02:00 pm
مسئلہ کشمیر کی72سالہ تاریخ 

مسئلہ کشمیر کی72سالہ تاریخ 

02:00 pm

مسئلہ کشمیر پر پا کستان اور بھا رت کے درمیان 1948 ء کی جنگ کے بعد بھا رت اس مسئلے کو اقوام متحدہ کی سلا متی کونسل میںلے گیا ۔ اقوام متحدہ نے سوچ بچا ر کے بعد اس پر یونائیٹڈ نیشن کمیشن آن انڈیا پاکستان (UNCIP ) بنا دیا تاکہ اس مسئلے کا کوئی پائیدارحل نکالا جا سکے ۔ UNCIPنے 5جنوری 1949ء کو ایک قر ارداد پاس کی جس میں کشمیریو ں کو یہ حق دیا گیا کہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ خود کریں۔ قر اد داد میں کہا گیا کہ یہ فیصلہ کرنے کے لیے کہ کشمیری پاکستان کے ساتھ الحاق چاہتے ہیں یا بھارت کے ساتھ ، اقوام متحدہ کے زیر انتظام ایک استصواب رائے کرایا جا ئے گا ۔
پنڈت جواہر لعل نہرو نے جو اس وقت بھارت کے وزیراعظم تھے UNCIPکی اس قرار داد کو تسلیم کیا اور بھارتی پارلیمنٹ میں اپنی تقر یر کے دوران یہ وعدہ کیا کہ وہ کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیں گے لیکن بعد میں بھارت نے ایسے حالات ہی پیدا نہیں ہونے دیئے کہ استصواب رائے کرایا جا سکے۔ اس وقت کے UNCIP کے چیف سراوون ڈکسن نے بھارت کے اس طرز عمل کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے استعفیٰ دے دیا ۔ اس کے بعد 1957ئمیں بھارتی حکومت نے ایک سازش کے ذریعے مقبوضہ کشمیر کی قانون ساز اسمبلی سے اپنے حق میں ایک قرارداد پا س کرالی اور یہ کہنا شروع کر دیا کہ کشمیر بھارت کا اٹوٹ انگ ہے۔ اقوام متحدہ نے اپنی قرارداد نمبر 91 اور122 کے ذریعے بھارت کے اس اقدام کو مستردکیا اور کہا کہ صرف اقوام متحدہ کے زیرانتظام استصواب رائے سے ہی مسئلہ کشمیر کا حل قبول کیا جا ئے گا۔ بھارتی حکومت نے اپنے آئین میں آرٹیکل 370کا اضافہ کر دیا جس کے تحت کشمیر کو ایک خصوصی حیثیت دے کر ایک ایسی ریاست بنا دیا گیا جس کا اپنا آئین اور اپنی مقننہ ہو گی۔ گزشتہ سات دہا ئیوں سے بھارت کشمیر کو اپنا اٹوٹ انگ تو کہتا آرہا ہے لیکن کسی بھارتی حکومت کو یہ جرات نہ ہو سکی کہ آئین کے آرٹیکل 370کو منسوخ کر سکے۔ اس کے بعد آرایس ایس کی انتہا پسند پا لیسیوں کو ماننے والی بی جے پی کی حکومت آگئی جس کے سربراہ نریندر مودی نے نہ صر ف آ ئین کے آ رٹیکل 370کو منسوخ کر کے کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کی بلکہ کشمیر کو انڈین یونین کا حصہ بھی قرار دے دیا جوکہ اقوام متحدہ کی قرا ر دادو ں کی صریحاََ خلا ف ور زی ہے ۔ آ ر ایس ایس کی فلاسفی ہند و توا کے اصولو ں پر مبنی ہے جو کہ بنیا دی طو ر پر مسلمانوں کے خلا ف ہے ۔ اس فلا سفی کے ما ننے والے بر صغیر پاک و ہند کی تقسیم چا ہتے ہی نہیں تھے ۔ آر ایس ایس اور بھا رت کی دیگر تحریکیں جن میں آ ریا سماج اور ہند و مہاسبھا شا مل ہیں مسلمانوں ، عیسا ئیوں اور بر طا نوی لو گوں کے بار ے میں یہ تصور رکھتے تھے کہ انہیں ہند وئوں پر زبر دستی مسلط کیا گیا ہے۔  آ ر ایس ایس کے ہندو سمجھتے ہیں کہ پا کستان ہند وئوں کی نر م اور لچکدار پا لیسیوں کی وجہ سے وجود میں آ یا ۔ آ ر ایس ایس نے  1965ء کی جنگ کے بعد خا ص طو ر پر مسلما نوں کے خلا ف نفرت پھیلانے کی مہم کو تیز کر دیا ۔
 آ ر ایس ایس اور اس کے سیا سی ونگ بی جے پی نے اپنی حریف جما عت کا نگریس کو بھی ان کی لچکدار پالیسیوں کی وجہ سے بد نا م کر نا شر وع کر دیا ۔ ان دنوں آ ر ایس ایس نے گا ئو  رکھشا کے نعرے کا خو ب استعمال کیا اور حکو مت پر پو را دبا ئو ڈالا کہ کشمیر کی خصو صی حیثیت کو ختم کرے ۔ آر  ایس ایس نے کا نگریس کے خلا ف مختلف اتحا دبنا نے شرو ع کر دیئے اور 1971ء میں ایک گرینڈ الا ئنس بنا یا جس نے 1977ء میں جنتا پا رٹی کے نا م سے شہر ت پا ئی ۔ 1977ء کے انتخابا ت میں جنتا پارٹی کو فتح حا صل ہو ئی جس نے آ ر ایس ایس کے  رہنما ئوں اٹل بہا ری وا جپا ئی ، ایل کے ایڈ وانی اور برج لعل ور ما کووفا قی وزا رتیں دے کر یہ موقع فراہم کیا کہ اپنے انتہا پسند اقدا ما ت نا فذ کر نے کے لیے ریا ست کی مشینری کو استعما ل کریں ۔ 1980ء میں اس پا رٹی نے اپنا نام بھا رتیہ جنتا پا رٹی (BJP) رکھ لیا ۔ اس کے ساتھ ہیBJPنے ایودھیا میں با بری مسجد کی جگہ رام مندر بنا  نے کی تحریک شر وع کر دی۔ با بری مسجد اور اس کے نتیجے میں ہو نے والے فسا دا ت نے مذہبی رنگ اختیار کرلیا  جس کی وجہ سے ہند و قو م پر ستی کھل کر سامنے آئی اور 1991,ء1989ء  اور 1996ء کے انتخابا ت میں بی جے پی کو کا میا بیا ں ملیں اور با لا ٓخر 2014ء میں گجرات کا قصائی نریندر مودی بھارت کا وزیراعظم بن گیا ۔ مودی نے حکومت میں آتے ہی پا کستا ن دشمنی کا نعرہ لگایا جس سے اس کی مقبولیت میں بے پناہ اضافہ ہوا اور وہ 2019ء کا الیکشن بڑی آسانی سے جیت گیا ۔ پانچ اگست 2019ء کو نریندر مودی نے کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کر کے ہندوئوں کے ساتھ اپنا دیرینہ وعدہ نبھایا ۔ اس کے ساتھ ہی کشمیر کو انڈین یونین کا حصہ قرا ر دے دیا گیا۔ بھارت کے یو م آزادی کے مو قع پر تقریر کر تے ہو ئے نریندر مو دی نے بڑے فخر سے کہاکہ میں نے 70دنوں میں وہ کچھ کر کے دکھا دیا ہے جو دو سرے رہنما 70سالوں میں نہیں کر سکے ۔ مودی نے کہا کہ میں نے ولابھائی پٹیل کا متحدہ بھا رت کا خو اب پو را کر دیا ہے۔ مودی کے کارنا مے یہیں پر ختم نہیں ہو تے۔ آسام میں   1.9   ملین بنگالی مسلمانوں کو آ سا م کی شہر یت سے فارغ کرنا بھی نریندر مو دی کا کا رنا مہ ہے۔
 نیشنل رجسٹریشن آ ف سویلین (NRC) سویلین امینڈ منٹ ایکٹ (CAA)، نئے ڈومیسائل قوا نین اور کشمیریو ں کی قتل و غا رت گری بھی نریند ر مودی کے سینے پر سجے ہو ئے تمغے ہیں جنہیں وہ بڑے فخر سے انتہا پسند ہندو ئوں کو دکھا تا ہے ۔ پانچ اگست 2019ء سے کشمیر ایک قید خانہ بن چکا ہے جہاں پر قابض بھا رتی فو ج ما روا ئے عدالت قتل غا رت گری، اغواء اور ریپ جیسے جرائم کا ارتکا ب کر رہی ہے لیکن ان کو کو ئی  پو چھنے والا نہیں کیونکہ ڈسٹربڈ ایریا ایکٹ ، آرمڈ فو رسز سپیشل پا ور ایکٹ (AFSPA)اور پبلک سیفٹی ایکٹ (PSA) جیسے کا لے قوانین  بھارتی فوج کو پورا قانونی تحفظ فرا ہم کرتے ہیں۔ کشمیر کی وادی میں خوف و ہراس کی فضا ء قائم ہے ۔ اقوام متحدہ کے کمیشن برائے  انسا نی حقوق اور بین الاقوامی میڈیا کی رپورٹوں کے مطا بق کشمیر میں بنیا دی انسا نی حقوق کی شدید پا ما لیاں ہو رہی ہے ۔ کشمیر کے حالات  بین الاقوا می برا دری کے لیے چیلنج بن چکے ہیں ۔کشمیر پر حما یت کی وجہ سے بھارت نے پاکستان کے خلا ف بھی مختلف محاذ کھو ل رکھے ہیں ۔ ایک طرف پاکستان کا نام ایف اے ٹی ایف کی بلیک لسٹ میں ڈلوا نے کے لیے بھارت ایڑی چو ٹی کا زو ر لگا رہا  ہے تو دو سری طرف ہمیں بد نا م کر نے کے لیے 15سال سے جھو ٹا پرا پیگنڈہ کر رہا ہے جس کو یورپین یو نین ڈس انفا رمیشن لیب نے حا ل ہی میں بے نقا ب کیا ہے جس کی رپو رٹ ’’  انڈین کرونیکلز‘‘کے نا م سے منظر عام پر آ چکی ہے ۔ بین الا قوامی برا دری اور اقوا م متحدہ کو چاہئے کہ بھارت کے جنگی جنو ن کو لگا م دینے کی کو شش کرے تاکہ کسی ناخوشگوا ر صورحال سے بچا جاسکے۔ 









































































































































 

تازہ ترین خبریں

 پشاور کے باچا خان ائیرپورٹ میں اچانک کیا ہوگیا ؟؟؟ ہر طرف کھلبلی مچھ گئی ۔۔۔ حالات خراب 

 پشاور کے باچا خان ائیرپورٹ میں اچانک کیا ہوگیا ؟؟؟ ہر طرف کھلبلی مچھ گئی ۔۔۔ حالات خراب 

 پرائیویٹ سیکٹر یونیورسٹیز پاکستان نے حکومت سے بروقت نیا سمسٹر شروع کرنے کا مطالبہ کردیا

 پرائیویٹ سیکٹر یونیورسٹیز پاکستان نے حکومت سے بروقت نیا سمسٹر شروع کرنے کا مطالبہ کردیا

حکومت کی پھرتیاں۔۔۔بین الصوبائی،انٹرسٹی اورٹورسٹ ٹرانسپورٹ پروقت سے پہلے ہی پابندی پابندی عائد کردی،

حکومت کی پھرتیاں۔۔۔بین الصوبائی،انٹرسٹی اورٹورسٹ ٹرانسپورٹ پروقت سے پہلے ہی پابندی پابندی عائد کردی،

 اگر ایمرجنسی پیدا ہوئی تو ہولی فیملی اہسپتال کو کرونا اہسپتال میں منتقل کر دیں گے۔۔ شیخ رشید احمد کا بڑا اعلان

اگر ایمرجنسی پیدا ہوئی تو ہولی فیملی اہسپتال کو کرونا اہسپتال میں منتقل کر دیں گے۔۔ شیخ رشید احمد کا بڑا اعلان

ایمازون نے پاکستان کو سیلر لسٹ میں شامل کر لیا

ایمازون نے پاکستان کو سیلر لسٹ میں شامل کر لیا

عمران خان صاحب اگر آپ نے جہانگیر ترین سے ہاتھ ملایا تو آپ کی جماعت کا تگڑا گروپ پی ٹی آئی کو خیر باد کہہ دے گا۔۔کپتان بری طرح پھنس گئے۔

عمران خان صاحب اگر آپ نے جہانگیر ترین سے ہاتھ ملایا تو آپ کی جماعت کا تگڑا گروپ پی ٹی آئی کو خیر باد کہہ دے گا۔۔کپتان بری طرح پھنس گئے۔

شفقت محمود نے 15جون کے بعد بورڈ کے امتحانات کا اعلان کردیا

شفقت محمود نے 15جون کے بعد بورڈ کے امتحانات کا اعلان کردیا

کراچی قرنطینہ سنٹر سے بیرون ملک آنے والا مسافر بھاگ گیا ۔۔ انتہائی بری خبر 

کراچی قرنطینہ سنٹر سے بیرون ملک آنے والا مسافر بھاگ گیا ۔۔ انتہائی بری خبر 

اسلام آباد میں لاک ڈاون کا نفاذ ۔۔۔۔۔ ڈپٹی کمشنر حمزہ شفقات کا اہم بیان سامنے آگیا 

اسلام آباد میں لاک ڈاون کا نفاذ ۔۔۔۔۔ ڈپٹی کمشنر حمزہ شفقات کا اہم بیان سامنے آگیا 

 لاک ڈاون میں صرف دو دن رہ گئے ۔۔۔ لاری اڈوں پر پردیسیوں کا رش لگ گیا

 لاک ڈاون میں صرف دو دن رہ گئے ۔۔۔ لاری اڈوں پر پردیسیوں کا رش لگ گیا

عید الفطر کے موقع پر سی ویو اور ہاکس بے بند رکھنے کا فیصلہ

عید الفطر کے موقع پر سی ویو اور ہاکس بے بند رکھنے کا فیصلہ

شہبازشریف نے بیرون ملک جانے کیلئے پٹیشن دائر کردی

شہبازشریف نے بیرون ملک جانے کیلئے پٹیشن دائر کردی

وزیر تعلیم سے جامعات میں نیا سیمسٹر شروع کرنے کا مطالبہ

وزیر تعلیم سے جامعات میں نیا سیمسٹر شروع کرنے کا مطالبہ

کیا ہونے جارہاہے ؟فواد چوہدری کے بیان نے مخالفین پر سکتہ طاری کردیا

کیا ہونے جارہاہے ؟فواد چوہدری کے بیان نے مخالفین پر سکتہ طاری کردیا