12:55 pm
امریکہ کو پاکستان کی سرزمین استعمال کرنے کی اجازت!

امریکہ کو پاکستان کی سرزمین استعمال کرنے کی اجازت!

12:55 pm

٭امریکہ کوپاکستان کی فضا اور زمین کو استعمال کرنے کی اجازت!!O لندن: پاکستانی ہائی کمیشن پرافغان اشرف غنی کے حامی، مظاہرین کا حملہ، توڑپھوڑ، پتھرائو، طالبان کے خلاف نعرے، قطر کے سفارت خْانہ کے سامنے بھی مظاہرہO اسلام آباد، شہباز شریف کا عشائیہ، آصف زرداری، بلاول، فضل الرحمان، مریم نواز عدم شرکتO چودھری نثار علی خاں حلف نہ اٹھا سکے، اسمبلی سیکرٹریٹ کی معذرتO سندھ اسمبلی، ہنگامہ، وزیرآبپاشی کی پنجاب کو دھمکیاں، ’’گھروں میں گھس کر جوتے ماریں گے‘‘ O سپریم کورٹ: شہباز شریف کو بیرون ملک جانے کی اجازت کے خلاف حکومت کی اپیل، نوٹس جاریO سندھ کچے میں ڈاکوئوں اور پولیس میں مقابلہ، دو اہلکار شہید، 8 ڈاکو مارے گئے، تین گرفتارO حماس کو ہتھیار اور بھاری امداد دی جا رہی ہے، ایران کا اعتراف:۔
٭امریکہ کے نائب وزیردفاع ڈیوڈ اوگلو نے بیان دیا کہ پاکستان نے امریکہ کو اپنی فضا اور زمین استعمال کرنے کی اجازت دے دی ہے۔ اس پر بعض حلقوں نے اندیشے کا اظہار کیا کہ امریکہ نے پاکستان میں فوجی اڈے قائم کر لئے ہیں۔ پاکستان کی وزارت خارجہ نے وضاحت کی ہے کہ امریکہ کا کوئی فوجی اڈا یا سنٹر پاکستان میں موجود نہیں۔ اسے پاکستان کی فضا اور زمین استعمال کرنے کی اجازت 2001ء میں ایک معاہدہ کے تحت جنرل پرویز مشرف نے دی تھی تا کہ وہ افغانستان میں اپنی افواج کو ضروری سامان پہنچا سکے۔ یہ معاہدہ 20 سال سے چل رہا ہے، اب بھی جاری ہے۔ وزارت خارجہ کی اس وضاحت کے مطابق یہ معاہدہ جنرل مشرف کے بعد آصف زرداری اور نوازشریف کے دور میں قائم رہا، اب بھی قائم ہے، اس میں کوئی نئی بات شامل نہیں کی گئی۔ جنرل مشرف کے دور میں تو جیکب آباد میں امریکی اڈا بھی بنوایا گیا اس کی حفاظت پاکستان کی پولیس کرتی تھی۔ تاریخ کی عجیب روائت کہ جو بھی فوجی حکمران آیا، اس کے زمانے میں امریکہ کو پاکستان میں فوجی اڈے قائم کرتا رہا۔ جنرل ایوب خاں نے پشاور کے نزدیک ’’بڈا بیر‘‘ کا اڈا امریکہ کو دے دیا۔ یہاں سے امریکی یو ٹو جاسوس طیارہ روس کی فضا میں گیا، روسی فوج نے اسے گرا لیا اور پشاور شہر کے نقشہ پر سرخ دائرہ لگانے کا اعلان کیا تو اسے یہ اڈا چھوڑنا پڑا۔ جنرل ضیاء الحق کے دور میں راولپنڈی کا اوجڑی کیمپ مسلسل امریکی فوجی سامان سے بھرا رہتا تھا یہ سامان امریکی طیارے اور کراچی سے خصوصی فوجی ٹرینیں امریکی سفارت خانہ کی نگرانی میں راولپنڈی پہنچاتی تھیں۔ یہاں سے امریکی گاڑیاں اور طیارے اسلحہ اور گولہ بارود افغانستان لے جاتے تھے۔ 10 اپریل 1985ء کو اوجڑی کیمپ دھماکہ کے ذریعے تباہ ہو گیا (یا کیا گیا!) تو یہ اڈا ختم ہو گیا (اس دھماکہ سے پہلے بہت سا امریکی اسلحہ طالبان اور بھاری معاوضہ پر ایران کو بھی فراہم کرنے کی کہانیاں چلتی رہیں، جن کے مطابق کئی سرکردہ لوگ صفر کی سطح سے اٹھ کر ارب پتی ہو گئے!!) جنرل مشرف کا دور آیا تو جیکب آباد میں وسیع علاقہ پر امریکہ کا فوجی اڈا بنوا دیا گیا۔ عالم یہ کہ پاکستان کی فوج کا سپہ سالار بھی اس کے اندر تو کیا، اس کے قریب بھی نہیں جا سکتا تھا۔ مزید یہ کہ امریکہ کے مطالبہ پر پاکستانی پولیس کی بھاری تعداد اس اڈے کی حفاظت پر متعین کر دی گئی۔ اس اڈے سے امریکی طیارے اُڑ کر افغانستان پر حملے کرتے تھے۔ آصف زرداری کے دور میں یہ اڈا ختم ہو گیا مگر 2001 والے معاہدے کے تحت امریکی طیاروں کو پاکستان کی فضا میں گزرنے کی اجازت برقرار رہی۔ (امریکہ نے معاہدہ کے مطابق کروڑوںڈالر کا معاوضہ بھی روک لیا) آصف زرداری کے دور میں اسی معاہدہ کے تحت امریکی ہیلی کاپٹر پاکستان کی فضا سے گزر کر ایبٹ آباد کے نزدیک اسامہ بن لادن کی خفیہ رہائشگاہ پر حملہ آور ہوئے تھے۔ نوازشریف کے دور میں بھی یہ معاہدہ قائم رہا، اب بھی قائم ہے۔ افغانستان میں امریکی اسلحہ اور دوسرا سامان پہنچانے اور امریکی فوج کے سامان کو واپس لے جانے کا سارا عمل اسی معاہدہ کے تحت کیا جا رہا ہے۔ اب امریکی فوجی طیارے خلیج فارس اور بحیرہ عرب میں طیارہ بردار امریکی بحری جہازوں سے اڑ کر پاکستان کی فضا میں سے گزر کر کابل جاتے اور طالبان پر بم باری کرتے ہیں۔ سوال یہ کہ کیا پاکستان کی فضائیہ اور فوج کو بھی امریکہ کی فضا اور سرزمین سے گزر کر کیوبا وغیرہ جانے کی اجازت ہے؟
٭اسرائیل کے بارے میں بہت کچھ لکھا ہے، اب ماحول کچھ نارمل ہو رہا ہے۔ اہم بات: ایران کے ایک سینئر سرکاری ترجمان (نام کے بغیر) کا بیان ہے کہ ایران فلسطین میں قائم حماس کو کروڑوں ڈالر کی امداد دے چکا ہے اس سے حماس نے غزہ کے علاقے میں تین زیرزمین اسلحہ ساز فیکٹریاں قائم کر لی ہیں ان میں دور مار راکٹ تیار کئے جا رہے ہیں۔ دریں اثنا اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو نے دکھ کا اظہار کیا ہے کہ غزہ پر اسرائیل کا قبضہ ہونے والا تھا مگر اقوام متحدہ نے روک دیا! اب گھر کی باتیں:
٭ن لیگ کے صدر اور قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہبازشریف نے وزراء کی کالونی میں اپنے سرکاری بنگلے پر پارلیمانی لیڈروں کو عشائیہ دیا۔ (بکرے کا قورمہ، مرغ پلائو، کڑاہی، تکے، مچھلی، سیخ کباب، نان اور…اور حلوہ!) اس تقریب میں مولانا فضل الرحمان اور مریم نواز تو اس لئے شریک نہ ہو سکے کہ وہ پارلیمنٹ کے رکن نہیں ہیں، ویسے یہ ذاتی رہائش گاہ تھی، پارلیمنٹ کی عمارت نہیں تھی۔ مولانا اور مریم کے آنے سے کیا فرق پڑ جاتا؟ مگر پارلیمانی لیڈروں کے حوالے سے ان دونوں کو نہ بلانے کا جواز تلاش کر لیا گیا۔ ویسے تو آصف زرداری اور بلاول زرداری بھی نہیں آئے۔ دونوں اپنی پارٹی کے پارلیمانی لیڈر ہیں۔ خاص بات یہ کہ شہباز شریف نے خود اپوزیشن اتحاد کی قیادت سنبھال کر پیپلزپارٹی اور اے این پی کو دوبارہ اتحاد میں شرکت کی دعوت دے دی۔ ظاہر ہے، مولانا فضل الرحمان اور مریم نواز کو اس معاملہ سے باہر رکھا گیا! معلوم نہیں دونوں کیا محسوس کر رہے ہوں گے! مریم نواز البتہ زیادہ محسوس کر رہی ہوں گی۔ شہباز شریف جیل میں تھے تو مریم نواز نے ن لیگ کی قیادت سنبھال لی۔ مولانا فضل الرحمان ملاقات کے لئے جاتی امرا آتے اور مریم نواز مولانا اور بلاول زرداری سے ملنے ان کے گھروں میں جاتی تھیں، شاندار کھانوں کی ضیافتیں، جلسے، جلوس، تقریریں! شہبازشریف کے جیل سے رہا ہونے پر یہ سارے ہنگامے یک بیک ختم ہو گئے، شہبازشریف لندن چلے جاتے تو یہ سارا جوش و خروش اسی طرح بحال ہو جاتا مگر ایسا نہیں ہو سکا۔ اب مولانا شہباز شریف سے ملنے آتے ہیں۔ شہبازشریف ہر روز ٹیلی ویژن پر دکھائی دے رہے اور…اور… ہوا کیسے رُخ بدلتی ہے!!
٭پنجاب کی اطلاعات کی معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان کراچی گئیں، دو نشستوں والے ایک بحری سکوٹر پرسمندر کی سَیر کی۔ حفاظتی جیکٹ اور ٹوپی پہنی ہوئی تھی۔ سکوٹر کو ایک ڈرائیور چلا رہا تھا، خاتون پچھلی سیٹ پر مردانہ انداز میںبیٹھی ہوئی تھیں۔ سکوٹر کا اگلا حصہ اچھا خاصہ اٹھا ہوا تھا (!!) سمندر کی سیر کرتے کرتے بھی مریم نواز کو نہ بھول پائیں۔ اور نیا تبصرہ کر دیا۔ یہ خواتین کا باہمی ’پیار محبت‘ کا مسئلہ ہے۔ خواتین ایک دوسری کو کبھی نہیں بھولتیں۔ ایک واقعہ یاد آ گیا ہے کلب سے واپسی پر ایک بڑے آدمی نے اپنی بیگم سے پوچھا کہ کیا  مسز…! کو دیکھا کتنا زیور پہن کر آئی تھی۔ بیوی بولی کہ ’وہی جس نے نیلی ساڑھی پہنی ہوئی تھی۔ پلو نہیں سنبھالا جا رہا تھا۔ گلے میں رانی ہار، دس انگلیوں میں چھ انگوٹھیاں، چھ انچ ایڑی والی جوتی، تقریب کے مطابق سرخ کی بجائے گرے لپ سٹک، بائیں ہاتھ کی بجائے دائیں ہاتھ میں راڈو کی گھڑی، چہرے پر اتنی بھاری میک اَپ، چار رنگوں کے بال…نہیں! میں نے اسے نہیں دیکھا۔ مجھے کیا پڑی ہے ایسے لوگوں کو دیکھنے کی!…ہاں آپ اتنے غور سے اسے دیکھ رہے تھے، یہ عادت نہ گئی!!
٭سندھ اسمبلی نے قرارداد منظور کی اس کا دریائی پانی چوری کیا جا رہا ہے۔ تحریک انصاف کے علی نواز نے قرارداد کی مخالفت کی۔ اس پر سندھ کے وزیر آبپاشی سہیل نور شدید غصے میں پھٹ پڑے…’’بکواس بند کرو، تمہیں شرم آنی چاہئے…پنجاب والوں کے گھروں میں گھس کر انہیں جوتے ماریں گے۔‘‘ پھر سہیل نور علی نواز پر حملہ کے لئے بھاگے۔ راستے میں روک لیا گیا…قارئین خود تبصرہ کر لیں۔

 


تازہ ترین خبریں

پاکستان سے یومیہ 50لاکھ ڈالر افغانستان سمگل، بلوم برگ نے حکومتی کارکردگی کا پول کھول دیا

پاکستان سے یومیہ 50لاکھ ڈالر افغانستان سمگل، بلوم برگ نے حکومتی کارکردگی کا پول کھول دیا

وزیراعظم شہبازشریف کا دورہ ترکیہ ملتوی

وزیراعظم شہبازشریف کا دورہ ترکیہ ملتوی

سائنسدان2 ہزار  سال پرانی  نباتی خاتون کا چہربنانے میں کامیاب ہوگئے

سائنسدان2 ہزار سال پرانی نباتی خاتون کا چہربنانے میں کامیاب ہوگئے

ہزاروں لوگوں نے رجسٹریشن کرائی،ہم جیل بھرو تحریک شروع کر چکے ہیں، فواد چوہدری

ہزاروں لوگوں نے رجسٹریشن کرائی،ہم جیل بھرو تحریک شروع کر چکے ہیں، فواد چوہدری

الیکشن ایک ساتھ ہونے چاہیں،بار بار انتخابات سے ملک انتشار کا شکار ہوگا،خواجہ سعد رفیق

الیکشن ایک ساتھ ہونے چاہیں،بار بار انتخابات سے ملک انتشار کا شکار ہوگا،خواجہ سعد رفیق

ترکی ،شام تباہ کن زلزلے سے ہونے والی ہلاکتیں اور مناظر دماغ کو سن کر رہے ہیں، شہباز شریف

ترکی ،شام تباہ کن زلزلے سے ہونے والی ہلاکتیں اور مناظر دماغ کو سن کر رہے ہیں، شہباز شریف

ملک کے بالائی علاقوں میں مزید برفباری کا امکان

ملک کے بالائی علاقوں میں مزید برفباری کا امکان

پنجاب اور خیبرپختونخوا اسمبلیوں کے انتخابات، اہم فیصلہ آج ہو گا

پنجاب اور خیبرپختونخوا اسمبلیوں کے انتخابات، اہم فیصلہ آج ہو گا

توشہ خانہ کیس ، عدالت نے عمران خان   حاضری سے استثنیٰ کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا

توشہ خانہ کیس ، عدالت نے عمران خان حاضری سے استثنیٰ کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا

وزیراعظم شہباز شریف کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کا   اجلاس آج  ہوگا

وزیراعظم شہباز شریف کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس آج ہوگا

ترکیہ   میں زلزے  نے تباہی مچا دی ،  سات روزہ سوگ کا اعلان

ترکیہ میں زلزے نے تباہی مچا دی ، سات روزہ سوگ کا اعلان

ترکیہ اور شام میں زلزلے سے تباہی، ہلاکتیں 1300 سے زائد، ترکیہ میں ایمرجنسی نافذ

ترکیہ اور شام میں زلزلے سے تباہی، ہلاکتیں 1300 سے زائد، ترکیہ میں ایمرجنسی نافذ

اے پی سی کیلئے پی ٹی آئی کو دعوت نامہ نہیں ملا، فواد چوہدری

اے پی سی کیلئے پی ٹی آئی کو دعوت نامہ نہیں ملا، فواد چوہدری

مشکل وقت میں  درکار  انسانی امداد پیش کرنے کیلئے تیار ہیں، عمران خان  کا  ترکیہ ،شام زلزلے پر افسوس کا اظہار

مشکل وقت میں  درکار  انسانی امداد پیش کرنے کیلئے تیار ہیں، عمران خان  کا  ترکیہ ،شام زلزلے پر افسوس کا اظہار