01:27 pm
امریکہ سے ایک استدعا

امریکہ سے ایک استدعا

01:27 pm

امریکہ جولائی یا ستمبر کے ابتدا میں افغانستان سے چلاجائے گا۔ 40فیصدامریکی اور نیٹو کی فوجیں افغانستان چھوڑ چکے ہیں۔ باقی
امریکہ جولائی یا ستمبر کے ابتدا میں افغانستان سے چلاجائے گا۔ 40فیصدامریکی اور نیٹو کی فوجیں افغانستان چھوڑ چکے ہیں۔ باقی 60فیصدبھی جلدچلی جائیں گی۔ بگرام کی ایئربیس خالی کیاجارہاہے۔ جبکہ قندھار کاایئر بیس تقریباً خالی ہوچکاہے۔ اس طرح امریکہ آئندہ آنے والے دنوں میں افغانستان میں موجود نہیں رہے گا۔ امریکہ نے افغانستان میں20 سال تک افغان طالبان کے خلاف جنگ لڑی‘ جس میں نیٹو کے فوجیں بھی شامل تھیں۔ لیکن نتائج امریکہ کے حق میں نہیں آسکے۔ نہ تو افغانستان میں امریکی طرز کی جمہوریت قائم ہوسکی اور نہ ہی امن وسکون۔ چنانچہ موجودہ صورتحال سے یہ نتیجہ اخذ کیا جاسکتاہے کہ امریکہ افغانستان میں طالبان کے ہاتھوں جنگ ہارچکاہے۔ بالکل اس طرح جس طرح سوویت یونین افغان طالبان کے ہاتھوں شکست کھاکر پسپا ہوا تھا۔ لیکن سوویت یونین پاکستان‘ امریکہ اور افغان طالبان کے درمیان جنیوا معاہدہ کرکے عالمی رسوائی سے بچ گیاتھا ۔امریکہ نے بھی افغان طالبان کے ساتھ براہ راست افغان امن کے قیام کے لئے مذاکرات کئے جس کے نتیجہ میں دوحہ امن پروسس معروض وجود میں آیا۔ اس ہی معاہدے کے تحت امریکہ افغانستان سے نکل رہاہے۔ اس امید کے ساتھ کہ افغانستان کی سرزمین کسی دوسرے ملک کے خلاف دہشت گردی کے لئے استعمال نہیں ہوگی۔ دوحہ میں افغان طالبان اور افغان حکومت کے مابین بات چیت تقریباً رک چکی ہے۔ جس سے یہ نتیجہ باآسانی اخذ کیاجاسکتاہے کہ افغان حکومت طالبان کے ساتھ مذاکرات کرنے میں دلچسپی کامظاہرہ نہیں کررہی ہے۔ 
امریکہ کی یہ خواہش ہے کہ پاکستان افغان طالبان پر دبائو ڈالے کہ وہ افغان حکومت کے ساتھ بامعنی مذاکرات کریں‘ لیکن پاکستان نے امریکی نمائندے زلمے خلیل زاد کو یہ باور کرادیا تھا کہ پاکستا ن افغان طالبان پر کسی حد تک اثر ورسوخ رکھتاہے جبکہ ان کی پالیسیاںان کی اپنی تشکیل دی ہوئی ہوتی ہیں ۔ جس میں پاکستان کاکوئی عمل دخل نہیں ہوتا ۔ لیکن امریکہ پاکستان کی اس دلیل کو ماننے کو تیار نہیں ہے۔ تاہم امریکہ کو چاہیے کہ وہ افغانستان سے نکلنے سے پہلے افغانستان میں ایک ایسی حکومت بنانے کی حقیقی معنوں میں کوشش کرنی چاہیے جس میں افغان طالبان کے علاوہ افغانستان کی موجودہ حکومت کے ساتھ ساتھ دیگر اہم افراد شامل ہوں تاکہ افغانستان میں امریکہ کے چلے جانے کے بعد سیاسی خلاء پیدا نہ  ہوسکے  اور نہ ہی خانہ جنگی کے امکانات پیدا ہوسکیں جیسا کہ دنیا بھر کے باخبر تجزیہ نگارلکھ رہے ہیں ۔ چنانچہ پاکستان سمیت اس خطے کے تمام ممالک (بھارت کو چھوڑ کر)امریکہ سے یہ امید رکھ رہے ہیں کہ وہ اپنی سیاسی وسفارتی بصیرت کے ذریعہ افغانستان کو ممکنہ خانہ جنگی کی طرف نہیں دھکیلیں گے۔ بلکہ ایک یونٹی حکومت کے کی طرف بھرپور کوشش کی جائے گی۔
اس ہی پس منظر میں افغانستان‘ چین اور پاکستان کے وزیرخارجہ کے درمیان ملاقات ہوئی ہے جس میں تفصیل سے یہ غور کیا گیا کہ امریکہ کے چلے جانے کے بعد افغانستان کو کس طرح خانہ جنگی سے روکاجاسکتاہے۔ اس بات چیت میں بھی ایک یونٹی حکومت کاتصور زیربحث آیاتھا۔ لیکن واضح خدوخال سامنے نہیں آسکے۔ یا اس کو میڈیا کے سامنے پیش نہیں کیا گیا۔ لیکن یہ بات طے شدہ ہے کہ اگر امریکہ نے افغانستان سے جانے سے قبل افغانستان میں افغان طالبان کے ساتھ مل کر ایک نمائندہ حکومت نہیں بنائی تو افغانستان ایک بار نہ چاہتے ہوئے ایک بار پھر خانہ جنگی کی لپیٹ میں آسکتاہے۔ جس کے انتہائی خراب نتائج اس خطے پر پڑیں گے جس میں پاکستان اور ایران سرفہرست ہوںگے۔ افغان طالبان کو بھی اس حقیقت کا ادراک ہے وہ بھی اپنے ملک میں دوبارہ خانہ جنگی نہیں چاہتے ہیں لیکن اگر ان کی راہ میں اشرف غنی کے ذریعہ مصنوعی رکاوٹیں کھڑی کی گئیں تو وہ ان قوتوں سے ضرور لڑیں گے جس طرح انہوں نے امریکہ اور نیٹو کی افواج سے بڑی دلیری کے ساتھ جنگ کی ہے۔ جیساکہ میں نے بالائی سطور میں لکھاہے کہ پاکستان خود امریکہ سے یہ امید رکھتاہے کہ وہ افغانستان کو مکمل طور پر چھوڑنے سے پہلے ایک ایسی حکومت تشکیل دینے کی کوشش کرے گا جوافغانستان کے نمائندہ افراد پر مشتمل ہو جو افغانستان میں قیام امن کی ذمہ داریاں سنبھال سکیں اور اگر ایسی نمائندہ حکومت قائم نہیں ہوسکی تو پھرممکنہ خانہ جنگی افغانستان کامقدر بن جائے گی۔ ویسے بھی اشرف غنی کی حکومت افغان طالبان کا مقابلہ نہیں کرسکتی ہے‘  اس کی فوج آہستہ آہستہ بدلتے ہوئے حالات کے پیش نظر افغان طالبان سے مل رہی ہے‘ وہ ان سے لڑنا بھی نہیں چاہتے ہیں ۔ اس طرح بہت کم عرصے میں اشرف غنی کی حکومت تحلیل ہوجائے گی۔ ویسے بھی افغانستان کی اکثر اضلاع میں طالبان کاقبضہ ہے‘ ان کے پاس جدید ہتھیار ہیں اور لڑنے اور مرنے کاحوصلہ بھی ہے۔ چنانچہ امریکہ کے افغانستان سے چلے جانے کے بعد افغان طالبان چند دنوں میں کابل پر بھی قبضہ کرکے اپنی حکومت قائم کرلیں گے۔ یہ یقینی امر ہے‘ امریکہ کو سنجیدگی سے اس مسئلہ پر غور کرناچاہیے۔
شنید ہے کہ امریکہ کے صدر جوبائیڈن بھی نہیں چاہتے ہیں کہ افغانستان میں دوبارہ خانہ جنگی شروع ہوسکے‘ کیونکہ امریکہ نے ایک ٹریلین ڈالرز سے زیادہ افغانستان میں سرمایہ کاری کی ہے جس میں انسانی وسائل کی ترقی کی مد میںبھی خاصی رقم خرچ کی ہے۔ اگردوبارہ افغانستان میں خانہ جنگی شروع ہوتی ہے تو امریکہ نے اس ملک کی ترقی کے لئے  جوبھی کیاہے‘ وہ سب رائیگاں ہوجائے گا۔ نیز جدید فوجی ہتھیار بھی افغان طالبان کے ہاتھوں میں آجائیں گے۔ جس کو امریکہ پسند نہیں کرے گا۔ ذرا سوچیئے!
 

تازہ ترین خبریں

یوم شہداء پولیس:آئی جی اسلام آباد نے یادگار پر پھولوں کی چادر چڑھا دی

یوم شہداء پولیس:آئی جی اسلام آباد نے یادگار پر پھولوں کی چادر چڑھا دی

وزیراعظم کی سیٹ ملنے والی ہے یا پھر سیدھا ۔۔۔! سابق وزیر اعظم نواز شریف پاکستان واپس آرہے ہیں ؟ جانیں 

وزیراعظم کی سیٹ ملنے والی ہے یا پھر سیدھا ۔۔۔! سابق وزیر اعظم نواز شریف پاکستان واپس آرہے ہیں ؟ جانیں 

تبدیلی سرکار کا مہنگائی میں پسے عوام پر پھر ’’وار‘‘

تبدیلی سرکار کا مہنگائی میں پسے عوام پر پھر ’’وار‘‘

 کرپٹ لوگوں پر مکمل جھاڑوپھیر دینگے،آئندہ عام انتخابا ت سے  پہلے کرپشن کیسوں کے فیصلے ہوجائینگے،شیخ رشید

کرپٹ لوگوں پر مکمل جھاڑوپھیر دینگے،آئندہ عام انتخابا ت سے پہلے کرپشن کیسوں کے فیصلے ہوجائینگے،شیخ رشید

4افراد جاں بحق ، دردناک واقعہ نے سوگ برپا کردیا ،امدادی ٹیمیں روانہ

4افراد جاں بحق ، دردناک واقعہ نے سوگ برپا کردیا ،امدادی ٹیمیں روانہ

اپوزیشن لیڈر شہبازشریف کا پولیس کے شہداء کو سلام عقیدت

اپوزیشن لیڈر شہبازشریف کا پولیس کے شہداء کو سلام عقیدت

پولیس نے دہشت گردی کے خاتمے کیلئے بے مثال قربانیاں دیں،بلاول بھٹو زرداری

پولیس نے دہشت گردی کے خاتمے کیلئے بے مثال قربانیاں دیں،بلاول بھٹو زرداری

معاون خصوصی برائے سی پیک افیئرز خالد منصور کون ہیں؟جانیں ،بڑی خبرآگئی

معاون خصوصی برائے سی پیک افیئرز خالد منصور کون ہیں؟جانیں ،بڑی خبرآگئی

پاکستان 29 سال بعد اولمپکس میڈل جیتنے کیلئے پُرامید

پاکستان 29 سال بعد اولمپکس میڈل جیتنے کیلئے پُرامید

خطرناک مملک کی فہرست جاری، کیاپاکستان بھی شامل ہے ؟ بڑی خبرآگئی

خطرناک مملک کی فہرست جاری، کیاپاکستان بھی شامل ہے ؟ بڑی خبرآگئی

عاصم باجوہ نے عہدہ کیوں چھوڑا،وجہ کیابنی؟ جانیں 

عاصم باجوہ نے عہدہ کیوں چھوڑا،وجہ کیابنی؟ جانیں 

پڑوسی ملک میں خفیہ ادارے کی عمارت کی قریب دھماکا، سیکورٹی اہلکارسمیت تین افرادزخمی

پڑوسی ملک میں خفیہ ادارے کی عمارت کی قریب دھماکا، سیکورٹی اہلکارسمیت تین افرادزخمی

فواد چوہدری نے عبدالقیوم نیازی کو وزیراعظم آزاد کشمیر نامزد کیے جانے کی تصدیق کردی

فواد چوہدری نے عبدالقیوم نیازی کو وزیراعظم آزاد کشمیر نامزد کیے جانے کی تصدیق کردی

سکول بند ہوں گے یا کھلے رہیں گے۔۔۔!!! کیاہونیوالاہے ؟ طلبہ یہ خبرضرور پڑھ لیں ، پھر نہ کہنا خبر نہ ہوئی

سکول بند ہوں گے یا کھلے رہیں گے۔۔۔!!! کیاہونیوالاہے ؟ طلبہ یہ خبرضرور پڑھ لیں ، پھر نہ کہنا خبر نہ ہوئی