02:25 pm
مدارس سے کیا خطرہ؟

مدارس سے کیا خطرہ؟

02:25 pm

مجمع العلوم اسلامیہ میں شامل کراچی کے دونوں مدارس جامعہ بنوریہ العالمیہ اور جامعتہ الرشید دیوبندی مسلک کے بڑے مدرسوں میں شمار ہوتے ہیں۔شاید انہیں اپنا
(گزشتہ سے یوستہ)
مجمع العلوم اسلامیہ میں شامل کراچی کے دونوں مدارس جامعہ بنوریہ العالمیہ اور جامعتہ الرشید دیوبندی مسلک کے بڑے مدرسوں میں شمار ہوتے ہیں۔شاید انہیں اپنا اثر و نفوذ استعمال کر کے وفاق المدارس العربیہ سے مزید مدارس کو توڑ کر نئے بورڈز میں شامل کرلیں گے۔اس وفاق سے تقریباً30ہزار مدارس وابستہ ہیں۔ جن میں 28لاکھ سے زیادہ طلباء و طالبات تعلیم و تربیت حاصل کر رہے ہیں۔وحدت المدارس ،جماعت اشاعت توحید السنتہ (پنج پیری مکتبہ فکر) کے مدارس پر مشتمل ہے جو دیوبندی مکتبِ فکر کا حصہ ہے ۔کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے سابق سربراہ ملا فضل اللہ، باجوڑ کے رہنما مولوی فقیر اور خیبر ایجنسی کے رہنما منگل باغ پنج پیری مکتبِ فکر یا اس کے قریب قریب سوچ کے حامل تھے۔اس بنیاد پر اسے سخت گیر قرار دیا جاتا ہے۔مدرسہ بورڈ ایک وفاقی تعلیمی بورڈ کی طرح ہے جواپنے مکتبِ فکر کے مدارس کی رجسٹریشن، نصاب سازی اور تعلیمی نگرانی سمیت امتحانات کا انعقاد اور اسناد جاری کرتاہے۔ان اسناد کو حکومت عصری تعلیم کے مختلف اسناد کے متوازی تسلیم کرتی ہے۔مگر اردو، انگریزی اور مطالعہ پاکستان پاس کرنا لازمی ہے۔ مدرسے کی شہادت ثانویہ عامہ (دو سال دورانیہ) کی سند میٹرک، شہادت ثانویہ خاصہ (دو سال دورانیہ) کی سند ایف اے، شہادت عالیہ کی سند (دو سال دورانیہ) بی اے اور شہادت عالمیہ کی سند (دو سال دورانیہ) ایم اے کے متوازی ہے۔مدارس کو مسلکی بنیاد پر مدرسہ بورڈ تشکیل دینے کی ضرورت مدارس میں طلبہ کو اپنے عقائد اور مکتبِ فکر کے مطابق تدریس اور نصاب کی تیاری کی وجہ سے پیش آئی ۔ ہر مکتبِ فکر کے مدرسہ بورڈ کے تحت نصاب کمیٹی اپنے مکتبِ فکر کے مدارس کے لیے یکساں نصاب تیار کرتی ہے۔ملک میں مسلک کی بنیاد پر مدارس کے پانچ بورڈز موجود تھے جن میں سے سے بڑا وفاق المدارس العربیہ، ملتان (دیوبندی مکتب فکر)، وفاق المدارس الشیعہ، لاہور(شیعہ مکتبِ فکر)، تنظیم المدارس اہلسنت، لاہور (بریلوی مکتبِ فکر)، وفاق المدارس السلفیہ، فیصل آباد (اہلحدیث مکتبِ فکر) اور رابطۃ المدارس الاسلامیہ، منصورہ (جماعت اسلامی مکتبِ فکر) شامل ہیں۔ وفاق المدارس السلفیہ 1955 اور رابطۃ المدارس الاسلامیہ 1978میں قائم ہوئے۔  وفاق المدارس العربیہ سے وابستہ 21565 مدراس میں ساڑھے 28 لاکھ طلبہ و طالبات زیرِ تعلیم ہیں۔تنظیم المدارس اہلسنت سے وابستہ 9616 مدارس میں 13 لاکھ طلبہ و طالبات، وفاق المدارس السلفیہ سے وابستہ 1400 مدارس میں 40 ہزار طلبہ و طالبات اور وفاق المداراس الشیعہ سے وابستہ 550 مدراس میں 19 ہزار طلبہ و طالبات تعلیم حاصل کر رہے ہیں۔  1300 مدراس تنظیم رابطہ المدارس سے وابستہ ہیں۔
2005ئمیںپرویز مشرف کے دور حکومت  میں مدارس کے خلاف مبینہ کارروائیوں کو روکنے کے لیے مدارس کے پانچوں بورڈز نے اتحاد تنظیمات مدارس پاکستان (آئی ٹی ایم پی) کے نام سے مشترکہ پلیٹ فارم تشکیل دیا جس کی سربراہی مرکزی رویت ہلال کمیٹی کے سابق چیئرمین مفتی منیب الرحمٰن کر رہے ہیں ۔حکومت چاہتی ہے کہ سرکاری مدرسہ بورڈ زبنانے سے مدرسہ نصاب اور تدریسی عمل بہتر بنانے کے لیے ایک مقابلے کی فضا پیدا ہو اور زیادہ سے زیادہ مدارس بھی حکومت کے ساتھ رجسٹرڈ ہوں ۔ تا ہم مدرسہ اصلاحات کے لئے سب کو اعتماد میں لینا لازمی ہو گا۔جو مدرسہ بورڈز اپنے نصاب بہتر بنائیںگے،قرآن و سنت کی تعلیم و تربیت سمیت جدید عصری علوم، سائنس و ٹیکنالوجی پر توجہ دیں گے تو وہ طلبہ کی بڑی تعداد کو اپنی جانب کھینچنے میں کامیاب ہوں گے۔اگر حکومت مدارس کی بڑی تعداد رجسٹرڈ کرنا چاہتی ہے تاکہ بین الاقوامی سطح پر یہ بتایا جاسکے کہ مدارس کی بڑی تعداد قومی دھارے میں شامل ہوچکی ہے تو اتحاد المدارس تنظیم سے رجوع کرے۔ پاکستان مدرسہ ایجوکیشن بورڈکو ختم کر کے مدرسہ ڈائریکوریٹ قائم کرنے کے بعد مدرسہ بورڈزکے تحت چلنے والے مدارس مدرسہ ڈائریکوریٹ کے ساتھ رجسٹرڈ ہونے کے پابندبنا دیئے گئے ہیں۔حکومت کا دعویٰ ہے کہ 6000 سے زائد مدارس کی رجسٹریشن ہوچکی ہے۔وفاق نے شروع میںجو پانچ نئے  مدرسہ بورڈز قائم کیئے ان میں اتحاد المدارس العربیہ (دیوبندی مکتبہ فکر)، اتحاد المدارس الاسلامیہ (بریلوی مکتبہ فکر)، نظام المدارس پاکستان (بریلوی مکتبہ فکر)، مجمع المدارس تعلیم الکتاب والحکمہ (اہلحدیث مکتبہ فکر) اور وفاق المدارس الاسلامیہ الرضویہ (شیعہ مکتبہ فکر) شامل ہیں۔مگر یہ پانچ مدرسہ بورڈ اس عرصہ میں پہلے سے قائم مدرسہ بورڈز سے الحاق شدہ مدارس کو اپنی جانب لانے میںکامیاب نہیں ہو سکے ہیں۔ جامعہ بنوریہ العالمیہ کے مہتمم مفتی نعمان نعیم کا کہنا ہے کہ ان کے مدرسے نے بیرونِ ممالک کے طلبہ کے داخلوں میں مشکلات کے حل کے لیے نیا بورڈ تشکیل دیا مگر ان کا مدرسہ وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے ساتھ ملحق رہے گا۔جامعتہ الرشید کراچی سے وابستہ علما ء کا موقف ہے کہ ان کا مدرسہ گزشتہ 20 برسوں سے طلبہ کو جدید عصری علوم و فنون سکھا رہا ہے اور نیا بورڈ مجمع العلوم الاسلامیہ ، وفاق المدارس العربیہ کے برعکس مدارس میں ایک ایسا نظام لانا چاہتا ہے جو قدیم و جدید علوم کا امتزاج رکھتا ہو گا۔وہ نئے بورڈ کے تحت مختلف اسلامی جامعات کے نظام سے اخذ کرکے نیا نصاب تعلیم تشکیل دینا چاہتے ہیں۔مگروفاق المدارس العربیہ کے رہنما ء نئے بورڈز کی تشکیل وفاق المدارس العربیہ اور مدارس کے خلاف سازش قرار دیتے ہیں۔ تدریس، امامت اور خطابت کے لیے مدرسہ بورڈز کی جاری کردہ سند کی ہی اہمیت ہوتی ہے۔مگرحکومت مدارس کے نئے بورڈز تشکیل دے کر پہلے سے موجود مدارس کے بورڈزکی اجارہ داری ختم کرنا اور اس کا متبادل سامنے لانا چاہتی ہے تو ایسا ممکن نہیں۔
حکومت اگر سمجھتی ہے کہ مدارس سیاست کے لئے استعمال ہو رہے ہیںیا انتہا پسندی کو فروغ دیتے ہیں تو بھی انتقام کے بجائے اصلاح مدنظر رکھی جائے۔جو عناسر دین کی سنہرے اخلاق و اقدارپر مبنی تعلیم و تربیت سے خائف ہیں۔یا جو اپنی یا این جی اوز کی روشن خیالی کے نام پر اخلاق و کردار سے عاری معاشرہ کی تشکیل کے خلاف ہیں۔ وہ اپنی روزی روٹی ملک اور اسلام دشمنی کے بغیر بھی حلال کرنے کے اسباب تلاش کر سکتے ہیں۔ حکومت اگر مخلص اور سنجیدہ ہے تو وہ این جی اوز کے ایجنڈہ پرتعلیم ودانش کے اداروں کوتوڑنے یا ایک دوسرے کے ساتھ ٹکرائو اور بدمزگی پیدا کرنے کے بجائے ملکی مفاد میںاداروں کوقر یب لانے، جوڑنے پر توجہ دے سکتی ہے۔حکومت نصاب کا جائزہ لے، خطبات پر نظر رکھے۔جو مدارس مسلکی منافرت پھیلانے کے مرتکب پائے جائیں یا جن کا نصاب تعصب اور عداوت کو جنم دیتا ہو، تمام مسالک کے جید اور معتبر علمائے کرام کی کمیٹی شواہد اور معقول دلائل کا جائزہ لے ۔ تب ہی ان کے خلاف قانون حرکت میں آسکتا ہے۔ تب ہی قانونی چارہ جوئی کو انتقام یا متعصب قرار نہ دیا جائے گا۔ 
 

تازہ ترین خبریں

طلبہ کی توموجیں ہوگئیں۔۔بچوں پر اسکول  ہوم ورک کا دباؤ کم کرنے کا قانون پاس

طلبہ کی توموجیں ہوگئیں۔۔بچوں پر اسکول ہوم ورک کا دباؤ کم کرنے کا قانون پاس

راولپنڈی اسلام آبادکے شہریوں کی مشکلات۔۔۔جڑواں شہروں کے باسیوں کے لیے بڑی خوشخبری آگئی

راولپنڈی اسلام آبادکے شہریوں کی مشکلات۔۔۔جڑواں شہروں کے باسیوں کے لیے بڑی خوشخبری آگئی

بلاول بھٹو زرداری ’گو عمران گو‘ کے نعرے کیوں لگا رہے ہیں ؟

بلاول بھٹو زرداری ’گو عمران گو‘ کے نعرے کیوں لگا رہے ہیں ؟

حکومت غریب اور متوسط طبقے کیلئےکیا کرنے جا رہی ہے؟بڑا دعویٰ سامنے آگیا

حکومت غریب اور متوسط طبقے کیلئےکیا کرنے جا رہی ہے؟بڑا دعویٰ سامنے آگیا

تین ماہ سے بندداسوڈیم کی تعمیرکاکام کب شروع  ہوگا؟تاریخ کااعلان کردیاگیا

تین ماہ سے بندداسوڈیم کی تعمیرکاکام کب شروع ہوگا؟تاریخ کااعلان کردیاگیا

حکمرانوں کاہردن قومی سلامتی کے لیے خدشات بڑھارہاہے ۔۔حکومت سےنجات  حاصل نہ ہوئی تو۔۔۔

حکمرانوں کاہردن قومی سلامتی کے لیے خدشات بڑھارہاہے ۔۔حکومت سےنجات حاصل نہ ہوئی تو۔۔۔

ماسکو: مذاکرات کے دوران پاکستانی سفارتکار مائیک بند کرنا بھول گئے، شیریں مزاری اور بیٹی کے بارے میں کیا کہتے رہے؟ ریکارڈنگ سامنے آ گئی

ماسکو: مذاکرات کے دوران پاکستانی سفارتکار مائیک بند کرنا بھول گئے، شیریں مزاری اور بیٹی کے بارے میں کیا کہتے رہے؟ ریکارڈنگ سامنے آ گئی

لندن میں سیاسی جوڑ توڑ! جہانگیر ترین  بول پڑے، حقائق سے پردہ اُٹھا دیا

لندن میں سیاسی جوڑ توڑ! جہانگیر ترین بول پڑے، حقائق سے پردہ اُٹھا دیا

تبدیلی آ گئی،سرکاری افسر ہسپتال کی خوبصورت نرس کو اٹھا کرلے گیا اور پھر۔۔ایسا کام کہ پوری قوم غصے میں آگئی

تبدیلی آ گئی،سرکاری افسر ہسپتال کی خوبصورت نرس کو اٹھا کرلے گیا اور پھر۔۔ایسا کام کہ پوری قوم غصے میں آگئی

31دسمبر تک ہر شہری کے پاس یہ چیز ہو گی، حکومت کا ایسا اعلان کہ ہر کوئی خوشی سے جھوم اٹھا

31دسمبر تک ہر شہری کے پاس یہ چیز ہو گی، حکومت کا ایسا اعلان کہ ہر کوئی خوشی سے جھوم اٹھا

کورونا وائرس کا ایک نیا حملہ ! پروازیں کینسل اور سکول بند کرنے کا فیصلہ

کورونا وائرس کا ایک نیا حملہ ! پروازیں کینسل اور سکول بند کرنے کا فیصلہ

ملک میں ہنگامی صورتحال، بین الاقومی اور مقامی پروازیں منسوخ کرنا پڑ گئیں

ملک میں ہنگامی صورتحال، بین الاقومی اور مقامی پروازیں منسوخ کرنا پڑ گئیں

اس وقت آئی ایس آئی کا سربراہ کون ہے؟  وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے قیاس آرائیوں کا خاتمہ کر دیا

اس وقت آئی ایس آئی کا سربراہ کون ہے؟ وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے قیاس آرائیوں کا خاتمہ کر دیا

وہ شہر جہاںاب آئندہ دو ماہ کیلئے سورج نہیں نکلے گا،جان کر آپکو بھی شدید حیرت ہو گی

وہ شہر جہاںاب آئندہ دو ماہ کیلئے سورج نہیں نکلے گا،جان کر آپکو بھی شدید حیرت ہو گی