12:52 pm
 کمان سے نکلا قلم  

 کمان سے نکلا قلم  

12:52 pm

یہ پہلی بار نہیں ہوا،بارہا ان کا قلم بلا سوچے سمجھے کمان سے نکل جاتاہے ،انہیں تب احساس ہوتا ہے جب افتاد ٹوٹ چکی ہوتی ہے۔حامد میر کو بات کرنے پر نہیں مگر بڑھانے پرکمال  دسترس حاصل ہے ،وہ منہ چھٹ ہیں اسی لئے بات کے وزن پر نہیں اس میں چھپی  سنسنی خیزی  کو مد نظر رکھتے ہیں وہ سنسنی خیزی جس سے موصوف کی ریٹنگ میں اضافہ ہو ،بھلے بعد ازاں معذرتیں کیوں نہ کرتے پھریں ۔  
یہ رویہ ایک باخبریاکان کھڑے رکھنے والے پڑھے لکھے صحافی کا نہیں ہونا چاہیئے مگر میر صاحب کا المیہ یہ ہے کہ انہیں اپنی جانکاری کی بھاری قیمت وصول کرنا ہوتی ہے اس کے لئے وہ کسی بھی انتہا تک جاسکتے ہیں ۔مجھے یاد آیا انہوں نے بڑے شوق اورتفاخر سے روزنامہ اوصاف کی ایڈیٹر شپ سنبھالی تھی۔ اوصاف کا وصف یہ رہا کہ اس نے اپنے لکھنے والوں پر کبھی کوئی قدغن نہیں لگائی ،مگر جو لکھا جائے سچ ہو، ایسا سچ جس کی گواہی تلاش کرنے کی ضرورت پیش نہ آئے وہ خود اپنا ثبوت ہو۔حقیقت یہ ہے اسلام آباد ،جرمنی ،انگلینڈ اور کشمیر کے علاوہ دیگر کئے علاقوں سے شائع ہونے والے اس موقر روزنامے نے حامد میر کو شہرت دوام سے ہمکنار کیا اور انہیں ایک ایسا اعتمادبخشا جو موصوف کی پوری  زندگی کے لئے کافی تھا ۔اوصاف کی ادارت کے دنوں میں ان کے رابطے اداروں اور ان کے سرکردہ لوگوں سے استوار ہوئے ،اوصاف اخبار کی نیک نامی کا صلہ تھا کہ اسامہ بن لادن نے میر صاحب کو شرف ملاقات سے نوازا اور اوصاف ہی کے اہتمام پر وہ افغانستان گئے اور پھر جیسے ہی اس مہم سے لوٹے  صحافت کی دنیا میں ان نام بام عروج پر پہنچ گیا۔
پس اوصاف سے کمائی ہوئی شہرت کو انہوں نے مہنگے داموں بیچنے کا عزم باندھا۔  انہیں ان کے لفظوں اور جذبوں کے خریدار بھی مل گئے ،مگر  انہوں نے عجلت  میں اپنے محسن کے ساتھ وہ کیا جس کے بارے حضرت علی ؓنے فرمایا تھا کہ ’’اس کے شر سے ڈرو جس پر احسان کرو‘‘  حامد میر نے اخبار بدلا تو تیور بھی بدل لئے ۔ نئے اخبار میں پہلاکالم چیف ایڈیٹر اوصاف کی ہرزہ سرائی میں لت پت  ایسا لکھا کہ مجھے پہلی بار ان کی تحریر سے گھن آئی۔
 حامد میر بہادر صحافی ہیں مگر مزاج کے اعتبار سے ان کے یہاں تعصب اور جانب داری چھپی نہیں رہ سکتی ۔ اپنی تحریر کو باوزن اور معتبر بنانے کے لئے وہ کتابی حوالہ جات استعمال تو کرتے ہیں مگر اکثر  و بیشتر relevancy  برقرار نہیں رکھ سکتے ۔ مجھے یہ کہنے میں بھی کچھ باک نہیں کہ وہ عام طور پر حالات و واقعات کے پس منظر میں دیکھتے ہوئے بھی اپنا تعصب چھپانے میں کامیاب نہیں ہوسکتے ۔ اس میں شک نہیں کہ وہ معروضی حالات پر گہری نظر رکھتے ہیں  مگر ان کے بیان کرنے یا اپنی تحریرکو وقیع بنانے کے لئے ان الفاظ کا فقدان محسوس ہوتا ہے،  جو ہونے چاہئیں۔
مجھے تو آج تک یہ بھی معلوم نہیں ہوسکا کہ اس کا ہیرو کون ہے۔  اسامہ بن لادن اور ملا عمر جیساکوئی جہادی جو اللہ اوراس کے نبی آخرالزماں حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کے بتائے ہوئے نظام حیات کے لئے اپنا تن من دھن دائو پر لگا دیتا ہے یا کوئی سرخ انقلاب کا بانی اس کا آئیڈیل ہے۔  جس کے بتائے ہوئے نظام زندگی کے احیا   کے فکر و نظر کا وہ سچا حامی ہے۔اس بارے اس نے اپنی سوچ کو ہمیشہ ملفوف رکھا ہے ۔سیاسی نقطہ نظر کے حوالے سے بھی کبھی وہ بنیاد پرست مولوی کی فکر کی نمائندگی کررہا ہوتا ہے تو کبھی سرخ انقلاب کے نعرے لگانے والے  مذہب بے زار گروہوں  کی پشتی بانی کا علمبردار بن کر ان کی تحریکوں کا ساتھ دینے پر تلا ہوتا ہے ۔جس سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ اس نے فکری اور انقلابی تحریکوں کا کبھی سنجیدہ مطالعہ نہیں کیا۔ جدھر کی ہوا ہو،ادھر چل پڑنے کی روش پر گامزن ہے ۔
حامد میرنے اپنے تازہ ترین بیان میں جس بودے پن کا اظہار کیا اس سے بھی ان کی نابالغ سوچ عیاں ہے ۔جس قومی ادارے کی انہوں نے ہرزہ سرائی کی ہے اس پر تنقید کے دروازے کبھی بند نہیں رہے۔  ملک کے بڑے بڑے لکھنے والے مستقل کالم نگار اور دانشور سب گلوں شکوئوں کا بجا طور پر اظہار کرتے رہتے ہیں اوران کے تحفظات کے ازالے کے لئے ادارے کی جانب سے گاہے بگاہے اجتماعی حال احوال   اور تبادلہ خیال کی نشست کا اہتمام بھی کیا جاتا ۔ دونوں جانب سے تسلیم و رضا باہمی آگہی اور عہدوپیمان بھی کئے جاتے ہیں۔ گزشتہ چند سالوں سے کسی طرف سے اظہار رائے کی پابندی کم کم ہی لگائی گئی ہے تاہم حامد کا المیہ یہ ہے کہ ان  کی کمان میں تنا قلم ہدف سے پار گرتا ہے اس لئے جہان بھر میں ان پر جگ ہنسائی ہوتی ہے ۔

تازہ ترین خبریں

رہائشی عمارت دیکھتے ہی دیکھتے ملبے کا ڈھیر بن گئی، ویڈیو میں تباہی کے دلخراش مناظر

رہائشی عمارت دیکھتے ہی دیکھتے ملبے کا ڈھیر بن گئی، ویڈیو میں تباہی کے دلخراش مناظر

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی نااہلی۔۔ سندھ ہائی کورٹ سے بڑی خبر آ گئی،جیالے بھی ہکا بکا

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی نااہلی۔۔ سندھ ہائی کورٹ سے بڑی خبر آ گئی،جیالے بھی ہکا بکا

الیکشن کمیشن نے ضمنی انتخاب کی تاریخوں کا اعلان کردیا

الیکشن کمیشن نے ضمنی انتخاب کی تاریخوں کا اعلان کردیا

مہنگائی کانیاطوفان آنے کو۔۔۔ڈالر نےاگلے پچھلے تمام ریکارڈ توڑ دیئے،امریکی کرنسی کی قدرمیں کتنااضافہ ہوگیا؟جان کرپریشان ہوجائیں گے

مہنگائی کانیاطوفان آنے کو۔۔۔ڈالر نےاگلے پچھلے تمام ریکارڈ توڑ دیئے،امریکی کرنسی کی قدرمیں کتنااضافہ ہوگیا؟جان کرپریشان ہوجائیں گے

یوٹیوب نے عوام سے کیاگیااپناوعدہ پوراکردیا۔۔۔شاندارسہولت متعارف کر ادی

یوٹیوب نے عوام سے کیاگیااپناوعدہ پوراکردیا۔۔۔شاندارسہولت متعارف کر ادی

 ملک کے بیشتربالائی وسطی علاقوں میں موسم خشک رہے گا

ملک کے بیشتربالائی وسطی علاقوں میں موسم خشک رہے گا

سردیوں کا آغاز ہو گیا۔۔موسم سرما کی پہلی برفباری ۔۔پاکستان کا کون سے اہم ترین علاقے نے برف کی چادر اوڑھ لی ؟جانیے تفصیل

سردیوں کا آغاز ہو گیا۔۔موسم سرما کی پہلی برفباری ۔۔پاکستان کا کون سے اہم ترین علاقے نے برف کی چادر اوڑھ لی ؟جانیے تفصیل

ملک آج بھی کرپشن کے سرطان کی جکڑ میں ہے۔سراج الحق 

ملک آج بھی کرپشن کے سرطان کی جکڑ میں ہے۔سراج الحق 

تحریک انصاف نے قوم پرست جماعتوں سے انتخابی اتحاد کا فیصلہ کرلیا 

تحریک انصاف نے قوم پرست جماعتوں سے انتخابی اتحاد کا فیصلہ کرلیا 

 شہباز شریف اورسلمان شہباز کی بریت کی خبر غلط اور مس رپورٹنگ ہے۔شہزاد اکبر

شہباز شریف اورسلمان شہباز کی بریت کی خبر غلط اور مس رپورٹنگ ہے۔شہزاد اکبر

ایف آئی اے شہباز خاندان کیخلاف ثبوتوں کے 5تھیلے سامنے لے آیا

ایف آئی اے شہباز خاندان کیخلاف ثبوتوں کے 5تھیلے سامنے لے آیا

ربیع الاول کا چاند7اکتوبر بروز جمعرات کو نظرآنے کا امکان ہے ، محکمہ موسمیات 

ربیع الاول کا چاند7اکتوبر بروز جمعرات کو نظرآنے کا امکان ہے ، محکمہ موسمیات 

 میرے دادا کہتے تھے بیٹا عوام کی خدمت ایسے کرو کہ عوام آپ کو یادرکھے۔حمزہ شہباز

میرے دادا کہتے تھے بیٹا عوام کی خدمت ایسے کرو کہ عوام آپ کو یادرکھے۔حمزہ شہباز

 ہم نے خدمت کے ریکارڈ قائم کیے اس لیے قوم نے ہم پر بار بار اعتماد کیا،رانا ثنا اللہ

ہم نے خدمت کے ریکارڈ قائم کیے اس لیے قوم نے ہم پر بار بار اعتماد کیا،رانا ثنا اللہ