01:09 pm
نیا سال اور ہماری قومی ترجیحات 

نیا سال اور ہماری قومی ترجیحات 

01:09 pm

 ( آخری حصہ)
تمباکو نوشی جس طرح صحت کے لیے مضر ہے اسی طرح جس زمین پر اس کی کاشت ہورہی ہے وہاں سے غذائی اجناس ختم ہورہی ہیں۔ تمباکو کا استعمال اپنے نشے کا عادی بنا لیتااور انسان کی سوچنے کی آزادانہ صلاحیتوں کو اپنے قابومیں کرلیتا ہے، اسی لیے قرآن نے نشے کو ممنوع قرار دیا ہے۔ تمباکو نوشی کا فوری خاتمہ ممکن نہیں تاہم اسے بھاری ٹیکس عائد کرکے اسے محدود کیا جاسکتا ہے۔ سب سے بڑھ کرہم اپنی صحت برباد کرنے کے ساتھ اپنا اجتماعی مستقبل دھوئیں میں اُڑا رہے ہیں۔ کئی سابق سینئر بیورکریٹس پاکستان میں  کام کرنے والی دنیا کی بڑی تمباکو کمپنیوں  بورڈ میں شامل ہیں، ان کا انتخاب حکومتی پالیسی سازی پر اثرا انداز ہونے کے لیے ہی کیا جاتا ہے۔ ان کی مدد سے یہ کمپنیاں بھاری ٹیکسوں ، پرمنٹ اورلائسنس وغیرہ کے جھملیوں سے گلو خلاصی کرواتی ہیں۔ کب سے ملکی مفاد ان نوازشوں پر   قربان ہوتا آرہا ہے۔ 
حکومتوں کی جانب سے  دولت یا تعلق نبھانے کے لیے عام آدمی کی قیمت پر سرمایہ کاروں کو نوازنے کی ایک اور بڑی مثال کے الیکٹرک ہے۔ کیا کبھی کسی نے صرف اس اراضی کی مالیت کا اندازہ لگایا ہے جو کے الیکٹرک کی ملکیت ہے؟ کے الیکٹرک کراچی کے نمایاں مقامات پر بیش قیمت زمینوں کی مالک ہے اور صرف اس زمین کی قیمت اس رقم سے کہیں زیادہ ہے جو اس کے شیئرز کی فروخت کے لیے مقرر کی گئی۔ حکومت چاہے زرداری یا نواز شریف کی ہو یا عمران خان کی ، کے الیکٹرک کو سبھی سے مراعات ملتی ہیں۔ کون اور کیوں الجمیع گروپ اور ابراج کو نواز رہا ہے؟ اور انہیں کون ’’رعایتیں‘‘ دے رہا ہے؟
2010ء میں اختیارات کی صوبوں کی منتقلی کے لیے اٹھارہویں ترمیم کی گئی لیکن یہ قانون سازی سماجی ، معاشی اور سیاسی سطح پر ملکی ترقی میں معاون ہونے کے بجائے رکاوٹ ثابت ہوئی ہے۔  اس کے باعث معیشت کی مکمل بربادی کا خدشہ پیدا ہوگیا ہے اور ڈر ہے کہ کہیں ریاست کا وجود ہی خطرے میں نہ پڑ جائے۔ اختیارات کی نچلی سطح پر منتقلی نے یوگوسلوایا کو ٹکڑے کردیا تھا۔ ٹیکسیشن اور این ایف سی ایوارڈ کی مثالیں سامنے ہیں۔  2021ء کے الیکشن پر اٹھارہویں ترمیم پہلی ترجیح ہونی چاہیے۔ 
پاکستان میں سینیٹ الیکشن ایک تماشا بن چکے ہیں اور عدلیہ بھی اس میں ہونے والی بدعنوانی سے واقف ہے۔ خفیہ رائے شماری سے ووٹوں کی خریدو فروخت کا بازار گرم ہوتا ہے۔ اب کھلے عام رائے شماری کے طریقے ہی سے سینیٹ کا وقار بچایا جاسکتا ہے۔  اسی طرح مردم شماری سے متعلق مسائل و تنازعات کو بھی فوری حل ہونا چاہیے۔ ایسی جمہوریت جہاں آبادی کا شمار سیاسی و انتخابی چالبازی کے دور پر کیا جائے وہاں بے چینی اور خلیجیں بڑھتی ہیں۔ 
ہم اپنی قومی سلامتی کے اہم ترین پہلو تعلیم سے متعلق ابہام کا شکار ہیں اور اٹھارہویں ترمیم کے تحت اسے صوبوں کے سپرد کرچکے ہیں۔ اس کی وجہ سے ذریعہ تعلیم اور متضاد نکتہ ہائے نظر ایک ہی ملک کے نظام تعلیم کا حصہ بن گئے ہیں۔ ایک موقف یہ ہے کہ ریاضی اور سائنس انگریزی میں پڑھائے جائین جب کہ دیگر مضامین کی تعلیم اردو یا مادری زبان میں دی جائے۔ یکساں قومی نصاب سے سرکاری، نجی اور دینی تعلیمی اداروں میں ہم آہنگی اور برابری پیدا کی جاسکتی ہے۔ وفاقی حکومت نے اس مقصد کے تحت  پری پرائمری اور پہلی سے پانچویں کلاس تک کی نصابی کتابیں تیار کر لیں۔ تاہم ان کتابوں کی منظوری دینے والے مجاز بورڈز صوبائی اختیار میں ہیں جہاں اس مقصد کے لیے درکار اہلیت ہی نہیں پائی جاتی۔ اس نصاب کے فوری نفاذکے لیے وفاقی سطح پر ایک مرکزی ادارہ قائم ہونا چاہیے جو تیزی سے توثیق اور نفاذ کے مراحل طے کرے۔
بھارت کی جانب سے فالس فلیگ کارروائیوں کے خطرات سے ہوشیار رہنے کی ضرورت ہے اور ہماری مسلح افواج کو اس حوالے سے چاق چوبند رہنا ہوگا۔ سی پیک اس خطے ہی کے نہیں پوری دنیا کے اقتصادی و تہذہبی منظرنامے کو تبدیل کرنے والا ایک غیر معمولی منصوبہ ہے۔  اس سے کئی نئے اتحاد جنم لیں گے اور ہمارے چین سے دیرینہ تعلقات مزید گہرے ہوں گے۔ روس بھی سرد جنگ میں اپنے خلاف کھڑے ہونے والے پاکستان کے بارے میں اپنا تناظر بدل رہا ہے اور اسے ایک توازن قائم کرنے والی غیر جانب دار قوت کے طور پر دیکھ رہا ہے۔ امن 2021ء کی جنگی مشقوں میں شرکت سے روس نے مستقبل کی کئی تبدیلیوں اشارہ دیا ہے۔ کئی برسوں سے روس  کے ساتھ جس پائپ لائن پر بات جاری ہے اس کی تکمیل سے ہماری توانائی کی ضروریات کو بڑا تحفظ ملے گا۔ 
جب اختیار رکھنے والے بھی حالات کو جوں کا توں رکھنے کے لیے اپنی ذمے داریوں سے روگردانی کریں تو افسوس ہوتا۔ یہ اچھے لوگ ریاست کے وجود کے لیے خطرہ بننے والی کرپٹ قیادت کو کیوں برداشت کیے ہوئے ہے؟ اپنے ہی بیان کردہ اخلاقی اصولوں پر عمل نہ کرنے منافقت نہیں تو اور کیا ہے۔  سیاسی منافقت بھی اس سے کچھ مختلف نہیں۔ جب کروڑوں انسانوں کی زندگیاں اور ریاست کا وجود خطرے میں ہو تو ریاست کی حفاظت کے ذمے داروں کا کیا کرنا چاہیے۔ ہمیں 2021ء میں ہرشعبے کی درست سمت کا تعین کرنے کیلئے منصوبہ بندی کرنا ہوگی۔ 
(فاضل کالم نگار سیکیورٹی اور دفاعی امور کے تجزیہ کار ہیں) 

 

تازہ ترین خبریں

رمضان میں بھی عوام بجلی سے محروم ۔۔۔ بٹگرام کے خیر آباد فیڈرپر پچھلے 72 گھنٹوں سے بجلی غائب ۔۔ علامہ عطا محمد دیشانی وارننگ دے دی

رمضان میں بھی عوام بجلی سے محروم ۔۔۔ بٹگرام کے خیر آباد فیڈرپر پچھلے 72 گھنٹوں سے بجلی غائب ۔۔ علامہ عطا محمد دیشانی وارننگ دے دی

عالمی وبا کورونا وائرس ۔۔ راولپنڈی کے مزید علاقوں میںلاک ڈاون نافذ ۔۔۔ کہیںآپ کا علاقہ تو شامل نہیں ۔۔خبر دیکھیں

عالمی وبا کورونا وائرس ۔۔ راولپنڈی کے مزید علاقوں میںلاک ڈاون نافذ ۔۔۔ کہیںآپ کا علاقہ تو شامل نہیں ۔۔خبر دیکھیں

کرکٹ شائقین کیلئے بری خبر ۔۔۔ پاکستان کے نوجوان کھلاڑی جاں بحق ہوگئے

کرکٹ شائقین کیلئے بری خبر ۔۔۔ پاکستان کے نوجوان کھلاڑی جاں بحق ہوگئے

خورشید قصور کےبھائی بیرسٹر عمر قصوری کا انتقال ہو گیا

خورشید قصور کےبھائی بیرسٹر عمر قصوری کا انتقال ہو گیا

عالمی وبا کورونا وائرس ۔۔ راولپنڈی کے مزید علاقوں میںلاک ڈاون نافذ ۔۔۔ کہیںآپ کا علاقہ تو شامل نہیں ۔۔خبر دیکھیں

عالمی وبا کورونا وائرس ۔۔ راولپنڈی کے مزید علاقوں میںلاک ڈاون نافذ ۔۔۔ کہیںآپ کا علاقہ تو شامل نہیں ۔۔خبر دیکھیں

نومنتخب وزیرخزانہ کے گرد گھیرا تنگ ۔۔۔۔ اسلام آباد ہائیکورٹ نے اہم قدم اٹھا لیا

نومنتخب وزیرخزانہ کے گرد گھیرا تنگ ۔۔۔۔ اسلام آباد ہائیکورٹ نے اہم قدم اٹھا لیا

سینئر صحافی سلیم صافی کے گھر کہرام مچ گیا۔۔۔ انتہائی بری خبر

سینئر صحافی سلیم صافی کے گھر کہرام مچ گیا۔۔۔ انتہائی بری خبر

محکمہ انسداد دہشتگردی کے 11سرکاری پستول غائب ہوگئے

محکمہ انسداد دہشتگردی کے 11سرکاری پستول غائب ہوگئے

بلوچستان کے کئی علاقوں میںزلزلے کے جھٹکے

بلوچستان کے کئی علاقوں میںزلزلے کے جھٹکے

30سے زائد ارکان اسمبلی کی جہانگیرترین کو استعفوں کی پیشکش

30سے زائد ارکان اسمبلی کی جہانگیرترین کو استعفوں کی پیشکش

جائداد کا تنازع ۔۔۔ خوفناک لڑائی ۔۔۔۔ کتنی جانیں گئی؟؟ ۔۔ انتہائی افسوسناک خبر

جائداد کا تنازع ۔۔۔ خوفناک لڑائی ۔۔۔۔ کتنی جانیں گئی؟؟ ۔۔ انتہائی افسوسناک خبر

شوکت ترین کا کچھ روز پہلےکا انٹرویو سامنے آگیا

شوکت ترین کا کچھ روز پہلےکا انٹرویو سامنے آگیا

کنواروں کیلئے خوشخبری ۔۔۔ کراچی میں شادی ہالز کب سے کھل رہے ہیں ۔۔۔ جان کر آپ بھی خوش ہوجائنگے

کنواروں کیلئے خوشخبری ۔۔۔ کراچی میں شادی ہالز کب سے کھل رہے ہیں ۔۔۔ جان کر آپ بھی خوش ہوجائنگے

رمیز راجہ کے متعلق اہم خبر ۔۔ آخر کار سول ایویشن اتھارٹی نے اجازت دے ہی دی ۔۔

رمیز راجہ کے متعلق اہم خبر ۔۔ آخر کار سول ایویشن اتھارٹی نے اجازت دے ہی دی ۔۔