02:58 pm
 صفرالمظفر  ، شکوک و شبہات کا ازالہ

 صفرالمظفر  ، شکوک و شبہات کا ازالہ

02:58 pm

(گزشتہ سےپیوستہ)
زمانہ جاہلیت میں لوگوں کا یہ اعتقاد تھا کہ بیمار کے پاس بیٹھنے یا اس کے ساتھ کھانے پینے سے اس کی بیماری دوسرے تندرست آدمی کو لگ جاتی ہے اور یہ لوگ ایسی بیماری کو عدوٰی (چھوت کی بیماری) کہتے تھے جس طرح آج ہمارے معاشرے میں وبائی امراض میں مبتلا ہونے والوں سے بہت پرہیز کیا جاتا ہے…آنحضرت ا نے اس عقیدہ کو باطل قرار دیا اور لاعدوٰی فرمایا یعنی بذاتِ خود ایک شخص کی بیماری بڑھ کر کسی دوسرے کو نہیں لگتی بلکہ بیمار کرنا، نہ کرنا قادرِ مطلق کے اختیار میںہے، البتہ وہ بیمار شخص جس کے بارے میں ماہر مسلمان طبیب نے بتا دیا ہو، اُس سے احتیاطاً دور رہنے اور پرہیز کرنے میںکوئی حرج نہیں۔ کیونکہ بیماری کے دیگر اسباب کی طرح یہ بھی ایک سبب ہو سکتا ہے۔
ایک دیہاتی نے عرض کیا یا رسول اللہ (صلی اللہ علیہ وسلم) خارش اوّل اونٹ کے ہونٹ میں شروع ہوتی ہے یا پھر اس کی دُم سے آغاز کرتی ہے اور پھر یہ خارش دوسرے تمام اونٹوں میں پھیل جاتی ہے، اس پر آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:(اچھا یہ بتائو) پہلے اونٹ کو کیسے خارش ہوئی اور کس کے ذریعہ لگی؟ ،یہ سن کر وہ دیہاتی لاجواب ہوگیا۔ (مرقاۃ ۸؍۳۴۵)
پھر آپ نے فرمایا یاد رکھو! متعدی مرض، چھوت، شگون اور بدفالی کوئی چیز نہیں ہے۔ اللہ تعالیٰ نے ہر جاندار کو پیدا کرکے اس کی زندگی، روزی اور مصیبت مقرر کردی ہے… مجذوم (کوڑھی) شخص سے جو شیر کی طرح بچنے کا حکم دیا اس کا یہ مطلب نہیں کہ جذام بذاتِ خود دوسرے کو لگ جاتا ہے بلکہ کمزور ایمان والوں کے ایمان و اعتقاد کی حفاظت کی غرض سے بچنے کا حکم فرمایا، مبادا کسی ضعیف الایمان شخص کو جذامی کے پاس بیٹھنے سے جذام ہو جائے تو اس کا اعتقاد بگڑ جائے گا وہ سمجھنے لگے گا کہ جذامی کے پاس بیٹھنے سے جذام ہوا، اس لئے بچنے کا یہ حکم عقیدہ کی حفاظت کیلئے دیا گیا…زمانہ جاہلیت میں عربوں کے اندر شگون اور فال لینے کا بہت رواج تھا۔ ان کی یہ عادت تھی کہ جب کوئی کام کرنے کا ارادہ کرتے تو کسی ہرن کو اس کی جگہ سے دوڑاتے اور بھڑکاتے یا کسی پرندے کو اڑا دیتے، اگر پرندہ یا ہرن دائیں جانب جاتا تو اس کو مبارک سمجھتے اور نیک فال لیتے اور وہ کام کرلیتے اگر پرندہ بائیں طرف کو اڑتا تو اس کو نامبارک اور منحوس سمجھتے اور پھر وہ کام نہ کرتے اور جہاں جانا ہوتا وہاں بھی نہ جاتے۔ (اشعۃ اللمعات)
آپ نے لاطیرہ فرما کر بدفالی اور بدشگونی کی تردید فرما دی کہ یہ محض بے حقیقت اور غلط بات ہے۔ کسی بھی کام یا چیز میںنفع نقصان ،کا میابی اور ناکامی سب اللہ تعالیٰ کے قبضہ قدرت میں ہے۔ آج کل بعض لوگ نجومیوں سے فال نکلواتے ہیں تو فال نکلوانے کیلئے جانا، فال کھلوانا، اس پر یقین کرنا یہ سب کچھ حرام ہے۔ حضرت حفصہ رضی اللہ عنہا فرماتی ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا جو شخص کاھن یا نجومی کے پاس آیا اور اس سے کوئی بات پوچھی (اور اس پر یقین کرلیا) تو اس کی چالیس راتوں کی نمازیں قبول نہیں ہوتیں۔ (مسلم)
شریعت نے نیک فال لینے سے منع نہیں فرمایا بلکہ نیک فال لینا پسندیدہ اور سنت ہے… حضرت انس ص سے روایت ہے کہ حضور اقدس  ا نے فرمایا نہ چھوت چھات کچھ ہے نہ بدشگون، مجھے تو نیک فال پسند ہے جو اچھے(پاکیزہ) کلام کے ساتھ ہو۔(الادب المفرد)
غول بیابانی کیا چیز ہے؟ اہل عرب کا خیال تھا کہ جنگلات میں غول مختلف صورتوں اور شکلوں میں لوگوں کو دکھائی دیتے ہیں اور ان کو راستہ بھلا دیتے ہیں اور ہلاک کر ڈالتے ہیں…بعض کا خیال یہ تھا کہ غول بیابانی وہ جادوگر جنات ہیں جو لوگوں کو فتنہ و فساد میں مبتلا کرتے ہیں اور ان کو راستے سے بھٹکا دیتے ہیں۔
تو آنحضرت ا نے لاغول فرما کر ان تمام باطل خیالات اور تصورات کی نفی فرما دی اور انہیں بے حقیقت قرار دے کر توہم پرستی سے تعبیر کیا، اور واضح فرما دیا کہ ان کو اتنی قدرت و طاقت حاصل ہی نہیں ہے کہ وہ اللہ تعالیٰ کے حکم کے بغیر مسافروں کو راستہ بھلا دیں اور ان کو ہلاک کرڈالیں…نوء کیا ہے؟ نوء کا مطلب ہے کہ ایک ستارہ کا غروب ہونا اور دوسرے کا طلوع ہونا، اہل عرب کے خیال میں بارش کا ہونا یا نہ ہونا ستاروں کے اسی طلوع و غروب کے زیر اثر ہے…یا پھر یہ چاند کی ۲۸ منزلوں کا نام ہے، جن میں سے ہرمنزل کے مکمل ہونے پرصبح صادق کے وقت ایک ستارہ گرتا ہے اور دوسرا ستارہ اس کے مقابلہ میں اسی وقت مشرق میں طلوع ہوجاتا ہے۔اہل عرب کا بارش کے متعلق یہ گمان تھا کہ چاند یا ستاروں کی ایک منزل کے ختم اور دوسری منزل کے آغاز پر بارش ہوتی ہے۔(مرقاۃ المفاتیح ۸؍۳۴۶)
آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے لانوء فرما کر اس کی بھی مکمل نفی فرما دی…اس سے یہ بات آشکارا ہوگئی کہ بارش کا برسانا یا نہ برسانا محض حق تعالیٰ شانہٗ کی قدرت میںہے، اور ستاروں سیاروں کی گردش اور ان کا طلوع و غروب بارش ہونے یا نہ ہونے کا ایک ظاہری سبب تو ہو سکتے ہیں لیکن مؤثر حقیقی ہرگز نہیںہو سکتے۔ مؤثر حقیقی اور قادر مطلق محض اللہ جل شانہٗ کی ذات ہے۔
ایک بادشاہ نے اپنے ایک غلام سے کہہ رکھا تھا کہ تو صبح سویرے مجھے اپنی صورت نہ دکھایا کر اس لئے کہ تومنحوس ہے ورنہ تیری نحوست کا میرے اوپر شام تک اثر رہے گا۔ ایک دن اتفاق سے وہ غلام صبح سویرے کسی کام سے بادشاہ کے پاس چلا گیا، تو بادشاہ نے اس کو تنبیہ کی اور حکم دیا کہ اس کو شام تک کوڑے لگائے جائیں، شام ہونے پر بادشاہ نے کہا کہ منحوس آئندہ صبح سویرے مجھے اپنا منہ نہ دکھانا…غلام نے کہا بادشاہ سلامت ! منحوس میں نہیں ہوں بلکہ آپ ہیں ، اس لئے کہ آج صبح میں نے آپ کا اور آپ نے میرا چہرہ دیکھا تھا آپ کا چہرہ دیکھنے سے مجھے یہ انعام ملا کہ شام تک کوڑے لگتے رہے، اور میرا بابرکت چہرہ دیکھنے کے بعد آپ صبح سے شام تک صحیح سلامت رہے، بادشاہ یہ سن کر متاثر ہوا اور اس کو آزاد کردیا اور کہا کہ یہ نحوست کوئی چیز نہیں لوگوں کی بناوٹی ہے۔
حقیقی بات یہ ہے کہ توہم پرستی وہ آگ ہے، جس میں ہم اپنے دینی، ملّی، قومی تشخص کو جلا رہے ہیں، دین دشمن اور گمراہ لوگ اس میں آہستہ آہستہ تیل ڈالتے رہیں گے… جبکہ حقیقت یہ ہے کہ اس ماہ صفر سے وابستہ اسلامی تاریخ توہم پرستی، نحوست، ناکامی اور بدشگونی کے اس جال عنکبوت کوتار تار کرکے مسرت اور شادمانی، کامیابی اور فتوحات کے مبارک جھنڈے گاڑ دیتی ہے، اس لئے کہ یہی تو وہ مبارک مہینہ ہے جس میں مسلمانوں کو مشرکین کے پنجۂ استبداد سے نجات ’’ہجرت مدینہ کی صورت میں‘‘ ملی۔ جو آگے چل کر اسلامی فتوحات کا پیش خیمہ ثابت ہوئی اور پھر اسلامی عقائد و نظریات کی حفاظت اور ترویج و اشاعت کیلئے جہاد جیسی عظیم نعمت بھی ملی جس کے ذریعے جہاں مسلمانوں کے جان و مال عزت آبرو محفوظ ہوئے وہیں وقت کی سپر پاور طاقتوں کو عقیدہ توحید کے سامنے سرنگوں ہونا پڑا…اسی ماہ صفر میں ’’حضرت زینبؓ بنت خزیمہ، صفیہؓ بنت حیّی مسلمانوں کی مائیں بن کر کاشانۂ نبوت میں تشریف لائیں اور ایک بڑی جماعت سرکردہ افراد نے ماہ صفر میں اسلام قبول کیا…یہ تمام واقعات حضرت فاطمہ  ؓ کا نکاح اور خودحضور صلی اللہ علیہ وسلم کا نکاح ہمیں توّہم پرستی، نحوست اور بدشگونی کے تاریک طلسم سے نکال کر خیر و برکت، خوشی و مسرت، شادابی و کامیابی کے سدا بہار ماحول فراہم کررہے ہیںکہ جہاد فی سبیل اللہ سے بڑھ کر کوئی کار ثواب نہیں ۔  

تازہ ترین خبریں

لوگوں کی تکلیف برداشت نہیں کر سکتے اس لیے۔۔۔ وزیراعظم عمران خان نے عوام کیلئے شاندار اعلان کردیا،عوام خوش ،اپوزیشن کی صفوں میں افسردگی

لوگوں کی تکلیف برداشت نہیں کر سکتے اس لیے۔۔۔ وزیراعظم عمران خان نے عوام کیلئے شاندار اعلان کردیا،عوام خوش ،اپوزیشن کی صفوں میں افسردگی

چیتا کلاس روم میں گھس گیا۔۔ حملے میں طالب علم زخمی۔۔ افسوسناک واقعہ کہاں پیش آیا ،دیکھیں ویڈیو

چیتا کلاس روم میں گھس گیا۔۔ حملے میں طالب علم زخمی۔۔ افسوسناک واقعہ کہاں پیش آیا ،دیکھیں ویڈیو

خطرناک ترین وائرس یہاں بھی پہنچ گیا۔۔اومی کرون کے پہلے کیس کی تصدیق ،ہر طرف خوف کے سائے

خطرناک ترین وائرس یہاں بھی پہنچ گیا۔۔اومی کرون کے پہلے کیس کی تصدیق ،ہر طرف خوف کے سائے

این اے 133 میں ن لیگ کو بڑا جھٹکا لگ گیا، متعدد رہنما پیپلز پارٹی میں شامل

این اے 133 میں ن لیگ کو بڑا جھٹکا لگ گیا، متعدد رہنما پیپلز پارٹی میں شامل

چینی کی قیمت میں 70 روپے فی کلو تک کی کمی۔۔انتہائی سستی ہو گئی

چینی کی قیمت میں 70 روپے فی کلو تک کی کمی۔۔انتہائی سستی ہو گئی

تبدیلی کا ایک اور شاخسانہ،ملک بھر میں یوٹیلیٹی اسٹورز بند۔۔عوام سے سستے راشن کی سہولت بھی چھین لی گئی

تبدیلی کا ایک اور شاخسانہ،ملک بھر میں یوٹیلیٹی اسٹورز بند۔۔عوام سے سستے راشن کی سہولت بھی چھین لی گئی

نوازشریف پاکستان واپس آئیں گے اور ملک کے چوتھی بار وزیراعظم بنیں گے، لائیو پروگرام میں بڑا دعویٰ کر دیا گیا

نوازشریف پاکستان واپس آئیں گے اور ملک کے چوتھی بار وزیراعظم بنیں گے، لائیو پروگرام میں بڑا دعویٰ کر دیا گیا

خطرناک ترین دفان نے سر اٹھا لیا ۔۔ بارشیں اور برفباری تو کچھ نہیں،آئندہ کچھ دنوں میں کیا  تباہ پھرنےوالی ہے؟محکمہ موسمیات نے خطرناک الرٹ جا

خطرناک ترین دفان نے سر اٹھا لیا ۔۔ بارشیں اور برفباری تو کچھ نہیں،آئندہ کچھ دنوں میں کیا تباہ پھرنےوالی ہے؟محکمہ موسمیات نے خطرناک الرٹ جا

نئی آفت نے پاکستان کو گھیر لیا۔۔ خبر دار گھروں سے باہر نہ نکلیں ،پاکستانیوں کیلئے الرٹ جاری کردیاگیا

نئی آفت نے پاکستان کو گھیر لیا۔۔ خبر دار گھروں سے باہر نہ نکلیں ،پاکستانیوں کیلئے الرٹ جاری کردیاگیا

انٹرنیشنل اسلامک یونیورسٹی میں ہاسٹل میں مقیم طالبات کواجتماعی ز ی ا د ت ی  کا نشانہ بنا دیا گیا،رکن قومی سمبلی کے انکشافات نے پوری قوم کو لر

انٹرنیشنل اسلامک یونیورسٹی میں ہاسٹل میں مقیم طالبات کواجتماعی ز ی ا د ت ی کا نشانہ بنا دیا گیا،رکن قومی سمبلی کے انکشافات نے پوری قوم کو لر

سوئی گیس کی قیمتوں میں اضافہ، سوئی سدرن نے عوام پر بجلیاں گر ادیں

سوئی گیس کی قیمتوں میں اضافہ، سوئی سدرن نے عوام پر بجلیاں گر ادیں

سموگ اور دُھند سے جان کب چھوٹے گی؟ محکمہ موسمیات نے پیشنگوئی کر دی

سموگ اور دُھند سے جان کب چھوٹے گی؟ محکمہ موسمیات نے پیشنگوئی کر دی

اسے کہتے ہیں ریلیف دینا،پیٹرول کی قیمتوں میں19 روپے کی بڑی کمی

اسے کہتے ہیں ریلیف دینا،پیٹرول کی قیمتوں میں19 روپے کی بڑی کمی

سرکاری ملازمین کی موجیں،گریڈ 1سے 4کی تنخواہوں میں 20جبکہ گریڈ 5 سے اوپر ملازمین کی تنخواہوں میں 10فیصد اضافے کا فیصلہ

سرکاری ملازمین کی موجیں،گریڈ 1سے 4کی تنخواہوں میں 20جبکہ گریڈ 5 سے اوپر ملازمین کی تنخواہوں میں 10فیصد اضافے کا فیصلہ