02:03 pm
پاکستان میں امریکی اڈے‘ پارلیمنٹ کہاں ہے؟

پاکستان میں امریکی اڈے‘ پارلیمنٹ کہاں ہے؟

02:03 pm

جب سے امریکی اور نیٹو کی فوجوں نے افغانستان سے جانے کا اعلان کیاہے بلکہ اس سلسلے میں 40فیصدسے زیادہ انخلا ہوچکاہے‘ تو امریکہ پاکستان سے فضائی اڈے کا خواستگارہےتاکہ وہ افغانستان سے چلے جانے کے بعد بھی اس خطے کی نگرانی کرسکے۔ غالباً افغان طالبان اور چین، اس سلسلے میں امریکی سی آئی اے کے ڈائریکٹر نے حال ہی میں پاکستان کے آرمی چیف سے ملاقات کی ہے اور انہیں ’’سمجھایا‘‘ ہے کہ امریکہ کیوں پاکستان میں فضائی اڈے قائم کرناچاہتاہے۔ دستیاب اطلاعات کے مطابق آرمی چیف نے اس ملاقات میں فضائی اڈے دینے سے معذرت کرلی ہے۔ وزیراعظم عمران خان کا بھی موقف یہی ہے‘ بلکہ وزیراطلاعات فواد چوہدری  نے کہا ہے کہ پاکستان کے تمام فضائی اڈے پاکستان کے کنٹرول میں ہیں‘ امریکہ کودینے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتاہے۔ اس ہی پس منظر میں زلمے خلیل زاد نے دوبارہ پاکستان کا دورہ کیا ہے اور پاکستان سے درخواست کی ہے کہ وہ پاکستان میں مخصوص جگہ پر امریکہ اڈے قائم کرنے کی اجازت دے دے ۔ زلمے خلیل زاد کوبھی انکار کی صورت میں جواب ملاہے۔ واضح رہے کہ زلمے خلیل زد نے حال ہی میں پاکستان کو دھمکی دی تھی کہ اگر پاکستان نے افغان طالبان کی اپنے ملک میں نقل و حرکت پرپابندی عائد نہیں کی تو پاکستان کو سنگین نتائج کاسامنا کرنا پڑے گا۔
مجھے اس سلسلے میں حیرت ہورہی ہے کہ امریکہ کیوں پاکستان میں ہی اڈے قائم کرنے کا خواہش مند ہے؟ جبکہ بھارت امریکہ کو اڈے دینے کو تیار ہے‘ قطر میں امریکہ کا ایک بہت بڑا فضائی اڈا موجود ہے‘بحرین میں امریکہ کاپانچواں بحری بیڑہ موجود ہے‘سعودی عرب میں بھی ایسے اڈے موجود ہیں چنانچہ جب امریکہ کو یہ تمام سہولتیں  دستیاب ہیں تو وہ پاکستان سے اڈے قائم کرنے کے سلسلے میں مطالبہ کیوں کررہاہے؟ اس کا سیدھا سا جواب یہ ہے کہ امریکہ پاکستان کی سرزمین کو افغان طالبان کے خلاف استعمال کرناچاہتاہے۔ ماضی میں سابق صدر مشرف نے انہیں جیکب آباد اور بلوچستان میں اڈے فراہم کئے تھے جہاں سے امریکی ڈرون پاکستانی شہریوں پرحملہ کرتے تھے‘ جس کا جواز یہ پیش کیاجاتاتھا کہ امریکی ڈرون حملے دہشت گردوں کے خلاف کئے جارہے ہیں جو پاکستان کوعدم استحکام سے دوچار کررہے ہیں۔ تاہم یہ بات تسلیم کرنی پڑے گی کہ پاکستان پراس وقت امریکی اڈے قائم کرنے کے سلسلے میں شدید دبائو ہے۔ اس وقت تک پاکستان اس دبائو کو برداشت کررہاہے‘ پاکستانی قیادت کو ادراک ہے کہ امریکہ پربھروسہ کرنا خودکشی کرنے کے مترادف ہے۔ امریکہ سی پیک کے خلاف ہے اور وہ پاکستان کو افغان طالبان سے غلط فہمیاں پیداکرکے لڑاناچاہتاہے۔ دراصل امریکہ افغانستان میں بیس سالہ جنگ کی صورت میں شکست کابدلہ پاکستان سے لیناچاہتاہے۔ یہی وجہ ہے کہ پاکستان کودھمکیاں مل رہی ہیں کہ اگر اس نے امریکہ کے ساتھ تعاون نہیں کیا تو نتائج پاکستان کو بھگتنے ہوں گےچنانچہ اس گھمبیر صورتحال کے پیش نظر پاکستان کی حکومت کو فوراً بجٹ اجلاس کے بعد قومی اسمبلی کاخصوصی اجلاس طلب کرناچاہیے اور اس اجلاس میں کھل کر امریکہ کے مطالبات پرارکان اسمبلی کے خیالات سے آگاہی حاصل کرنی چاہیے۔ عمران خان یا پھرآرمی چیف کواس سلسلے میں اپناکوئی فیصلہ نہیں کرناچاہیے کیونکہ یہ ملکی سالمیت کا مسئلہ ہے۔ پاکستانی عوام اس خطے میں امریکن پالیسیوں کی حمایت نہیں کرتے ہیں۔ نیز امریکہ افغانستان میں جنگ ہار چکاہے۔ بالکل اس ہی طرح جس طرح ویتنام میں جنگ ہاراتھا۔ قومی اسمبلی میں جب امریکہ کے اس مطالبہ پر بحث ہوگی تو بہت سے حقائق کھل کر سامنے آئیں گے اس صورت میں پاکستان کی موجودہ حکومت اور آرمی چیف کوکسی نتیجے پر پہنچنے میں بہت مدد مل سکے گی جو حقیقی معنوں میں پوری قوم کافیصلہ ہوگا۔
 دوسری طرف امریکہ کو افغانستان سے مکمل طور پر نکلنے سے پہلے دوحہ میں امن پروسیس کو آگے بڑھاناچاہیے کیونکہ اگر انٹرا افغان ڈائیلاگ کامیاب ہوجاتا ہے تو اس صورت میں افغانستان میں ایک ایسی حکومت بن سکتی ہے جس میں افغان طالبان کا واضح رول ہوسکتاہے۔افغان طالبان کے بغیر افغانستان کی موجودہ حکومت یا پھر آئندہ کوئی حکومت قائم نہیں رہ سکتی ہے۔ افغان طالبان نے بیس سالوں کے دوران غیر ملکی افواج کا بڑی بے جگری سے مقابلہ کیاہے۔بےپناہ قربانیاں دی ہیں اوراب تک بھی دے رہے ہیں۔ افغانستان کا موجودہ صدر غیرملکی افواج کے ذریعہ اپنے ہی ہم وطنوں کاقتل عام کرارہاہے۔ یہ ایک کٹھ پتلی حکومت ہے جس کو قابض فوج نے افغان عوام پر اپنی فوجی طاقت کے ذریعے مسلط کی ہے۔
 مزیدبراں امریکہ کو اس بات کا احساس ہونا چاہیے کہ پاکستان اور چین کے مابین70سال سے زائد معاشی وفوجی تعلقات قائم ہیں‘ پاکستان چین کے مشورے کے بغیر امریکہ کو فضائی اڈے دینے کی خواہش پوری نہیں کرسکتاہے۔ نیزافغان طالبان کا مشورہ بھی اس سلسلے میں اہم ہے۔ وہ کبھی بھی نہیں چاہیں گے کہ امریکہ پاکستان میں بیٹھ کران کی سرگرمیوں کی نگرانی کرے‘ ماضی میں جوکچھ ہوا‘اس کو اب دوبارہ دہرانانہیں چاہیے‘پاکستان کی پارلیمنٹ نے گزشتہ سالوں میں یمن کی جنگ کے سلسلے میں ارکان پارلیمنٹ کااعتماد حاصل کیاتھا جس کے مطابق پاکستان نے یمن کی جنگ میں حصہ بننے سے انکار کردیاتھا اب یہی طریقہ امریکہ کے فضائی اڈوں کے مطالبے کے سلسلے میں اختیارکرناچاہیے۔ پارلیمنٹ پاکستان کے عوام کی ترجمان ہے‘اس کے ارکان کی اکثریت محب وطن پاکستانیوں پر مشتمل ہے وہ جو بھی فیصلہ کریں گے‘ پاکستان کے وسیع تر مفاد میں ہوگا۔ تاہم اگر امریکہ اپنی شکست کا’’بدلہ‘‘خدانخواستہ پاکستان سے لیناچاہتاہے تو ایسا کرنے سے پہلے اسکو بہت سوچ سمجھ کر فیصلہ کرناہوگا پاکستان ایک کمزور ملک نہیں ہے‘ اس نے دو مرتبہ امریکہ کے مفاد میں کام کیاہے‘ پہلا چین کے ساتھ دوستی کرانے کاراستہ ہموار کیاتھا اور دوسری مرتبہ افغان طالبان کے ساتھ براہ راست سیاسی مذاکرات بھی پاکستان نے کرائے ہیں۔ امریکہ کو پاکستان کاشکرگزار ہوناچاہیے۔ذرا سوچیئے!

تازہ ترین خبریں

 ملوث ملزم زخمی حالت میں گرفتار،سنسنی خیز انکشافات ، معاملہ کیاہے؟خبر پڑھ کر آپ افسردہ ہوجائینگے

ملوث ملزم زخمی حالت میں گرفتار،سنسنی خیز انکشافات ، معاملہ کیاہے؟خبر پڑھ کر آپ افسردہ ہوجائینگے

بڑی پیشکش: کورونا ویکسین لگوائیں، 14 لاکھ ڈالر مالیت کا فلیٹ‌ حاصل کریں

بڑی پیشکش: کورونا ویکسین لگوائیں، 14 لاکھ ڈالر مالیت کا فلیٹ‌ حاصل کریں

عدالتوں میں گرمیوں کی چھٹیوں کا شیڈول جاری

عدالتوں میں گرمیوں کی چھٹیوں کا شیڈول جاری

فلور ملز ایسوسی ایشن نے آٹا مہنگا کرنے کا عندیہ دے دیا

فلور ملز ایسوسی ایشن نے آٹا مہنگا کرنے کا عندیہ دے دیا

محکمہ موسمیات نے دل خوش کردینے والی پیشگوئی کردی

محکمہ موسمیات نے دل خوش کردینے والی پیشگوئی کردی

گالی دینا پنجاب کی ثقافت نہیں بلکہ ن لیگ کے رہنماؤں کا کلچر ہے: عثمان بزدار

گالی دینا پنجاب کی ثقافت نہیں بلکہ ن لیگ کے رہنماؤں کا کلچر ہے: عثمان بزدار

مسلم فٹبالر نے پریس کانفرنس میں سامنے رکھی بیئرکی بوتل ہٹادی،خبر پڑھ کر آپ بھی داد دیئے بغیر نہ رہ سکیں گے

مسلم فٹبالر نے پریس کانفرنس میں سامنے رکھی بیئرکی بوتل ہٹادی،خبر پڑھ کر آپ بھی داد دیئے بغیر نہ رہ سکیں گے

کراچی: گلشن معمار میں فائرنگ، پی ٹی آئی رہنما اور اہلیہ زخمی

کراچی: گلشن معمار میں فائرنگ، پی ٹی آئی رہنما اور اہلیہ زخمی

کچلنے کی کوشش  یا کچھ اور۔۔ ن لیگی رہنما نے پی ٹی آئی رہنما کی گاڑی کو ٹکر مار دی،کتنا جانی مالی نقصان ہوا؟جانیے تفصیل

کچلنے کی کوشش یا کچھ اور۔۔ ن لیگی رہنما نے پی ٹی آئی رہنما کی گاڑی کو ٹکر مار دی،کتنا جانی مالی نقصان ہوا؟جانیے تفصیل

جوبائیڈن اور ولادی میر پیوٹن نے ملاقات کر ڈالی

جوبائیڈن اور ولادی میر پیوٹن نے ملاقات کر ڈالی

معاملات سلجھ بھی سکتے ہیں اور بگڑ بھی سکتے ہیں۔ آئندہ چند ہفتے و مہینے نہایت اہم ہیں۔ شاہ محمود قریشی

معاملات سلجھ بھی سکتے ہیں اور بگڑ بھی سکتے ہیں۔ آئندہ چند ہفتے و مہینے نہایت اہم ہیں۔ شاہ محمود قریشی

قومی اسمبلی میں بجٹ بحث کے دوران اراکین پارلیمنٹ کی طرف سے مقدس کلمات کی توہین۔۔۔۔تھانہ سیکرٹریٹ میں مقدمہ کی درخواست

قومی اسمبلی میں بجٹ بحث کے دوران اراکین پارلیمنٹ کی طرف سے مقدس کلمات کی توہین۔۔۔۔تھانہ سیکرٹریٹ میں مقدمہ کی درخواست

قومی اسمبلی میں ہنگامہ آرائی اور ڈپٹی سپیکر کے خلاف تحریک عدم اعتماد کا معاملہ۔ پروزیراعظم عمران خان نے پارلیمانی پارٹی کا اجلاس طلب کر لیا

قومی اسمبلی میں ہنگامہ آرائی اور ڈپٹی سپیکر کے خلاف تحریک عدم اعتماد کا معاملہ۔ پروزیراعظم عمران خان نے پارلیمانی پارٹی کا اجلاس طلب کر لیا

 مفتی عزیز الرحمان کی نازیبا ویڈیووائرل ہونےکے واقعے کے بعد پولیس مدرسے پہنچ گئی

مفتی عزیز الرحمان کی نازیبا ویڈیووائرل ہونےکے واقعے کے بعد پولیس مدرسے پہنچ گئی