02:29 pm
فوج مخالف روئیے کو عوام  لگام ڈالیں

فوج مخالف روئیے کو عوام  لگام ڈالیں

02:29 pm

ہر ملک کو اسٹیبلشمنٹ چلاتی ہے۔ سول اسٹیبلشمنٹ الگ ہوتی ہے اور خاکی اسٹیبلشمنٹ  الگ ہوتی ہے، دونوں کا میدان الگ الگ ہوتا ہے۔ مگر دونوں کا ہدف ملکی معاملات کو داخلی اور خارجی سطح پر، معیشت کے حوالے سے، عوام کی ضروریات زندگی، خوراک، امن و امان کو محفوظ بنانا ہوتا ہے۔ ترکی، مصر اور پاکستان میں فوج میںاقتدرا ہوتا ہے یا فوج خود اقتدار میں ہو جاتی ہے۔ یہ معاملات سنجیدہ سیاستدانوں کے سپرد ہیں کہ وہ اپنے اقتدرا میں فوجی مشاورت، سول و خاکی اسٹیبلشمنٹ کی مشاورت اور بعض معاملات میں رہنمائی  حاصل کریں۔ اگر وہ ایسا نہ کریں گے تو ملک کی حفاظت کی خاطر فوج کو اقتدار میں آنا پڑتا ہے۔
 
جمہوریت محض ووٹ لے کر آنے کا نام نہیں ہے، جمہوریت یہ بھی ہے کہ آپ کابینہ کیسی بناتے ہیں؟ کابینہ میں ریاستی منصبوں پر، حکومتی عہدوں پر ان شخصیات و افراد کو متعین کرتے ہیں جو یہ بوجھ اٹھانے کی صلاحیت و اہلیت رکھتے ہیں۔ وہ ایثار پیشہ ہوتے، خوشامد کی جگہ مدد اور رہنمائی فراہم  کرنے کا فطری رویہ اپناتے ہیں جہاں ضرورت کو سخت روئیے سے منع کر دیتے ہیں تاکہ غلطی پیدا ہو چکنے کے بعد اصلاح ہو جائے۔
فوج مشرف کے چیف ایگزیکٹو عہد میں اقتدار میں تھی، جنرل ضیاء الحق، جنرل ایوب، جنرل یحییٰ خان کے عہد میں بھی فوج اقتدار میں تھی۔ ان کے عہد کے سیاسی فیصلے، ریاستی فیصلے، ہدف تنقید رہے ہیں۔ بلکہ ایسا اس لئے ہونا مناسب ہوتا ہے کہ ریاست اور حکومت الگ الگ ہونے کے باوجود ایک جگہ اکٹھی ہو جاتی ہے۔ جب ریاست اور حکومت ایک ہی جگہ، ایک ہی ادارے، ایک ہی فرد کی ذات میں جمع  جو  جائے تو ’’غلطیوں‘‘ کی نشاندہی کرنا ’’فرض‘‘ عین ہو جاتا ہے۔ کیونکہ ریاست اور حکومت کے معاملات، اہداف، مفادات دو ٹوک الگ الگ ہوتے ہیں، مگر جب فوج خود اقتدار میں نہ ہو تو پھر فوج پر، ریاستی اداروں پر ، توہین آمیز تنقیدکرنا حب الوطنی نہیں، اگر غداری نہ بھی کہا جائے تو حماقت تو ضرور ہوتی ہے۔ 
مسلم لیگ (ن) کے نواز شریف، مریم نواز، مولانا فضل الرحمان، فوج، ریاستی اداروں کو شدید تنقید، تضحیک کا مدت سے سامان بنائے ہوئے ہیں۔ مفتی کفایت اللہ صاحب علم ہو کر بھی کرخت لہجہ اپناتے ہیں۔ اگر مولانا شیرانی اور ان کے ساتھی آج مولانا فضل الرحمان کو بے نقاب کر رہے ہیں  تو اس کا الزام بھی فوج پر، ریاستی اداروں پر؟ شیشے کے گھر میں بیٹھ کر یہ سیاسی کردار جب بہت زیادہ سنگ باری کرتے ہیں تو یہ سیاست نہیں، بلکہ دشمنی ہو جاتی ہے، تضحیک اور  تذلیل ہو جاتی ہے۔ مفتی کفایت اللہ کے حوالے سے مقدمے کی بازگشت اسی لئے ہے کہ ان کا رویہ بہت غلط رہا تھا۔   مولانا شیرانی کے ’’منفردات‘‘ کے باوجود وہ کبھی ماضی بعید کے حسین احمد مدنی سے نسبت کا کھلے عام فخریہ ذکر نہیں کرتے۔ ان کے منفردات میں یہود سے اچھے تعلقات کو بھی  بیان کیا جاتا ہے ۔  لہٰذا میں مولانا شیرانی کے  شخصی فکر کے بعض منفردات کے باوجود انہیں تقویٰ، علم، پاکیزہ کردار کی بنیاد پر جمعیت العلمائے اسلام (ف) کو پاکستان کی جمعیت العلمائے اسلام بنانے کا اہل سمجھتاہوں پھر سے یہ وہ جمعیت العلمائے اسلام پاکستان ہوگی انشاء اللہ،جس کی بنیاد مفتی محمد شفیع، مولانا ظفراحمد عثمانی، مولانا شیراحمد عثمانی، مولانا اشرف علی تھانوی کی ابتاع کرنے والوں نے مسلم لیگ کی ہمنوا، مئوید بن کر قائم کی تھی۔  حیرت ہے کہ مسلم لیگ (ن) کے پلیٹ فارم پر آکر محمود اچکزئی ریاست مخالف باتیں کرتے ہیں اور کوئی انہیں ٹوکتا نہیں۔
جب عمران خان، طاہر القادری نے نواز شریف حکومت کے خلاف دھرنے دئیے تھے، کیا جنرل راحیل شریف نے حکومت میں موجود نواز شریف کے خلاف جانے سے انکار نہیں کیا تھا؟ یہی کچھ آج جنرل قمر جاوید باجوہ اور جنرل فیض اگر کر رہے ہیں تو انہیں کچھ سیاسی حلقے، مسلم لیگ (ن) کے کچھ انتہا پسند، کچھ شدت پسند مولوی حضرات تذلیل، تضحیک، تمسخر کا نشانہ کیوں بناتے ہیں؟ مسلم لیگ (ن) کی ترجمان خواتین کیوں بیان بازی میں تمسخر، تضحیک، تذلیل کرتے روئیے، ریاستی اداروں اور فوج کے حوالے سے بھی اپناتی ہیں؟ کیا ان زبانوں کو مہذب اور شائستہ انداز میں سیاسی موقف دینے پر ہمیں مجبور نہیں کرنا چاہیے؟ اگر ایک خاتون ہونے کے سبب مریم نواز کو نائب صدر بنایا گیا ہے تو مریم سے کہیں زیادہ صاحب علم اور صاحب فکر تو تہمینہ درانی تھی۔ اس کو کیوں سیاست کرنے کی اجازت نہ تھی؟ کیا تہمینہ درانی کو نواز شریف اسی طرح نامزدگی کے ذریعے نائب صدر بنا سکتے ہیں جیسے مریم نواز کو بنایا تھا؟ عوام ان سیاستدانوں اور علماء سے دور رہیں جو فوج مخالف رویہ اپناتے ہیں کہ فوج ہمارے ملک کا آخری حصار ہے بلکہ عوام ان رویوں کو لگام ڈالیں۔


 

تازہ ترین خبریں

پاک فضائیہ کے 4 ایئر آفیسرز کو ایئروائس مارشل کےعہدوں پرترقی دے دی گئی۔

پاک فضائیہ کے 4 ایئر آفیسرز کو ایئروائس مارشل کےعہدوں پرترقی دے دی گئی۔

جام کمال کے بیٹے کے پروٹوکول کی تصاویر دیکھ کر سوشل میڈیا صارفین آگ بگولہ ہوگئے

جام کمال کے بیٹے کے پروٹوکول کی تصاویر دیکھ کر سوشل میڈیا صارفین آگ بگولہ ہوگئے

پی ایس ایل سکس ۔۔پشاور زلمی کا کراچی کنگز کے خلاف ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ 

پی ایس ایل سکس ۔۔پشاور زلمی کا کراچی کنگز کے خلاف ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ 

حکومت نے شراب کی فروخت سے ایک ارب کے ٹیکس کا ٹارگٹ دے دیا

حکومت نے شراب کی فروخت سے ایک ارب کے ٹیکس کا ٹارگٹ دے دیا

قومی اسمبلی میں ہنگامہ آرائی ۔۔۔ غیر پارلیمانی زبان استعمال کرنے والے ارکان کوکل ایوان میں داخلے کی اجازت نہیں دی جائیگی۔ اسد قیصر 

قومی اسمبلی میں ہنگامہ آرائی ۔۔۔ غیر پارلیمانی زبان استعمال کرنے والے ارکان کوکل ایوان میں داخلے کی اجازت نہیں دی جائیگی۔ اسد قیصر 

آن لائن شاپنگ پر سیلز ٹیکس لگانے کا فیصلہ

آن لائن شاپنگ پر سیلز ٹیکس لگانے کا فیصلہ

بلوچستان کے 5 کھرب سے زائد کا بجٹ 18جون کوپیش کیا جائےگا

بلوچستان کے 5 کھرب سے زائد کا بجٹ 18جون کوپیش کیا جائےگا

 الیکٹرانک ووٹنگ مشین کے ذریعے ووٹنگ ہماری ترجیح ہے، وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات چوہدری فواد حسین

 الیکٹرانک ووٹنگ مشین کے ذریعے ووٹنگ ہماری ترجیح ہے، وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات چوہدری فواد حسین

 شہباز شریف سے  یوسف رضا گیلانی اور مولانا اسد کی ملاقات ۔۔۔بجٹ کاپیاں اپوزیشن پر پھینکنے اور بدکلامی کے حکومتی رویہ کی شدید مذمت

شہباز شریف سے یوسف رضا گیلانی اور مولانا اسد کی ملاقات ۔۔۔بجٹ کاپیاں اپوزیشن پر پھینکنے اور بدکلامی کے حکومتی رویہ کی شدید مذمت

حکومت نے پٹرول کی قیمت میں اضافہ کر دیا

حکومت نے پٹرول کی قیمت میں اضافہ کر دیا

27میں سے 26نکات پر عملدرآمد مکمل، پاکستان کے گرے لسٹ سے نکلنے کے امکان روشن

27میں سے 26نکات پر عملدرآمد مکمل، پاکستان کے گرے لسٹ سے نکلنے کے امکان روشن

جتنا مرضی استعمال کریں ۔۔۔مفت انٹرنیٹ اور فون کالز کے مزے لیں، پاکستانیوں کیلئے شاندار خبر آگئی

جتنا مرضی استعمال کریں ۔۔۔مفت انٹرنیٹ اور فون کالز کے مزے لیں، پاکستانیوں کیلئے شاندار خبر آگئی

پیپلزپارٹی تحریک انصاف کے ساتھ نظر آرہی ہے۔ مولانا فضل الرحمان

پیپلزپارٹی تحریک انصاف کے ساتھ نظر آرہی ہے۔ مولانا فضل الرحمان

چین نے نیٹو اجلاس میں جاری کیے گئے بیان کا جواب دے دیا

چین نے نیٹو اجلاس میں جاری کیے گئے بیان کا جواب دے دیا