12:55 pm
 سیاست کا ایک اہم باب بند ہو گیا

 سیاست کا ایک اہم باب بند ہو گیا

12:55 pm

کرونا نے کون کون سے لوگوں کو ہم سے چھین لیا ۔مشہور معروف لوگوں کی خبروں کے ساتھ تصویریں بھی شائع ہوتی ہیں ۔لیکن بہت سے لوگوں کی صرف تعداد بتائی جاتی ہے۔ ان میں سے بھی میرے اندازے کے مطابق کئی گنا جانے والے ایسے لوگ ہیں جن کا شمار اخباروں میں شائع نہیں ہوتا۔چند دن پہلے بری امام ہاؤس میں امتیاز جنجوعہ  نے بتایا کہ حاجی نواز کھوکھر  کرونا کے مرض میں مبتلا ہو گئے ہیں اور ان پر مرض کابڑا ہی شدید اٹیک ہوا ہے۔دوسرے دن میں نے ان کے صاحبزادے سینیٹر مصطفی کھوکھر کو فون کرکے خیریت کا پوچھا اور ہسپتال آنے کی خواہش کا اظہار کیا تو انہوں نے بتایا کہ حاجی صاحب سے زیادہ چاچا جی امتیازکھوکھر (تاجی کھوکھر) کی طبیعت خراب   ہے۔ میں اب ان کے پاس جا رہاہوں میرے لئے تاجی کھوکھر کی بیماری نئی خبر تھی۔سوچا کل جاؤں گا اور دونوں بھائیوں کے پاس سے ہو آؤں گا۔رات سو گیا۔صبح سویرے آنکھ کھلی تو میرے پڑوس کی مسجد میں  تاجی کھوکھر کے انتقال کر جانے کا اعلان ہو رہا تھا۔وہ گردوں کے عارضہ میں مبتلا تھے اور کڈنی سنٹر میںزیر علاج تھے۔میں کبھی کبھی جانوروں کے شوق میں ان کے پاس حاضر ہوتا۔خوب گپ شپ ہوتی۔ان کی 5جنوری کو وفات ہوئی۔ان کے جنازے کا مجمع دیکھ کر محسوس ہوا کہ اللہ نے ان کے بشریٰ گناہ معاف کر دئیے ہوں گے۔ ان کی سخاوت زمانے میں مشہور  تھی۔پھر 6اور7جنوری کو بحریہ انٹرنیشنل ہسپتال میں  نواز کھوکھر  کی تیمارداری کے لئے حاضر ہوتا رہا۔ 8جنوری کو حاضر نہ ہو سکا۔9 جنوری کی سہ پہر پھر حاضر ہوا ۔حاجی صاحب کے تینوں بیٹے مصطفی نواز ،  عثمان نواز اور حسن نواز کھوکھر  ہسپتال میں ان کے کمرے میں موجود تھے۔مختلف ڈاکٹروں کی ٹیمیں حاجی نواز کھوکھر  کو دیکھنے آ رہی تھیں ۔میں تقریباً 8بجے تک ہسپتال میں موجود رہا ۔ ان کے صاحبزادگان سے تو ملاقات نہ ہو سکی باقی ان کے قریبی دوست باہر لان میں بیٹھے ہوئے تھے۔میں نے ڈاکٹروں کے آنے جانے اور ان کے صاحبزادوں کے اتنی دیر مسلسل ان کے کمرے میں موجود رہنے سے یہ اندازہ لگا لیا تھا کہ حاجی صاحب کی طبیعت زیادہ ہی خراب ہے۔بہرحال میں ہسپتال سے گھر تقریباً 9بجے پہنچا تو کچھ ہی دیر بعد فون آگیا کہ حاجی نواز کھوکھر اللہ کو پیارے ہو گئے ہیں ۔حاجی صاحب عمر میںچند سال مجھ سے بڑے تھے اور امتیاز کھوکھر المعروف تاجی کھوکھر مجھ سے عمر میں چھوٹے تھے۔میرے ان کے ساتھ تعلقات کی بڑی وجہ ان کی یہ خوبی تھی کہ یاتو وہ کسی کے دوست یا کسی کے دشمن تھے۔ کھوکھر برادران میں منافقت نام کی کوئی چیز نہیں تھی۔ اسی لئے ہماری دوستی اور محبت کے تعلقات چالیس سال تک قائم رہے۔ان کا کھرا پن ساری زندگی ان کے دوستوں میں اضافہ کرتا رہا۔
حاجی نواز کھوکھر سیاستدان ہونے کے ساتھ ساتھ بہت اچھے وکیل بھی تھے۔اگر وہ سیاست دان اور  وکیل نہ ہوتے تو بہت اچھے صحافی ہوتے۔میں اگران کے جوانی کے مشاغل کا احاطہ کروں تو اندازہ لگانا مشکل نہیں ہے کیونکہ ایک بہت بڑا مقبول جملہ ہے کہ انسان اپنی صحبت سے پہچانا جاتا ہے۔یہ مثال نواز کھوکھر کی شخصیت پر ٹھیک بیٹھتی ہے۔کسی زمانے میں راولپنڈی اسلام آباد میں تین مَلکوں کی دوستی بڑی مشہور ہوتی تھی اور یہ تینوں راولپنڈی صدر کے ہوٹل سلور گرل پر بیٹھ کرملکی حالات پر تبادلۂ خیال کرتے تھے۔ان کے اس محفل کے چوتھے مستقل دوست حاجی نواز کھوکھر ہوتے تھے۔ان تین مَلکوں میں ایک پروفیسر فتح محمد ملک جو ملک کے ممتاز دانشور تصور کئے جاتے ہیں وہ آج بھی ماشاء اللہ حیات ہیں اور ملک کا  سرمایہ ہیں ۔دوسرے زاہد ملک تھے جو ایک معروف بیوروکریٹ اور نظریاتی اخبار نویس تھے۔ جنہوں نے اس سے اپنے دو اخبار اردو اور انگریزی آبزرور نکالے اور کامیابی سے چلائے۔ تیسرے شورش ملک تھے ۔جس شخص کا یارانہ ایسی ادبی اور صحافتی شخصیات سے ہو ان کو سمجھنے میں یہ مشکل نہیں تھی کہ نواز کھوکھر کس ذہنیت کے مالک تھے۔ان تمام باتوں میں حیران کن بات یہ تھی کہ حاجی نواز کھوکھر ان تینوں مَلکوں سے کم و بیش دس سے پندرہ سال عمر میں چھوٹے تھے۔ یہ چیز اس طرف بھی اشارہ کرتی ہے کہ چھوٹی عمر کا شخص بڑا آدمی بننے کی صلاحیت رکھتا ہے اور ان صلاحیتوں کو بروئے کار لانے کے سارے طریقے اور گُر اپنے عہد کے بڑے لوگوں سے سیکھ رہا ہے۔ لیکن پھر قسمت کو کچھ اور ہی منظور تھا۔1985ء میں شورش ملک  نے  اخبار کی سروس چھوڑدی۔زاہد ملک  نے پہلے ہفتہ وار رسالہ شروع کیا جو بہت کامیاب ہوا پھر روزنامہ اخبار شروع کر دئیے وہ ان کے جھمیلوں میں پھنس گئے۔پروفیسر فتح محمد ملک جرمنی چلے گئے اس طرح یہ ٹولہ بکھر گیا اورحاجی نواز کھوکھر  کو مکمل طور پر سیاست نے گھیر لیا۔اسی دوران 1985ء میں جنرل ضیا ء الحق کے دور میں غیر جماعتی الیکشن کا اعلان ہوا۔اس الیکشن میں وفاقی دارالحکومت سے نواز کھوکھر صفِ اول کے کھلاڑی  بن کر میدان میں اترے اور نمایاں کامیابی حاصل کی۔الیکشن کے فوراً بعد ان کو ایک قتل کے جھوٹے مقدمے میں پھنسانے کی کوشش کی گئی۔لیکن برصغیر کی معروف روحانی شخصیت کی دعاؤں سے وہ کیس ختم ہو گیا۔اپنی نجی محفل میں نواز کھوکھر  ان ولی اللہ کی دعاؤں کا اکثر ذکر کیا کرتے تھے کہ یہ لوگ کس طرح ہتھیلی پر سرسوں جماتے ہیں ۔فرماتے کہ میں اس کے بعد دعاؤں کے اثر پر سخت اعتقاد رکھتا ہوں ۔1985ء میں سیاست میں آ جانے کے بعد اسلام آباد سے کئی بار ممبر قومی اسمبلی منتخب ہوئے۔وفاقی وزیر بنے،  ڈپٹی سپیکر منتخب ہوئے۔ میں آج تیسرے دن سے ان کی باتوں اور ملاقاتوں کو یاد کرتا ہوں تو دل بے اختیار یہ کہہ اٹھتا ہے کہ حاجی صاحب اتنی بھی کیا جلدی تھی؟ آپ تو وفاقی دارالحکومت میں سیاست کا ایک باب تھے ۔مجھے ان سے سینکڑوں ملاقاتوں کا موقع ملنے کے علاوہ متعدد بار سفر کرنے کا بھی موقع ملا۔وہ بہترین ہمدرد ،  دوست،  دھڑے باز اور پارٹی باز تھے۔جیسا کہ کالم میں ذکر کیا کہ ان میں سب سے بڑی دلیرانہ اور مردانہ خوبی یہ تھی کہ وہ یا تو کسی کے دوست تھے یا دشمن تھے،  منافقت اس پورے خاندان کی سرشت میں نہیں ہے اور یہ خوبیاں سینیٹر مصطفی کھوکھر میں بھی ہیں وہ بھی مضبوط ارادوں اور جرأت سے پیپلز پارٹی کے رہنماؤں کے ساتھ دوستی نبھا رہے ہیں ۔کھوکھر برادران کی سیاست کو وفاقی دارالحکومت کے علاقے کی سیاست سے کبھی بھی دور نہیں کیا جاسکے گا۔کھوکھر برادران کی اچانک موت سے جس قدر مجھے شدید دکھ ہوا اس کو لفظوں میں بیان کرنا شائد میرے لیے ممکن نہیں ۔کیونکہ میرے ان سے ذاتی اور قریبی تعلقات تھے۔حاجی نواز کھوکھر سے اتنے قریب تعلقات ہونے کی بڑی وجہ خادم اعلیٰ بری امام اور مانسر شریف کے راجہ صاحب تھے۔ ہم دونوں کی ان سے اندھی عقیدت تھی۔ہمارے درمیان گفتگو کا موضوع صحافت اور سیاست سے زیادہ تصوف ہوا کرتا تھا۔


 

تازہ ترین خبریں

ملک بھر میں سخت پابندی ۔۔۔ وفاقی حکومت نے صوبوں کو ہدایت جاری کردیں۔کیاہونےوالاہے؟پوری قوم کیلئے بڑی خبر

ملک بھر میں سخت پابندی ۔۔۔ وفاقی حکومت نے صوبوں کو ہدایت جاری کردیں۔کیاہونےوالاہے؟پوری قوم کیلئے بڑی خبر

 امریکامیں 2روزہ ماحولیاتی کانفرنس 2021کاآغازہوگیا ۔۔پاکستان کی بھی شرکت 

 امریکامیں 2روزہ ماحولیاتی کانفرنس 2021کاآغازہوگیا ۔۔پاکستان کی بھی شرکت 

پی ڈی ایم جماعتوں کی عیدالفطر کے بعد لانگ مارچ کی تیاری شروع

پی ڈی ایم جماعتوں کی عیدالفطر کے بعد لانگ مارچ کی تیاری شروع

دیر لگی مگر آخر کار ! وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار خوشی سے نہال ، پاکستانیوں کو زبردست خوشخبری سنا دی گئی

دیر لگی مگر آخر کار ! وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار خوشی سے نہال ، پاکستانیوں کو زبردست خوشخبری سنا دی گئی

کراچی میں لاک ڈاؤن۔۔ ٹرانسپورٹ پربھی پابندی۔۔۔ وزیرصحت سندھ کے اعلان نے عوام پر بجلیاں گرادیں

کراچی میں لاک ڈاؤن۔۔ ٹرانسپورٹ پربھی پابندی۔۔۔ وزیرصحت سندھ کے اعلان نے عوام پر بجلیاں گرادیں

گواد ر انٹرنیشنل ائیرپورٹ سے ترقی کے نئے دور کی شروعات ہوگی ۔۔۔ جام کمال کی اہم شخصیت سے ملاقات کے وقت بیان 

گواد ر انٹرنیشنل ائیرپورٹ سے ترقی کے نئے دور کی شروعات ہوگی ۔۔۔ جام کمال کی اہم شخصیت سے ملاقات کے وقت بیان 

صحافی نے تحریک انصاف کے وزیر سے سوال کیا تو انہوںنے ایسا جواب دیا کہ تمام پاکستانی ارتھ ہو کر  رہ گئے

صحافی نے تحریک انصاف کے وزیر سے سوال کیا تو انہوںنے ایسا جواب دیا کہ تمام پاکستانی ارتھ ہو کر رہ گئے

پارٹی ورکر ہوں کسی لوٹے کی بیٹی نہیں ، ن لیگ کو زبردست جھٹکا ، اہم ترین خاتون رہنما نے ن لیگ سے استعفیٰ دیدیا

پارٹی ورکر ہوں کسی لوٹے کی بیٹی نہیں ، ن لیگ کو زبردست جھٹکا ، اہم ترین خاتون رہنما نے ن لیگ سے استعفیٰ دیدیا

اسلام آباد پولیس کی ایک اور ذبردست کاروائی ۔۔۔۔ کار چوری میں ملوث منظم گینگ کے 5 کارچور گرفتارکرلئے گئے 

اسلام آباد پولیس کی ایک اور ذبردست کاروائی ۔۔۔۔ کار چوری میں ملوث منظم گینگ کے 5 کارچور گرفتارکرلئے گئے 

خیبر پختونخوا میں مزید 39 افراد جاں بحق ہوگئے ۔۔ انتہائی افسوس ناک خبر 

خیبر پختونخوا میں مزید 39 افراد جاں بحق ہوگئے ۔۔ انتہائی افسوس ناک خبر 

56 بچے متاثر ۔۔۔۔ شہراقتدار سے انتہائی بری خبر آگئی

56 بچے متاثر ۔۔۔۔ شہراقتدار سے انتہائی بری خبر آگئی

کورونا ڈیوٹی کرنے والے ڈاکٹر نے خود کشی کی ۔۔۔ وجہ کیا بنی ؟؟ انتہائی  ہوشربا انکشاف

کورونا ڈیوٹی کرنے والے ڈاکٹر نے خود کشی کی ۔۔۔ وجہ کیا بنی ؟؟ انتہائی ہوشربا انکشاف

اب عوام کو یہ چیز ہر صورت میں ملے گی ۔۔۔ وزیراعظم نے اہم اعلان کردیا

اب عوام کو یہ چیز ہر صورت میں ملے گی ۔۔۔ وزیراعظم نے اہم اعلان کردیا

خاتون کا ٹیکسی ڈرائیور پر وحشیانہ تشدد ۔۔۔۔ ویڈیو وائرل ہوگئی ۔۔۔۔ وجہ کیا بنی ؟؟ْ۔۔۔انتہائی دلچسپ خبر

خاتون کا ٹیکسی ڈرائیور پر وحشیانہ تشدد ۔۔۔۔ ویڈیو وائرل ہوگئی ۔۔۔۔ وجہ کیا بنی ؟؟ْ۔۔۔انتہائی دلچسپ خبر