02:08 pm
جدیددوراورپرانی عینک

جدیددوراورپرانی عینک

02:08 pm

سعودی عرب اوردیگر خلیجی ریاستوں کی جانب سے تین سال سے قطرپرعائد پابندیاں ختم ہونے کے چند ہفتوں بعداسی سال جنوری میں پاکستان کے آرمی چیف جنرل قمرباجوہ نے دوروزکے لئے  قطرکادورہ کیاتھاجہاں انہوں نے قطرکے امیرشیخ تمیم بن حمادالثانی اورفوجی عہدیداروں کے ساتھ دفاع،سلامتی اور جیو پولیٹیکل  امور پر تبادلہ خیال کیا۔دراصل جنرل باجوہ کادورہ کچھ عرصے سے طے شدہ تھالیکن قطراورعرب ممالک کے درمیان خراب تعلقات کی وجہ سے یہ دورہ تعطل کاشکار ہوگیا۔اب آنے والے دنوں میں وزیراعظم عمران خان کا بطوروزیراعظم چوتھادورہ ہوگا۔ گزشتہ پورابرس پاکستان اورعرب ممالک کے تعلقات میں تنائو قائم رہا،خاص کرپاکستان کے سب سے اہم اتحادی سعودی عرب سے تعلقات تلخ رہے۔ماہرین کے مطابق پاکستان کے خلیج میں کم ہوتے سیکورٹی کردارکے تناظرمیں یہ دورہ بہت اہمیت کاحامل ہے۔
پاکستان اورقطر کے درمیان سیاسی،معاشی اوردفاعی تعلقات موجودہیں۔دونوں ممالک نے تجارتی تبادلے،سرمایہ کاری،ثقافت اورتعلیم سے متعلق معاہدوں پردستخط کررکھے ہیں ۔ 2016ء میں دونوں ممالک نے ایک15سالہ معاہدے پر سالانہ753 ملین ٹن قدرتی گیس فراہم کرنے پر دستخط ہوئے تھے جس نے پاکستان کونیشنل گرڈ میں 2ہزارمیگاواٹ بجلی شامل کرنے کی سہولت میسر آئی تھی۔ جون2017ء میں قطراور عرب ممالک کے درمیان شدید تنائو اورخراب تعلقات کے دوران پاکستان غیرجانبداررہااورقطر کے ساتھ تجارتی تعلقات برقراررہے۔مثال کے طور پر اگست2017ء میں کراچی اورحمد کی بندرگاہوں کے درمیان پاکستان قطرایکسپریس سروس شروع کی گئی جس کامقصد دونوں ممالک کے مابین تجارت کوفروغ دیناتھا۔2019ء میں دونوں ممالک  کے درمیان تجارت میں63فیصد(قطرکے حق میں)   اضافہ ہوا۔ قطرسے پاکستانیوں کی جانب سے بھیجا جانے والاترسیلاتِ زربھی اہم ہے۔ دسمبر 2020ء میں قطرسے پاکستان بھیجاجانے والا ترسیلات زرخلیجی ممالک کے ترسیلات زر کا27 فیصد تھا۔
پاکستان اورقطرافغان امن عمل میں بھی گہری دلچسپی رکھتے ہیں۔پاکستان نے دوحہ مذاکرات کے دوران قطرکے اہم کردارکی تعریف کی ہے۔پچھلے کئی برسوں کے درمیان پاکستان  اورقطرکے تعلقات مستحکم ہوئے ہیں۔جس کی بڑی وجہ اعلیٰ سطح کے ریاستی دورے ہیں۔ عمران خان نے جنوری 2019ء میں قطرکاپہلادورہ کیا تھا جس کے جواب میں اسی برس جون میں قطری وفدنے بھی دورہ کیا۔ان دوروں میں دونوں ممالک کے درمیان سیاحت،کاروباراورمالیاتی معاونت سے متعلق مفاہمت کی یادداشتوں پردستخط ہوئے۔ 2019ء میں ہی پاکستان نے فیفا2022 کے ورلڈکپ کے لئے سکیورٹی فراہم کرنے کی پیشکش کی۔اس وقت قطرمیں تقریباڈیڑھ لاکھ پاکستانی کام کررہے ہیں،ان میں سے بیشترفیفاسے متعلق منصوبوں پرتعینات ہیں۔اگرچہ ملازمین کی تنخواہوں سے متعلق مسائل رہے ہیں لیکن پاکستانی حکام کو اعتمادہے کہ جلد ہی تمام معاملات حل کرلیے  جائیں گے۔
سلامتی اوردفاعی میدان میں پاکستان اور قطر کے درمیان1983ء سے معاہدے موجود ہیں۔ اس وقت سے ہی دونوں ممالک مشترکہ تربیت، مشقیں اورفوجی افسران کے تبادلوں میں مصروف ہیں۔ پاکستانیوں کی ایک بڑی تعداد قطری مسلح افواج میں موجودہونے کے ساتھ اہم امور پر مشاورتی کرداربھی اداکررہی ہے۔حال ہی میں دونوں ممالک نے فضائی اوربحری امورپر تعاون میں اضافے پرتبادلہ خیال کیاہے۔اگرچہ ماضی میں دونوں ممالک نے دفاعی معاملات پربات چیت کی ہے لیکن جنرل باجوہ کا حالیہ دورہ اس وقت سامنے آیاہے جب خلیج میں طویل مدتی اثرات کی حامل تبدیلیاں جاری ہیں۔جس میں متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کے تعلقات کاقائم ہوناقابل ذکر ہے۔ موجودہ بدلتے حالات کے بعدیہ محسوس کیا جارہا ہے کہ اسرائیل کے ساتھ غیرسرکاری تعلقات رکھنے کے باوجودسعودی عرب خلیج میں تل ابیب کابڑھتا کردارقبول نہیں کرے گا کیوں کہ وہ اس کی حکومت کے لئے  براہ راست چیلنج ہوگا۔ سب کوپتاہے کہ خلیج کے تمام ممالک اسرائیل کے ساتھ سرکاری اورغیرسرکاری سطح پرروابط رکھتے ہیں۔اس سے خلیج میں پاکستان کی اہمیت کم ہوجائے گی کیونکہ اسرائیل کے خلاف پاکستان کاموقف خلیجی ممالک کے لئے غیرضروری رکاوٹ پیداکرے گا۔خلیجی ممالک کے ساتھ پاکستان کے خراب تعلقات کی ایک حالیہ مثال متحدہ عرب امارات کی جانب سے پاکستانیوں کے لئے وزٹنگ ویزوں کااجرابندکرناہے۔اسرائیل کو تسلیم نہ کرکے پاکستان پرسعودی عرب اور ایران کی دشمنی کے زیادہ اثرات پڑ سکتے ہیں کیوں کہ خلیجی ممالک نے خطے میں بھارت کو بہتر اتحادی سمجھتے ہوئے دوستی کی غیرمعمولی پینگیں بڑھا کر پاکستان سے فاصلہ بڑھالیاہے اور وہ بھارت کو اقتصادی  اورتزویراتی طورپربہت قریب کرلیا ہے۔ خلیجی مما لک اور جنوبی ایشیائی ممالک کے درمیان تعلقات بدل رہے ہیں،2015ء میں پاکستان نے یمن جنگ میں فوج بھیجنے سے انکارکردیاتھا،جس کا نتیجہ سعودی عرب اورمتحدہ عرب امارات کے ساتھ کشیدگی کی شکل میں نکلا۔حالیہ برسوں میں بھارت نے خلیجی ممالک کے ساتھ تعلقات میں بہتری کواہمیت دی ہے۔سعودی عرب بھارت میں بنیادی ڈھانچے اور تیل کے منصوبوں پربہت زیادہ سرمایہ کاری کررہاہے،دہلی اورریاض نے انسدادِ دہشت گردی میں تعاون اورمشترکہ بحری مشقیں بھی کی ہیں۔یہاں تک کہ بھارتی آرمی چیف نے دسمبر 2020ء میں خلیج کے اپنے پہلے دورے کوانتہائی تاریخی قراردیاتھا۔خلیجی ممالک کے لئے  بھی  بھارت اوراسرائیل کے تعلقات کوئی مسئلہ نہیں ہیں۔
بھارت اوراسرائیل متعددخلیجی ریاستوں خاص طورپرمتحدہ عرب امارات کے ساتھ ایک بہترین اتحادبنارہے ہیں۔پاکستان نے اسرائیل کو تسلیم کرنے سے صاف انکارکردیاہے جس کی وجہ سے بھارت کوخلیجی ممالک سے تعلقات بہتر کرنے کی کھلی چھوٹ مل گئی ہے۔ بھارت اور اسرائیل کے درمیان دفاعی اورانٹیلی جنس تعاون بھی کافی مضبوط ہے۔پہلے ہی کہاجارہاہے کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارت اسرائیلی پالیسی پرعمل پیرا ہے۔ پاکستان طویل عرصے سے مختلف خلیجی ممالک کے لئے   بنیادی تحفظ فراہم کرنے والے ملک کا کردار ادا  کررہاہے۔ درحقیقت پاکستان نے بہت سے خلیجی ممالک میں ہوابازی کی صنعت کے قیام میں اہم کرداراداکیاہے۔پاکستانی حکومتوں اور خلیج میں حکمران خاندانوں کے درمیان قریبی تعلقات رہے ہیں۔اس وجہ سے ہی خلیجی ممالک کے مفادات کے دفاع کے لئے  پاکستان کوقابل اعتماد سمجھاجاتارہاہے لیکن اب اسرائیل سے تعلقات کی روشنی میں پاکستان کے پاس خلیجی ممالک کودینے کے لئے  کچھ زیادہ موجودنہیں ہے۔ (جاری ہے)

تازہ ترین خبریں

"این اے 133 کا الیکشن ملتوی ۔۔ ؟  الیکشن کمیشن نے ووٹو ں کی خریداری کی ویڈیوز آنے کے بعدبڑاعلان کردیا

"این اے 133 کا الیکشن ملتوی ۔۔ ؟ الیکشن کمیشن نے ووٹو ں کی خریداری کی ویڈیوز آنے کے بعدبڑاعلان کردیا

اسلام آباد میٹرواسٹیشن سے ملنے والی بچی سے زیادتی ہوئی یا نہیں۔۔؟باپ نے قتل کیو کیوں،گرفتار ملزم باپ نے انکشافات نے تہلکہ مچادیا

اسلام آباد میٹرواسٹیشن سے ملنے والی بچی سے زیادتی ہوئی یا نہیں۔۔؟باپ نے قتل کیو کیوں،گرفتار ملزم باپ نے انکشافات نے تہلکہ مچادیا

سہاگ رات کو لڑائی۔۔۔؟ ۔۔شادی کے اگلے ہی دن دولہا دلہن کی لاشیں کہاں سے اور کس حالت میں ملیں ۔۔ انتہائی افسوسناک خبر

سہاگ رات کو لڑائی۔۔۔؟ ۔۔شادی کے اگلے ہی دن دولہا دلہن کی لاشیں کہاں سے اور کس حالت میں ملیں ۔۔ انتہائی افسوسناک خبر

تیز ہواؤں کا سلسلہ ملک میں داخل،شدید بارشوںکا الرٹ جاری کردیا گیا

تیز ہواؤں کا سلسلہ ملک میں داخل،شدید بارشوںکا الرٹ جاری کردیا گیا

ن لیگ اور پیپلزپارٹی کا سیاسی اتحاد ہوا تو وزیراعظم کون ہو گا؟بڑی خبر آگئی

ن لیگ اور پیپلزپارٹی کا سیاسی اتحاد ہوا تو وزیراعظم کون ہو گا؟بڑی خبر آگئی

گیس کی شدید بحران۔۔۔پورے سندھ میں گیس ڈھائی ماہ کیلئے بند ۔۔ پاکستانیوں کے ہوش اڑا دینےوالی خبر

گیس کی شدید بحران۔۔۔پورے سندھ میں گیس ڈھائی ماہ کیلئے بند ۔۔ پاکستانیوں کے ہوش اڑا دینےوالی خبر

سعودی عرب جانے ناممکن۔۔بڑی پابندی عائد ۔۔ سعودی عرب جانے کے خواہشمند افراد کیلئے بری خبر

سعودی عرب جانے ناممکن۔۔بڑی پابندی عائد ۔۔ سعودی عرب جانے کے خواہشمند افراد کیلئے بری خبر

دسمبر سے فروری کب اور کتنی بارشیں متوقع ہیں؟موسمیاتی ادارے نے رواں موسم سرماسے متعلق تفصیلی پیشنگوئی کر دی

دسمبر سے فروری کب اور کتنی بارشیں متوقع ہیں؟موسمیاتی ادارے نے رواں موسم سرماسے متعلق تفصیلی پیشنگوئی کر دی

پی ٹی آئی رہنما نے اپنے ہی ساتھیوں کے پول کھول دیئے ، قیادت نے سینئر رہنما کو شوکاز نوٹس جاری کر دیا،سنگین الزامات عائد

پی ٹی آئی رہنما نے اپنے ہی ساتھیوں کے پول کھول دیئے ، قیادت نے سینئر رہنما کو شوکاز نوٹس جاری کر دیا،سنگین الزامات عائد

کورونا وائرس کی خطرناک ترین قسم ’اومیکرون‘سے بچائوکیلئے شہریوں کو کیا کرنا ہو گا؟ این سی او سی نے نئی ہدایات جاری کردیں

کورونا وائرس کی خطرناک ترین قسم ’اومیکرون‘سے بچائوکیلئے شہریوں کو کیا کرنا ہو گا؟ این سی او سی نے نئی ہدایات جاری کردیں

پاکستانیوں کی جیبوں سے اربوں روپے نکالنے کا پروگرام۔۔ فون کال پر ٹیکس ۔۔۔۔ عوام کیلئے بری خبر۔۔

پاکستانیوں کی جیبوں سے اربوں روپے نکالنے کا پروگرام۔۔ فون کال پر ٹیکس ۔۔۔۔ عوام کیلئے بری خبر۔۔

بھارت سے پاکستان آنیوالی خاتون نے اسلام قبول کرکے لاہور کے شہری سے شادی کرلی،بھارتی واپسی پر اس کے ساتھ کیا ہوا۔۔ جانیے تفصیل

بھارت سے پاکستان آنیوالی خاتون نے اسلام قبول کرکے لاہور کے شہری سے شادی کرلی،بھارتی واپسی پر اس کے ساتھ کیا ہوا۔۔ جانیے تفصیل

تبدیلی۔۔۔۔ حاملہ رکن اسمبلی بچے کو جنم دینے سائیکل پر اسپتال پہنچ گئیں نیوزی لینڈ کی حاملہ رکن اسمبلی بچے کو جنم دینے سائیکل پر اسپتال پہنچ گ

تبدیلی۔۔۔۔ حاملہ رکن اسمبلی بچے کو جنم دینے سائیکل پر اسپتال پہنچ گئیں نیوزی لینڈ کی حاملہ رکن اسمبلی بچے کو جنم دینے سائیکل پر اسپتال پہنچ گ

سینیٹر ایوب آفریدی کے مستعفی ہونے کے بعد سینیٹ کی خالی نشست پر الیکشن کب ہو گا ؟ الیکشن کمیشن نےشیڈول جاری کر دیا

سینیٹر ایوب آفریدی کے مستعفی ہونے کے بعد سینیٹ کی خالی نشست پر الیکشن کب ہو گا ؟ الیکشن کمیشن نےشیڈول جاری کر دیا