02:58 pm
قطر و سعودی مفاہمت  ، نئے  امکانات

قطر و سعودی مفاہمت  ، نئے  امکانات

02:58 pm

قطر، امارات، سعودیہ کے مابین اختلاف اور لڑائی قدیم قبائلی طرز کی تھی جس کا انجام بالآخر قبائلی طریق کار کے مطابق ہی مصالحت اور مفاہمت کی صورت میں نکلنا تھا۔ 
قطر کے حوالے سے سعودیہ سے زیادہ امارات محرک رہا تھا، امریکہ میں امارات نے بہت زیادہ قطر مخالف جدوجہد کی تھی، لابیوں پر بھی سرمایہ خرچ کیا تھا،جواب میں مگر قطر نے قوت ارادی، حوصلہ و ہمت اور اخوان سے تعلق کو مثبت و تعمیراتی رویوں کے اظہار کا درست ذریعہ بنائے رکھا تھا، سعودیہ ، امارات و قطر میں اصل مسئلہ اخوان المسلمون کی سرپرستی اور الجزیرہ ٹی وی کا عرب بادشاہتوں کے خلاف معاندانہ ابلاغی رویہ تھا ریاست قطر کی تشکیل میں اخوان المسلمون نے شعبہ تعلیم و تربیت کا انتظام اسی طرح سنبھالا تھا جس طرح سعودیہ کی تخلیق اول و تاسیس میں ابتدائی طور پر نجدی شیوخ و علماء نے محمد بن عبدالوہاب کے فکر توحید کی بنیاد پر آل سعود بادشاہت کی تاسیس میں بنیادی کردار ادا کیا تھا۔
مصرمیں جنرل عبدالفتاح السیسی نے چونکہ منتخب اخوانی صدر محمد مرسی سے اقتدار چھینا، جبکہ طیب اردوان کے ترکی نے اپنے اخوانی پس منظر کے سبب پروفیسر محمد مرسی کی بھرپور حمایت کی جس کے سبب طیب اردوان اور جنرل عبدالفتاح السیسی میں شدید اختلاف پیدا ہوا، اور یہ اختلاف اب لیبیا میں ترکی کے اس مئوثر کردار کے سبب مزید زیادہ ہوگیا ہے جس سے اخوانی ذہن کی پولٹیکل اسلام کا مظہر بن کر اقوام متحدہ سے منطور شدہ حکومت موجود ہے اور صدر طیب اردوان اس اخوانی پس منظر کی لیبیائی حکومت کے ساتھ عسکری و سیاسی طور پر بھرپور تعاون کر رہے ہیں۔ یہ تعاون بھی ترک صدر اور مصری حکمران جنرل کے مابین اخوان المسلمون کے سبب ہے۔ یوں قطر کے بائیکاٹ میں مصر بھی امارات و البحرین و سعودیہ کا ساتھی بن گیا تھا، صدر مرسی کا اقتدار سے الگ کیا جانا ایک سیاسی مسئلہ ہے جبکہ جس طرح اسے ذلت آمیز طور پر قید خانے میں موت سے دوچار کیا گیا ہے اس مصری عسکری عمل سے اخوان کے لئے انسانی ہمدردی پیدا ہونا فطری بات ہے۔لیبیا میں جنرل ہفتر الگ حکومتی وجود رکھتے ہیں جس کی حمایت امارات و مصر کرتے ہیں اور سعودیہ بھی مگر جنرل ہفتر فی الحال کافی کمزور ہیں۔
عمان جس کو ’’اومان‘‘ بولا جاتا ہے اور جس کا دارالخلافہ مسقط ہے اس کے سلطان قابوس اور کویت کے امیر الشیخ الصباح نے قطر کے مسئلے پر سعودیہ و امارات میں صلح کی طویل جدوجہدکی تھی۔ آج مصالحت کرانے والے کویتی امیر اور سلطان قابوس دنیا میں موجود نہیں مگر ان کا لگایا ہوا پودا ثمرآور ہو کر قطری سعودیہ اماراتی صلح و مفاہمت کا نام پا گیا ہے۔ یہ خوشی کی بات ہے۔
قطر کے ٹی وی چینل الجزیرہ کوعرب بادشاہتوں کے انہدام کے لئے عصری اخوانی کردار نہیں بننا چاہیے۔ اب بھی الجزیرہ کو اخوانی سوچ کے فروغ کو نہیں اپنانا چاہیے بطور خاص جبکہ قطر کو سعودیہ وامارات و مصر نے سینے سے لگا کر قبول کرلیا ہے۔ بہرحال یہ مصالحت و مفاہمت خوش آئند ہے۔ کاش اس مفاہمت میں جیرڈکشنر کا کردار نہ ہوتا اور عرب مفاہمت عربوں کی اپنی جدوجہد کی بنیاد پر ظہور میں آتی۔ جیرڈکشنر کے کردار نے مشرق وسطیٰ میں امریکہ کے کردار کو نیا روپ دے دیا ہے۔ کاش ایران آگے بڑھ کر سعودیہ کو گلے سے لگالے تاکہ مشرق وسطیٰ میں امریکی کردار محدود ہو جائے اور امت مسلمہ نئے سرے سے زندہ ہو جائے۔
العلاء شہر میں ولی عہد محمد بن سلمان نے مصالحت کانفرنس کو سلطان قابوس اور الشیخ صباح کے نام منسوب کیا ہے امیر کویت الشیخ نواف نے خلیجی بحران کے خاتمے کو خوش آئند قرار دیا ہے۔  اس مصالحت کانفرنس میں ابوظہبی کا کردار خاموش ہے۔ محمد بن زید النہیان خاموش ہیں جبکہ دوبئی کے حکمران الشیخ المکتوم نے العلاء میں ہونے والی کانفرنس میں شرکت کی ہے۔ کیا امارات کا رویہ قطر کے حوالے سے منفی ہی رہے گا؟ یاد رہے یہ 41واں اجلاس تھا خلیج تعاون کونسل کا جس میں اماراتی ولی عہد شریک نہیں ہوئے۔
ایک بات کی طرف توجہ دلانا چاہتا ہوں کہ ہمارے وزیراعظم اور اسٹیبلشمنٹ کو سعودیہ و امارات کے حوالے سے کی گئی ماضی کی اپنی فاش اور شدید غلطی کی اصلاح اب لازماً کرنا ہوگی۔ ہمارے وزیراعظم جذباتی ہیں جبکہ عملاً وہ بہت ہی کمزور عددی حکومت رکھتے ہیں۔ اس عددی طور پر کمزور ترین اور معاشی طور پر خلیجی ریاستوں اور سعودیہ کی  معاشی محتاج حکومت ہونے کے  سبب انہیں عرب مخالف صدر طیب اردوان قطر، ایران، مہاتیر محمد کے ساتھ ’’نیا بلاک‘‘ بنانے کی غلطی نہیں کرنی چاہیے تھی۔ جس قطر کو سہارا سمجھا گیا تھا وہ آج واپس سعودیہ، امارات ،البحرین و مصر میں جا بیٹھا ہے کیا ہماری اسٹیبلشمنٹ وزیراعظم کو اب مجبور کر سکتی ہے کہ وہ مخصوص لابی کے مخصوص افراد اور شخصیات کے حصار سے خود کو باہر نکال کر عربوں کے لئے عرب اقدار و روایات کی روشنی میں نئے سرے سے تعلقات استوار کریں۔ عربوں سے بگاڑ پیدا کرکے وزیراعظم نے خود کو بھی سیاسی طور پر تنہا ثابت کیا ہے اور ملک کو اسٹریٹجک اور معاشی نئے مسائل میں کافی زیادہ الجھا دیا ہے۔ ازراہ نوازش  ایران و عرب کے حوالے سے نیا توازن قائم کریں۔ پاکستان کو عربوں کی شدید ضرورت ہے۔ اسی طرح عربوں کو بھی پاکستان کی شدید ضرورت پڑنے والی ہے۔ ایران پڑوسی ملک ہے بطور پڑوسی اس کے تعلقات کو ضرور مستحکم بنائیں مگر عربوں سے قطع تعلقی کی قیمت پر نہیں۔ ایسا کرنے سے ریاستی مفادات اور عوام کو نقصان ہو رہا ہے۔

 

تازہ ترین خبریں

یا اللہ رحم۔۔کراچی میں شدید بارشیں اور آندھی۔۔کتنے افراد جاں کی بازی ہار گئے۔۔ خبر نے دل چیر دیئے

یا اللہ رحم۔۔کراچی میں شدید بارشیں اور آندھی۔۔کتنے افراد جاں کی بازی ہار گئے۔۔ خبر نے دل چیر دیئے

نفیسہ شاہ اور شیریں مزاری آمنے سامنے۔۔۔۔  ایک دوسرے پر نقل کرنے کا الزام لگادیا

نفیسہ شاہ اور شیریں مزاری آمنے سامنے۔۔۔۔  ایک دوسرے پر نقل کرنے کا الزام لگادیا

عمران خان نے ریحام خان سے جان چھڑوانے کےلئے جہانگیر ترین سے مدد مانگی تھی

عمران خان نے ریحام خان سے جان چھڑوانے کےلئے جہانگیر ترین سے مدد مانگی تھی

 سندھ سے انتہائی بری خبر ۔۔۔۔۔ 11 افراد جاں بحق ہوگئے 

 سندھ سے انتہائی بری خبر ۔۔۔۔۔ 11 افراد جاں بحق ہوگئے 

امتحانات دینے والے طلبا کیلئے خوشخبری ۔۔۔۔ تعلیمی بورڈز کا اہم فیصلہ

امتحانات دینے والے طلبا کیلئے خوشخبری ۔۔۔۔ تعلیمی بورڈز کا اہم فیصلہ

جہانگیر ترین ایک مرتبہ پھر سرگرم ۔۔۔۔۔ہم خیال اراکین پارلیمنٹ کیلئے عشائیہ کا اہتمام ۔۔ پی ٹی آئی اراکین کی آمد کا سلسلہ جاری

جہانگیر ترین ایک مرتبہ پھر سرگرم ۔۔۔۔۔ہم خیال اراکین پارلیمنٹ کیلئے عشائیہ کا اہتمام ۔۔ پی ٹی آئی اراکین کی آمد کا سلسلہ جاری

ذاتی رنجش پر مخالفین نے زمیندار کی بھینس کر زہردے کر مار ڈالا

ذاتی رنجش پر مخالفین نے زمیندار کی بھینس کر زہردے کر مار ڈالا

ماروی سرمد کے حیران کن ماضی سے پردہ اٹھا دینے والی تحریر

ماروی سرمد کے حیران کن ماضی سے پردہ اٹھا دینے والی تحریر

پی ڈی ایم کو دوبارہ فعال کرنے کی تیاریاں

پی ڈی ایم کو دوبارہ فعال کرنے کی تیاریاں

پاکستانیوں کیلئے ایک اوربڑی خوشخبری۔۔صوبہ بلوچستان میں گیس کے نئے ذخائر دریافت کرلیے گئے۔

پاکستانیوں کیلئے ایک اوربڑی خوشخبری۔۔صوبہ بلوچستان میں گیس کے نئے ذخائر دریافت کرلیے گئے۔

امتحانات دینے والے طلبا کیلئے خوشخبری ۔۔۔۔ تعلیمی بورڈز کا اہم فیصلہ 

امتحانات دینے والے طلبا کیلئے خوشخبری ۔۔۔۔ تعلیمی بورڈز کا اہم فیصلہ 

رنگ روڈ میگا سیکنڈل پر پیپلزپارٹی نے وزیراعظم سمیت اسکینڈل میں ملوث وزراء سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کر دیا

رنگ روڈ میگا سیکنڈل پر پیپلزپارٹی نے وزیراعظم سمیت اسکینڈل میں ملوث وزراء سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کر دیا

جہانگیر ترین ایک مرتبہ پھر سرگرم ۔۔۔۔۔ہم خیال اراکین پارلیمنٹ کیلئے عشائیہ کا اہتمام ۔۔ پی ٹی آئی اراکین کی آمد کا سلسلہ جاری

جہانگیر ترین ایک مرتبہ پھر سرگرم ۔۔۔۔۔ہم خیال اراکین پارلیمنٹ کیلئے عشائیہ کا اہتمام ۔۔ پی ٹی آئی اراکین کی آمد کا سلسلہ جاری

سابق وزیراعظم نواز شریف کی ضبط شدہ جائیدادوں کو نیلام کرنے کا فیصلہ۔۔۔بولی کی تاریخ بھی مقر ر 

سابق وزیراعظم نواز شریف کی ضبط شدہ جائیدادوں کو نیلام کرنے کا فیصلہ۔۔۔بولی کی تاریخ بھی مقر ر