12:34 pm
شہادت کے طمطراق تمغے

شہادت کے طمطراق تمغے

12:34 pm

ہمارے یہ سیاستدان کشمیرکے مظلوم اور بے کس لوگوں کوکیاپیغام بھیج رہے ہیں جوپچھلی سات دہائیوں سے زائدبھارتی فوج کے ظلم وستم کے باوجوداپنے حق کے حصول کیلئے اپنی جانیں قربان کررہے ہیں اوراس تحریک کوہرحال میں اپنے منطقی انجام تک پہنچانے کیلئے اپناسب کچھ دائو پرلگاچکے ہیں۔ سفاک ہندوکی بھارتی قابض افواج نے مقبوضہ کشمیرمیں اب تک ایک محتاط اندازے کے مطابق94ہزار888کشمیریوں کو شہیدکر دیاہے جبکہ1990ء کے بعدبھارتی فوج اورنیم فوجی دستوں کے ہاتھوں7099افراددورانِ حراست شہید کئے گئے۔اس عرصے میں ایک لاکھ 43 ہزار48افرادکوگرفتارکیاگیاجبکہ ایک لاکھ 8ہزار 596رہائشی مکانوں اوردیگرتعمیرات کونذرآتش کیاگیا۔قابض بھارتی فوج نے خواتین کی آبروریزی کوایک جنگی ہتھیارکے طورپراستعمال کیا ہے اوراب تک11ہزار36خواتین کی عصمتوں کوپامال کیاگیا۔ جولائی2016ء میں برہان وانی کی بھارتی فوج کے ہاتھوں شہادت کے بعد کشمیرمیں تحریک انتفادہ نے ایک نیارخ اختیارکیااورلوگ قابض بھارتی سامراج کے خلاف سڑکوں پرنکل آئے،انہوں نے بھارتی تسلط کے خلاف بھرپورردعمل کا اظہارکیاجس نے کشمیرکی تحریک آزادی میں ایک نئی جان ڈال دی۔برہان وانی کی شہادت کے بعدکشمیرمیں سینکڑوں لوگوں کوشہید اور 20ہزار873افرادکوزخمی کردیااوران زخمیوں کی کثیرتعدادعمربھرکیلئے معذورہوگئی۔اس عرصے میں بھارتی فوج نے نہتے نوجوانوں پرمہلک پیلٹ گنوں کابے دریغ استعمال کرکے8355کشمیری نوجوانوں کوشدیدزخمی کردیا جن میں73نوجوان اپنی بینائی سے محروم ہوگئے جبکہ207نوجوانوں کی ایک آنکھ کی بینائی متاثر ہوئی اور974نوجوانوں کی دونوں آنکھیں متاثرہوئیں۔ برہان وانی کی شہادت کے بعد 18ہزار 990 افرادکوگرفتارکرلیاگیاجبکہ ان میں سے 818 کو بغیر شنوائی کے کالے قانون پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت جیلوں میں بندکردیا گیا۔ 2017میں قابض افواج اورمقبوضہ کشمیرکی کٹھ پتلی انتظامیہ نے بھارتی حکومت کے احکامات پرحریت کانفرنس اور دیگر آزادی پسندقائدین اورسرگرم رہنمائوں کوبھارتی تحقیقاتی ادارے این آئی اے کے ذریعے من گھڑت مقدمات کے تحت گرفتار کیا اوروہ اس وقت نئی دہلی سمیت کئی جیلوں میں غیرقانونی طورپرنظربند ہیں۔یہ سب کچھ انہیں مرعوب کرنے کیلئے کیاجا رہا ہے تاہم ایسے ہتھکنڈے کشمیریوں کواپنی منزل سے دورنہیں کرسکتے۔
کشمیری عوام 1947سے بالعموم اور 1988ء  سے بالخصوص آزادی کیلئے قربانیاں دے رہے ہیں جودراصل’’تحریک تکمیلِ پاکستان ‘‘ہے۔ کشمیریوں نے بھارتی تسلط سے آزادی کیلئے بیش بہاقربانیاں دی ہیں۔بھارتی قابض افواج نے بالعموم حالیہ عرصے کے دوران اوربالخصوص5اگست کے بعدمقبوضہ علاقے میں انسانی حقوق کی ایسی سنگین پامالیاں کی ہیں جس کولکھنے کیلئے قلم بھی ندامت سے منہ چھپاتاپھرتاہے لیکن مودی جیساسفاک درندہ ابھی تک قصرسفیدکے فرعون اوراسرائیل جیسے انسانیت فروش نیتن یاہوکی آنکھوں کاتارہ بناہوا ہے۔ بھارت کی ریاستی دہشت گردی کے نتیجے میں مقبوضہ کشمیرمیں اب تک بڑی تعداد میں نہتے مسلمانوں کاخون بہایاجارہاہے۔انسانی حقوق کی تنظیموں کا مؤقف ہے کہ مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی فوج کی بڑے پیمانے پرتعیناتی اورکالے قوانین کانفاذ مقبوضہ علاقے میں انسانی حقوق کی پامالیوں کا باعث بن رہاہے۔مودی کایہ دعوی کہ دیگرممالک کے مقابلے میں بھارتی فوج کاانسانی حقوق کے حوالے سے ریکارڈبہترہے جب کہ اصل حقائق اس کے برعکس ہیں اوربھارتی اتحادیوں کے ملکوں میں اب ان مظالم کے خلاف آواز بلندہوناشروع ہوگئی ہے۔کشمیر میں گزشتہ 30برس کے دوران ایک لاکھ سے زائد شہری شہیداور10ہزارسے زائدلاپتہ ہوچکے ہیں جبکہ مقبوضہ کشمیرحکومت کاکہناہے کہ ایسے لوگوں کی تعدا د محض 4ہزار ہے،کشمیر کے طول وعرض میں گزشتہ 30برس کے دوران500سے زائدمزارِشہدا آباد ہو چکے ہیں اورہزاروں کشمیری گمنام قبروں میں آسودہ خاک ہیں۔ خود بھارتی نژادامریکی اسکالرخاتون نے درجنوں اجتماعی قبروں کاشواہد کے ساتھ انکشاف بھی کیاہے جوبھارت کی ریاستی دہشت گردی کاواضح ثبوت ہے لیکن ان تمام مظالم کے باوجود تمام قاتل کشمیریوں کے بے گناہ خون سے آلودہ اپنے ہاتھوں کولہراکراپنی فتح کاجشن منارہے ہیں جومہذب اقوام اوراقوام متحدہ کے منہ پرزناٹے دارتھپڑہے جس کی گونج ساری دنیامیں واضح سنائی دے رہی ہے۔
کشمیرمیں تحریک آزادی کودبانے کیلئے متعددکالے قوانین نافذہیں جن میں آرمڈ فورسزاسپیشل پاورایکٹ،پبلک سیفٹی ایکٹ اور ڈسٹربڈایریازایکٹ بھی شامل ہیں۔ان کالے قوانین کے تحت ہزاروں شہریوں کوبلاوجہ پابندِ سلاسل کیاگیاہے جن میں سے ایک بڑی تعداداب بھی بھارت اورمقبوضہ کشمیرکی مختلف جیلوں میں نظربندہے۔انسانی حقوق کی بین الاقوامی تنظیم’’ہیومن رائٹس واچ‘‘نے کشمیرمیں نافذ کالے قانون ’’آرمڈفورسزسپیشل پاورزایکٹ‘‘ کو واپس لینے کامطالبہ کرتے ہوئے اسے دنیاکا بدترین قانون قرار دیاہے۔ بھارتی درندہ صفت حکمرانوں نے جولائی 1990ء میں تحریک آزادی کشمیرکوکچلنے کیلئے بڑے پیمانے پرکالے قوانین نافذ کرکے ریاست کوشورش زدہ قراردیاتھا اوربھارتی فوجیوں کو وسیع پیمانے پراختیارات دیئے۔کشمیرمیں’’آرمڈ فورسزاسپیشل پاورایکٹ‘‘ سمیت متعددکالے قوانین نافذہیں جن کااصل مقصدبھارتی افواج کوانسانی حقوق کی پامالیوں کی کھلی چھوٹ دیناہے۔کشمیرمیں انسانی حقوق کی صورتحال میں بہتری کے سرکاری دعوؤں کے باوجودفرضی جھڑپوں اورحراستی ہلاکتوں کاسلسلہ جاری ہے۔ کشمیر میں 7ہزار افرادکودوران حراست قتل کردیاگیا۔کشمیرکی عدالتوں کی جانب سے نظربندنوجوانوں کی رہائی کے فیصلوں کے باوجود ان پرعملدرآمدنہیں کیاجاتاجس سے انسانی حقوق کی صورتحال اورزیادہ ابتر ہوئی ہے۔ 
مسئلہ کشمیرپربھارتی موقف تاریخی حقائق کے منافی ہے۔تقسیم برصغیرکے اصولوں اورتاریخی حقائق کی بنیاد پرکشمیرپاکستان کاایک اہم حصہ قرارپایا تھا۔ تاہم1947ء میں برطانوی سامراج نے متعصب ہندو لیڈروں کے ساتھ سازبازکرکے کشمیرکو زبردستی بھارت کے ساتھ شامل کردیا۔اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی پاس کردہ قراردادوں کے مطابق کشمیرایک تصفیہ طلب مسئلہ ہے اورخودبھارتی وزیراعظم جواہرلال نہرونے اقوام متحدہ میں ساری دنیاکے سامنے کشمیرمیں حق خودارادیت کے حق کوتسلیم کرتے ہوئے کشمیریوں کی رائے کا احترام کایقین دلایاتھااوراس قراردادکی ضمانت کے طورپراقوام عالم کی پانچ بڑی طاقتوں نے بطور ضامن اس پراپنے دستخط ثبت کئے تھے جس کے بعدکشمیرمیں جنگ بندی عمل میں آئی تھی لیکن اس وقت ہمارے سیاسی حکمرانوں کی غلط پالیسیوں اوراندرون خانہ انتشارکی بنا پرخودبھارت کوموقع دیاکہ وہ اپنی مکارانہ سازشوں میں کامیاب ہوگیاوگرنہ کشمیر کو مکمل طورپرفتح کرنے کیلئے ہمارے مجاہدین سرینگرکے دروازے پرپہنچ چکے تھے۔سفاک ہندونے اسی دوران اپنی 6لاکھ فوج کشمیرمیں اتاردی اوربعدازاں وہ پاک بھارت مذاکرات میں تنازعہ کشمیرکوایک طرف رکھ کرپاکستان سے تجارتی تعلقات اور  دوستی کامطالبہ کرتے رہے۔
(جاری ہے)

تازہ ترین خبریں

محرم الحرام میں مجالس اور جلوسوں کیلئے ایس او پیز جاری

محرم الحرام میں مجالس اور جلوسوں کیلئے ایس او پیز جاری

پاکستان کے اہم شہر میں 15 سے زائد شادیاں کرنے والافراڈیا ، پولیس حرکت میں آگئی

پاکستان کے اہم شہر میں 15 سے زائد شادیاں کرنے والافراڈیا ، پولیس حرکت میں آگئی

پینٹاگون کے نزدیک فائرنگ ، کئی افرادکے زخمی ہونے کی اطلاعات

پینٹاگون کے نزدیک فائرنگ ، کئی افرادکے زخمی ہونے کی اطلاعات

قومی اسمبلی ملازمین کیلئے نیا ہدایت نامہ جاری ۔۔۔ کورونا ویکسی نیشن سرٹیفکیٹ کے بغیر پارلیمنٹ ہاؤس میں داخلہ ممنوع قرار

قومی اسمبلی ملازمین کیلئے نیا ہدایت نامہ جاری ۔۔۔ کورونا ویکسی نیشن سرٹیفکیٹ کے بغیر پارلیمنٹ ہاؤس میں داخلہ ممنوع قرار

الیکشن کمیشن کی عمارت کے دوسرے فلور پر آگ لگ گئی 

الیکشن کمیشن کی عمارت کے دوسرے فلور پر آگ لگ گئی 

 قائد اعظم پورٹریٹ کے سامنے غیر اخلاقی تصاویر بنوانے کے واقعے پر مقدمہ در ج

قائد اعظم پورٹریٹ کے سامنے غیر اخلاقی تصاویر بنوانے کے واقعے پر مقدمہ در ج

15 سے زائد شادیاں کرنے والے فراڈئے کے بیٹے کو ساہیوال پولیس نے گرفتار کرلیا 

15 سے زائد شادیاں کرنے والے فراڈئے کے بیٹے کو ساہیوال پولیس نے گرفتار کرلیا 

قومی اسمبلی میں حکومتی جماعت کے دوارکان کے مابین شدید تلخ کلامی

قومی اسمبلی میں حکومتی جماعت کے دوارکان کے مابین شدید تلخ کلامی

شہبازشریف نےانٹرویودےدیالیکن ہمیں اب جواب دیناپڑتاہے۔ شاہد خاقان عباسی 

شہبازشریف نےانٹرویودےدیالیکن ہمیں اب جواب دیناپڑتاہے۔ شاہد خاقان عباسی 

عمران صاحب صبح اٹھتے ہی آپ کا کام صرف عوام کا آٹا چینی بجلی گیس دوائی مہنگی کرنا ہوتا ہے۔ مریم اورنگزیب

عمران صاحب صبح اٹھتے ہی آپ کا کام صرف عوام کا آٹا چینی بجلی گیس دوائی مہنگی کرنا ہوتا ہے۔ مریم اورنگزیب

عمران خان سیاسی بصیرت سے تاحال محروم ہیں اور جمہوریت سے نفرت کرنے والی سوچ کے مہرے کے سوا کچھ نہیں۔ فیصل کریم کنڈی

عمران خان سیاسی بصیرت سے تاحال محروم ہیں اور جمہوریت سے نفرت کرنے والی سوچ کے مہرے کے سوا کچھ نہیں۔ فیصل کریم کنڈی

 چئیرمین سی پیک اتھارٹی عاصم سلیم باجوہ کا اپنے عہدے سے مستعفی ہونے کا اعلان

چئیرمین سی پیک اتھارٹی عاصم سلیم باجوہ کا اپنے عہدے سے مستعفی ہونے کا اعلان

ن لیگی رکن پارلیمنٹ کے بیٹے کانیا کارنامہ ۔۔۔ اپنی جگہ دوسرے بندے کو امتحانی ہال میں بٹھا دیا

ن لیگی رکن پارلیمنٹ کے بیٹے کانیا کارنامہ ۔۔۔ اپنی جگہ دوسرے بندے کو امتحانی ہال میں بٹھا دیا

نوازشریف کوکرکٹ کاشوق تھاوہ بائی چانس وزیراعظم بن گئے۔ عمران خان 

نوازشریف کوکرکٹ کاشوق تھاوہ بائی چانس وزیراعظم بن گئے۔ عمران خان