01:21 pm
 خدا کرے کہ نیا سال سب کو راس آئے !

 خدا کرے کہ نیا سال سب کو راس آئے !

01:21 pm

سن 2020 میں جس مقدار میں مصائب اور پریشانیاں سامنے آئیں، ابھی ان کا شمار کرنا باقی ہے۔ سارا سال خبروں کا آغاز 'ایک نئی صورت حال
سن 2020 میں جس مقدار میں مصائب اور پریشانیاں سامنے آئیں، ابھی ان کا شمار کرنا باقی ہے۔ سارا سال خبروں کا آغاز 'ایک نئی صورت حال اور پھر اس میں کورونا وائرس کی وجہ سے ہونے والی ہلاکتیں اور اس کی گرفت میں آنے والے نئے مریضوں کی تعداد کے بیان سے ہوتا رہا۔تقابلی صورت حال کا اندازہ ملازمین کو دی جانے والی زر تلافی سے کیا جانے لگا۔ رواں برس گیارہ ستمبر تک پہلی عالمی جنگ سے دوگنا انسان امریکا میں موت کے منہ میں چلے گئے اور یہ تعداد ویتنام کی جنگ میں ہونے والی امریکی فوجیوں کی ہلاکتوں سے چھ گنا زائد رہی۔ ابھی تک وبا کی شدت انسانی دماغ کے احاطے میں سمائی نہیں۔زندگی کے گزرے ہوئے لمحات کو پکڑ نہیں سکتے ۔لیکن آنے والے لمحات کو بہتر بنا سکتے ہیں ۔یونہی ماہ و سال کی گردش میں عمر تمام ہو جاتی ہے ۔بعض اوقات لمحے گزر کر ہی نہیں دیتے مگر سال گزشتہ کیسے پر لگا کر اڑ گیا خبر ہی نہ ہوئی اور خبر ہوتی بھی کیسے کچھ تو نیا ہوتا ،کوئی بات کوئی خبر ،کوئی واقعہ تو ایسا ہوتا جس کا ہونا 2020ء کو بیتے ،ان گنت سالوں سے ممیز کر جاتا ۔وہی پریشانیوں اور آزمائشوں کا نہ ختم ہونے والا سلسلہ جاری تھا ۔ قدرتی و زمینی آفات ،دہشت گردی ،بد امنی ،لاقانونیت،کرپشن ،مہنگائی و غربت کو روئے عوام،بے روزگاری،ناخواندگی اور بحران چاہے وہ بجلی کا ہو یا گیس کا بحران۔2020ء کی تار تار پوشش پہ چند گنی چنی کامیابیوں کے پیوند لگے ،ماتھے پر ایک دو جھومر سجے کتاب ہست و بود کا ایک اور قیمتی باب بند ہوا ۔پرانے چیپڑکلوز ہوں تو تب ہی نئے اسباق پڑھے جاتے ہیں ۔
بعض اوقات صبح صبح نرم نرم ہوا کا ایک جھونکا ،طلوع ہوتے سورج کی پہلی پہلی کرنیں ،درختوں پر چہچہاتی چڑیوں کی اٹھکیلیاں ،اللہ تعالیٰ کی حمد و ثنا بیان کرتے دیگر چرند پرند ،اذان دیتے مرغے ،سڑک سے گزرتی گاڑی میں بجتے کسی صوفی کلام کے بول،کسی پرانے زمانے کے گانے کی دھن،اسکول کے لئے منہ بسورتے تیار ہونے والے معصوم بچے کا کوئی بے ساختہ جملہ ،ایک دم پرفیکٹ بن جانے والی چائے یا کافی کا پہلا گھونٹ ،اخبار میں اچانک نظر سے گزرنے والی کوئی اچھی خبر ،مارننگ شو میں اپنی پسندیدہ میزبان کی میزبانی میں پسندیدہ شخصیت کی ایک جھلک ،یادوں کے دریچوں سے یک دم لپکنے والی کوئی میٹھی یاد ، کسی ادیب کا کوئی جملہ ،اقتباس ،دلنشین قول یا پسندیدہ شاعر کا شعر بھی دن بھر کی خوشی و شادمانی ،سیرابی و شادابی کا سبب بن جاتا ہے ۔بات تو صرف محسوس کرنے کی ہے ۔یوں تو زندگی برف کی مانند پگھل رہی ہے اور دریائوں کی طرح تیزی سے گزر کر موت کے سمندر میں گر رہی ہے اور ساحل کی ریت کی طرح مٹھی سے پھسل جاتی ہے ۔ویسے تو اس زندگی کا لمحہ لمحہ قیمتی ہے لیکن سال نو کے 12مہینوں کو بے حد قیمتی بنانے کے لئے 12گر آج میں آ پ کو بتاتا ہوں ۔اس ضمن میں آپ کو کچھ خاص نہیں کرنا بس اپنی سوچ کو ایک نئی ڈگر پر لے جانا ہے ۔ مثلاً! زندگی ویسی بھی ہو سکتی ہے جیسی میں چاہتا ہوں ،پریشانیا ںنہیں خوشیاں شمار کرنی ہیں ،بڑے خوابوں کی بڑی تعبیریں حاصل کرنی ہیں ،دوسروں سے موازنہ ہر گز نہیں ،محبت کے لئے محبت دینی پڑے گی،حدوں سے آگے نہیں بڑھناکیو نکہ انسان بہت سی چیزوں سے استفادہ کرتا ہے بلکہ بہت سی چیزوں پر اس کی زندگی کا انحصار ہے مگر وہ انہیں سمجھ نہیں پاتا اس لئے ان کی تعریف متعین کرنے سے قاصر رہتا ہے۔ سچی بات تو یہ ہے کہ انسان نظام قدرت کو اسی حد تک سمجھ پاتا ہے یا سمجھ سکتا ہے جتنی سمجھ اسے عطا ہوئی ہے۔ سمجھنے کی طرح وہ نہ تو ہوا کو سمجھ سکا ہے نہ روشنی کو، چاند تاروں کی حقیقت و ماہیئت اس پر واضح ہوئی ہے نہ گردش لیل و نہار اس پر واضح ہوئی ہے۔ غالب جیسا شاعر یہ کہنے پر مجبور ہوا کہ سبزہ و گل کہاں سے آئے ہیں،ابر کیا چیز ہے ہوا کیا ہے؟ انسان بھلے ہی ایسی چیزوں کو نہ سمجھ سکا ہو مگر ان کے بغیر اس کی زندگی کا تصور بھی محال ہے۔ اسے نہیں معلوم کہ ہوا کا سفر کہاں سے شروع ہوتا ہے اور کہاں ختم ہوتا ہے، ختم بھی ہوتا ہے یا نہیں، مگر ہوا کے بغیر اس کی زندگی مشکل نہیں ناممکن ہے۔ ہوا چند ثانیوں کیلئے کہیں ٹھہر جائے تو اس کے پسینے چھوٹ جائیں۔خود انسانوں کی بنائی ہوئی چیزیں دیگر کروڑوں انسانوں کی عقل سے بالاتر ہیں، مثلا کمپیوٹر، انٹرنیٹ، موبائل اور دیگر آلات جدیدہ۔ چند لوگ اگر انہیں معرض وجود میں لانے کے قابل بھی ہوئے تو اس لئے کہ ٹیکنالوجی کو قابل تسخیر بنایا گیا ورنہ یہ کبھی مسخر نہ ہوتی۔ جب چند افراد کی ایجاد شدہ چیزیں دیگر کروڑوں لوگوں پر واضح نہیں ہیں تو قدرت کی بنائی ہوئی اشیا اور بخشی ہوئی نعمتوں کی مکمل تفہیم کیونکر ممکن ہے؟ وقت بھی اسی لئے ناقابل تشریح ہے مگر سمجھنے کی کوشش کی جائے تو ایسا بھی نہیں کہ سمجھ میں نہ آئے۔ ازل، ابد الآباد اور لوح محفوظ پر یقین رکھنے والے تو اس کی تفہیم پر قادر ہیں۔ اسی لئے انہیں اس کے بہترین مصرف کی دعوت دی گئی۔ اس کیلئے وقت کو سمجھنا ضروری نہیں ہے۔
 انسان جب بہت سی چیزوں کے تکنیکی مضمرات کو سمجھے بغیر ان کے بہترین مصرف کی فکر کرتا ہے تو وقت کی کیوں نہیں کرسکتا۔ دیوار پر کیلنڈروں کے چڑھنے اترنے کا گواہ بننے سے زیادہ ضروری ہے کہ انسان وقت کو حیات ِ مستعار کی سب سے قیمتی شے جان کر اس کا بالکل ایسے تحفظ کرے جیسے اپنی سب سے عزیز شے کی کرتا ہے۔ یہ اس لئے بھی ضروری ہے کہ کوئی نہیں جانتا کس کے پاس کتنا وقت ہے۔ کوئی اسے روکنا چاہے تو یہ بھی ممکن نہیں ہے۔ممکن اگر کچھ ہے تو یہی کہ ایک سال کو ایک سال سمجھنے کے بجائے بارہ مہینے سمجھا جائے، اس سے بھی بہتر ہے کہ تین سو پینسٹھ دن کی حیثیت دی جائے اور بہترین عمل یہ ہے کہ آٹھ ہزار سات سو ساٹھ گھنٹوں یا پانچ لاکھ پچیس ہزار چھ سو منٹ کے طور پر دیکھتے ہوئے ایک ایک گھنٹے اور ایک ایک منٹ کو حتی المقدور کارآمد بنایا جائے۔ سال کو سال کے طور پر دیکھنے یا سمجھنے کا نقصان یہ ہے کہ سال تو آتا ہے، چلا جاتا ہے۔پھر آتا ہے پھر چلا جاتا ہے۔ 2020 ء نے بہت سی کھٹی میٹھی یادیں میری جھولی میں ڈال دیں ہیں جنھیں احاطہ تحریر میں لانا شاید ممکن نہ ہو لیکن اس برس نے مجھ پر کئی مطالب واضع کیے،زندگی کے کئی مفاہیم میری نگاہ سے گزرے اور کئی عادتیں سدھریں اور کئی بگڑ گئیں۔ دن گزرنے کے لیے ہوتے ہیں،مہینے گزرنے کے لیے ہوتے ہیں اور اسی طرح سالوں کو بھی گزارنا ہی ہوتا ہے اور2020ء سال بھی اگر گزر گیا ہے تو ہمیں اپنی کمیوں اور خامیوں پر نگاہ دوڑانی چاہیے اور نئے سرے سے عزم کرکے آگے بڑھنا چاہیے۔جن ارادوں کو اس سال میں عملی جامہ نہیں پہنایا جا سکا تہیہ کریں کہ اگلے برس لازمی اسے پورا کریں گے۔کچھ نئے ارادے بنائیں اور انہیں پورا کرنے کیلئے تن من کی بازی لگا دیجیے، انشا اللہ کامیابی آپ کا مقدر بنے گی۔
نہ کوئی رنج کا لمحہ کسی کے پاس آئے
خدا کرے کہ نیا سال سب کو راس آئے
 

تازہ ترین خبریں

نیا تعلیمی سال کب سے شروع ہو گا۔۔ ؟ سالانہ امتحانات کے حوالے سے بھی بڑا اعلان۔۔ طلبہ کے لیے شاندار خبر

نیا تعلیمی سال کب سے شروع ہو گا۔۔ ؟ سالانہ امتحانات کے حوالے سے بھی بڑا اعلان۔۔ طلبہ کے لیے شاندار خبر

پیر سے نہم تا بارہویں کے طالب علموں کی کلاسز کا آغاز

پیر سے نہم تا بارہویں کے طالب علموں کی کلاسز کا آغاز

رمضان میں بھی عوام بجلی سے محروم ۔۔۔ بٹگرام کے خیر آباد فیڈرپر پچھلے 72 گھنٹوں سے بجلی غائب ۔۔ علامہ عطا محمد دیشانی نے وارننگ دے دی

رمضان میں بھی عوام بجلی سے محروم ۔۔۔ بٹگرام کے خیر آباد فیڈرپر پچھلے 72 گھنٹوں سے بجلی غائب ۔۔ علامہ عطا محمد دیشانی نے وارننگ دے دی

عالمی وبا کورونا وائرس ۔۔ راولپنڈی کے مزید علاقوں میںلاک ڈاون نافذ ۔۔۔ کہیںآپ کا علاقہ تو شامل نہیں ۔۔خبر دیکھیں

عالمی وبا کورونا وائرس ۔۔ راولپنڈی کے مزید علاقوں میںلاک ڈاون نافذ ۔۔۔ کہیںآپ کا علاقہ تو شامل نہیں ۔۔خبر دیکھیں

کرکٹ شائقین کیلئے بری خبر ۔۔۔ پاکستان کے نوجوان کھلاڑی جاں بحق ہوگئے

کرکٹ شائقین کیلئے بری خبر ۔۔۔ پاکستان کے نوجوان کھلاڑی جاں بحق ہوگئے

خورشید قصور کےبھائی بیرسٹر عمر قصوری کا انتقال ہو گیا

خورشید قصور کےبھائی بیرسٹر عمر قصوری کا انتقال ہو گیا

عالمی وبا کورونا وائرس ۔۔ راولپنڈی کے مزید علاقوں میںلاک ڈاون نافذ ۔۔۔ کہیںآپ کا علاقہ تو شامل نہیں ۔۔خبر دیکھیں

عالمی وبا کورونا وائرس ۔۔ راولپنڈی کے مزید علاقوں میںلاک ڈاون نافذ ۔۔۔ کہیںآپ کا علاقہ تو شامل نہیں ۔۔خبر دیکھیں

نومنتخب وزیرخزانہ کے گرد گھیرا تنگ ۔۔۔۔ اسلام آباد ہائیکورٹ نے اہم قدم اٹھا لیا

نومنتخب وزیرخزانہ کے گرد گھیرا تنگ ۔۔۔۔ اسلام آباد ہائیکورٹ نے اہم قدم اٹھا لیا

سینئر صحافی سلیم صافی کے گھر کہرام مچ گیا۔۔۔ انتہائی بری خبر

سینئر صحافی سلیم صافی کے گھر کہرام مچ گیا۔۔۔ انتہائی بری خبر

محکمہ انسداد دہشتگردی کے 11سرکاری پستول غائب ہوگئے

محکمہ انسداد دہشتگردی کے 11سرکاری پستول غائب ہوگئے

بلوچستان کے کئی علاقوں میںزلزلے کے جھٹکے

بلوچستان کے کئی علاقوں میںزلزلے کے جھٹکے

30سے زائد ارکان اسمبلی کی جہانگیرترین کو استعفوں کی پیشکش

30سے زائد ارکان اسمبلی کی جہانگیرترین کو استعفوں کی پیشکش

جائداد کا تنازع ۔۔۔ خوفناک لڑائی ۔۔۔۔ کتنی جانیں گئی؟؟ ۔۔ انتہائی افسوسناک خبر

جائداد کا تنازع ۔۔۔ خوفناک لڑائی ۔۔۔۔ کتنی جانیں گئی؟؟ ۔۔ انتہائی افسوسناک خبر

شوکت ترین کا کچھ روز پہلےکا انٹرویو سامنے آگیا

شوکت ترین کا کچھ روز پہلےکا انٹرویو سامنے آگیا