12:53 pm
عزم و ہمت کی داستان

عزم و ہمت کی داستان

12:53 pm

28مئی کو پاکستان نے بھارت کے پانچ ایٹمی دھماکوں کے جواب میں چھ ایٹمی دھماکے کئے تھے۔ ان دنوں نواز شریف وزیراعظم تھے اور محترمہ بے نظیر بھٹو ریاستی معتوب اور بیرون ملک تھی۔ وزیراعظم نواز شریف کن کن فکری مراحل سے گزر کر ایٹمی دھماکے کرنے چاغی پہنچے تھے اس کی مکمل تفصیل ان کے ساتھ پولیس کی طرف سے ڈیوٹی دینے والے ذوالفقار چیمہ نے دو اقسا  ط میں ایک معاصر اخبار میں لکھ دی ہیں۔ یہ تفصیل بہت دلچسپ ہیں جبکہ بریگیڈیئر(ر) سیمسن سائمن شرف نے ایک روزنامے میں دو اقساط میں ’’یوم تکبیر تک کا سفر‘‘ لکھ کر ملٹری اسٹیبلشمنٹ کی طرف سے بھار ت کے چھ ایٹمی دھماکوں کے بعد کی سوچ بچار کی پوری تفصیل لکھ دی ہے۔ بریگیڈیئر سائمن شرف نے ہی پہلی قسط میں دلچسپ راز سے پردہ اٹھایا کہ محترمہ بے نظیر ان دنوں شائد امریکہ میں تھی کہ انہوں نے پاکستان کو ایٹمی دھماکوں کے جواب میں ایٹمی دھماکے نہ کرنے کامشورہ اخباری بیان میں دیا تھا، مگر بعد میں محترمہ بے نظیر بھٹو نے رازداری سے تین چھوٹے چھوٹے صفحات پر زرد رنگ کی سیاہی والے پین سے ملٹری اسٹیبلشمنٹ کو اپنا مشورہ بھجوایا تھا کہ اس موقع کو ضائع نہ ہونے دیں بلکہ جرات اور دلیری سے جوابی ایٹمی دھماکے کریں ، بھٹو کی بیٹی کو یہی کچھ کرنا چاہیے تھا۔ میں بھٹوز میں جرات کی جھلک اکثر دیکھتا ہوں۔
ذوالفقار علی بھٹو ہماری تاریخ کا بہت بڑا متنازعہ کردار ہے۔ مشرقی پاکستان پر جنرل یحییٰ خان کی طرف سے ملٹری آپریشن سے لے کر سقوط ڈھاکہ میں بھٹو کا کردار قابل مواخذہ حقیقت ہے مگر یہی قابل مواخذہ اور ناپسندیدہ کردار والا بھٹو ہی ہے جس نے پہلے بھارتی ایٹمی دھماکے بعد فیصلہ کیا تھا کہ پاکستان ایٹمی میدان میں جائے گا۔ ڈاکٹر عبدالقدیر خان یہ کہانی کئی بار بیان کرچکے ہیں کہ کس طرح وہ بھٹو تک پہنچے اور پھر کس کس طرح انہوں نے یورینیم کو افزودہ کرنے کا مرحلہ طے کیا۔ بھٹو کی طرف سے مالیاتی امور کی سہولتیں دینے کا فرض سیکرٹری خزانہ غلام اسحاق خان نے نہایت فیاضی اور رازداری سے ادا کیا جبکہ فوج نے کہوٹہ کی اور سائنس دانوں کی حفاظت میں تاریخی کردار ادا کیا۔ جنرل ضیاء الحق نے بھٹو کے ہاتھوں شروع کئے گئے کہوٹہ مشن کو پوری جانفشانی،  دلیری اور رازداری سے مکمل کیا۔ بھٹو کی شخصیت اور جنرل ضیاء الحق کی شخصیات تضادات کانام ہے۔بھٹو نے پاکستان کو پہلا آئین دیا، یورینیم افزدہ کرتا ڈاکٹر عبدالقدیر خان اور کہوٹہ  دیا اور بھٹو ہی نے علامہ اقبال ؒاور  مجلس احرار کے تاریخی اینٹی قادیانی موقف کو قبول کیا اور پارلیمنٹ سے قادیانیوں کو پارلیمانی بحث و مباحثے کے بعد غیر مسلم قرار دیا۔ آغا شورش کاشمیری، مجید نظامی نے بھی اس حوالے سے بھٹو کو مسلسل مدد فراہم کی جبکہ علمائے کرا م نے بھرپور تیاری یحییٰ بختیار کو کروائی تھی۔
28 مئی کو ایٹمی دھماکے ہوئے تو امریکہ و مغرب نے پاکستان پر اقتصادی پابندیاں نافذ کر دیں۔ ان لمحوں سعودی عرب ایک بارپھر پاکستان کی مدد کو آیا اور پاکستان کو مفت تیل کی سہولت طویل مدت کے لئے دی۔ سعودی عرب ہی وہ ملک ہے جس کے شاہ فیصل نے پاکستانی دفاع کو مضبوط کرنے کے لئے ایف سولہ طیاروں کے لئے بھرپور مالی امداد  دی تھی کہ سعودی عرب اور پاکستان ایک روح رکھتے دو ممالک ہیں۔
شہزادہ سلطان بن عبدالعزیز سعودی وزیر دفاع تھے کہ انہیں سعودی انٹیلی جنس نے اطلاع دی کہ تل ابیب سے اسرائیلی طیارے انڈیا چلے گئے ہیں اور خطرہ ہے کہ یہ اسرائیلی جنگی طیار ے کہوٹہ پر حملے آور ہوں گے۔ سعودیہ کی پاکستان کے لئے شدید محبت ملاحظہ کیجئے کہ وزیر دفاع شہزادہ سلطان خود فوراً اسلام آباد روانہ ہوئے اور آرمی چیف جنرل اسلم بیگ سے اسلام آبادائیرپورٹ پر ملاقات کرکے انہیں کہوٹہ کی حفاظت کو مضبوط بنانے کی ضرورت بیان کی اور بعد ازاں شہزادہ سلطان وزیراعظم محترمہ بے نظیر بھٹو سے ملے۔ 
پاکستان کا ایٹمی پروگرام کن کن خطرناک مراحل سے گزرا؟ اب تاریخ کا حصہ ہے۔  پاکستانی  سائنس دانوں، ڈاکٹر عبدالقدیر اور ان کے ساتھیوں اور ایٹمی کمیشن کے ڈاکٹر ثمر مبارک اور ان کے ساتھیوں نے ، ماہر ین نے جو جو کام کیا وہ قابل قدر قومی کارنامہ ہے۔ یہ سب ہمارے قومی ہیروز ہیں۔
بھٹوز ، ڈکٹر عبدالقدیر اور ان کے ساتھیوں، جنرل ضیاء الحق اور غلام اسحاق اور پاک فوج نے قومی رازوں کی جس طرح حفاظت کی، جس طرح اسے خاموشی سے پایہ تکمیل تک پہنچایا،  سیٹھ عابد جیسے تاجر نے جو خدمات سرانجام دیں۔ نواز شریف نے جس طرح دھماکے کئے ، یہ سب لوگ ہمارے قومی ہیروز کی طرح کے  کردار ہیں۔ ان سب کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں۔ ذرا غور کریں کہ اسرائیل نے کس طرح عراق کا ایٹمی پروگرام تباہ کیا، کس طرح ایرانی ایٹمی پروگرا م کو آگے نہیں بڑھنے دیتا، یہی کچھ پاکستان کو بھی درپیش ہوتا رہتا تھا۔ پاکستان زندہ باد۔ سائنس دان زندہ باد۔ ایٹمی دھماکوں تک خدمات سرانجام دینے والے قومی ہیروز زندہ باد۔

تازہ ترین خبریں

الیکشن کمیشن نے ضمنی انتخاب کی تاریخوں کا اعلان کردیا

الیکشن کمیشن نے ضمنی انتخاب کی تاریخوں کا اعلان کردیا

مہنگائی کانیاطوفان آنے کو۔۔۔ڈالر نےاگلے پچھلے تمام ریکارڈ توڑ دیئے،امریکی کرنسی کی قدرمیں کتنااضافہ ہوگیا؟جان کرپریشان ہوجائیں گے

مہنگائی کانیاطوفان آنے کو۔۔۔ڈالر نےاگلے پچھلے تمام ریکارڈ توڑ دیئے،امریکی کرنسی کی قدرمیں کتنااضافہ ہوگیا؟جان کرپریشان ہوجائیں گے

یوٹیوب نے عوام سے کیاگیااپناوعدہ پوراکردیا۔۔۔شاندارسہولت متعارف کر ادی

یوٹیوب نے عوام سے کیاگیااپناوعدہ پوراکردیا۔۔۔شاندارسہولت متعارف کر ادی

 ملک کے بیشتربالائی وسطی علاقوں میں موسم خشک رہے گا

ملک کے بیشتربالائی وسطی علاقوں میں موسم خشک رہے گا

سردیوں کا آغاز ہو گیا۔۔موسم سرما کی پہلی برفباری ۔۔پاکستان کا کون سے اہم ترین علاقے نے برف کی چادر اوڑھ لی ؟جانیے تفصیل

سردیوں کا آغاز ہو گیا۔۔موسم سرما کی پہلی برفباری ۔۔پاکستان کا کون سے اہم ترین علاقے نے برف کی چادر اوڑھ لی ؟جانیے تفصیل

ملک آج بھی کرپشن کے سرطان کی جکڑ میں ہے۔سراج الحق 

ملک آج بھی کرپشن کے سرطان کی جکڑ میں ہے۔سراج الحق 

تحریک انصاف نے قوم پرست جماعتوں سے انتخابی اتحاد کا فیصلہ کرلیا 

تحریک انصاف نے قوم پرست جماعتوں سے انتخابی اتحاد کا فیصلہ کرلیا 

 شہباز شریف اورسلمان شہباز کی بریت کی خبر غلط اور مس رپورٹنگ ہے۔شہزاد اکبر

شہباز شریف اورسلمان شہباز کی بریت کی خبر غلط اور مس رپورٹنگ ہے۔شہزاد اکبر

ایف آئی اے شہباز خاندان کیخلاف ثبوتوں کے 5تھیلے سامنے لے آیا

ایف آئی اے شہباز خاندان کیخلاف ثبوتوں کے 5تھیلے سامنے لے آیا

ربیع الاول کا چاند7اکتوبر بروز جمعرات کو نظرآنے کا امکان ہے ، محکمہ موسمیات 

ربیع الاول کا چاند7اکتوبر بروز جمعرات کو نظرآنے کا امکان ہے ، محکمہ موسمیات 

 میرے دادا کہتے تھے بیٹا عوام کی خدمت ایسے کرو کہ عوام آپ کو یادرکھے۔حمزہ شہباز

میرے دادا کہتے تھے بیٹا عوام کی خدمت ایسے کرو کہ عوام آپ کو یادرکھے۔حمزہ شہباز

 ہم نے خدمت کے ریکارڈ قائم کیے اس لیے قوم نے ہم پر بار بار اعتماد کیا،رانا ثنا اللہ

ہم نے خدمت کے ریکارڈ قائم کیے اس لیے قوم نے ہم پر بار بار اعتماد کیا،رانا ثنا اللہ

چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری ہنگامی دورے پر امریکہ روانہ 

چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری ہنگامی دورے پر امریکہ روانہ 

کورونا کے بعد ڈینگی کے وار جاری ۔۔۔ سندھ اور پنجاب میں سینکڑوں کیسز رپورٹ 

کورونا کے بعد ڈینگی کے وار جاری ۔۔۔ سندھ اور پنجاب میں سینکڑوں کیسز رپورٹ