02:57 pm
محترمہ سلینا کریم اورسیکولر جناح 

محترمہ سلینا کریم اورسیکولر جناح 

02:57 pm

محترمہ سلینا کریم برطانیہ میں  مقیم ایک مسلمان اسکالر ہیں۔ و ہ کبھی بھی پاکستان نہیں آئی مگر انہوں نے اور ان کے خاندان نے قرآن پاک سے اور پاکستان سے سچا عشق کیا ہے۔ ان کے والد محترم نے ’’پاکستان اور قرآن‘‘ نامی کتاب انگریزی میں لکھی تھی جبکہ محترمہ سلینا کریم نے دو قومی نظریئے، نظریاتی لیگی جدوجد پاکستان، کیا علامہ اقبال اور محمد علی جناح یورپی طرز کے الحادی، اینٹی مذہبی سیکولر تھے یا فرقہ پرستی سے بہت دور، سچے اور مخلص دور اندیش، مسلمان مفکرین تھے؟ اس سوال کا جواب بہت تحقیقی، بہت محنت سے محترمہ سلینا کریم نے اپنی کتاب سیکولر جناح میں پیش کیا ہے۔ یہ کتاب620 صفحات پر مشتمل ہے اور اس کتاب کے چار ایڈیشن شائع ہوچکے ہیں۔ بنیادی طور پر ماضی بعید کے چیف جسٹس محمد منیر نے جو1953ء کے حوالے سے مرزائیت کے خلاف اور ختم نبوت کے حق میں لاہور میں ہونے والے سرکاری نظر میں فسادات مگر میری نظر میں جزوی مارشل لاء جسے سیکرٹری دفاع سکندر مرزا  نے خواجہ ناظم الدین (وزیراعظم) کی اجازت اور مرضی کے سراسر خلاف نافذ کیا تھا اور پھر ہر وہ داڑھی والا جس نے لاہور میں مرزائیت کے خلاف اور ختم نبوت کے حق میں جلسے، جلوسوں میں حصہ لیا، ان پر تشدد کیا گیا          ، بہت کو قتل کیا گیا، جیلوں میں ڈالا گیا۔ جسٹس منیر نے اس حوالے سے ایک رپورٹ لکھی جس میں محمدعلی جناح کو سیکولر کے طور پر زیربحث لایا گیا تھا پھر چیف جسٹس محمد منیر نے ہی ’’جناح ٹو ضیاء‘‘ نامی کتاب  لکھی اور جناح کو سیکولر ثابت کیا۔ محترمہ سلینا کریم نے اپنی کتاب سیکولر جناح میں ثابت کیا ہے کہ جس طرح کا الحادی سیکولر جناح کو جسٹس محمد منیر سمیت کچھ دوسر ے اذہان ثابت کرتے رہے ہیں وہ ہرگز ملحد سیکولر تھے نہ ہی الحاد پر مبنی پاکستان انہوں نے بنایا تھا بلکہ انہوں نے پاکستان ایک مخلص مسلمان کے طور پر ایک اسلامی جمہوری ریاست کی حیثیت میں بنایا تھا۔
جبکہ1930 ء میں جب علامہ اقبال نے خطبہ الہ آباد میں شمالی مغربی ہندوستانی علاقوں  پر مبنی ’’اسلامی ریاست‘‘ کا تصور پیش کیا تھا تو علامہ اقبال نے بھی ایسے ہی اسلام کا سیکولر تصور پیش کیا تھا جو فرقہ واریت سے بہت دور تھا۔ اسلامی پاکستان کا ایسا تصور دیا تھا جس میں اسلام کو بطور ’’دین‘‘ کے سامنے رکھا گیا تھا۔ ایسا اسلام جس میں مسلمان فرقوں، شیعہ، سنی، مقلد، غیر مقلد، وہابی، حنفی، وغیرہ کا مسلک اور مذہب ہرگز موجود نہ تھا بلکہ صرف اور صرف اسلام تھا اور اگر اقبال نے اس حوالے سے اپنے خطبات میں ’’سیکولر اسلام‘‘ کا تصور دیا تھا تو وہ ہرگز مغربی دنیا کے الحاد پر مبنی، اینٹی دین و مذہب تصور پر ہرگز مبنی نہیں تھا۔ یورپی معاشرت میں جو تھیو کریسی (چرچ بادشاہت اقتدار) کا جو تصور ہے جناح و اقبال نے اس  سے لاتعلقی کیوں اختیار کی تھی؟
محترمہ سلینا نے پوری زندگی شائد اس  تحقیق و تفتیش میں گزار دی اور کتاب کے حاشیوں پر بھی ریفرنسز اور حوالہ جات بہت عرق ریزی سے لکھے۔ محترمہ سلینا نے پاکستان اور جناح سے اپنی حقیقی اور سچی محبت پیش کی ہے اور اپنے بیٹے کا نام بھی ’’جناح صاحب‘‘ رکھا حالانکہ وہ اور ان کا خاندان برطانیہ میں رہتا ہے۔
انگریزی میں لکھی گئی سیکولر جناح کا چوتھا ایڈیشن نجی طور پر لاہورمیں قائم شدہ یونیورسٹی آف مینجمنٹ اینڈ ٹیکنالوجی کے شعبہ پبلشنگ نے UMT-2021      پریس جوہر ٹائون سے شائع کیا  اور ماشاء اللہ نوید مسرت یہ ہے کہ یونیورسٹی آ ف مینجمنٹ اینڈ ٹیکنالوجی لاہور اس عظیم تحقیقاتی کتاب کا اردو اور سندھی میں ترجمہ بھی شائع کروانے والی ہے۔
میں یونیورسٹی مذکورہ کی انتظامیہ اور اساتذہ کا شکر گزار ہوں کہ انہوں نے بہت عمدہ، بہت عظیم تحقیقاتی کتاب کو نہ صرف شائع کیا بلکہ اس کے تراجم کا بھی وہ بندوبست کررہے ہیں۔ میں چاہتا ہوں کہ قارئین یہ کتاب ضرور پڑھیں جو انگریزی پڑھ سکتے ہیں وہ مذکورہ یونیورسٹی سے  رابطہ کریں اور کتاب حاصل کرکے پڑھیں۔  جبکہ صدر مملکت ، وزیراعظم پاکستان سے استدعا کرتا ہوں کہ وہ محترمہ سلینا کریم کی علمی، تحقیقاتی کاوش کے اعتراف کے طور پر ریاست پاکستان کی طرف سے تمغہ ایوارڈ پیش فرمائیں۔ وفاقی وزارت تعلیم اور چاروں صوبوں کی وزارت تعلیم یہ کتاب ہر کالج، یونیورسٹی، سکول کی لائبریری میں رکھوائیں۔ تمام تحقیقاتی ادار ے اس کتاب کو لائبریری میں رکھیں۔
وہ قارئین جو فرقہ وارانہ سیاسی کشمکش کو جناح کی سیاست میں دیکھنا چاہتے ہوں انہیں یہ بحث بہت اچھے طریقے سے ملے گی۔ ایک طرف کانگرس سے وابستہ علماء اور جمعیت العلمائے ہند کے علماء دو قومی نظرئیے اور پاکستان کی مخالفت کر رہے تھے تو دوسری لکھنو کی انجمن اثنا عشریہ  بھی جناح سے پوچھ رہی تھی کہ اگر ان کا مطلوب پاکستان پہلے تین  خلفائے راشدین کے مسلک اور مذہب پر ہوگا تو پھر شیعہ مسلک والے ایسے  پاکستان کو نہیں بننے دیں گے۔ اس طرح 1946ء میں پھر شیعہ کی طرف سے پاکستان کی شدید مخالفت ہوئی کہ انہیں  اندیشہ تھا کہ سنی حنفی پاکستان بننے جارہا ہے۔
یہ دلچسپ بحثیں قارئین کو چیپڑThe Myths of Jinnah یعنی کتاب کے دسویں باب میں صفحہ270 سے344 تک بکھری ہوئی ملیں گی۔مصنفہ محترمہ سلینا  نے اس فرقہ وارانہ بحث کو نہایت دیانتداری سے تجزیہ میزان کا سامان بنا دیا ہے۔ پڑھیے اور لطف لیجئے کہ کس طرح سوشلزم اور اسلامی سوشلزم کی بحث اس عہد میں ہوتی رہی تھی۔ اگلی نشستوں میں انشاء اللہ اس کتاب سے کچھ مواد  ہدیہ قارئین کیا  جائے گا۔

تازہ ترین خبریں

طلبہ کی توموجیں ہوگئیں۔۔بچوں پر اسکول  ہوم ورک کا دباؤ کم کرنے کا قانون پاس

طلبہ کی توموجیں ہوگئیں۔۔بچوں پر اسکول ہوم ورک کا دباؤ کم کرنے کا قانون پاس

راولپنڈی اسلام آبادکے شہریوں کی مشکلات۔۔۔جڑواں شہروں کے باسیوں کے لیے بڑی خوشخبری آگئی

راولپنڈی اسلام آبادکے شہریوں کی مشکلات۔۔۔جڑواں شہروں کے باسیوں کے لیے بڑی خوشخبری آگئی

بلاول بھٹو زرداری ’گو عمران گو‘ کے نعرے کیوں لگا رہے ہیں ؟

بلاول بھٹو زرداری ’گو عمران گو‘ کے نعرے کیوں لگا رہے ہیں ؟

حکومت غریب اور متوسط طبقے کیلئےکیا کرنے جا رہی ہے؟بڑا دعویٰ سامنے آگیا

حکومت غریب اور متوسط طبقے کیلئےکیا کرنے جا رہی ہے؟بڑا دعویٰ سامنے آگیا

تین ماہ سے بندداسوڈیم کی تعمیرکاکام کب شروع  ہوگا؟تاریخ کااعلان کردیاگیا

تین ماہ سے بندداسوڈیم کی تعمیرکاکام کب شروع ہوگا؟تاریخ کااعلان کردیاگیا

حکمرانوں کاہردن قومی سلامتی کے لیے خدشات بڑھارہاہے ۔۔حکومت سےنجات  حاصل نہ ہوئی تو۔۔۔

حکمرانوں کاہردن قومی سلامتی کے لیے خدشات بڑھارہاہے ۔۔حکومت سےنجات حاصل نہ ہوئی تو۔۔۔

ماسکو: مذاکرات کے دوران پاکستانی سفارتکار مائیک بند کرنا بھول گئے، شیریں مزاری اور بیٹی کے بارے میں کیا کہتے رہے؟ ریکارڈنگ سامنے آ گئی

ماسکو: مذاکرات کے دوران پاکستانی سفارتکار مائیک بند کرنا بھول گئے، شیریں مزاری اور بیٹی کے بارے میں کیا کہتے رہے؟ ریکارڈنگ سامنے آ گئی

لندن میں سیاسی جوڑ توڑ! جہانگیر ترین  بول پڑے، حقائق سے پردہ اُٹھا دیا

لندن میں سیاسی جوڑ توڑ! جہانگیر ترین بول پڑے، حقائق سے پردہ اُٹھا دیا

تبدیلی آ گئی،سرکاری افسر ہسپتال کی خوبصورت نرس کو اٹھا کرلے گیا اور پھر۔۔ایسا کام کہ پوری قوم غصے میں آگئی

تبدیلی آ گئی،سرکاری افسر ہسپتال کی خوبصورت نرس کو اٹھا کرلے گیا اور پھر۔۔ایسا کام کہ پوری قوم غصے میں آگئی

31دسمبر تک ہر شہری کے پاس یہ چیز ہو گی، حکومت کا ایسا اعلان کہ ہر کوئی خوشی سے جھوم اٹھا

31دسمبر تک ہر شہری کے پاس یہ چیز ہو گی، حکومت کا ایسا اعلان کہ ہر کوئی خوشی سے جھوم اٹھا

کورونا وائرس کا ایک نیا حملہ ! پروازیں کینسل اور سکول بند کرنے کا فیصلہ

کورونا وائرس کا ایک نیا حملہ ! پروازیں کینسل اور سکول بند کرنے کا فیصلہ

ملک میں ہنگامی صورتحال، بین الاقومی اور مقامی پروازیں منسوخ کرنا پڑ گئیں

ملک میں ہنگامی صورتحال، بین الاقومی اور مقامی پروازیں منسوخ کرنا پڑ گئیں

اس وقت آئی ایس آئی کا سربراہ کون ہے؟  وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے قیاس آرائیوں کا خاتمہ کر دیا

اس وقت آئی ایس آئی کا سربراہ کون ہے؟ وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے قیاس آرائیوں کا خاتمہ کر دیا

وہ شہر جہاںاب آئندہ دو ماہ کیلئے سورج نہیں نکلے گا،جان کر آپکو بھی شدید حیرت ہو گی

وہ شہر جہاںاب آئندہ دو ماہ کیلئے سورج نہیں نکلے گا،جان کر آپکو بھی شدید حیرت ہو گی