02:27 pm
مفاہمت کی راہ

مفاہمت کی راہ

02:27 pm

شاہ جی کافی دنوں سے خاموش تھے۔ کل اچانک ان کا فون آیا تو پہلا خیال ذہن میں یہی آیا کہ موصوف نے کوئی نئی کانسپریسی تھیوری تلاش کرلی
شاہ جی کافی دنوں سے خاموش تھے۔ کل اچانک ان کا فون آیا تو پہلا خیال ذہن میں یہی آیا کہ موصوف نے کوئی نئی کانسپریسی تھیوری تلاش کرلی ہے۔ سوچا چلو تفریح ہی رہے گی اور پھر ان کے گھر کے کیک بھی بڑے لذیذ ہوتے ہیں اس لئے خراماں خراماں ان کے خوبصورت لان میں پہنچ گیا۔ وہاں مجھے ایک جھٹکا سا لگا۔ ہمارے وہ پڑوسی جو عام طور پر شاہ جی کے مہمان ہوتے ہیں ان میں سے کوئی بھی وہاں موجود نہ تھا بلکہ تین اجنبی حضرات آئے ہوئے تھے۔ شاہ جی نے ان کے تعارف میں صرف اتنا کہا کہ یہ ان کے دوست ہیں اسلام آباد  سے باہر سے تشریف لائے ہیں، کاروبار کرتے ہیں۔ ان تینوں نے گرمی کے باوجود سوٹ پہن رکھے تھے اور ٹائیاں لگا رکھی  تھیں۔  ان کے نام شاہ جی نے آغا، بھٹی اور چوہدری بتائے۔ مجھے نہ جانے کیوں لگا کہ یہ نام ان کے اصلی نہیں تھے مجھے تو وہ انگریزی حروف تہجی کے پہلے تین حروف یعنی اے بی سی استعمال کرکے گھڑے ہوئے نام محسوس ہوئے۔ شاہ جی نے ان مہمانوں کا تعارف تو بہت مختصر کروایا تھا مگر میرے بارے میں ایک اچھا خاصا طویل لیکچر دے ڈالا جس سے مجھے پہلے تو خوشی ہوئی اور پھر تشویش ہونے لگی۔
بہت جلد پتہ چل گیا کہ میری تشویش بے جا نہیں تھی۔ چائے آتے ہی شاہ جی نے فرمایا کہ انہوں نے ایک تھیوری تخلیق کی ہے مگر وہ خود بھی اس سے مطمئن نہیں ہیں۔ اس لئے وہ اس تھیوری پر بامقصد تنقید یا بحث کرنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ میں ان کی تھیوری کی مخالفت کروں اور کھل کر اس کی کمزوریوں کی نشاندہی کروں۔ میرے لئے بالکل نیا تجربہ تھا۔ اس لئے میں نے فوراً حفظ ماتقدم کے طور پر اپنی پلیٹ میں کیک کے تین پیس اور دوسموسے ڈ ال لئے۔ سوچا اگر میری باتیں شاہ جی کو پسند نہ آئیں تو ہوسکتا ہے میز پر موجود اشیا واپس بھیج دی جائیں۔
شاہ جی نے تھیوری پیش کرنا شرع کیا۔ ان کا خیال تھا کہ نواز شریف کو سلیکٹرز کی طرف سے بہت سی پیشکش کی گئی ہیں مگر وہ ابھی تک اپنے دو مطالبات پر ڈٹا ہوا ہے یعنی فیئر اور فری انتخابات کروائے جائیں اور تمام ادارے اپنی اپنی آئینی حدود کے اندر رہیں۔ اب شاہ جی کی تھیوری یہ تھی کہ اگر نواز شریف اسی طرح ثابت قدم رہتے ہیں تو دیر سے سہی ان کے یہ دونوں مطالبے منظور ہو ہی جائیں گے ۔ لہٰذا انہیں اپنے رویئے میں لچک پیدا نہیں کرنی چاہیے۔
’’شاہ جی۔ معذرت چاہتا ہوں مگر آپ کا خیال بالکل غلط ہے‘‘ میں نے پہلا کیک پیس نگلتے ہوئے کہا۔
’’وہ کیوں‘‘ شاہ جی نے مصنوعی غصے سے پوچھا۔
’’آپ یہ کہنا چاہتے ہیں کہ شہباز شریف کی مفاہمت کی کوششیں بے معنی ہیں‘‘
’’بالکل بے معنی ہیں۔ ان سے کچھ حاصل نہیں ہوگا‘ ‘ شاہ جی نے تنک کر کہا۔
’’شاہ جی اگر آپ سمجھتے ہیں کہ محکمہ زراعت والے ایک دن ہنسی خوشی آزادانہ انتخابات کروا دیں گے اور بڑے سکون کے ساتھ بیرکوں میں واپس چلے جائیں گے اور سول سپرمیسی کو تسلیم کرلیں گے تو یہ آپ کی بچگانہ خوش فہمی ہے‘‘ میں نے چائے کا کپ میز پر رکھ دیا۔
’’مگر جس طرح ملک کی معیشت کے حالات بگڑ رہے ہیں۔ ان کے پاس نواز شریف کے سوا کوئی چارہ ہی نہیں ہے‘‘ یہ آغا صاحب بولے جس سے مجھے حیرت تو ہوئی مگر افسوس نہیں ہوا۔
’’یہ بھی ایک غلط فہمی ہے‘‘ میں نے تحمل سے کہا ’’اور بہت سے  حل موجود ہیں۔ اولاً تو اب  عمران خان اپنی نالائقیوں پر قابو پاتا جارہا ہے۔ ہوسکتا ہے کہ اگلے دو سال میں  وہ حکومت کرنا سیکھ ہی جائے اور اپنے نااہل وزراء کو فارغ کر دے‘‘
’’مگر اس کا ووٹ بینک ٹوٹ چکا ہے‘‘ بھٹی صاحب نے دخل دیا ‘‘ مہنگائی اس حکومت سے کم نہیں ہوسکتی۔ اگلے انتخابات میں اسے ووٹ نہیں پڑے گا۔
’’خیر ووٹ تو اسے پچھلے انتخابات میں بھی نہیں پڑا تھا‘‘ شاہ جی چمک کر بولے ’’ووٹ بینک صرف نواز شریف کا ہے اور وہ ہر گزرتے دن کے ساتھ بڑھ رہا ہے‘‘
’’شاہ جی آپ نے بھٹی صاحب کے ساتھ ساتھ اپنے سوال کا بھی خود ہی جواب دے دیا ہے ‘‘ میں نے مسکرا کر کہا ’’کیا مطلب‘‘
اگر پچھلی بار ووٹ نہ ملنے کے باوجود عمران خان حکومت میں آگیا تھا اور نواز شریف ووٹ لے کر باہر رہا تو پھر اب کیوں حالات بدلیں گے۔ اگر نواز شریف نے اپنی ضد نہ چھوڑی تو اس کا ووٹ بینک کیسا بھی ہو اسے حکومت نہیں ملے گی۔ بلکہ کچھ اور  بھی ہوسکتا ہے، میں نے سنجیدگی سے جواب دیا۔
’’ اور کیا ہوسکتا ہے‘‘ اب کی بار چوہدری صاحب بولے۔
(جاری ہے)
 

تازہ ترین خبریں

طلبہ کی توموجیں ہوگئیں۔۔بچوں پر اسکول  ہوم ورک کا دباؤ کم کرنے کا قانون پاس

طلبہ کی توموجیں ہوگئیں۔۔بچوں پر اسکول ہوم ورک کا دباؤ کم کرنے کا قانون پاس

راولپنڈی اسلام آبادکے شہریوں کی مشکلات۔۔۔جڑواں شہروں کے باسیوں کے لیے بڑی خوشخبری آگئی

راولپنڈی اسلام آبادکے شہریوں کی مشکلات۔۔۔جڑواں شہروں کے باسیوں کے لیے بڑی خوشخبری آگئی

بلاول بھٹو زرداری ’گو عمران گو‘ کے نعرے کیوں لگا رہے ہیں ؟

بلاول بھٹو زرداری ’گو عمران گو‘ کے نعرے کیوں لگا رہے ہیں ؟

حکومت غریب اور متوسط طبقے کیلئےکیا کرنے جا رہی ہے؟بڑا دعویٰ سامنے آگیا

حکومت غریب اور متوسط طبقے کیلئےکیا کرنے جا رہی ہے؟بڑا دعویٰ سامنے آگیا

تین ماہ سے بندداسوڈیم کی تعمیرکاکام کب شروع  ہوگا؟تاریخ کااعلان کردیاگیا

تین ماہ سے بندداسوڈیم کی تعمیرکاکام کب شروع ہوگا؟تاریخ کااعلان کردیاگیا

حکمرانوں کاہردن قومی سلامتی کے لیے خدشات بڑھارہاہے ۔۔حکومت سےنجات  حاصل نہ ہوئی تو۔۔۔

حکمرانوں کاہردن قومی سلامتی کے لیے خدشات بڑھارہاہے ۔۔حکومت سےنجات حاصل نہ ہوئی تو۔۔۔

ماسکو: مذاکرات کے دوران پاکستانی سفارتکار مائیک بند کرنا بھول گئے، شیریں مزاری اور بیٹی کے بارے میں کیا کہتے رہے؟ ریکارڈنگ سامنے آ گئی

ماسکو: مذاکرات کے دوران پاکستانی سفارتکار مائیک بند کرنا بھول گئے، شیریں مزاری اور بیٹی کے بارے میں کیا کہتے رہے؟ ریکارڈنگ سامنے آ گئی

لندن میں سیاسی جوڑ توڑ! جہانگیر ترین  بول پڑے، حقائق سے پردہ اُٹھا دیا

لندن میں سیاسی جوڑ توڑ! جہانگیر ترین بول پڑے، حقائق سے پردہ اُٹھا دیا

تبدیلی آ گئی،سرکاری افسر ہسپتال کی خوبصورت نرس کو اٹھا کرلے گیا اور پھر۔۔ایسا کام کہ پوری قوم غصے میں آگئی

تبدیلی آ گئی،سرکاری افسر ہسپتال کی خوبصورت نرس کو اٹھا کرلے گیا اور پھر۔۔ایسا کام کہ پوری قوم غصے میں آگئی

31دسمبر تک ہر شہری کے پاس یہ چیز ہو گی، حکومت کا ایسا اعلان کہ ہر کوئی خوشی سے جھوم اٹھا

31دسمبر تک ہر شہری کے پاس یہ چیز ہو گی، حکومت کا ایسا اعلان کہ ہر کوئی خوشی سے جھوم اٹھا

کورونا وائرس کا ایک نیا حملہ ! پروازیں کینسل اور سکول بند کرنے کا فیصلہ

کورونا وائرس کا ایک نیا حملہ ! پروازیں کینسل اور سکول بند کرنے کا فیصلہ

ملک میں ہنگامی صورتحال، بین الاقومی اور مقامی پروازیں منسوخ کرنا پڑ گئیں

ملک میں ہنگامی صورتحال، بین الاقومی اور مقامی پروازیں منسوخ کرنا پڑ گئیں

اس وقت آئی ایس آئی کا سربراہ کون ہے؟  وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے قیاس آرائیوں کا خاتمہ کر دیا

اس وقت آئی ایس آئی کا سربراہ کون ہے؟ وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے قیاس آرائیوں کا خاتمہ کر دیا

وہ شہر جہاںاب آئندہ دو ماہ کیلئے سورج نہیں نکلے گا،جان کر آپکو بھی شدید حیرت ہو گی

وہ شہر جہاںاب آئندہ دو ماہ کیلئے سورج نہیں نکلے گا،جان کر آپکو بھی شدید حیرت ہو گی