12:31 pm
حب اقتدار اورحزب اختلاف مفاہمت

حب اقتدار اورحزب اختلاف مفاہمت

12:31 pm

ہر تاریکی کا انجام روشنی ہوتا ہے ہر شام کی صبح ہوتی ہے .جنگ و جدل کے بعد صلح و آشتی کے پھریرے لہرائے جاتے ہیں.علائوالدین خلجی نے کہا تھا شیر کو قوت بازو سے قابو کرنے والے کبھی گیدڑ سے پنگا نہیں لیتے اگر کوئی اس طرح کی حماقت کا ارتکاب کرتا ہے تو  ذلت و رسوائی اس  کا مقدر بن جاتی ہے. رانا سانگا اور ظہیرالدین بابر کے درمیان میدان جنگ لگا اور رانا سانگا کو شکست ہوئی لیکن خراج دینے کیلئے  آمادہ نہیں ہوا. چتوڑ  کے راجوں اور مغلوں کے درمیان یہ لڑائی چار نسلوں تک جاری رہی بالآخر یہ لڑائی امن آشتی اور مفاہمت کا پیغام لیکر ختم ہوئی. امیر تیمور اور اور ابدال کلزئی کے درمیان معرکہ برپا ہوا امیرفاتح ٹھہرا لیکن ابدال کلزئی نےخراج دینے پرصلح کرنے اورتاج وتخت واپس لینے پر آمادگی ظاہر نہیں کی تھی. امیر تیمور نے ابدال کلزئی کو مارنے کی بجائے صلح و آشتی کا ہاتھ آگے بڑھایا. تیمور نے اس موقعہ پر اپنے مشیروں سے کہا تھا جو حال کے ہو کر رہ جاتے ہیں وہ مستقبل کی کامیابی سے محروم ہو جاتے ہیں.
مرہٹہ سلطنت کے بانی بابا رائو نےنظام دکن سے صلح کے وقت کہا تھا کہ یدھ کا فیصلہ تلواروں سے نہیں نکلتا ہے. تلوارسے زیادہ موثر سوچ ہوتی ہے.عمران خان نے ترک ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا تھا کہ اگر تحریک طالبان پاکستان ہتھیار ڈال دے تو معاف کر دیئے جائیں گے. طالبان کے چند گروہوں سے افغانستان میں مذاکرات چل رہے ہیں معلوم نہیں ہے کہ اس کا نتیجہ کیا نکلے۔ عمران خان نے کہا میں عسکری حل پر یقین نہیں رکھتا ہوں. وزیراعظم کا یہ دلیرانہ موقف بہت پرانا ہے کہ لشکر کشی سے آپ دہشت گردی ختم نہیں کر سکتے اس کا ایک ہی راستہ ہے وہ مذاکرات کا راستہ ہے.عمران خان کی اس بات کو لوگوں نے باتوں کا بتنگڑ بنا دیا خونی لبرل سوچ رکھنے والوں کا واویلا یہ ہے کہ اس سے ہمارے شہدا کا خون ضائع چلا جائے گا. اپوزیشن کا خیال ہے کہ پارلیمنٹ کو اعتماد میں کیوں نہیں لیا گیا ابھی گائوں بسا نہیں ہے اور اجاڑنے  والے پہلے سے ہی کمربستہ ہو گئے ہیں. حکومت کے موقف میں وزن ہے اگر آئندہ نسلوں کو دہشت گردی سے پاک ماحول فراہم کرنا ہے تو دہشت گردی کی بنیادکو کاٹنا ہو گا. اس معاملے میں حکومت کا موقف زیادہ صائب ہے. پارلیمنٹ کا اجلاس بلانے کی بات میں بھی کافی حد تک وزن ہے لیکن اصولی طور پر تو یہ بات سب کے نزدیک درست ہے کہ ملک میں دہشت گردی ختم ہونی چائیے اور ملک میں سرکش اور باغی دماغوں کو ختم کرنا ہوگا. اس کیلئے ہمیشہ مذاکرات کے میدان سجائے جاتے ہیں ایک صلح صفائی اورمفاہمت کا میدان ہے دوسرا جنگ وجدل کا خون ریز راستہ ہے۔ وقت اور حالات کے تناظر میں موقع اور محل کی نسبت ان میں کسی کو بھی اختیار کیا جا سکتا ہے. اگر لڑائی سے دہشتگردی اور مخاصمت ختم ہوتی ہو یہ راستہ بھی درست راستہ ہے بالآخر امن ہی نے فتح حاصل کرنی ہے۔ اصل میں امن ہی زندگی اور  صلح  ہے افراد اور قوموں کا مستقبل ہے. دستورحیات ہے کہ کوئی فردیا قوم ہمیشہ حالت جنگ میں نہیں رہ سکتی ہے. ہر لڑائی کا انجام ہوتا ہے اور امن و آشتی کی میز پراختتام کو پہنچتی ہے. یہی وہ وقت ہوتا ہے جب فاتح اپنی نالائق حکمت عملی سے میدان جنگ میں جیتی ہوئی جنگ کو مذاکرات کی میز پر ہار دیتے ہیں. جو لوگ وجدان اورحکمت میں  فزوں تر ہوتے ہیں حوصلہ مندی اور بصیرت سے کام لیتے ہیں وہ شکست  خوردہ قوتوں  کو نیست و نابود کرنے کے بجائے ان کے زخموں کو سہلاتے ہیں. اگر ایسا نہ کیا جائے تو فطرت کا اصول ہے شکست کے زخم ناسور بن جاتے ہیں اور جنگ و جدل صدیوں تک انسانوں کا خون چوستی رہتی ہے۔ یہ بات شک شبہ سے بالاتر ہے کہ تحریک طالبان پاکستان  کی قوت قاہرہ کو ختم کرنے کیلئےہماری مسلح افواج اور عام پاکستانیوں نے بے شمار قربانیاں دی ہیں. ہماری قابل فخر افواج اوردیگر سلامتی کے اداروں نے اجتماعی کوششوں سے تحریک طالبان کو نیست و نابود کر دیا تھالیکن تمامتر کامیابی کے باوجود بچے کھچے طالبان کوافغانستان اور انڈیا سے مسلسل امدادمیسر آرہی تھی اسلئے پاکستان کوتازہ ترین دہشت گردی کا نشانہ بنایا گیا،یہ دہشت گردی کی تازہ لہر تھی. تحریک طالبان پاکستان کی باقیات سے امن مذاکرات کرکے ان کو ہمیشہ کیلئے  ختم کرنا بے حد ضروری ہے ان میں وہ لوگ جو حملے کروانے کہ ذمہ دار ہیں وہ لوگ ناقابل معافی ہیں. عام فریب اور دھوکے میں آئے ہوئے لوگوں کو معاف کرنا قرین انصاف ہے. پیپلزپارٹی اور مسلم لیگ کے دور میں بھی مذاکرات ہوتے رہے ہیں اس میں کوئی انوکھی  اور نئی بات نہیں ہے. پیپلز پارٹی نے 2008ء میں تنظیم تحریک نفاذشریعت محمدی سے مذاکرات کئے تھے اور امن معاہدہ بھی ہوا تھا. 2014ء میاں نوازشریف کی حکومت نے کالعدم ٹی ٹی پی سے بات چیت کی تھی مذاکرات کامیاب نہیں ہو سکے تھے. ضرب عضب اورضرب ردالفسادکے ذریعے دہشت گردوں کا قلع قمع کردیا گیا تھا. اب  ٹی ٹی پی کے لوگ افغانستان میں ہیں افغان طالبان کے ذریعے ان سے مذاکرات ممکن ہیں.طالبان اور امریکہ  کےدرمیان پاکستان نے مذاکرات کا راستہ ہموار کیا تھا۔ اب افغان طالبان سے جائز توقع کی جا سکتی ہے کہ تحریک طالبان پاکستان سے وابستہ لوگوں اور پاکستان حکومت کے درمیان مذاکرات کیلئےسہولت فراہم کریں.پاکستان  نے کئی مرتبہ بی ایل  اےکوقومی دھارے میں لانے کیلئے  مذاکرات کئے ہیں.اگر تحریک طالبان پاکستان کے لوگ سرینڈر کرنے اور پاکستان کی حاکمیت کو ماننے کے لئے تیار ہوجاتے ہیں تو ان کو وسیع تر قومی مفاد کے پیش نظرموقعہ ملنا چاہئے.  مذاکرات کی حتمی نوک پلک کو درست کرنے کیلئے  پارلیمنٹ  کا اجلاس طلب کرنا بھی ضروری ہے.اس حوالے سے ال پارٹی کانفرنس بھی بلوانے میں کوئی حرج نہیں ہے.نبی مکرم حضرت محمد ص کی زندگی  دشمن کو معاف کر دینے کے واقعات سے مزین ہے. حضور نے اہل مکہ پرفتح  پانے کے بعد سب کو معاف کردیا تھا.موجودہ وزیراعظم پاکستان کے لیے بہتر موقعہ ہے کہ وہ افغانستان اور تحریک طالبان پاکستان کے بارے میں نواز شریف اور آصف زرداری کو فون کال کے ذریعے اعتماد میں لینے کیلئےسعی کریں.پاکستان کو درپیش مسائل سے نپٹنے کیلئے  اتفاق رائے  ضروری ہے۔

تازہ ترین خبریں

 فروری 2024قومی بچت بینک نے بہبود سیونگ سرٹیفکیٹس کے لیے منافع کی شرح کا اعلان کردیا گیا

 فروری 2024قومی بچت بینک نے بہبود سیونگ سرٹیفکیٹس کے لیے منافع کی شرح کا اعلان کردیا گیا

صدر مملکت  کی جانب سے قومی اسمبلی کا اجلاس طلب کرنے کی سمری مسترد ،دیکھیں 

صدر مملکت  کی جانب سے قومی اسمبلی کا اجلاس طلب کرنے کی سمری مسترد ،دیکھیں 

پنجاب کی نئی وزیراعلیٰ مریم نواز شریف کے بارے میں وہ سب تمام معلومات جو آپ نہیں جانتے ،دیکھیں

پنجاب کی نئی وزیراعلیٰ مریم نواز شریف کے بارے میں وہ سب تمام معلومات جو آپ نہیں جانتے ،دیکھیں

ن لیگ نے ایم کیو ایم کے مطالبوں سے اصولی اتفاق کر لیا ، دیکھیں تفصیل خبر میں

ن لیگ نے ایم کیو ایم کے مطالبوں سے اصولی اتفاق کر لیا ، دیکھیں تفصیل خبر میں

پاکستان کی آئی ایم ایف سے بنگلہ دیش طرز کے معاہدے کی کوشش، دیکھیں تفصیل 

پاکستان کی آئی ایم ایف سے بنگلہ دیش طرز کے معاہدے کی کوشش، دیکھیں تفصیل 

 2 فرشتوں کے بغیربانیٔ پی ٹی آئی سے کوئی ملاقات نہیں ہوئی ، شیر افضل مروت کا بیان سامنے آ گیا 

 2 فرشتوں کے بغیربانیٔ پی ٹی آئی سے کوئی ملاقات نہیں ہوئی ، شیر افضل مروت کا بیان سامنے آ گیا 

مرتضیٰ بھٹو قتل کیس میں 4 ملزمان کے وارنٹ گرفتاری جاری 

مرتضیٰ بھٹو قتل کیس میں 4 ملزمان کے وارنٹ گرفتاری جاری 

مریم نواز پنجاب کی پہلی خاتون  وزیر اعلیٰ منتخب،دیکھیں خبر

مریم نواز پنجاب کی پہلی خاتون وزیر اعلیٰ منتخب،دیکھیں خبر

سنی اتحاد کونسل ارکان کابائیکاٹ، مریم نواز بھی بول اٹھیں

سنی اتحاد کونسل ارکان کابائیکاٹ، مریم نواز بھی بول اٹھیں

وزیراعلیٰ کے انتخاب کے لیے پنجاب اسمبلی کا اجلاس، سنی اتحاد کونسل اراکین احتجاجا واک آؤٹ کر گئے  

وزیراعلیٰ کے انتخاب کے لیے پنجاب اسمبلی کا اجلاس، سنی اتحاد کونسل اراکین احتجاجا واک آؤٹ کر گئے  

تمام  مستند معلومات کے لیے بینظیر انکم سپورٹ  کا  واٹس ایپ چینل شروع، دیکھیں

تمام  مستند معلومات کے لیے بینظیر انکم سپورٹ کا واٹس ایپ چینل شروع، دیکھیں

اہم خبر ،اسد عمر لانگ مارچ توڑ پھوڑ کیس میں بری ہو گئے 

اہم خبر ،اسد عمر لانگ مارچ توڑ پھوڑ کیس میں بری ہو گئے 

وزیراعلیٰ پنجاب اور سندھ کا انتخاب آج،دیکھیں تفصیل 

وزیراعلیٰ پنجاب اور سندھ کا انتخاب آج،دیکھیں تفصیل 

پاک فوج اور رائل سعودی لینڈ فورسز کی مشترکہ فوجی تربیتی مشقوں کا انعقاد

پاک فوج اور رائل سعودی لینڈ فورسز کی مشترکہ فوجی تربیتی مشقوں کا انعقاد