12:53 pm
ریلوے، بدترین حادثہ! اصل مجرم؟

ریلوے، بدترین حادثہ! اصل مجرم؟

12:53 pm

٭گھوٹکی:ریلوے کا ایک اور بدترین حادثہ، ساری ریل انتظامیہ مجرم!!O پٹڑی خراب ہونے کا علم تھا پھربھی گاڑیاں چلائی گئیں، اہم انکشافات،60 معصوم مسافر جان سے گئےO امریکہ:پاکستان میں اڈوں کے لئے امریکہ کا دبائو بڑھ گیا، عدم تعاون پر دھمکیاںO پشاور، حکومتی ایم پی اے کی بجلی گھر پر چڑھائی، کنٹرول سنبھال لیا۔ مقدمہ پر دھمکیاں!! کراچی: بحریہ ٹائون کے خلاف مظاہرہ، سندھو دیش کے نعرے، اسمبلی میں ہنگامہO فرزانہ راجہ، اشتہاری، وارنٹ گرفتاری، کروڑوں کا غبن، ملزمہ امریکہ میں روپوشOبلاول: احسن اقبال کو کاغذی عہدیدار کہنے پر شدید ردعملO پنجاب: جیلوںمیں قیدیوں کو ہفتہ میں چھ دن گوشت ملے گا!
٭دل دُکھ، غم، درد اور اذیت سے بھرا ہوا ہے۔ ریلوے کی انتہائی نااہل، نالائق انتظامیہ! سب چھوٹے بڑے تسلیم کر رہے ہیں کہ گھوٹکی کے نزدیک جس مقام پر ہولناک حادثہ ہوا وہاں ریلوے پٹڑی خراب ہونے کا سب کو علم تھا۔ اس پر تیز ٹرینیں چلانا انتہائی غلط اور خطرناک اقدام تھا مگر یہ کچھ جاننے کے باوجود یہ اقدام جاری رکھا گیا۔60 افراد ان لوگوں کی نااہلی نالائقی کی نذر ہوئے اور اب ریلوے کا وزیر، سیکرٹری، چیئرمین بورڈ، انسپکٹر جنرل، ڈی ایس سکھر جانوروں کی طرح آپس میں لڑ رہے ہیں، ایک دوسرے کو مجرم قرار دے رہے ہیں۔ یہ سب لوگ60 افراد کے قتل کے مجرم ہیں، ان کے خلاف مقدمے، گرفتاریاں، جیلیں ضروری ہیں، مگر یہ کارروائی کون کرے گا؟ کروڑوں کی تنخواہوں والی افسر شاہی! ایک دوسرے سے ملے ہوئے نالائق لوگ! انہیں کوئی پریشانی نہیں، اب تک سینکڑوں حادثے ہو چکے، ہزاروں مسافر جاں بحق و زخمی ہوئے، ہر بار قومی خزانے سے لواحقین کو کروڑوں کی امداد! یہ جرمانہ تو ریلوے کے ٹھنڈے کمروں سے باہر نہ نکلنے والے اعلیٰ حکام و افسروں سے وصول ہونا چاہئے۔ ان لوگوں کی نالائقی کا بوجھ قومی خزانہ پر ڈال دیا جاتا ہے۔
٭ایک بات پر حیرت کہ حالیہ حادثہ اور اس سے پہلے، اپوزیشن کے مطابق ریلوے کے 427 حادثوں کے ذمہ دار کسی وزیر ریلوے کا احتساب نہیں کیا گیا۔ میں اس تفصیل سے پہلے سابق وزیر ریلوے شیخ رشید کو حالیہ حادثہ کا ذمہ دار قرار دیتا ہوں جس نے 154 سال پرانی پٹڑی پر اک دم 35 نئی ٹرینیں چلا دیں، جب کہ پٹڑی اس قابل نہیں تھی کہ اس پر مزید بوجھ ڈالا جاتا۔ یہ پٹڑی 1866ء میں ابتدائی طور پر لاہور سے روہڑی تک انگریز حکومت نے فوجی مقاصد کے لئے بچھائی تھی۔ اتفاق سے اسی زمانہ میں ہڑپہ کے آثار قدیمہ دریافت ہوئے تھے۔ ریلوے حکام نے ہڑپہ کی عمارتوں اور وسیع زمین سے لاکھوں اینٹیں نکال کر پٹڑی کے نیچے بچھا دیں۔ اس وقت آثار قدیمہ کے ایک انگریز افسر کو پتہ چلا تو اس نے موقع پر پہنچ کر اینٹوں کی مزید کھدائی بند کرا دی، اس سے ہڑپہ کے موجودہ چند کھنڈرات بچ گئے۔ قارئین اندازہ لگا سکتے ہیں کہ آثار قدیمہ کی پرانی فرسودہ اینٹوں پر کھڑی یہ پٹڑی کیسے اورکب تک بھاری بھرکم ٹرینوں کا بوجھ سہار سکتی تھی؟ شیخ رشید نے ان حقائق کے باوجود محض اپنی روائتی ذاتی نمائش کے لئے اس ناقص پٹڑی پر 40 نئی ٹرینیں چلانے کا اعلان کر دیا۔ مزید ستم کہ عام طور پر ایکسپریس ٹرینوں کے ساتھ دس بارہ بوگیاں ہوتی تھیں مگر نئی اور پرانی ٹرینوں کے ساتھ 20، بلکہ اس سے بھی زیادہ بوگیاں لگا دی گئیں۔ سال خوردہ پٹڑی پہلے ہی دم توڑ رہی تھی، شیخی باز وزیر کی حماقت سے بالکل اجڑ گئی۔ کیا یہ بات عجیب نہیں کہ سکھر ڈویژن میں اسی پٹڑی پر ریلوے کے سب سے زیادہ حادثے ہو رہے ہیں۔ شیخ رشید کے دو سالہ دور میں ہونے والے حادثے میں 248 حادثوں کی تفصیل سامنے آئی تھی مگر ان صاحب کو الٹا ترقی دے کر وزیرداخلہ بنا دیا گیا!! اس سے پہلے بھی ریلوے کے ساتھ کیسا ستم ہوتا رہا! ایک صاحب ریلوے کے وزیر بنے۔ ان کی حَضرو شہر سے کراچی تک ہفتہ میں ایک بس چلا کرتی تھی۔ ان صاحب نے ٹرینیں بند کرنا شروع کر دیں۔ جس روز یہ وزارت چھوڑی، ان کی حَضرو اور کراچی کے درمیان روزانہ بسیں شروع ہو چکی تھیں! مرزا غالب نے کہا تھا کہ ’’تیرے سوا بھی ہم پہ بہت سے سِتم ہوئے‘‘ جو بھی آیا ملک کو تباہ کر کے چلا گیا۔ اب موجودہ وزیر ریلوے کا بیان کہ مرنے والے 60 افراد واپس آ سکتے ہوں تو میں استعفا دے دوں گا!! استغفراللہ!! کیا ظالمانہ بیان ہے! اعظم سواتی صاحب! استغفار کریں! قدرت کی گرفت بہت سخت ہوتی ہے! مجھ میں حادثہ کی تفصیل میں جانے کی ہمت نہیں اور ہاں وزیراطلاعات کا ہمیشہ کی طرح اوٹ پٹانگ بیان کہ خواجہ سعد رفیق (سابق وزیر ریلوے) کی گناہوں کی سزا اعظم سواتی کو نہیں دی جا سکتی!! اس معاملہ میں خواجہ سعد رفیق کا کیا ذکر!؟ ان کا دور جیسا بھی تھا مگر ٹرینیں وقت پر چلنا شروع ہو گئی تھیں اور موجودہ دور؟ کبھی کوئی ٹرین وقت پر نہیں آئی!!
٭ہر روز کوئی ایک موضوع پورے کالم کو سمیٹ لیتا ہے۔ نہائت اہم باتیں رہ جاتی ہیں۔ امریکہ نے پاکستان میں فوجی اڈوں کے لئے زبردست دبائو شروع کر دیا ہے۔ پہلے امریکہ کا ایک خصوصی دفاعی وفد آیا۔ اڈوں کی اہمیت اور ضرورت بیان کی۔ پاکستان کی حکومت نے ٹال دیا۔ امریکی نمائندہ خلیل زاد زلمے اسلام آباد کے چکر لگانے لگا۔ پھر بات نہ بنی تو امریکی سفیر نے وزیراعظم کی بجائے چیف آف آرمی سٹاف سے براہ راست ملاقات کی، بات پھر بھی آگے نہ بڑھ سکی تو امریکہ کی بدنام زمانہ سی آئی اے کا چیف ہنگامی طور پر اسلام آباد آ پہنچا، سیدھا جی ایچ کیو میں پاک آرمی کے چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کے پاس جا پہنچا اور سمجھانے کی کوشش کی کہ افغانستان سے امریکی فوج کے انخلاا سے وسیع پیمانہ پر خونریز خانہ جنگی کا خطرہ ہے جس سے پاکستان کو سخت نقصان پہنچے گا، اس خانہ جنگی کو روکنے کے لئے امریکہ کی کسی ہمسایہ ملک میں موجودگی ضروری ہے۔ یہ ہم سایہ ملک صرف پاکستان ہو سکتا ہے۔ ایک یہ ’زوردار‘ دلیل کہ امریکی اڈے پاکستان کی بھی حفاظت کریں گے۔ اب تک کی رپورٹ یہ ہے کہ پاکستان کے وزیراعظم اور وزارت خارجہ کے مسلسل بیانات آ رہے ہیں کہ پاکستان اڈے نہیں دے گا مگر کچھ اندر کی ’مصالحانہ‘ باتیں بھی آ رہی ہیں کہ یہ اڈے اس شرط پر دیئے جا سکتے ہیں کہ ان پر پاکستان کا کنٹرول ہو گا! امریکہ کو یہ شرط کیسے منظور ہو سکتی ہے کہ افغانستان پر حملوں کے لئے ہر بار پاکستان کی اجازت لی جائے؟ اہم ترین بات یہ کہ امریکہ ان اڈوں کے لئے بلوچستان کا وہ علاقہ مانگ رہا ہے جہاں چین کی مدد سے سی پیک کا منصوبہ زیر عمل ہے! چین نے واضح طور پر پاکستان کو یہ صورتحال ناقابل قبول ہونے کا انتباہ کر دیا ہے۔ اب مختصر آسان سی بات کہ پاکستان کے عوام امریکی ڈرون طیاروں سے پاکستان میں ہونے والی وسیع تباہی کے بارے میں پوری طرح باخبر اور نہائت حساس ہیں۔ عمران خاں کی حکومت اچھی طرح سمجھتی ہے کہ جس روز اڈے دیئے گئے، اسی روز حکومت کی چھٹی ہو جائے گی!!
٭پشاور میں کمرشل ایریا میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ ہو رہی تھی۔ تاجر لوگ احتجاج کر رہے تھے ایک ایم پی اے فضل الٰہی سخت غصے میں 40 افراد کے لشکرکے ساتھ بجلی کے مرکزی گرڈ سٹیشن میں گھس گیا اور دھمکیاں دیتے ہوئے اپنے ہاتھوں سے کمرشل علاقوں میں لوڈ شیڈنگ ختم کرکے اسے رہائشی علاقوں پر ڈال دیا۔ بجلی کے حکام نے فضل الٰہی کے خلاف کارسرکار میں مداخلت اور دھمکیوں کے خلاف مقدمہ درج کرا دیا۔ اس پر فضل الٰہی مزید سیخ پا ہو گیا کہ میں ایم پی اے ہوں جو چاہے اندھیر مچا سکتا ہوں۔ کوئی نہیں روک سکتا! یہ دھونس دھاندلی کا سرکاری مقدمہ ہے ممکن ہے ’اوپر‘، ’بہت اوپر‘ سے کوئی حکم آنے پر مقدمہ واپس ہو جائے اور یہ طے کر دیا جائے کہ اسمبلی کے ارکان جو مرضی اودھم مچائیں، انہیں روکا نہیں جا سکتا…اور یہ بھی اصرار کیا جائے کہ ’’قانون سب کے لئے برابر ہے!!‘‘

تازہ ترین خبریں

کچلنے کی کوشش  یا کچھ اور۔۔ ن لیگی رہنما نے پی ٹی آئی رہنما کی گاڑی کو ٹکر مار دی،کتنا جانی مالی نقصان ہوا؟جانیے تفصیل

کچلنے کی کوشش یا کچھ اور۔۔ ن لیگی رہنما نے پی ٹی آئی رہنما کی گاڑی کو ٹکر مار دی،کتنا جانی مالی نقصان ہوا؟جانیے تفصیل

جوبائیڈن اور ولادی میر پیوٹن نے ملاقات کر ڈالی

جوبائیڈن اور ولادی میر پیوٹن نے ملاقات کر ڈالی

معاملات سلجھ بھی سکتے ہیں اور بگڑ بھی سکتے ہیں۔ آئندہ چند ہفتے و مہینے نہایت اہم ہیں۔ شاہ محمود قریشی

معاملات سلجھ بھی سکتے ہیں اور بگڑ بھی سکتے ہیں۔ آئندہ چند ہفتے و مہینے نہایت اہم ہیں۔ شاہ محمود قریشی

قومی اسمبلی میں بجٹ بحث کے دوران اراکین پارلیمنٹ کی طرف سے مقدس کلمات کی توہین۔۔۔۔تھانہ سیکرٹریٹ میں مقدمہ کی درخواست

قومی اسمبلی میں بجٹ بحث کے دوران اراکین پارلیمنٹ کی طرف سے مقدس کلمات کی توہین۔۔۔۔تھانہ سیکرٹریٹ میں مقدمہ کی درخواست

قومی اسمبلی میں ہنگامہ آرائی اور ڈپٹی سپیکر کے خلاف تحریک عدم اعتماد کا معاملہ۔ پروزیراعظم عمران خان نے پارلیمانی پارٹی کا اجلاس طلب کر لیا

قومی اسمبلی میں ہنگامہ آرائی اور ڈپٹی سپیکر کے خلاف تحریک عدم اعتماد کا معاملہ۔ پروزیراعظم عمران خان نے پارلیمانی پارٹی کا اجلاس طلب کر لیا

 مفتی عزیز الرحمان کی نازیبا ویڈیووائرل ہونےکے واقعے کے بعد پولیس مدرسے پہنچ گئی

مفتی عزیز الرحمان کی نازیبا ویڈیووائرل ہونےکے واقعے کے بعد پولیس مدرسے پہنچ گئی

ایف آئی اے نے مسلم لیگ (ن) کے رہنما  حمزہ شہباز کو طلب کر لیا ہے۔

ایف آئی اے نے مسلم لیگ (ن) کے رہنما حمزہ شہباز کو طلب کر لیا ہے۔

مصنوعی ذہانت اور بلاک چین ٹیکنالوجیز سے پاکستان آئی ٹی برآمدات 5 ارب ڈالر تک بڑھانے کی صلاحیت رکھتا ہے، صدر مملکت

مصنوعی ذہانت اور بلاک چین ٹیکنالوجیز سے پاکستان آئی ٹی برآمدات 5 ارب ڈالر تک بڑھانے کی صلاحیت رکھتا ہے، صدر مملکت

نئی تعلیمی سال کا آغاز ۔۔ داخلے کب سے شروع ہوں گے۔۔۔وزیرتعلیم شفقت محمود نے اعلان کردیا

نئی تعلیمی سال کا آغاز ۔۔ داخلے کب سے شروع ہوں گے۔۔۔وزیرتعلیم شفقت محمود نے اعلان کردیا

گالیاں دینا اور بدتمیزی کرنا ہمارا کلچر نہیں ‏ن لیگ کی تاریخ ہے شیخ روحیل اصغرنےگالیاں دیں جس پرردعمل دیا۔ علی نواز اعوان

گالیاں دینا اور بدتمیزی کرنا ہمارا کلچر نہیں ‏ن لیگ کی تاریخ ہے شیخ روحیل اصغرنےگالیاں دیں جس پرردعمل دیا۔ علی نواز اعوان

جماعت اسلامی کے سابق یوسی ناظم کے بیٹے کو قتل کر دیا گیا

جماعت اسلامی کے سابق یوسی ناظم کے بیٹے کو قتل کر دیا گیا

حکومت نے پٹرولیم مصنوعات کی پٹرولیم لیوی میں کمی کردی

حکومت نے پٹرولیم مصنوعات کی پٹرولیم لیوی میں کمی کردی

 پاکستان سپر لیگ سیزن سکس۔۔کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کا ملتان سلطان کیخلاف ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ

پاکستان سپر لیگ سیزن سکس۔۔کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کا ملتان سلطان کیخلاف ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ

خیبر پختونخوا حکومت صوبے کی تاریخ کا سب سے بڑا بجٹ پیش کرنے والی ہے

خیبر پختونخوا حکومت صوبے کی تاریخ کا سب سے بڑا بجٹ پیش کرنے والی ہے