05:13 pm
افغانستان بھارت

افغانستان بھارت

05:13 pm

  پاکستان کے عوام مخلص اور سادہ مزاج لوگ ہیں۔ خوش کن باتوں سے جلدی متاثر ہو جاتے ہیں،پاکستان کے عوام  عام طور پر ریٹائرڈ جرنیلوں اور سابق سفارتکاروں سے بہت مرعوب  ہیں۔ یہ گزرے زمانے کے لوگ اپنے آپ کو علم و عمل کے اعتبار سے کامل سمجھتے ہیں۔ صورتحال میں اتنی تیز رفتاری سے تبدیلیاں  صادر ہو رہی ہیں ان کا درست اندازہ  لگانا کار دارد ہے۔ افغانستان کے بارے میں یہی صورتحال پائی جاتی ہے ریٹائرڈ لوگ تو ہمیشہ ماضی میں زندہ رہتے ہیں اور اپنے دور کے قصے کہانیوں اور واقعات سے نتائج اخذ کرکے موجودہ حالات پر منطبق  کر دیتے ہیں۔عالمی سطح پر ملکوں اور قوموں کا کردار تبدیل ہو گیا ہے۔کچھ قومیں پچھلی صفوں سے نکل کر اگلی معتبر نشستوں پر غالب آ گئی ہیں،دو عشرے قبل جو قومیں اور ممالک  ناقابل تسخیر تھے اور اپنے آپ کو سپر پاور سمجھتے تھے  موجودہ دور میں ان کو اپنی سپرمیسی کا بھرم رکھنے کے لئے اجتماعی کوششوں کی اشد ضرورت محسوس ہو رہی ہے۔افغانستان کے بارے میں ان کا نقطہ نظر یہ ہے کہ افغانستان کے معاملات میں وقت کے ساتھ کوئی جوہری  تبدیلی وقوع  پذیر نہیں ہو ئی ہے۔
پاکستانی قوم کو تاثر دینے کی کوشش کرتے ہیں کہ القاعدہ کی کوئی حیثیت نہیں ہے وہ قوم کو سمجھانے کی کوشش کرتے ہیں کہ امریکہ افغانستان پر قابض ہو کر وسطیٰ ایشیا ء کے وسائل  پر تصرف حاصل کرنا چاہتا ہے۔ عالمی اور علاقائی کرداروں کا رول پہلے جیسا ہی ہے۔آ  ج روس کو افغانستان کی پیچیدہ صورت حال کے حوالے سے خطرات لا حق ہو گئے ہیںاور وہ پریشانی میں مبتلا ہو گیا ہے،اچانک امریکہ نے افغانستان سے انخلاء کرکے علاقائی  قوتوں کے لئے  خطرناک  بارودی سرنگ بچھا دی ہے  اور افغانستان اور خطے کو شدید اور دیر پا بحران میں مبتلا کر دیا ہے۔ امریکہ ناگزیر وجوہات کی بناء  پر سمجھتا تھا کہ 9 /11 کے واقع کی ذمہ دار القاعدہ ہے ۔امریکہ نے اقوام متحدہ پر اثر انداز ہو کر سیکورٹی کونسل کی قرارداد کا سہارا لے کر افغانستان پر حملہ آور ہونے کا جواز تراش لیا تھا۔ امریکہ نے اپنی جارحانہ خارجہ پالیسی کی بنا پر روس چین اور ایران کو بھی اپنا ہمنوا بنا لیا تھا اور کسی نے  آ گے بڑھ کر حملے کی مخالفت نہیں کی۔ اس وقت سب ممالک افغانستان کو اپنے لئے  خطرہ سمجھ رہے تھے۔ اس وقت چیچن  مجاہدین اور اسلامک موو منٹ آف ازبکستان افغانستان میں موجود تھے۔روس اور وسطیٰ ایشیائی ریاستیں طالبان کی مذہبی ریاست کو اپنے لئے  خطرہ سمجھ رہے تھے۔ اس لئے  ہمسایہ ممالک شمالی اتحاد کی متوازی حکومت کو سپورٹ کر رہے تھے۔ چین کے صوبے سنگیانگ کی علیحدگی پسندوں کی تنظیم (ای ٹی آ ئی ایم)  سے وابستہ لوگ بھی افغانستان میں موجود تھے  ۔
امریکہ نے جب حماقت کا ارتکاب کرتے ہوئے  عراق پر ظالمانہ حملہ کیا تو چین اور روس نے امریکہ کی اس نازیبا حرکت  کی مذمت کی اور ان کے لئے اس کھلی جارحیت  کو برداشت کرنا مشکل ہو گیا۔ 
افغان صدر اشرف غنی نے پاکستان پر الزام عائد کیا ہے کہ پاکستان نے دس  ہزار جنگجو افغان طالبان  کی مدد کے لئے بھجوائے ہیں۔ افغانستان کے نائب صدر جو پاکستان دشمنی میں اپنا ثانی نہیں رکھتے الزام عائد کیا ہے پاکستان ائیر فورس نے افغان ائیر فورس کو دھمکی لگائی ہے کہ اگر آپ نے ہمارے باڈر کے قریب طالبان سے علاقے خالی کروانے کی کارروائی کی تو ہم آپ پر فضائی  حملے کرنے میں حق بجانب ہوں گے۔پاکستان کے ڈی جی  آئی ایس آئی نے اشرف غنی اور نائب صدر کو ترکی بہ ترکی جواب دیا  اور کہاکہ  پاکستان میں جتنی تخریب کاری اور دہشت گردی ہو رہی ہے   سب کے لئے افغانستان کی زمین استعمال ہو رہی ہے۔وزیر اعظم پاکستان نے افغان قیادت کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ  پندرہ سال میں ہم نے افغانستان جنگ کی وجہ سے ستر ہزار جانوں کی قربانی دی ہے۔ افغان جنگ کی وجہ سے پاکستان نے 30 لاکھ افغان مجاہدین کی  میزبانی کی ہے اب ہم میں مزید سکت نہیں ہے کہ ہم  مزیدافغان مہاجرین کو قبول کر سکیں۔پاکستان خطرات کی دلدل میں پھنس گیا ہے سب سے بڑا خطرہ ٹی ٹی پی سے جو طالبان کی کامیابی سے حوصلہ پکڑ کر دوبارہ قوت پکڑ سکتی ہے  کیونکہ پاکستان میں ایسے نظریاتی لوگ کثرت سے موجود ہیں جو اسلامی  نظام حیات کو قوت کے بل بوتے نافذ کرنے ہر مکمل یقین رکھتے ہیں۔ پاکستان ،چین، ایران  روس مخمصے میں مبتلا ہیں طالبان کا ساتھ دیں یا ان کو ناراض کرنے کا  خطرہ مول لیں۔ ایک بات یاد رکھنے والی ہے کہ امریکہ روس کے طرح کنگال ہو کر افغانستان سے نہیں نکلا ہے اس کی معاشی اور عسکری قوت ابھی باقی ہے۔افغان جنگ میں ناکامی  کے باوجود نہ کمزور ہوا ہے نہ ہی دیوالیہ ہوا ہے۔ افغان حکومت کو قائم  اور برقرار رکھنے کے لئے امریکہ افغان حکومت کی مالی اور اخلاقی امداد جاری رکھے گا۔ امریکہ کے فوجی اڈے خلیج میں موجود ہیں۔ امریکہ کے لئے افغانستان میں اتنی بڑی شکست کو قبول کرنا یا ہضم کرنا بہت مشکل ہے۔امریکہ پاکستان کو مورد الزام ٹھہرا کر پاکستان کے لئے مشکلات پیداکرے گا۔پاکستان روس چین ایران کو مل کر افغانستان میں امن قائم کرنے کے لئے اپنے سارے  ذرائع استعمال کرنے چاہیے۔

 

تازہ ترین خبریں

وزیر اعظم کی انتہائی قریبی شخصیت اپنے عہدے سے مستعفی ہوگئی

وزیر اعظم کی انتہائی قریبی شخصیت اپنے عہدے سے مستعفی ہوگئی

حلقہ ایل اے 16باغ تین کے الیکشن میں پاکستان تحریک انصاف نے میدان مار لیا

حلقہ ایل اے 16باغ تین کے الیکشن میں پاکستان تحریک انصاف نے میدان مار لیا

عثمان ڈار نے مسلم لیگ ن کے رہنما عطا تارڑ کے نئے نام کے لیے تجاویز مانگ لیں۔

عثمان ڈار نے مسلم لیگ ن کے رہنما عطا تارڑ کے نئے نام کے لیے تجاویز مانگ لیں۔

 حکومت نے موڈرنا کورونا ویکسین عام شہریوں کو بھی لگانے کا فیصلہ کرلیا 

 حکومت نے موڈرنا کورونا ویکسین عام شہریوں کو بھی لگانے کا فیصلہ کرلیا 

اسلام آباد کے بعد گلگت بلتستان کے ضلع استور میں سیلاب نے تباہی مچادی

اسلام آباد کے بعد گلگت بلتستان کے ضلع استور میں سیلاب نے تباہی مچادی

 ’16 ممالک نے پاکستان کیساتھ کونسا معاہدہ   کرنے کی خواہش ظاہر کر دی ؟ جانیں 

’16 ممالک نے پاکستان کیساتھ کونسا معاہدہ کرنے کی خواہش ظاہر کر دی ؟ جانیں 

بیوی کا طلاق لینا شوہر کو برداشت نہ ہوا ، پاکستان کے اہم شہرمیں ایک شخص نے اپنی زندگی کا خاتمہ کر لیا

بیوی کا طلاق لینا شوہر کو برداشت نہ ہوا ، پاکستان کے اہم شہرمیں ایک شخص نے اپنی زندگی کا خاتمہ کر لیا

ہمیں آزاد کشمیر میں 16 نشستیں دینے کا کہہ کر 11 دیں گئیں 

ہمیں آزاد کشمیر میں 16 نشستیں دینے کا کہہ کر 11 دیں گئیں 

پی ٹی آئی کے پی میں غربت اور پسماندگی ختم کر نے میں مکمل ناکام ہوگئی ،صرف دعوؤں اور وعدوں پر ڈنگ ٹپاؤ پالیسی جاری ہے۔ سراج الحق 

پی ٹی آئی کے پی میں غربت اور پسماندگی ختم کر نے میں مکمل ناکام ہوگئی ،صرف دعوؤں اور وعدوں پر ڈنگ ٹپاؤ پالیسی جاری ہے۔ سراج الحق 

نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم کا دورہ پاکستان۔۔۔۔ سیکورٹی ماہرین کی ٹیم آئندہ ماہ دورہ کرے گی

نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم کا دورہ پاکستان۔۔۔۔ سیکورٹی ماہرین کی ٹیم آئندہ ماہ دورہ کرے گی

 چائنیزپیپلزلبریشن آرمی اور پاک ‏فوج مشکل وقت کے بھائی ہیں باہمی مفادات کےتحفظ کے لیے ہمارےتعلقات مسلسل مضبوط ہو ‏رہے ۔آرمی چیف

چائنیزپیپلزلبریشن آرمی اور پاک ‏فوج مشکل وقت کے بھائی ہیں باہمی مفادات کےتحفظ کے لیے ہمارےتعلقات مسلسل مضبوط ہو ‏رہے ۔آرمی چیف

مولانا عبد الخبیر آزاد اور وزیر اعظم آمنے سامنے ، عمران خان نے ایسا کیا حکم دیا تھا  

مولانا عبد الخبیر آزاد اور وزیر اعظم آمنے سامنے ، عمران خان نے ایسا کیا حکم دیا تھا  

آزاد کشمیر کے دھاندلی زدہ الیکشن اور سیالکوٹ کے متنازعہ ضمنی انتخابات نے مسلم لیگ ن کے اصولی موقف کی تائید کر دی ہے۔ احسن اقبال 

آزاد کشمیر کے دھاندلی زدہ الیکشن اور سیالکوٹ کے متنازعہ ضمنی انتخابات نے مسلم لیگ ن کے اصولی موقف کی تائید کر دی ہے۔ احسن اقبال 

آزا دکشمیر کے حلقہ ایل اے 16باغ کےالیکشن کا نتیجہ قریب

آزا دکشمیر کے حلقہ ایل اے 16باغ کےالیکشن کا نتیجہ قریب