01:22 pm
لیبیا،عدم استحکام کاذمہ دارکون؟

لیبیا،عدم استحکام کاذمہ دارکون؟

01:22 pm

فرانس،مصراورترکی کے حمایت یافتہ امیدواروں  کومستردکرکے لیبیاکے مندوبین نے ماضی کی سیاست کومستردکرنے کاعندیہ دیا ہے۔حال ہی میں جنیوامیں بعض عجیب باتیں ہوئیں ۔ جنیواکاشماران شہروں میں نہیں ہوتاجوآج کل مشرقِ وسطیٰ سے متعلق اہم فیصلوں کے مراکزمیں سے ہیں۔لیبیامیں عبوری حکومت کے قیام کے لئے عالمی برادری کے حمایت یافتہ امیدوار اقوام متحدہ کے زیر اہتمام ہونے والے حالیہ مذاکرات میں لیبیاکے مندوبین کی منظوری حاصل کرنے میں ناکام رہے۔اس کی بجائے نسبتاًغیرمعروف سیاستدانوں کے ایک گروپ کولیبیامیں سالِ رواں کے آخرمیں ہونے والے انتخابات تک کے لئے عبوری حکومت کے قیام کے لئے منتخب کیاگیا۔ذرائع بتاتے ہیں کہ عبوری حکومت کے قیام کے لئے جنہیں چنا گیاہے وہ لیبیا کی سیاست میں بہت حدتک زمینی حقیقت کادرجہ رکھتے ہیں۔اقوام متحدہ کے تحت ہونے والے انتخابات کے امیدواروں کی تمام فہرستوں نے لیبیاکے مشرقی،مغربی اورشمالی علاقوں میں تقسیم گہری کی ہے مگرخیر،اصل مسئلہ یہ نہیں ہے۔سب یہ سمجھ رہے تھے کہ ملک کے مشرقی حصے سے تعلق رکھنے والے پارلیمنٹ کے اسپیکراغیلاصالح صدارتی کونسل کے سربراہ منتخب ہوں گے مگرایسانہ ہوا۔
لیبیاکوامن اوراتحادکی طرف لے جانے کی کوشش سے قبل اغیلاصالح کواپنے دامن سے چنددھبے دھونے ہیں۔انہوں نے طرابلس پر حملے کی ناکام کوشش میں ایسٹرن کمانڈرخلیفہ ہفتارکی مددکی تھی۔وہ لیبیاکے دارالحکومت طرابلس سے ملک کے وسط میں سرطے لے جاناچاہتے تھے۔خلیفہ ہفتارکی افواج آج کل اسی علاقے میں قیام پذیرہیں اورانہیں روس کی حمایت بھی حاصل ہے۔ اغیلاصالح ہی نے لیبیا کے قبائلی رہنمائوں کوجمع کیاتھا،جنہیں مصر کے السیسی نے لیبیاپرحملے کی دھمکی بھی دی۔اغیلاصالح نے مصرکے صدرکو اس بات پرآمادہ کیا کہ اگرقومی مصالحت کی حمایت یافتہ فوج سرطے پرحملہ کرے تووہ مداخلت کریں۔ گزشتہ جون میں طرابلس پرحملے کی ناکام کوشش کے بعدخلیفہ ہفتارکے حامی فوجیوں نے پسپاہوتے ہوتے سرطے ہی میں قدم جمائے تھے۔صالح مصرنوازہیں اوروہ اس بات کے لئے کوشاں رہے ہیں کہ لیبیا میں ایک ایسا کٹھ پتلی سربراہِ مملکت وحکومت لایا جائے جومصرکے کہنے پرچلے۔جنیوا میں جب صالح کومنظوری نہ مل سکی توقاہرہ میں ردِعمل خاصااشتعال آمیزتھا۔
مصرکے معروف ٹی وی اینکراورالسیسی کے غیرعلانیہ ترجمان مصفی بکری نے ایک ٹوئیٹ میں کہاکہ اقوام متحدہ کی وساطت سے کیے جانے والے فیصلے کی بساط الٹ دی جائے گی۔ اپنے ٹوئیٹ میں انہوں نے کہاکہ اخلاقی جوازنہ رکھنے والے کو انتخابات کے ذریعے ملک کی حکمراں کونسل کاسربراہ منتخب کرناملک کے خلاف سازش کے سواکچھ نہیں۔ان کاکہناتھا کہ اخوان المسلمون کوایک بارپھرسامنے لایاجارہاہے۔کوشش کی جارہی تھی کہ اغیلاصالح کواپنی مرضی کے مطابق چلانے کی تیاری کی جائے۔ہم ایساہونے نہیں دیں گے۔ اخوان  المسلمون نے بھی ملی جلی حکمتِ عملی اپنائی ہے۔ ایک طرف تواس نے اغیلاصالح کے حمایت یافتہ امیدوار وں کی حمایت کااعلان کیااوردوسری طرف جیتنے والے امیدواروں کی حمایت بھی کی۔یہ کام الگ الگ پلیٹ فارم سے ہوئے۔
اب قاہرہ نے بھی ذہن تبدیل کیاہے اورلیبیامیں نئی حکومت کی تشکیل کے حوالے سے ابھرنے والے نئے چہروں کوبھی اپنانے کی طرف قدم بڑھایا ہے۔ السیسی نے خلیفہ ہفتارکی افواج کی حمایت کی تھی مگرجب طرابلس پرحملے کی کوشش ترک افواج کی مدد سے ناکام بنادی گئی تب السیسی نے خلیفہ ہفتارکی حمایت سے بھی ہاتھ اٹھالیا۔جب ترکی کی بالادستی واضح ہوگئی تب مصر کی انٹیلی جنس نے ترک انٹیلی جنس سے گفت وشنیدکی اوراس معاملے میں خلیفہ ہفتارکواعتمادمیں نہیں لیاگیا۔ اغیلا صالح اس بات چیت کاحصہ تھے جس میں ترکی اور فرانس کے حمایت یافتہ وزیر داخلہ فتحی بغاشہ بھی شامل تھے۔جب یہ لوگ ناکام ہوگئے تب اغیلاصالح سمیت تمام فریقین نے نئی صدارتی کونسل کی بھرپورحمایت کااعلان کیا۔تمام غیر متوقع فاتحین نے بدلتی ہوئی صورتِ حال میں پیچھے رہناگواراکیاہے۔یہ حقیقت انہوں نے بھلائی ہے نہ نظر انداز کی ہے کہ حالات کی تبدیلی نے انہیں عارضی طورپر اقتدارکے ایوان تک پہنچایاتھا۔
نئے وزیراعظم عبدالحامددبیبہ خودکوکاروباری اورٹیکنوکریٹ کے طورپرپیش کرتے ہیں۔ان کاتعلق مسراطہ کے علاقے کے ایک انتہائی مالدارخاندان سے ہے اورانہوں نے تعمیرات کی صنعت میں نام کمایا ہے۔ان کامرکزی کاروباری علاقہ قذافی ہے۔ عبدالحامد دبیبہ کے کزن علی دبیبہ سابق آمرکرنل معمرقذافی کے قریبی ساتھیوں میں سے تھے۔وہ آرگنائزیشن فار ڈیو یلپمنٹ آف ایڈمنسٹریٹو سینٹرکے سربراہ تھے۔جیسے ہی انقلاب رونمااوربرپاہوا، عبدالحامددبیبہ نے انقلابیوں کی فنڈنگ شروع کردی۔2017 ء میں وہ مسراطہ کے اس وفد کے رکن تھے جس نے ماسکواورگروزنی کادورہ کیا۔
لیبیامیں ہرکیمپ منقسم ہے۔عبدالحامددبیبہ کے معاملے میں بھی ایساہی تھا۔مسراطہ سے تعلق رکھنے والے دوامیدواروں بشاغہ اور احمدامیطق کے درمیان سمجھوتے کے نتیجے میں عبدالحامد دبیبہ کی پوزیشن محفوظ رہ سکی۔عبوری حکومت کے کامیاب امیدواروں کی فہرست کے سربراہ محمدالمنفی ہیں،جن کاتعلق تبروک کے علاقے سے ہے۔ وہ بن غازی کی جنگ اورطرابلس پر حملے کے مخالف تھے۔وہ خلیفہ ہفتارکے سخت ترین ناقدین میں سے ہیں۔
جی این اے نے محمد المنفی کویونان میں لیبیا کاسفیرمقررکیاتھامگرجب انہوں نے ترکی اور لیبیا کے درمیان طے پانے والے بحری معاہدے کی حمایت کی تویونان نے انہیں نکال باہر کیا۔ان کے دونائبین کی سیاست میں برائے نام دلچسپی ہے۔ان میں موسی الکونی بھی شامل ہے جوعالمی شہرت یافتہ ناول نگارابراہیم الکونی کابھائی ہے۔کونی قبیلے کے لوگ جنوبی لیبیامیں زیادہ تعدادمیں اور اقتدارکے حوالے سے مضبوط ہیں۔سوال یہ ہے کہ انہی کوآگے آنے کاموقع کیوں دیاگیااورانہیں کیوں نہیں دیاگیاجنہوں نے طویل مدت تک جنگ لڑی؟اغیلاصالح اچھی طرح جانتے ہیں کہ وہ اپنی ہی تاریخ دوبارہ نہیں لکھ سکتے۔(جاری ہے)

تازہ ترین خبریں

کراچی: گلشن معمار میں فائرنگ، پی ٹی آئی رہنما اور اہلیہ زخمی

کراچی: گلشن معمار میں فائرنگ، پی ٹی آئی رہنما اور اہلیہ زخمی

کچلنے کی کوشش  یا کچھ اور۔۔ ن لیگی رہنما نے پی ٹی آئی رہنما کی گاڑی کو ٹکر مار دی،کتنا جانی مالی نقصان ہوا؟جانیے تفصیل

کچلنے کی کوشش یا کچھ اور۔۔ ن لیگی رہنما نے پی ٹی آئی رہنما کی گاڑی کو ٹکر مار دی،کتنا جانی مالی نقصان ہوا؟جانیے تفصیل

جوبائیڈن اور ولادی میر پیوٹن نے ملاقات کر ڈالی

جوبائیڈن اور ولادی میر پیوٹن نے ملاقات کر ڈالی

معاملات سلجھ بھی سکتے ہیں اور بگڑ بھی سکتے ہیں۔ آئندہ چند ہفتے و مہینے نہایت اہم ہیں۔ شاہ محمود قریشی

معاملات سلجھ بھی سکتے ہیں اور بگڑ بھی سکتے ہیں۔ آئندہ چند ہفتے و مہینے نہایت اہم ہیں۔ شاہ محمود قریشی

قومی اسمبلی میں بجٹ بحث کے دوران اراکین پارلیمنٹ کی طرف سے مقدس کلمات کی توہین۔۔۔۔تھانہ سیکرٹریٹ میں مقدمہ کی درخواست

قومی اسمبلی میں بجٹ بحث کے دوران اراکین پارلیمنٹ کی طرف سے مقدس کلمات کی توہین۔۔۔۔تھانہ سیکرٹریٹ میں مقدمہ کی درخواست

قومی اسمبلی میں ہنگامہ آرائی اور ڈپٹی سپیکر کے خلاف تحریک عدم اعتماد کا معاملہ۔ پروزیراعظم عمران خان نے پارلیمانی پارٹی کا اجلاس طلب کر لیا

قومی اسمبلی میں ہنگامہ آرائی اور ڈپٹی سپیکر کے خلاف تحریک عدم اعتماد کا معاملہ۔ پروزیراعظم عمران خان نے پارلیمانی پارٹی کا اجلاس طلب کر لیا

 مفتی عزیز الرحمان کی نازیبا ویڈیووائرل ہونےکے واقعے کے بعد پولیس مدرسے پہنچ گئی

مفتی عزیز الرحمان کی نازیبا ویڈیووائرل ہونےکے واقعے کے بعد پولیس مدرسے پہنچ گئی

ایف آئی اے نے مسلم لیگ (ن) کے رہنما  حمزہ شہباز کو طلب کر لیا ہے۔

ایف آئی اے نے مسلم لیگ (ن) کے رہنما حمزہ شہباز کو طلب کر لیا ہے۔

مصنوعی ذہانت اور بلاک چین ٹیکنالوجیز سے پاکستان آئی ٹی برآمدات 5 ارب ڈالر تک بڑھانے کی صلاحیت رکھتا ہے، صدر مملکت

مصنوعی ذہانت اور بلاک چین ٹیکنالوجیز سے پاکستان آئی ٹی برآمدات 5 ارب ڈالر تک بڑھانے کی صلاحیت رکھتا ہے، صدر مملکت

نئی تعلیمی سال کا آغاز ۔۔ داخلے کب سے شروع ہوں گے۔۔۔وزیرتعلیم شفقت محمود نے اعلان کردیا

نئی تعلیمی سال کا آغاز ۔۔ داخلے کب سے شروع ہوں گے۔۔۔وزیرتعلیم شفقت محمود نے اعلان کردیا

گالیاں دینا اور بدتمیزی کرنا ہمارا کلچر نہیں ‏ن لیگ کی تاریخ ہے شیخ روحیل اصغرنےگالیاں دیں جس پرردعمل دیا۔ علی نواز اعوان

گالیاں دینا اور بدتمیزی کرنا ہمارا کلچر نہیں ‏ن لیگ کی تاریخ ہے شیخ روحیل اصغرنےگالیاں دیں جس پرردعمل دیا۔ علی نواز اعوان

جماعت اسلامی کے سابق یوسی ناظم کے بیٹے کو قتل کر دیا گیا

جماعت اسلامی کے سابق یوسی ناظم کے بیٹے کو قتل کر دیا گیا

حکومت نے پٹرولیم مصنوعات کی پٹرولیم لیوی میں کمی کردی

حکومت نے پٹرولیم مصنوعات کی پٹرولیم لیوی میں کمی کردی

 پاکستان سپر لیگ سیزن سکس۔۔کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کا ملتان سلطان کیخلاف ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ

پاکستان سپر لیگ سیزن سکس۔۔کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کا ملتان سلطان کیخلاف ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ