ کے بعد  اس پیشکش کو قبول کرلیا، یوں یہ عمارت فروخت کر دی گئی۔ (وفاقی وزیر عمر ایوب کے والد گوہر ایوب زندہ ہیں، ان سے تصدیق کرائی جاسکتی ہے) میں نے سمیع صاحب (اب مرحوم) کی یہ وضاحت ہی پوری تفصیل کے ساتھ چھاپ دی۔ میرے سمیع صاحب کے ساتھ خوشگوار تعلقات قائم ہوگئے۔ بہت مزیدار کافی پلایا کرتے تھے۔ خدا تعالیٰ مغفرت فرمائے!
اور اب نواز شریف اور اسرائیل کے حوالے سے ایک اور خبر، بزرگ عالم دین مولانا اجمل قادری نے اچانک تہلکہ خیز بیان دیا ہے کہ نواز شریف کے دور میں واقعی ایک پاکستانی سرکاری وفد اسرائیل گیا تھا اور وہ خود اس وفد میں شامل تھے۔ حکومت کے ترجمان ڈاکٹر شہباز گل اس خبر پر بہت واویلا کر رہے ہیں اور اسے اچھال رہے ہیں کہ نواز شریف کے اسرائیل کے ساتھ گہرے روابط ہیں۔ اس پر ایک واقعہ یاد آگیا ہے۔ یہ بھی انہی دنوں کی بات ہے جب  محمد سمیع لندن میں ہائی کمشنر تھے  اور پاکستانی سفارت خانہ کی عمارت فروخت کی جا رہی تھی۔ ان دنوں مولانا اجمل قادری میری دعوت پر عصر کے بعد اخبار کے دفتر میں آئے۔ عام انٹرویو چل رہا تھا کہ اچانک بولے کہ شاہ صاحب! انٹرویو جلد ختم کرلیں، مجھے جلد گھر جانا ہے اور فوراً ہوائی اڈے پر  پہنچنا ہے، رات کو عشاء کی نماز ہالینڈ میں پڑھنی ہے اور وہاں ایک مسجد کا افتتاح کرنا ہے۔ میں نے حیرت کے عالم میں  کہا کہ جناب ابھی تو مغرب کی نماز کا وقت ہو رہا ہے، آپ عشاء کی نماز ہالینڈ میں کیسے پڑھیں گے؟ کہنے لگے کہ ہالینڈ کا وقت ہمارے وقت سے پانچ گھنٹے پیچھے ہے۔ اس وقت یہاں 5بجے ہیں۔ عشاء کی نماز  سے پہلے وہاں پہنچ جائے گا۔ ایک سوال پر کہنے لگے کہ ہالینڈ میں دوسرے مذہبی مسالک والوں کی مسجدیں موجود ہیں، ہمارے مسلک کی کوئی مسجد نہیں، ہم نے بڑی کوشش سے اپنی مسجد بنوائی ہے۔ اچھا خدا حافظ! وہ چلے گئے۔ میں شش و پنج میں تھا کہ  اتنے مختصر وقت میں یہ سب کچھ کیسے ہوسکتا ہے؟ تقریباً چار پانچ گھنٹے بعد شیرانوالہ گیٹ میں ان کے گھر فون کیا کہ کیا مولانا ہالینڈ میں پہنچ گئے ہیں! کسی کا جواب آیا کہ کون سا ہالینڈ؟ مولانا تو عشاء کی نماز پڑھ کر سو رہے ہیں!!!
 آئیے واپس موجودہ دنیا میں! آج کل عمران خان کی حکومت اور اپوزیشن کے اتحاد پی ڈی ایم کے درمیان جو ’’ہنی مون‘‘ چل رہا ہے۔ یہ 1970ء کے انتخابی مقابلوں میں ہونے والی نہایت بے ہودہ پرزہ سرائیوں اور ’’ ٹھاہ ٹھاہ‘‘ کے نعروں کے مقابلہ میں کچھ بھی نہیں۔ اس لئے میں ایک دوسرے کے خلاف موجودہ آتش بازی کو کوئی خاص اہمیت نہیں دے رہا۔ دونوں طرف نتھا سنگھ اور پریم سنگھ میں، وَن اینڈ سی سیم تھنگ !! ان کا عالم ان دو بلیوں جیسا ہے  جو آپس لڑتی رہ گئیں اور کیک بند رکھا گیا تھا! 1970ء کا زمانہ کہیں زیادہ ہنگامہ خیز تھا۔ ابھی مغربی اور مشرقی پاکستان اکٹھے تھے۔ مغربی پاکستان میں  پیپلزپارٹی اور جماعت اسلامی ایک دوسرے کے خلاف ڈٹ کر کھڑی تھیں (پتہ نہیں، جماعت اسلامی آج کل کہاں ہے؟ صرف سراج الحق کے بیانات دہرائے جارہے ہیں) 1970ء میں پیپلزپارٹی، مسلم لیگ، اے این پی اور جماعت اسلامی میں ایک دوسرے کے جو  بخئے ادھیڑے گئے، دونوں طرف کی محترم خواتین پر غلیظ الزامات کی بھرمارہوگئی، ہیلی کاپٹروں سے مخالف خواتین کی شرم ناک تصویریں پھینکی گئیں۔ بات اتنی بڑھ گئی کہ خود ان مخالف پارٹیوں کی خواتین نے سخت نوٹس لیا ار یہ بے ہودگی رک گئی۔ ان باتوں کی اب بھی کہیں نہ کہیں افسوسناک عکاسی ہو جاتی ہے مگر غنیمت کہ گالیاں دیتے وقت یہ حال شائستگی کا خیال رکھا جاتا ہے۔ بہت پہلے میں روزنامہ مشرق میں تھا۔ اردو بولنے والے ’’اہل زبان بزرگ صحافیوں میں کسی بات پر گرما گرمی ہوگئی ایک صاحب نے دوسرے صاحب کو فرش پر پٹخ دیا۔ ایڈیٹر مکین احسن کلیم بھاگتے ہوئے آئے ۔ پوچھا کہ کیا ہوا؟ ایک صاحب بولے کہ جناب عالیٰ! یہ محترم موصوف غلط بیانی کر رہے تھے، میں نے انہیں روکا، نہیں رکے، بات بڑھ گئی تو میں نے محترم موصوف کو اٹھا کر فروش پر پٹخ دیا!!
مولانا فضل الرحمان نے اعلان کیا کہ ’’عمران خان میرے شکنجے میں پھنس گیا ہے‘‘ نوزائیدہ وزیر داخلہ نے ترت جواب دیا کہ مولانا آئیے، ائیے! تشریف لائیے، نیا پنجہ بنوا یا ہے!‘‘
 ایک قاری نے پوچھا ہے کہ فردوس عاشق اعوان تو صوبائی معاون خصوصی ہیں۔ سعودی عرب اور عرب امارات کے سفیروں کے گھروں میں کیا کرنے گئی تھیں؟ میں کیا بتا سکتا ہوں! پہاڑ سے اترنے والی  بنجارن  سے کبھی کسی نے پوچھا کہ کہاں سے آئی؟ کیوں آئی؟ کیسے آئی؟ کہاں جارہی ہو؟
 ایک بات حیرت انگیز!! حکومت نے تسلیم کرلیا کہ اس کی نااہلی سے سارا معاشی نظام بگڑ گیاہے۔ اپوزیشن واویلا کر رہی ہے کہ معیشت کا بیڑا غراق ہوگیا ہے۔ مگر حیرت ہے کہ  سٹاک ایکس کا انڈیکس 29ہزار کی پستی سے 43435تک کی بلندی پر پہنچ گیا ہے۔ یہ تو معیشت کی بہت خوش آئند تصویر ہے جبکہ بھارت کا انڈیکس 37ہزار سے اوپر نہیں آرہا۔! حیرت!

 

تازہ ترین خبریں

بھارت کو ایک ماہ کے لیے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی صدارت کی ذمہ داری۔۔۔دفتر خارجہ کا ردعمل سامنے آگیا

بھارت کو ایک ماہ کے لیے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی صدارت کی ذمہ داری۔۔۔دفتر خارجہ کا ردعمل سامنے آگیا

بلاول بھٹو زرداری اور ایمل ولی خان کی ملاقات۔۔۔۔۔سیاسی صورت حال پر تبادلہ خیال

بلاول بھٹو زرداری اور ایمل ولی خان کی ملاقات۔۔۔۔۔سیاسی صورت حال پر تبادلہ خیال

 پاکستان نے ویسٹ انڈیز کو جیت کیلئے 158 رنز کا ہدف دیدیا۔

پاکستان نے ویسٹ انڈیز کو جیت کیلئے 158 رنز کا ہدف دیدیا۔

وزیراعظم عمران خان کل عوام سے براہ راست مخاطب ہونگے 

وزیراعظم عمران خان کل عوام سے براہ راست مخاطب ہونگے 

موت تعاقب میں تھی ، پاکستان کے اہم شہر میں امتحان دینے نکلی نویں جماعت کی طالبہ کی افسوسناک موت

موت تعاقب میں تھی ، پاکستان کے اہم شہر میں امتحان دینے نکلی نویں جماعت کی طالبہ کی افسوسناک موت

پاکستان کے اس شہر کے عوام سپر احتیاط کریں، ہفتے کے روز ہونے والی موسلادھار بارش صرف شروعات تھی

پاکستان کے اس شہر کے عوام سپر احتیاط کریں، ہفتے کے روز ہونے والی موسلادھار بارش صرف شروعات تھی

مسٹر زرداری آپ کیا چاہتے ہیں لاک ڈاؤن، لاک ڈاؤن، لاک ڈاؤن۔اسد عمر کا بلاول کو جواب

مسٹر زرداری آپ کیا چاہتے ہیں لاک ڈاؤن، لاک ڈاؤن، لاک ڈاؤن۔اسد عمر کا بلاول کو جواب

پاکستان ٹیم کے نام ایک اور عزاز ۔۔۔۔محمد رضوان نے ٹی ٹوئنٹی میں ورلڈ ریکارڈ بنادیا

پاکستان ٹیم کے نام ایک اور عزاز ۔۔۔۔محمد رضوان نے ٹی ٹوئنٹی میں ورلڈ ریکارڈ بنادیا

 تحریک انصاف کے رکن اسمبلی نذیرچوہان کے پروڈکشن آرڈرز۔۔۔ ن لیگ نے بھی سپیکر اسمبلی پرویزالٰہی کی حمایت کافیصلہ کرلیا

 تحریک انصاف کے رکن اسمبلی نذیرچوہان کے پروڈکشن آرڈرز۔۔۔ ن لیگ نے بھی سپیکر اسمبلی پرویزالٰہی کی حمایت کافیصلہ کرلیا

افغانستان سے علاج کیلئے آنے والی خاتون کی ٹانگ سے ایسی چیز برآمد کہ بارڈر پر موجود سیکیورٹی اہلکار بھی ہکا بکا رہ گئے

افغانستان سے علاج کیلئے آنے والی خاتون کی ٹانگ سے ایسی چیز برآمد کہ بارڈر پر موجود سیکیورٹی اہلکار بھی ہکا بکا رہ گئے

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں اضافہ ۔۔۔ وزارت خزانہ کی جانب سے نوٹیفیکشن جاری

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں اضافہ ۔۔۔ وزارت خزانہ کی جانب سے نوٹیفیکشن جاری

 کراچی میں بھارت جیسی صورتحال ہوئی تو وزیراعظم اور ان کے وزرا ذمہ دار ہوں گے۔بلاول بھٹو 

 کراچی میں بھارت جیسی صورتحال ہوئی تو وزیراعظم اور ان کے وزرا ذمہ دار ہوں گے۔بلاول بھٹو 

اوگرانے اگست کیلئے ایل پی جی کی قیمت میں اضافہ کر دیا۔

اوگرانے اگست کیلئے ایل پی جی کی قیمت میں اضافہ کر دیا۔

بھارت میں مون سون بارشوں نے تباہی مچادی، 230 سے زائد افراد ہلاک ہوگئے 

بھارت میں مون سون بارشوں نے تباہی مچادی، 230 سے زائد افراد ہلاک ہوگئے