12:50 pm
سیاست دانوں کی لڑائیاں، سَرمَستیاں!

سیاست دانوں کی لڑائیاں، سَرمَستیاں!

12:50 pm

 ٭الیکشن کمیشن کا کراچی میں بھی الیکشن کے نتائج روکنے کا موج میلہ، یہاں بھی دوبارہ انتخابات کا امکان! کراچی میںایسے کرتب دکھائے کہ سیاسی پارٹیاں ایک دوسرے کے خلاف لعن طعن پراتر آئیں
 ٭الیکشن کمیشن کا کراچی میں بھی الیکشن کے نتائج روکنے کا موج میلہ، یہاں بھی دوبارہ انتخابات کا امکان! کراچی میںایسے کرتب دکھائے کہ سیاسی پارٹیاں ایک دوسرے کے خلاف لعن طعن پراتر آئیں، بدزبانی کی انتہا! ذرا جے یو آئی کے نئے سیکرٹری اطلاعات مولانا حمد اللہ کے ریمارکس سُنئے اور سر دُھنیے! فرمایا ہے کہ ’’پیپلزپارٹی بیک وقت تین قوتوں پی ٹی آئی، باپ و خلائی مخلوق کے نکاح میں آ گئی ہے۔ (باپ: بلوچستان عوامی پارٹی) پیپلزپارٹی میں بھٹو ازم ختم ہو چکا، اب یہ بچہ زرداری پارٹی بن گئی! پیپلزپارٹی کو نیا سیاسی باپ مبارک ہو! مولانا فضل الرحمن کے بارے میں صحیح زبان استعمال کی جائے ورنہ بات بہت دور تک جائے گی!‘‘ باقی باتیں تو اپنی جگہ مگر کسی ’عورت‘ کو بیک وقت تین خاوند رکھنے کی بات تو صحیح گالی سمجھی جاتی ہے۔ مگر پیپلزپارٹی والے بھی کون سی مہذبانہ زبان بول رہے ہیں! المیہ یہ ہے کہ اوپر ایسی باتیں ہوتی ہیں تو نیچے درجہ دوم، سوم والے سیاست دانوں کو بھی منہ پھاڑ کر بدزبانی کی شہ مل جاتی ہے۔ دو شہروں سیالکوٹ اور مظفر گڑھ میں سرکاری افسروں کے ساتھ سرکاری سیاست دانوں کی بدکلامی (خَرمَستیاں!) دیکھئے!
پنجاب کی غیر منتخب معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان ہر اتوار سیالکوٹ میں گزارتی ہیں، صبح ناشتہ کے بعدپریس کانفرنس ضروری ہوتی ہے۔ ٹیلی ویژنوں پر اتوار کے روز بھی تصویر آ جاتی ہے۔ اس اتوارکو گھر سے باہر بھی شان و شوکت دکھانے کا شوق آیا۔ ایک رمضان بازار میں جا نکلیں۔ خاتون اسسٹنٹ کمشنر ’سونیا صدف‘ کو بازار میں اور صحافیوں کو بازار میں طلب کر لیا۔ ایک بیان شہباز شریف کے خلاف دیا کہ جیل سے اٹھ کر ایئرکنڈیشنڈ ڈرائنگ روم میں آ کر الیکٹرانک ووٹنگ کی مخالفت کر رہے ہیں۔ اس دوران رمضان بازار میں خاتون اسسٹنٹ کمشنر سونیا صدف پر برس پڑیں کہ بازار میں ناقص پھل فروخت ہو رہے ہیں۔ تم کس بات کی تنخواہ لے رہی ہو؟ ابتدا میں یہ الفاظ سامنے آئے کہ ’’کس بے غیرت نے تمہیں یہاںلگایا ہے؟‘‘ اسسٹنٹ کمشنر بھی غصے میں آ گئیں کہ زبان کا لہجہ درست کریں۔ وہ بازار چھوڑکر چلی گئیں۔ ان افسروںکی تقرریاں چیف سیکرٹری کے دفتر سے کی جاتی ہیں۔ چیف سیکرٹری کے لئے ’’بے غیرت‘‘ کا لفظ ناقابل برداشت تھا۔ اخباری خبروں کے مطابق اسی دوران مظفر گڑھ میں پی ٹی آئی کا ایم پی اے ’خرم لغاری‘ وہاں کے اسسٹنٹ کمشنر ارشد ورک جتوئی پر برس پڑا۔ فون پرحکم دیا کہ رمضان بازار میں اس کا استقبال کیا جائے۔ اس نے کہا کہ ’’آپ جا کر دورہ کر لیں۔ میری کون سی آپ سے لڑائی ہے۔‘‘ اس پر ایم پی اے گرم ہو گیا اور کہا کہ لڑنا چاہتے ہوتو بتائو کہاں آنا ہے؟ ساتھ ہی اعلان کیا کہ میں جوان ہوں، اسسٹنٹ کمشنر بڈھا ہے، لوگ کہیں گے بڈھا مار کھا کر آ گیا۔‘‘ ایم پی اے نے مزید اضافہ کیا کہ اسسٹنٹ کمشنر بازار کے ٹھیکیداروں سے پانچ فیصد کمیشن لے رہا ہے! اسسٹنٹ کمشنر نے ایک جملے میں بات نمٹا دی کہ ’’کمیشن کا جھوٹا الزام لگانے والے پرلعنت‘‘۔ فردوس عاشق اور خرم لغاری کی یہ بدزبانیاں چیف سیکرٹری تک پہنچیں تو وہ بھی جلال میں آ گیا۔ اپنے ماتحت افسروں کا تحفظ اس کا اصولی فرض ہے۔ اس نے ان دونوں کی ’’فرعونیت‘ کی وزیراعلیٰ سے شکائت کر دی ہے۔ مگر اس شکائت کا فائدہ؟ وزیراعلیٰ کو کرسی بچانے کے لئے اس وقت ایک ایک ووٹ کی ضرورت ہے۔ موصوف کا تعلق جنوبی پنجاب سے ہے، جنوبی پنجاب کے ایم پی اے کو کیسے ناراض کیا جا سکتا ہے؟؟
٭کراچی کے ضمنی انتخابات میں پی ٹی آئی کی پہلے نمبر سے پانچویں نمبر تک تنزلی عبرت ناک ہے۔ ذرا ایک بار پھر انتخابی نتائج پر نظر! خبروںکے مطابق پیپلزپارٹی قادر مندوخیل 16156، ن لیگ مفتاح اسماعیل 15473، تحریک لبیک نذیر احمد 11125، پاک سرزمین کے مصطفی کمال 9227 تحریک انصاف کے امجد آفریدی 8922 اور ایم کیو ایم کے محمد مرسلین کو 7511 ووٹ ملے! گویا تحریک انصاف کو پیپلزپارٹی سے 7234، ن لیگ سے 6556، تحریک لبیک سے 2203 اورپاک سرزمین سے 305 ووٹ کم ملے ہیں۔ اب ن لیگ تو پیپلزپارٹی سے الجھ سکتی ہے صرف 683 ووٹوں کا فرق ہے مگر تحریک انصاف؟ تحریک لبیک سے بھی کہیں نیچے!! ایک میراثی کا بیٹا امتحان میں فیل ہو گیا۔ باپ نے وجہ پوچھی، بیٹے نے کہا کہ میں کلاس میں آخری بنچ پربیٹھتا تھا، ٹیچر نمبر بانٹنے لگا تو آخری بنچ تک آتے آتے سارے نمبر ختم ہو گئے تھے، ٹیچر نے کہا ہے کہ اگلے برس مجھے اگلے بنچوں پر بٹھائے گا پھر فیل نہیں ہوں گا!
٭ بھارت میں الٰہ آباد کے مقام پر 45 مربع کلو میٹر میں پھیلا ہوا 70 لاکھ ہندو یاتریوں کا بارہ سال بعد ہونے والا کنبھ میلہ وسیع پیمانہ پر کرونا پھیلا کر بالآخر ختم ہو گیا۔ یہ میلہ 15 جنوری سے شروع ہوا تھا۔ اس وقت تک بھارت میں کرونا بہت پھیل چکا تھا۔ عالمی ماہرین نے وزیراعظم نریندر مودی کو یہ میلہ روکنے کا مشورہ دیا مگر الٹا اثر ہوا۔ الٰہ آباد مودی کا انتخابی حلقہ ہے، میلہ روکنے کی بجائے خود اس میں شامل ہونے چلا گیا۔ الٰہ آباد میں تین دریا گنگا، جمنا اور سرسوتی آپس میں ملتے ہیں۔ ہندو ان تینوں کو مقدس قرار دیتے ہیں۔ الٰہ آباد کی ہائی کورٹ ان دریائوں کو  ’’مقدس انسان‘‘ قرار دے چکی ہے۔ ہندوئوں کے نزدیک ان دریائوں میں اشنان (غسل) کرنے سے ان کے پاپ جھڑ جاتے ہیں اور وہ نیا جنم لینے سے بچ جاتے ہیں! میلے کی انتظامیہ نے اس بار تین کروڑ یاتریوں کی آمد کی پیش گوئی کی تھی مگر کرونا کے باعث ’’صرف 70 لاکھ‘‘ آئے اور دریا میں ڈبکیاں لگائیں۔ مرد لوگ تو صرف لنگوٹی یا دھوتی باندھ کر نہائے مگر عورتیں مکمل میک اپ اور پورے لباس کے ساتھ پانی میں غوطے لگاتی ہیں۔ اس موقع پر سرکاری طور پر ایک لاکھ 20 ہزار غسل خانے تعمیر کئے گئے، 40 ہزار لائٹیں لگائی گئیں، 9000 خاکروب صفائی کرتے رہے (ساری گندگی دریا میں جاتی رہی) اور سرکاری طور پر 40 پولیس سٹیشن اور 30 ہزار پولیس افسر اور اہلکار مسلسل تین ماہ ڈیوٹی دیتے رہے۔ مودی سرکار نے خود اس محلے کی حفاظت کی! اور … اور…دوسری طرف مسلمانوں کے اجتماعات، جمعہ، تراویح پر سخت پابندیاں لگا دیں! مودی کی اس ہندو نوازی پر ملک میں کرونا کے نئے مریضوں کی تعداد ہفتہ کے روز چار لاکھ ایک ہزار تک بڑھ گئی۔ روزانہ تقریباً چار لاکھ نئے مریض!! قیامت اور کیا ہوتی ہے؟ اوپر سے مودی سرکار کو مغربی بنگال، تامل ناڈو اور کیرالہ میں بری طرح شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ صرف آسام میں، اتحاد کے ساتھ اور سب سے چھوٹی ’پانڈی چری‘ ریاست میں کامیابی ہوئی ہے!!
٭وزیراعظم عمران خان  نے کسی پروٹوکول کے بغیر خود گاڑی چلا کر اسلام آباد مارکیٹوں کا دورہ کیا۔ سرکاری ترجمان تعریفیں کرتے رہ گئے اور ٹیلی ویژنوں نے ایک مارکیٹ کا دورہ رکھا دیا، تمام دکاندار تمام گاہک سب غائب! بالکل سنسان مارکیٹ!! ’مرزا صاحباں‘ کا لوک گیت یاد آیا کہ گلیاں ہو جان سُنجیاں!!‘‘ باقی مصرع قارئین خود مکمل کر لیں!
٭بے شمار دعائیں مانگی گئیں مگر اللہ تعالیٰ کو جو منظور تھا وہ ہو کر رہا۔ روزنامہ اوصاف لاہور کے جائنٹ ایڈیٹر مبشر الماس صاحب کے والد صاحب طویل عرصہ زیر علاج رہنے کے عہد بالآخر ابدی سفر پر روانہ ہو گئے! اِنّا لِلّٰہ و اِنا الیہ راجعون۔ جڑانوالہ میں تدفین ہو گئی۔ قارئین کرام سے دُعائے مغفرت کی اپیل ہے۔
 

 

تازہ ترین خبریں

یا اللہ رحم۔۔کراچی میں شدید بارشیں اور آندھی۔۔کتنے افراد جاں کی بازی ہار گئے۔۔ خبر نے دل چیر دیئے

یا اللہ رحم۔۔کراچی میں شدید بارشیں اور آندھی۔۔کتنے افراد جاں کی بازی ہار گئے۔۔ خبر نے دل چیر دیئے

نفیسہ شاہ اور شیریں مزاری آمنے سامنے۔۔۔۔  ایک دوسرے پر نقل کرنے کا الزام لگادیا

نفیسہ شاہ اور شیریں مزاری آمنے سامنے۔۔۔۔  ایک دوسرے پر نقل کرنے کا الزام لگادیا

عمران خان نے ریحام خان سے جان چھڑوانے کےلئے جہانگیر ترین سے مدد مانگی تھی

عمران خان نے ریحام خان سے جان چھڑوانے کےلئے جہانگیر ترین سے مدد مانگی تھی

 سندھ سے انتہائی بری خبر ۔۔۔۔۔ 11 افراد جاں بحق ہوگئے 

 سندھ سے انتہائی بری خبر ۔۔۔۔۔ 11 افراد جاں بحق ہوگئے 

امتحانات دینے والے طلبا کیلئے خوشخبری ۔۔۔۔ تعلیمی بورڈز کا اہم فیصلہ

امتحانات دینے والے طلبا کیلئے خوشخبری ۔۔۔۔ تعلیمی بورڈز کا اہم فیصلہ

جہانگیر ترین ایک مرتبہ پھر سرگرم ۔۔۔۔۔ہم خیال اراکین پارلیمنٹ کیلئے عشائیہ کا اہتمام ۔۔ پی ٹی آئی اراکین کی آمد کا سلسلہ جاری

جہانگیر ترین ایک مرتبہ پھر سرگرم ۔۔۔۔۔ہم خیال اراکین پارلیمنٹ کیلئے عشائیہ کا اہتمام ۔۔ پی ٹی آئی اراکین کی آمد کا سلسلہ جاری

ذاتی رنجش پر مخالفین نے زمیندار کی بھینس کر زہردے کر مار ڈالا

ذاتی رنجش پر مخالفین نے زمیندار کی بھینس کر زہردے کر مار ڈالا

ماروی سرمد کے حیران کن ماضی سے پردہ اٹھا دینے والی تحریر

ماروی سرمد کے حیران کن ماضی سے پردہ اٹھا دینے والی تحریر

پی ڈی ایم کو دوبارہ فعال کرنے کی تیاریاں

پی ڈی ایم کو دوبارہ فعال کرنے کی تیاریاں

پاکستانیوں کیلئے ایک اوربڑی خوشخبری۔۔صوبہ بلوچستان میں گیس کے نئے ذخائر دریافت کرلیے گئے۔

پاکستانیوں کیلئے ایک اوربڑی خوشخبری۔۔صوبہ بلوچستان میں گیس کے نئے ذخائر دریافت کرلیے گئے۔

امتحانات دینے والے طلبا کیلئے خوشخبری ۔۔۔۔ تعلیمی بورڈز کا اہم فیصلہ 

امتحانات دینے والے طلبا کیلئے خوشخبری ۔۔۔۔ تعلیمی بورڈز کا اہم فیصلہ 

رنگ روڈ میگا سیکنڈل پر پیپلزپارٹی نے وزیراعظم سمیت اسکینڈل میں ملوث وزراء سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کر دیا

رنگ روڈ میگا سیکنڈل پر پیپلزپارٹی نے وزیراعظم سمیت اسکینڈل میں ملوث وزراء سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کر دیا

جہانگیر ترین ایک مرتبہ پھر سرگرم ۔۔۔۔۔ہم خیال اراکین پارلیمنٹ کیلئے عشائیہ کا اہتمام ۔۔ پی ٹی آئی اراکین کی آمد کا سلسلہ جاری

جہانگیر ترین ایک مرتبہ پھر سرگرم ۔۔۔۔۔ہم خیال اراکین پارلیمنٹ کیلئے عشائیہ کا اہتمام ۔۔ پی ٹی آئی اراکین کی آمد کا سلسلہ جاری

سابق وزیراعظم نواز شریف کی ضبط شدہ جائیدادوں کو نیلام کرنے کا فیصلہ۔۔۔بولی کی تاریخ بھی مقر ر 

سابق وزیراعظم نواز شریف کی ضبط شدہ جائیدادوں کو نیلام کرنے کا فیصلہ۔۔۔بولی کی تاریخ بھی مقر ر