02:31 pm
بھارت، اسرائیل ایک دوسرے کیلئے

بھارت، اسرائیل ایک دوسرے کیلئے

02:31 pm

سیکولرز، لبرلز اور ڈالر خور این جی اوز کے راتب خور اگر اسرائیل کو تسلیم کرنے کی بات کریں تو وہ قابل فہم ہے..... اس لئے کہ ان کی بہت سی رگیں اور روز اول سے ہی ’’اسرائیلی‘‘ ہیں..... لیکن مولویوں کی صفوں میں نجانے وہ ذہنی بیمار کہاں سے گھس آئے ہیں کہ جو اسرائیل کو تسلیم کرنے کے لئے قرآنی آیات کا سہارا لیتے ہوئے بھی نہیں شرماتے۔
یہ کیسے ممکن ہے کہ وہ اس زمینی حقیقت سے بے خبر ہوں کہ دنیا میں قادیانیوں کا سب سے بڑا سہارا اسرائیل ہی تو ہے..... اور یہ بھی کہ قادیانی باقاعدہ اسرائیل کی فوج میں شامل ہیں..... ذرا یاد کیجئے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے اس اسرائیلی دورے کوجولائی 2017ء میں اس نے کیا تھا..... 8جولائی 2017ء کو نریندر مودی جب بن گوریان ائیرپورٹ پر پہنچا تو اس کا استقبال کرنے والوں میں اسرائیلی حکام کے ساتھ ساتھ اسرائیلی قادیانیوں کا سربراہ شریف عودے بھی شامل تھا، آج اگر کسی حکومتی وزیر یا سیاست دان کے حوالے سے یہ خبر مشہور ہو جائے کہ وہ اسرائیل کا حامی ہے..... تو وہ پاکستانی قوم کی نظروں سے گر جاتا ہے..... لیکن وہ قادیانی کہ جس کے اسرائیلی سربراہ نے بن گوریان ائیرپورٹ پر نیتن یاہو کے ساتھ کھڑا ہو کر نریندر مودی کا استقبال کیا تھا۔ ان کے حوالے سے پاکستانی عوام کے ذہنوں میں نرم گوشہ کیسے پیداہوسکتاہے؟ وزیراعظم نریندر مودی کے دورہ اسرائیل کے موقع پر اسرائیلی حکام نے کہا تھا کہ ’’وہ بھارت کو پاکستان سے درپیش دہشت گردی سے نمٹنے کے لئے مکمل اور غیر مشروط حمایت جاری رکھے گا ..... بھارت اور اسرائیل دونوں ہم خیال ہیں، جنہیں دہشت گردی کے خلاف مشترکہ جدوجہد کرنی ہے۔‘‘ نریندر مودی کا وہ جملہ آج بھی مجھے یاد ہے کہ جو اس نے اسرائیل میں کھڑا ہو کر کہا تھا..... مودی نے کہا تھا کہ ’’بھارت اور اسرائیل ایک دوسرے کیلئے ہیں۔‘‘
سوال یہ ہے کہ اگر بھارت اور اسرائیل ایک  دوسرے کے لئے ہیں تو پھر عرب و عجم کے وہ مسلم ممالک کہ اسرائیل کو تسلیم کرنے کے معاملے پر جن میں دوڑ لگی ہوئی ہے..... وہ کہاں پہ کھڑے ہیں؟ اسرائیل کا وزیراعظم نتین یاہو اور بھارت کا وزیراعظم نریندر مودی اگر دھڑلے سے اعلان کرتے ہیں کہ وہ اور ان کے ممالک ایک دوسرے کے لئے بنے ہیں..... تو پھر مسلم امہ میں گھسے ہوئے اسرائیلی مائینڈ سیٹ رکھنے  والوں کو نرم سے نرم لفظوں میں بھی مسلم مفادات کا غدار ہی کہا جائے گا۔
مولانا  محمد خان شیرانی نے اسرائیل کو تسلیم کرنے کے حوالے سے بات کی تو قادیانی جرائد اور اسرائیلی میڈیا نے ان کے اس فرمائے ہوئے کو ایسے ہاتھوں ہاتھ لیا کہ جیسے ان کے ہاتھ ہفت اقلیم کی دولت لگ گئی ہو، محمد خان شیرانی کے بیان کو اگر اسرائیلی میڈیا ’’پر‘‘ لگا کر اڑاتا ہے..... وہ تو اس کی ضرورت بھی ہے اور قابل فہم بھی..... لیکن قادیانی جرائد و اخبارات کو کیا پڑی تھی کہ وہ اس بیان کو ہائی لائیٹ کرتے؟ حالانکہ اسرائیل کے حوالے سے مولانا شیرانی کا بیان ان کی ذاتی رائے تھی..... جس کو جمعیت علماء اسلام سمیت کوئی بھی مذہبی یا سیاسی جماعت تسلیم کرنے پر تیار نہ تھی، بلکہ الٹا یہی بیان شیرانی جی کے گلے پڑ گیا..... اور انہیں آناً، فاناً جماعت سے فارغ کر دیا گیا، مولانا شیرانی، چوراسی، پچاسی سالہ بزرگ ہیں، ان کی اس بزرگی اور فلسفیانہ انداز گفتگو کے باوجود اسرائیل کو تسلیم کرنے کے حوالے سے ان کے بیان کو کوئی بھی ذی ہوش پاکستانی تسلیم کرنے کے لئے تیار نہیں ہے، لیکن قادیانی اور اسرائیلی میڈیا نے ان کے اس بیان کو ایسے حیثیت دی کہ جیسے مذہبی دنیا کا کوئی ’’سلطان‘‘ یہودیوں کے حق میں کھڑا ہو چکا ہو، مجھے مولانا شیرانی کا بڑا احترام ہے..... گزشتہ سال اس خاکسار کی جے یو آئی آزاد جموں وکشمیر کے سیکرٹری جنرل مولانا امتیاز عباسی اور مفتی مسرت اقبال کی ہمراہی میں ان سے تفصیلی ملاقات ہوئی تو مولانا فضل الرحمن کے حوالے سے تب بھی ان کے خیالات اسی قسم کے تھے..... لیکن میں نے اس پہ لکھنا اس لئے مناسب نہ سمجھا کہ یہ جمعیت علماء اسلام کا اندرونی معاملہ تھا، اور ہر جماعت کے اندر اختلافات کا سلسلہ جاری رہتا ہے، اب جب فضل الرحمن کی مخالفت اور اسرائیل کو تسلیم کرنے کی بات ایک ہی مجلس میں کی گئی..... تو یہ کسی جماعت کا اندرونی معاملہ نہ رہا، سوال  اٹھانے والے تو یہ بھی سوال اٹھا رہے ہیں کہ ایک ہی سانس میں اسرائیل کی حمایت اور مولانا فضل الرحمن کی مخالفت کو ضروری کیوں سمجھا گیا؟ یاد رکھیے اسرائیل کو تسلیم کرنا کوئی مذاق کی بات نہیں..... یہ ملک مبشر لقمان اینڈ کمپنی اورقادیانی ذریت کی خواہشات کی تکمیل کے لئے نہیں بنایا گیا تھا..... بلکہ اس ملک کو ’’پاکستان‘‘ بنانے والوں نے اپنی جانوں کے نذرانے اس لئے پیش کئے تھے کہ یہاں اسلامی نظام کا بول بالا ہوگا، مظلوم کی حمایت اور ظالم کو پس دیوار زنداں دھکیلا جائے گا۔
اسرائیل، بھارت یکجان اور قادیانی ان کے شانہ بشانہ، سوال مگر یہ ہے کہ اس ٹرائیکا کے درمیان ’’مسلمان‘‘ ملک جتنا مرضی اسرائیل کو ’’تسلیم ہے، تسلیم ہے، تسلیم ہے‘‘ کے نعرے بلند کرتے رہیں، ان کی حیثیت ’’پرائی شادی میں عبداللہ دیوانہ‘‘ والی ہی رہے گی،  اسرائیل کی حمایت میں بیان دے کر ممکن ہے کہ چند سیاست دان نام نہاد دانشور اور مولوی ذاتی طور پر مالا مال ضرور ہو جائیں، مگر مسلمانوں کو اس سے کوئی فائدہ حاصل ہونے والا نہیں، ’’بھارت اور اسرائیل ایک دوسرے کے لئے ہیں‘‘ مودی کے اس کہے ہوئے کی سچائی کو واضح کرنے کے لئے اتنا ہی کافی ہے کہ مقبوضہ کشمیر کے مسلمانوں پر مظالم ڈھانے والوں میں بھارتی فوج کے ساتھ ساتھ اسرائیلی کمانڈوز بھی شامل ہیں، جب بھارتی طیارے بالا کوٹ کی پہاڑیوں پر حملہ آور ہوئے تھے..... اور جوابی طور پر درندازی کرنے والے دو بھارتی طیاروں کو پاکستانی شاہینوں نے مار گرایا تھا..... تو اس وقت یہ خبریں عام تھیں کہ پاکستان کے بعض شہروں پر بھارت اور اسرائیل مشترکہ طورپر حملہ آور ہوں گے، حالانکہ پاکستان نے تو کبھی بھی نہ اسرائیل پر حملہ کیا، اور نہ کرنے کا ارادہ ظاہر کیا..... پھر اسرائیل اور بھارت مل کر پاکستان پر  حملہ کیوں کرنا چاہتے تھے؟

 

تازہ ترین خبریں

یا اللہ رحم۔۔کراچی میں شدید بارشیں اور آندھی۔۔کتنے افراد جاں کی بازی ہار گئے۔۔ خبر نے دل چیر دیئے

یا اللہ رحم۔۔کراچی میں شدید بارشیں اور آندھی۔۔کتنے افراد جاں کی بازی ہار گئے۔۔ خبر نے دل چیر دیئے

نفیسہ شاہ اور شیریں مزاری آمنے سامنے۔۔۔۔  ایک دوسرے پر نقل کرنے کا الزام لگادیا

نفیسہ شاہ اور شیریں مزاری آمنے سامنے۔۔۔۔  ایک دوسرے پر نقل کرنے کا الزام لگادیا

عمران خان نے ریحام خان سے جان چھڑوانے کےلئے جہانگیر ترین سے مدد مانگی تھی

عمران خان نے ریحام خان سے جان چھڑوانے کےلئے جہانگیر ترین سے مدد مانگی تھی

 سندھ سے انتہائی بری خبر ۔۔۔۔۔ 11 افراد جاں بحق ہوگئے 

 سندھ سے انتہائی بری خبر ۔۔۔۔۔ 11 افراد جاں بحق ہوگئے 

امتحانات دینے والے طلبا کیلئے خوشخبری ۔۔۔۔ تعلیمی بورڈز کا اہم فیصلہ

امتحانات دینے والے طلبا کیلئے خوشخبری ۔۔۔۔ تعلیمی بورڈز کا اہم فیصلہ

جہانگیر ترین ایک مرتبہ پھر سرگرم ۔۔۔۔۔ہم خیال اراکین پارلیمنٹ کیلئے عشائیہ کا اہتمام ۔۔ پی ٹی آئی اراکین کی آمد کا سلسلہ جاری

جہانگیر ترین ایک مرتبہ پھر سرگرم ۔۔۔۔۔ہم خیال اراکین پارلیمنٹ کیلئے عشائیہ کا اہتمام ۔۔ پی ٹی آئی اراکین کی آمد کا سلسلہ جاری

ذاتی رنجش پر مخالفین نے زمیندار کی بھینس کر زہردے کر مار ڈالا

ذاتی رنجش پر مخالفین نے زمیندار کی بھینس کر زہردے کر مار ڈالا

ماروی سرمد کے حیران کن ماضی سے پردہ اٹھا دینے والی تحریر

ماروی سرمد کے حیران کن ماضی سے پردہ اٹھا دینے والی تحریر

پی ڈی ایم کو دوبارہ فعال کرنے کی تیاریاں

پی ڈی ایم کو دوبارہ فعال کرنے کی تیاریاں

پاکستانیوں کیلئے ایک اوربڑی خوشخبری۔۔صوبہ بلوچستان میں گیس کے نئے ذخائر دریافت کرلیے گئے۔

پاکستانیوں کیلئے ایک اوربڑی خوشخبری۔۔صوبہ بلوچستان میں گیس کے نئے ذخائر دریافت کرلیے گئے۔

امتحانات دینے والے طلبا کیلئے خوشخبری ۔۔۔۔ تعلیمی بورڈز کا اہم فیصلہ 

امتحانات دینے والے طلبا کیلئے خوشخبری ۔۔۔۔ تعلیمی بورڈز کا اہم فیصلہ 

رنگ روڈ میگا سیکنڈل پر پیپلزپارٹی نے وزیراعظم سمیت اسکینڈل میں ملوث وزراء سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کر دیا

رنگ روڈ میگا سیکنڈل پر پیپلزپارٹی نے وزیراعظم سمیت اسکینڈل میں ملوث وزراء سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کر دیا

جہانگیر ترین ایک مرتبہ پھر سرگرم ۔۔۔۔۔ہم خیال اراکین پارلیمنٹ کیلئے عشائیہ کا اہتمام ۔۔ پی ٹی آئی اراکین کی آمد کا سلسلہ جاری

جہانگیر ترین ایک مرتبہ پھر سرگرم ۔۔۔۔۔ہم خیال اراکین پارلیمنٹ کیلئے عشائیہ کا اہتمام ۔۔ پی ٹی آئی اراکین کی آمد کا سلسلہ جاری

سابق وزیراعظم نواز شریف کی ضبط شدہ جائیدادوں کو نیلام کرنے کا فیصلہ۔۔۔بولی کی تاریخ بھی مقر ر 

سابق وزیراعظم نواز شریف کی ضبط شدہ جائیدادوں کو نیلام کرنے کا فیصلہ۔۔۔بولی کی تاریخ بھی مقر ر