02:06 pm
بھار ت کی  دشمنی ہمارا مقدر 

بھار ت کی  دشمنی ہمارا مقدر 

02:06 pm

قوموں کے مقدر میں اہم کردار اُس فلاسفی کا ہوتا ہے جس کی بنیاد پر قومیں اور ملک وجود پاتے ہیں۔ مثال کے طور پر ریاست ہائے متحدہ امریکہ کا وجود فرانسیسی منکر مانیتسکو کے نظریہ تفریق اختیارات اور جان لاک کے معاہدہ عمرانی کا مرہون منت ہے۔ اس لاکین فلاسفی کے تحت امریکہ کو جو معاشرتی وجود عطا ہوا وہ جان کا تحفظ ‘ مساوات ‘ آزادی اور خوشی کا حق جیسی چار بنیادی ستونوں پر کھڑا ہے۔ آج کے امریکہ میںکوئی ان بنیادی حقوق سے انحراف کا تصور بھی نہیں کر سکتا اور یہی امریکہ کی سوا دو سالہ تاریخ ہے۔ اسی طرح پاکستان اسلامی نظریے کی بنیاد پر وجود میں آیا۔ اسلام کی وجہ سے دو قومی نظریے کی تحریک چلی اور ایک ایسے وقت میں جب دنیا میں جغرافیائی حدود کی بنیاد پر قومی ریاستیں بن رہی تھیں ‘ پاکستان دنیا کے نقشے پر ایک ایسے ملک کی حیثیت سے اُبھرا جو مذہب کی بنیاد پر بنا تھا۔ ریاست مدینہ کے بعد دنیا میں یہ پہلی اسلامی نظریاتی ریاست کا قیام تھا۔ آج کا پاکستان اسلامی تعلیمات کی بنیاد پر دنیا کے سامنے ایک ماڈل ریاست کی صورت میں سامنے آ رہا ہے۔ اگرچہ یہ بات تھیوری کے اعتبار سے ہے اور عملی اعتبار سے بہت کچھ ہونا ابھی باقی ہے تاہم مذہب اور ریاست کا ایک حسین امتزاج پاکستان میں دیکھا جا سکتا ہے۔ آج جس عہد میں ہم جی رہے ہیں یہ سیکولرازم اور اس کے نتیجے میں وجود پانے والی قومی ریاستوں کا دور ہے چنانچہ پاکستان کا تجربہ اپنے ڈھانچے اور ہیئت ترکیبی کے لحاظ سے یکتا اور منفرد ہے۔ اسلام ریاست کا مذہب ہے اور قرآن و سنت سے متصادم کوئی قانون پاکستان میں نہیں بن سکتا ہے۔ اسلامی تعلیمات قرارداد پاکستان اور آئین پاکستان کی رُو سے ہمارے لیے مشعل راہ ہیں۔ الحمد کسی رکاوٹ اور پریشانی کے بغیر ریاست پاکستان کا سفر اپنی منزل کی جانب رواں دواں ہے۔ حضرت قائد اعظم نے جب کہا تھا کہ ہم دنیا کو دکھا دیں گے کہ چودہ صدیاں گزرنے کے باوجود اسلام کے اصول آج بھی ویسے ہی قابل عمل ہیں تو ان کی بات کو گذشتہ 72برس کی تاریخ نے درست ثابت کیا ہے۔ 
پاکستان کا وجود اسی صورت قائم رہ سکتا ہے اور مزید توانا ہو سکتا ہے جب کہ ہم اسلامی نظریہ کو مضبوطی سے تھامے رکھیں اور اسلامی تعلیمات کی روشنی میں ایک ماڈل فلاحی معاشرے کے قیام کے لیے اپنی جدوجہد کو جاری رکھیں۔ کچھ ایسی ہی بات برسوں قبل عوامی جمہوری چین کی بات کہی گئی تھی۔ پندرہ سولہ سال قبل عوامی جمہوریہ چین میں ایک سروے کیا گیا کہ چین اپنی موجودہ ترقی کو کیسے جاری رکھ سکتا ہے۔ اس بات پر عمومی اتفاق تھا کہ اگر چین نے اپنی ترقی کو قائم و دائم رکھنا ہے تو دو کام کرنے از حد ضروری ہیں۔ اول ‘ چین کو کسی صورت بھی کمیونسٹ نظریے کو نہیں چھوڑنا کہ جس کی وجہ سے عوامی جمہوریہ چین کا وجود قائم ہوا اور چین میں بیداری کی لہر پیدا ہوئی۔ دوم‘ کمیونسٹ پارٹی کو مضبوط سے مضبوط تر کرنا ہے کیونکہ یہ کمیونسٹ نظریے اور تحریک کی محافظ ہے۔ 
اب آئیے اس بدقسمتی کی طرف جو آج کا کالم لکھنے کا سبب بنی اور جو ہمارے وطن پاکستان کے وجود کے درپے ہے۔ یہ ہمارے پڑوسی ملک ہندوستان کی اکھنڈ بھارت کی فلاسفی ہے جس کی وجہ سے بھارت ہمیشہ پاکستان کو نقصان پہنچانے کا کوئی موقع ہاتھ سے جانے نہیں دیتا۔ وزیر اعظم عمران خان نے کوئٹہ کی ہزارہ برادری سے خطاب میں اس بات کی نشاندہی کی ہے کہ بھارت پاکستان میں شیعہ سنی فساد کروا کر انتشار پیدا کرنا چاہتا ہے۔ افغانستان سے پاکستان میں عدم استحکام کرنے کی اس جو کوششیں کی ہیں اس سے عام پاکستانی آگاہ ہے۔ ایران کے راستے بلوچستان میں اپنے جاسوس بھیجنا اور بلوچ علیحدگی پسندوں کو مالی امداد دے کر پاکستان کے خلاف کارروائی کرانا یہ سب اس سوچ کا شاخسانہ ہے جو اول دن سے بھارتی فلاسفی کا حصہ ہے۔ مستزاد یہ کہ ہندوستان کے پہلے وزیر اعظم جواہر لعل نعرو نے ہندوستان کی خارجہ پالیسی کی بنیاد چانکیہ ازم پر رکھی جس کا بنیادی نکتہ ہمسایہ ریاستوں کو عدم استحکام سے دوچار کرنا ہے۔ قبل مسیح کے براہم فلسفی کوٹلہ چانکیہ کے پیش کردہ حکمرانی کے اصولوں میں سے ایک یہ ہے کہ ہر پڑوسی ریاست دشمن جب کہ ہمسایہ کا ہمسایہ دوست ہوتا ہے۔ 
گذشتہ 73برس کی ہندوستانی تاریخ کا مطالعہ بتاتا ہے کہ ہمسائیوں سے تعلقات میں چانکیہ ازم کی پیروی کی جا رہی ہے اور یہ اس لیے ہے کہ بھارت کے پہلے وزیر اعظم نہرو چانکیہ سے بہت متاثر تھے۔ انہوں نے دہلی میں ڈپلومیٹک انکلیو کا نام چانکیہ پوری رکھا۔ عرض کرنے کا مقصد یہ ہے کہ پاکستان اول دن سے بھارتی اکھنڈ بھارت سوچ کا شکار ہے۔ پاکستان نے تعلقات کی بحالی اور مذاکرات کے ذریعے مسائل حل کرنے کے لیے ہمیشہ سنجیدہ اور مخلصانہ کوششیں کی ہیں لیکن ان کے جواب میں بھارت نے وقت گذاری کی ہے اور ہر وہ کام کیا ہے جس سے پاکستان عدم استحکام سے دوچار ہو۔ پاکستان نے بھارت میں عدم استحکام پھیلانے کی کبھی کوشش نہیں کی البتہ پاکستان نے مسئلہ کشمیر کو حل کرنے کے لیے بھارت پر دبائو ضرور ڈالا ہے کیونکہ یہ تقسیم ہند کا نامکمل ایجنڈا ہے۔ بھارت نے بین الاقوامی سطح پر پاکستان کو بدنام کرنے اور اسے دہشت گرد ملک قرار دلوانے کے لیے جو کوششیں کی ہیں ان سے ہر پاکستانی آگاہ ہے۔ حال ہی میں یورپی یونین کی ڈس انفارمیشن لیب نے یورپ میں بھارتی نیٹ ورک کا انکشاف کیا ہے جو جعلی میڈیا اور نقلی تھنک ٹینکس پر مشتمل ہے جس کا مقصد پاکستان مخالف مہم چلا کر اس کی ساتھ کو متاثر کرنا ہے۔ ہم نے گذشتہ 73سالوں میں ہندوستان کے ساتھ صلح جوئی کی جتنی بھی کوشش کی اس کا انجام باالخیر نہیںہوا چنانچہ یہ طے ہے کہ بھارت کبھی بھی پاکستان مخالف سوچ سے باز نہیں آ سکتا۔ پاکستان کے اہل دانش ‘ حکومت اور ریاستی اداروں کو اس بنیادی نکتے کو پیش نظر رکھ کر پاکستان کی دفاعی اور جارحانہ حکمت عملی بنانے کی اشد ضرورت ہے۔ بھارت سے دوستی ایک ایسا خواب ہے جس کی تعبیر ممکن نہیں ہے لہٰذا ہمیں بھارت دشمنی کو اپنا مقدر سمجھ کر اپنی خارجہ و داخلہ پالیسی کو ترتیب دینا ہو گا۔ 

 

تازہ ترین خبریں

 پشاور کے باچا خان ائیرپورٹ میں اچانک کیا ہوگیا ؟؟؟ ہر طرف کھلبلی مچھ گئی ۔۔۔ حالات خراب 

 پشاور کے باچا خان ائیرپورٹ میں اچانک کیا ہوگیا ؟؟؟ ہر طرف کھلبلی مچھ گئی ۔۔۔ حالات خراب 

 پرائیویٹ سیکٹر یونیورسٹیز پاکستان نے حکومت سے بروقت نیا سمسٹر شروع کرنے کا مطالبہ کردیا

 پرائیویٹ سیکٹر یونیورسٹیز پاکستان نے حکومت سے بروقت نیا سمسٹر شروع کرنے کا مطالبہ کردیا

حکومت کی پھرتیاں۔۔۔بین الصوبائی،انٹرسٹی اورٹورسٹ ٹرانسپورٹ پروقت سے پہلے ہی پابندی پابندی عائد کردی،

حکومت کی پھرتیاں۔۔۔بین الصوبائی،انٹرسٹی اورٹورسٹ ٹرانسپورٹ پروقت سے پہلے ہی پابندی پابندی عائد کردی،

 اگر ایمرجنسی پیدا ہوئی تو ہولی فیملی اہسپتال کو کرونا اہسپتال میں منتقل کر دیں گے۔۔ شیخ رشید احمد کا بڑا اعلان

اگر ایمرجنسی پیدا ہوئی تو ہولی فیملی اہسپتال کو کرونا اہسپتال میں منتقل کر دیں گے۔۔ شیخ رشید احمد کا بڑا اعلان

ایمازون نے پاکستان کو سیلر لسٹ میں شامل کر لیا

ایمازون نے پاکستان کو سیلر لسٹ میں شامل کر لیا

عمران خان صاحب اگر آپ نے جہانگیر ترین سے ہاتھ ملایا تو آپ کی جماعت کا تگڑا گروپ پی ٹی آئی کو خیر باد کہہ دے گا۔۔کپتان بری طرح پھنس گئے۔

عمران خان صاحب اگر آپ نے جہانگیر ترین سے ہاتھ ملایا تو آپ کی جماعت کا تگڑا گروپ پی ٹی آئی کو خیر باد کہہ دے گا۔۔کپتان بری طرح پھنس گئے۔

شفقت محمود نے 15جون کے بعد بورڈ کے امتحانات کا اعلان کردیا

شفقت محمود نے 15جون کے بعد بورڈ کے امتحانات کا اعلان کردیا

کراچی قرنطینہ سنٹر سے بیرون ملک آنے والا مسافر بھاگ گیا ۔۔ انتہائی بری خبر 

کراچی قرنطینہ سنٹر سے بیرون ملک آنے والا مسافر بھاگ گیا ۔۔ انتہائی بری خبر 

اسلام آباد میں لاک ڈاون کا نفاذ ۔۔۔۔۔ ڈپٹی کمشنر حمزہ شفقات کا اہم بیان سامنے آگیا 

اسلام آباد میں لاک ڈاون کا نفاذ ۔۔۔۔۔ ڈپٹی کمشنر حمزہ شفقات کا اہم بیان سامنے آگیا 

 لاک ڈاون میں صرف دو دن رہ گئے ۔۔۔ لاری اڈوں پر پردیسیوں کا رش لگ گیا

 لاک ڈاون میں صرف دو دن رہ گئے ۔۔۔ لاری اڈوں پر پردیسیوں کا رش لگ گیا

عید الفطر کے موقع پر سی ویو اور ہاکس بے بند رکھنے کا فیصلہ

عید الفطر کے موقع پر سی ویو اور ہاکس بے بند رکھنے کا فیصلہ

شہبازشریف نے بیرون ملک جانے کیلئے پٹیشن دائر کردی

شہبازشریف نے بیرون ملک جانے کیلئے پٹیشن دائر کردی

وزیر تعلیم سے جامعات میں نیا سیمسٹر شروع کرنے کا مطالبہ

وزیر تعلیم سے جامعات میں نیا سیمسٹر شروع کرنے کا مطالبہ

کیا ہونے جارہاہے ؟فواد چوہدری کے بیان نے مخالفین پر سکتہ طاری کردیا

کیا ہونے جارہاہے ؟فواد چوہدری کے بیان نے مخالفین پر سکتہ طاری کردیا