01:15 pm
مومن کی یہ پہچان کہ گم اس میں ہیں آفاق

مومن کی یہ پہچان کہ گم اس میں ہیں آفاق

01:15 pm

(گزشتہ سے پیوستہ)
ایرانی نژادامریکی اسکالرحسن نصرنے تین قرآن کا تصور پیش کیاجس میں مصنف نے نفس انسانی کوبھی قرآن قراردیاکیونکہ قرآن کہتاہے"ہم ان کو اپنی آیات دکھائیں گے ان کے انفس میں اورآفاق میں نفس انسانی میں اٹھنے والے خیالات و دلائل کوقرآن نے آیات قراردیاہے اسی لیے اقبال نے مومن کے متعلق فرمایا’’قاری نظرآتاہے حقیقت میں ہے قرآن‘‘۔المختصرقرآن کے نکتہ نظرسے علم حقیقی وہ ہے جس کااثبات قرآن،کائنات اورنفس انسانی سے ہو۔آیات خواہ قرآن کی ہوں یا مظاہر کائنات میں بکھری ہوئی۔ یا نفس انسانی کے تموج سے اٹھنے والے خیالات کا ہیولی ہوں انہیں باعتبار شدت معنویت چاردرجوں میں تقسیم کیاگیا ہے ۔ پہلا درجہ آیات کاہے انہیں سمجھا بھی جاسکتاہے یانہیں بھی سمجھاجاسکتا۔ بارش،صبح شام،دن اور رات آیات ہیں غورکریں تومعنویت سے بھرپور ہیں  ورنہ معمول۔دوسرادرجہ بینات کاہے،غلط یا صحیح  ان کادراک ضروری ہوتاہے مثلازلزلے طوفان وغیرہ۔ تیسرادرجہ برہان کاہے یہ وہ آیات ہیں جوانسان کی نفسیات کوگہری سطح پر متاثرکیے بغیر نہیں رہتیں۔ قرآن کوبحیثیت مجموعی ’’برہان‘‘ کہا گیاہے۔چوتھا درجہ ان آیات کاہے جوشدت معنویت اورزور بیان سے سننے والے کوناک کے بل گرادیں۔ مثلاًاے گروہ جن وانس!کیاتم زمین وآسمان کے پردوں سے باہرنکلناچاہوتونکل سکتے ہو؟ 
قرآن ِ کریم کی حقانیت کی ایک واضح دلیل اس کااعجازہے یعنی قرآن ایک ایساکلام ہے جس کی نظیرپیش کرناانسانی قدرت سے باہر ہے، اسی  وجہ سے اس کوسرورِکونینﷺ کاسب سے بڑامعجزہ کہاجاتاہے۔خلوصِ دل کے مطالعہ سے یہ واضح ہوجاتاہے کہ یہ یقینااللہ تعالیٰ ہی کا کلام ہے،اورکسی بشری ذہن کااس میں کوئی دخل نہیں۔ قرآن کی فصاحت وبلاغت اورکلام کی سحرانگیزی ایک ایسی صفت ہے جس کا تعلق سمجھنے اور محسوس کرنے سے ہے،اورپوری حقیقت وماہیت کوالفاظ میں بیان کرناممکن نہیں،آپ تلاش و جستجو اوراستقراکے ذریعہ فصاحت وبلاغت کے اصول وقواعدمقررفرماسکتے ہیں لیکن درحقیقت ان اصول وقواعد کی حیثیت فیصلہ کن نہیں ہوتی، کسی کلام کے حسن وقبح کاآخری فیصلہ ذوق اور وجدان ہی کرتا ہے،جس طرح ایک حسین چہرے کی کوئی جامع ومانع تعریف نہیں کی جاسکتی،جس طرح ایک خوش رنگ پھول کی رعنائیوں کوالفاظ میں محدودنہیں کیاجاسکتا،جس طرح مہکتی ہوئی مشک کی پوری کیفیت بیان کرناممکن نہیں،جس طرح ایک خوش ذائقہ پھل کی لذت وحلاوت الفاظ میں نہیں سما سکتی،اسی طرح کسی کلام کی فصاحت وبلاغت کوتمام وکمال بیان کردینا بھی ممکن نہیں لیکن جب کوئی صاحبِ ذوق انسان اسے سنے گا تو اس کے محاسن واوصاف کاخودبخودپتاچل جائے گا۔ دوسری یہ کہ کسی کلام کا حسن اورفصاحت وبلاغت کااندازہ اس کلام کی زبان کوسمجھے بغیر نہیں  لگایاجاسکتا،اس لیے فصاحت وبلاغت کے معاملے میں ذوق بھی صرف اہلِ زبان کامعتبرہے، کوئی شخص کسی غیرزبان میں خواہ کتنی مہارت حاصل کر لے  لیکن ذوقِ سلیم کے معاملے میں وہ اہلِ زبان کاکبھی ہمسرنہیں ہو سکتا۔
ازمانہ جاہلیت کے اہلِ عرب پر نظر دوڑائیں تو وہ خطابت اورشاعری کے بامِ عروج پرتھے، عربی شعروادب کافطری ذوق ان کے بچے بچے میں سمایاہواتھا،فصاحت وبلاغت ان کی رگوں میں خونِ حیات بن کردوڑتی تھی،ان کی مجالس کی رونق،ان کے میلوں کی رنگینی،ان کے فخروناز کا سرمایہ  اوران کی نشرواشاعت کا ذریعہ سب کچھ شعروادب تھااورانہیں اس پراتناغرورتھاکہ وہ اپنے سواتمام قوموں کو’’عجم‘‘یعنی گونگا کہا کرتے  تھے۔ایسے ماحول میں ایک امی(جناب محمدﷺ)  ایک کلام پیش کرکے اعلان کرتاہے کہ یہ اللہ کاکلام ہے،اس کے غیرانسانی کلام ہونے کی دلیل کے طورپرایک چیلنج بھی دیتاہے: اگر تمام انسان اور جِنات مل کراس قرآن جیسا (کلام) پیش کرناچاہیں تواس جیساپیش نہیں کرسکیں  گے،خواہ وہ ایک دوسرے کی کتنی مدد کیوں  نہ کریں۔(الاسراء:88)
یہ چیلنج کوئی معمولی بات نہ تھی۔یہ دعویٰ اس کی طرف سے تھاجس نے کبھی وقت کے مشہورادباء اورشعرا ء سے کوئی علم حاصل نہ کیا تھا، کبھی مشاعرے کی محفلوں میں کوئی ایک شعربھی نہیں پڑھاتھا،اورکبھی کاہنوں کی صحبت بھی نہ اٹھائی تھی، خودشعرکہنا تودرکنار، اسے دوسرے شعرا کے اشعار تک یادنہیں تھے،پھریہ اعلان ایسا سچا ثابت ہوا کہ ان کے آبائی دین کی ساری عمارت منہ کے بل گِرپڑی،اوران کی صدیوں پرانی رسوم وروایات کاساراپلندہ پیوندِزمین ہوگیاکیونکہ یہ کلام ایک دین بھی پیش کررہاتھا،اس لیے یہ اعلان درحقیقت ان کی ادبی صلاحیتوں کوایک زبردست چیلنج تھا،یہ ان کے دین ومذہب پرایک کاری وار تھا، یہ ان کی قومی حمیت کے نام مبازرت کاایک پیغام تھا،یہ ان کی غیرت کوایک للکارتھی،جس کا جواب دئیے بغیرکسی غیورعرب کے لئے  چین سے بیٹھنا ممکن نہیں تھا،لیکن ہواکیا؟اس اعلان کے بعدان آتش بیان خطیبوں اورشعلہ نواشاعروں کی محفل میں سناٹاچھاگیا،کوئی شخص اس چیلنج کو قبول کرنے کے لئے  آگے نہ بڑھا،کچھ عرصہ کے بعد قرآن کریم نے پھراعلان فرمایا: 
اوراگرتم کواس کتاب کے بارے میں ذرا  بھی شک وشبہ ہے جوہم نے اپنے بندے پرنازل کی ہے تواس جیسی ایک سورت(ہی)بنالاؤ ، اگرتم سچے ہو،اوراللہ کے سواتمہارے جتنے حمایتی ہیں ان سب کوبلالوپھربھی اگرتم ایسانہ کرسکے،اوریقین ہے کہ ہرگزنہ کرسکوگے،توپھراس آگ سے ڈرو جس کاایندھن انسان اورپتھرہوں گے، وہ کافروں کے لئے  تیارکی گئی ہے ۔
اس پربھی بدستورسکوت طاری رہا، اور کوئی شخص اس کلام کے مقابلے میں چندجملے بھی بناکر نہ لاسکا،سوچنے کی بات ہے کہ جس قوم کی کیفیت یہ ہوکہ اگراسے یہ معلوم ہوجائے کہ دنیا کے آخری حصے پرکوئی شخص اپنی فصاحت وبلاغت پر غیرمعمولی گھمنڈرکھتاہے،تووہ اس پرتنقیدکرنے اور اپنے اشعارمیں اس پرچوٹیں کسنے سے بازنہ رہ سکتی تھی،اس بات کاکیسے تصور کیا  جا سکتاہے کہ وہ قرآن کے ان مکررسکرر اعلانات کے بعدبھی چپکی بیٹھی رہے،اوراسے دم مارنے کی جرات نہ ہو؟ اس بات کی کوئی تاویل اس کے سوانہیں ہوسکتی کہ فصاحت وبلاغت کے سورماقرآن کریم کامقابلہ کرنے سے عاجزآچکے تھے ۔  انہوں نے آنحضرت ﷺ کوزک پہنچانے کے لئے  ظلم وستم کاتوکوئی طریقہ نہیں چھوڑا، آپﷺؓ کوستایا، مجنوں ، جادوگر، شاعر اور کاہن  کہا لیکن ان سے اتنانہیں ہوسکا کہ قرآن کے مقابلے میں چندجملے پیش کردیتے۔ پھرصرف یہی نہیں کہ یہ شعلہ بیان خطیب اورآتش نوا شاعر قرآن کریم کا مقابلہ نہیں کرسکے بلکہ ان میں سے بہت سے لوگوں نے اس کلام کی حیرت انگیز تاثیرکاناچاہتے ہوئے بھی اعتراف کیا۔امام حاکم اور بیہقی نے قرآن کریم کے بارے میں ولید بن مغیرہ کے یہ الفاظ نقل کیے ہیں:’’خدا کی قسم ،جویہ کلام بولتے ہیں اس میں بلاکی شیرینی اوررونق ہے، یہ کلام غالب ہی رہتا ہے، مغلوب نہیں ہوتا‘‘۔
یہ توتھاقرآن کاتصورعلم،جہاں تک تصور تعلیم کاتعلق ہے وہ یہ ہے کہ قرآن، کائنات  اور نفس انسانی سے اٹھنے والی آیات سے ایک جامع ’’نظام اخلاق‘‘کشیدکیاجائے جوثابت وسیار ہو۔ اس میں کچھ دائمی اصول بھی ہیں اورکچھ زندگی کے تغیرکاساتھ دینے والے پہلو بھی۔اس نظام اخلاق کانفاذکتنی بڑی ذمہ داری ہے؟حضرت حسینؑ کے دل سے پوچھئے!جس سے پہاڑلرزگئے تھے، زمین اور آسمان نے ہاتھ جوڑلیے تھے۔ مگرغالب اپنے فارسی اشعارمیں کہہ رہے ہیں ’’آ!کہ آسمان کاقاعدہ بدل دیں یعنی زمانے کو آسمان کی گردش کے بجائے اپنی مرضی کے تابع کرلیں اوررطل گراں یعنی پیالہ عشق کی گردش سے قضاوقدرکارخ موڑڈالیں یعنی اسے اپنی مرضی پرڈھال دیں‘‘۔
کافرکی یہ پہچان کہ آفاق میں گم ہے
مومن کی یہ پہچان کہ گم اس میں ہیں آفاق
 

تازہ ترین خبریں

سارہ انعام قتل کیس ۔۔۔عدالت نے ایاز امیر کو مقدمے سے خارج کرنے کا حکم دے دیا

سارہ انعام قتل کیس ۔۔۔عدالت نے ایاز امیر کو مقدمے سے خارج کرنے کا حکم دے دیا

بس اتنا ہی۔۔۔!!! اسحاق ڈارکی نااہلی کے لیے دائر درخوا ست۔۔۔درخواست گذارنے واپس لے لی

بس اتنا ہی۔۔۔!!! اسحاق ڈارکی نااہلی کے لیے دائر درخوا ست۔۔۔درخواست گذارنے واپس لے لی

مریم اورنگزیب سے بد تمیزی کرنے والوں کو ایسے سبق سکھائیں گے۔۔۔ن لیگی رہنما عطا تارڑنےغصے میں انتقامی اعلان کر دیا

مریم اورنگزیب سے بد تمیزی کرنے والوں کو ایسے سبق سکھائیں گے۔۔۔ن لیگی رہنما عطا تارڑنےغصے میں انتقامی اعلان کر دیا

منافق۔۔۔عوام کے سامنے سستا سستا کے ڈھول پیٹنے والے فون پر مہنگائی کرنے کو کہتے ہیں ۔۔۔شیخ رشید نے حکومت کو نشانے پر رکھ لیا

منافق۔۔۔عوام کے سامنے سستا سستا کے ڈھول پیٹنے والے فون پر مہنگائی کرنے کو کہتے ہیں ۔۔۔شیخ رشید نے حکومت کو نشانے پر رکھ لیا

تلاشی پردسویں جماعت کی طالبہ کے بیگ سے ایسی چیز نکلی کہ دیکھنے والے سب ہکا بکارہ گئے، دیکھیں ویڈیو

تلاشی پردسویں جماعت کی طالبہ کے بیگ سے ایسی چیز نکلی کہ دیکھنے والے سب ہکا بکارہ گئے، دیکھیں ویڈیو

آڈیولیکس کیس ،آئی ایس آئی اور آئی بی کی ابتدائی تفشیش مکمل ، معاملہ سنجیدہ و گمبھیرہو گیا،کونسے نئے انکشافات ہوئے؟جانیں

آڈیولیکس کیس ،آئی ایس آئی اور آئی بی کی ابتدائی تفشیش مکمل ، معاملہ سنجیدہ و گمبھیرہو گیا،کونسے نئے انکشافات ہوئے؟جانیں

پاکستانیوں نے سر پیٹ لیا۔۔۔ مہنگائی طوفان نا قابل یقین حد تک بڑھ گیا۔۔۔ اشیاءکی قیمتوں میں بے پناہ اضافہ

پاکستانیوں نے سر پیٹ لیا۔۔۔ مہنگائی طوفان نا قابل یقین حد تک بڑھ گیا۔۔۔ اشیاءکی قیمتوں میں بے پناہ اضافہ

ڈار نے آتے ہی ڈالر کے پر کاٹ گئے، امریکی کرنسی میں ڈھیر، روپے نے کہیں کا نہ چھوڑا، قیمت میں بڑی کمی

ڈار نے آتے ہی ڈالر کے پر کاٹ گئے، امریکی کرنسی میں ڈھیر، روپے نے کہیں کا نہ چھوڑا، قیمت میں بڑی کمی

افسوسناک واقعے نے پورے خاندان کو موت کی نیند سلا دیا،جاں بحق ہونےوالوں میں 4بچے اور خاتون بھی شامل ،11زخمی

افسوسناک واقعے نے پورے خاندان کو موت کی نیند سلا دیا،جاں بحق ہونےوالوں میں 4بچے اور خاتون بھی شامل ،11زخمی

 فنڈز کی کمی کا بہانہ، حکومت نے کیا کیا ختم کروانے کی کوشش کی ۔۔۔ مریم نواز اور وزیر اعظم کی مبینہ بات چیت کی آڈیو لیک

فنڈز کی کمی کا بہانہ، حکومت نے کیا کیا ختم کروانے کی کوشش کی ۔۔۔ مریم نواز اور وزیر اعظم کی مبینہ بات چیت کی آڈیو لیک

نیا انکشاف ۔۔۔عمران خان اور وزیر اعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الٰہی کی ملاقات کا نیا رخ سامنے آگیا

نیا انکشاف ۔۔۔عمران خان اور وزیر اعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الٰہی کی ملاقات کا نیا رخ سامنے آگیا

اسحاق ڈار کی آمد کیساتھ ہی ڈالرسستا کیوں ہوتا چلا جا رہا ہے۔۔۔پی ٹی آئی اہم رہنما نے بڑی سازش سے پردہ اٹھا دیا

اسحاق ڈار کی آمد کیساتھ ہی ڈالرسستا کیوں ہوتا چلا جا رہا ہے۔۔۔پی ٹی آئی اہم رہنما نے بڑی سازش سے پردہ اٹھا دیا

بڑی خبر۔۔۔ فنڈز کی کمی کا بہانہ، حکومت نے کیا کیا ختم کروانے کی کوشش کی ۔۔۔

بڑی خبر۔۔۔ فنڈز کی کمی کا بہانہ، حکومت نے کیا کیا ختم کروانے کی کوشش کی ۔۔۔

کر سی بچانے کے ایسے ایسےطریقےکہ عقل دنگ رہ جائے چوہدری پرویز الٰہی کی نئی حکمت عملی عوام کے سامنے آگئی

کر سی بچانے کے ایسے ایسےطریقےکہ عقل دنگ رہ جائے چوہدری پرویز الٰہی کی نئی حکمت عملی عوام کے سامنے آگئی