12:32 pm
 پاکستان پرپابندیوں کامطالبہ،خطرے کی گھنٹی؟

 پاکستان پرپابندیوں کامطالبہ،خطرے کی گھنٹی؟

12:32 pm

(گزشتہ سے پیوستہ)
مودی کی جنرل اسمبلی میں کی تقریراورکملاہیرس کے ادا کردہ کلمات کوبراہ راست سننے کے بعدمیرے لئے بہت غورسے بھارتی میڈیا میں مودی کے دورہ امریکہ کی کوریج کاجائزہ لینااس لئے بھی ضروری ہوگیا تھاکہ میری بڑی مہربان بہن عارفہ کی خوردبین نگاہیں یقینامیرے لئے ایسے سوالات کاراستہ کھولے کھڑی ہوتی ہیں جن کامجھے ہرہفتہ ٹی وی چینل پرجواب دینا ہوتاہے۔ان کے مطابق ہرچینل پر’’مودی چھاگیا‘‘ کی دھوم مچائی جارہی تھی۔یوں گماں ہورہاتھاکہ کولمبس کے بعدنریندرمودی نے بھی ایک اورامریکہ دریافت کرنے کے بعداسے اپناگرویدہ بنالیاہے۔ کملاہیرس نے بھارتی جمہوریت کی اصل اوقات دکھانے کے لئے جوکلمات برسرعام اداکئے تھے ان کا کہیں ذکرہی نہیں ہورہاتھا۔

میری عجلت میں ہوئی تحقیق کے مطابق بھارت کاایک مشہورصحافی شیکھرگپتا واحدبھارتی صحافی ثابت ہواجس نے کملاہیرس کے کلمات کااپنے یوٹیوب چینل کے پروگرام’’کٹ دا کلٹرز‘‘میں نہایت سنجیدگی اور فکرمندی سے تجزیہ کیا۔یہ حقیقت ہے کہ امریکہ کی حکمران اشرافیہ کاایک مؤثرحصہ بھارت کوچین کے مقابلے کی قوت بناناچاہ رہاہے۔مودی- بائیڈ ن کوبھائی،بھائی تسلیم کرنے کے لئے امریکہ کی ان دنوں حکمران جماعت مگرفی الوقت دل وجان سے تیارنہیں ہے۔اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے روبروخودکودنیاکا حتمی ترقی پسند اورروشن خیال ثابت کرتے مودی کی مکارانہ تقریراس ضمن میں کسی کام نہیں آئی بلکہ ہندوتواکے جنون کی داستانوں نے سب کوخوفزدہ بنا رکھا ہے اور اسی کالک کی سیاہی بالآخردنیاکے سامنے آشکارہو گئی ہے جس کاآغازخودکملاہیرس نے کیاہے۔
اسی تناظرمیں ایک اوراہم خبرجوخطے کی خطرناک صورتحال کی طرف نشاندہی کرتی ہے۔ ایک مرتبہ پھرچین اوربھارت کے درمیان حالیہ بیان بازی کے دوران بھارتی میڈیا میں یہ خبربھی سرخیوں میں ہے کہ حال ہی میں چینی فوج بھارت کی شمالی ریاست اتراکھنڈ میں کافی اندرتک داخل ہوگئی تھی تاہم مودی حکومت نے اس پرکچھ کہنے کے بجائے خاموشی اختیارکی ہوئی ہے۔بھارتی ذرائع ابلاغ کی رپورٹوں کے مطابق چینی فوج کے تقریبا100گھڑسوارارکان ’’ایل اے سی ‘‘سے تقریبا5کلومیٹراندر’’باراہوتی ‘‘کے علاقے میں داخل ہو گئے تھے مگرپھرچندہی گھنٹوں بعدوہ واپس بھی چلے گئے تھے۔
بھارتی میڈیانے بعض دفاعی ذرائع کے حوالے سے لکھاہے کہ وہ اس بات پرحیران ہیں کہ اتنی بڑی تعدادمیں چینی فوجی آخراتنااندر تک کیوں آگئے تھے۔اس علاقے میں بھی بھارت اورچین کے درمیان سرحدکے حوالے سے تنازعہ موجودہے اورماضی میں بھی اس طرح کی اطلاعات آتی رہی ہیں کہ چینی فوج ان علاقوں میں داخل ہوگئی جہاں عموماًبھارتی فوجی دستے گشت کرتے ہیں۔ڈی ڈبلیوکی ایک رپورٹ کے مطابق سوشل میڈیاپر بہت سے بھارتی شہری تشویش میں مبتلا ہیں کہ آخرمودی حکومت اس بارے میں خاموش کیوں ہے؟ چینی وزارت خارجہ کی ترجمان ہواچونیئنگ کا’’ایل اے سی‘‘ کے آرپارکشیدگی سے متعلق ایک سوال کے جواب میں کہناہے کہ اس کی وجہ بھارت کی موجودہ پالیسیاں ہیں اور جب تک بھارتی حکومت ایسی کارروائیوں سے بازنہیں آتی تب تک ایل اے سی پرتنا ؤبرقراررہے گا۔
بھارت نے سرحد پرکشیدگی سے متعلق چینی وزارت خارجہ کے ان الزامات کو مسترد کر دیا ہے کہ انڈیا اپنی فارورڈ پالیسی پر عمل پیرا ہے اور غیر قانونی طور پر لائن آف ایکچوئل کنٹرول عبور کرنے کے راستے پر گامزن ہے۔ بھارت کا کہنا ہے کہ سرحدوں پر کشیدگی کی اہم وجہ بڑی تعداد میں فورسز کی تعیناتی ہے اور اس تعداد میں کمی کے بغیر باہمی تنا کم نہیں ہو گا۔ بھارت اور چین کے ان بیانات سے یہ بات عیاں ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان سرحد پر تنا ؤکم کرنے کی جو کوششیں ہوتی رہی ہیں ان سے کوئی خاص فرق نہیں پڑا اور یہ کشیدگی کافی حد تک تاحال برقرار ہے۔ کئی ماہرین کا بھی یہی کہنا ہے کہ مستقبل قریب میں اس کشیدگی میں کمی کے بجائے اضافے کا امکان زیادہ ہے۔مودی حکومت تواس محاذپرکشیدگی کا واویلاکرخطے میںامریکہ اورمغربی اتحاد یو ں سے اپنی اہمیت اورمفادات کی تکمیل کے لئے ہاتھ پاؤںمارنے کی بھرپورکوشش کرے گا لیکن ’’کواڈ‘‘ اتحاد میں شامل کرنے کے باوجود امریکہ اورمغرب کی خواہشات کے مطابق چین کے سامنے اپنی کمزوری دکھانے پرمودی کی بددیانتی سب پرعیاں ہوگئی ہے۔
گزشتہ برس جب آسٹریلیانے اندوپیسفک میں اپنی نیوی کی پیش قدمی کے موقع پر ’’کواڈ‘‘معاہدے کی بناء پرمودی کواپنی نیوی  میدان میں لانے کی دعوت دی تومودی کوگویا سانپ سونگھ گیاتھاکیونکہ مودی کویہ واضح پیغام مل گیاتھاکہ اس کے نتیجے میں وہ چین کے ساتھ ملحقہ تین ریاستوں سے ہاتھ دھوبیٹھے گااوراس کاعملی نتیجہ وہ لداخ میں بھگت چکاہے جس کے لئے خودبھارتی وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ نے لوک سبھا میں بتایا کہ مشرقی لداخ میں بھارت کو ایک بڑے چیلنج کا سامنا ہے۔ انہوں نے اعتراف کیا کہ چین غیر قانونی طورپر لداخ کے 38 ہزار مربع کلومیٹر کے علاقے پر قابض ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ چین اروناچل پردیش میں ہند چین سرحد کے مشرقی حصے میں 90 ہزار مربع کلومیٹر علاقے پر دعویٰ کررہاہے۔ بھارتی اخبارات کا کہنا ہے کہ بھارت نے مشرقی لداخ میں عملاًچینی بالادستی تسلیم کر لی ہے۔ چین نے بھی کمپنی شین جھیک انفوٹیک اور شنہوا انفوٹیک کے ذریعے پورے بھارت پر نظر رکھی ہوئی ہے ۔ بھارتی وزارت داخلہ ، خارجہ اور دفاع کے حکام کی ڈیجیٹل مانیٹرنگ بھی ہورہی ہے ۔ 

تازہ ترین خبریں

پاک فوج اور رائل سعودی لینڈ فورسز کی مشترکہ فوجی تربیتی مشقوں کا انعقاد

پاک فوج اور رائل سعودی لینڈ فورسز کی مشترکہ فوجی تربیتی مشقوں کا انعقاد

پی ٹی آئی  نے شیر افضل مروت کو شوکاز نوٹس جاری کردیا، وجہ سامنے آ گئی

پی ٹی آئی نے شیر افضل مروت کو شوکاز نوٹس جاری کردیا، وجہ سامنے آ گئی

مشکلات سے کبھی مایوس نہیں ہوئے،جو ناکامی سے ڈرتا ہے وہ کبھی کامیاب نہیں ہوتا، نواز شریف 

مشکلات سے کبھی مایوس نہیں ہوئے،جو ناکامی سے ڈرتا ہے وہ کبھی کامیاب نہیں ہوتا، نواز شریف 

پاکستانی گلوکارہ شازیہ منظور نے ٹی وی شو میں مذاق کرنے پر کامیڈین کو تھپڑدے مارے ،دیکھیں ویڈیو 

پاکستانی گلوکارہ شازیہ منظور نے ٹی وی شو میں مذاق کرنے پر کامیڈین کو تھپڑدے مارے ،دیکھیں ویڈیو 

یوٹیلٹی سٹورز اشیاء ضروریہ عام مارکیٹ  سے بھی مہنگے داموں فروخت کرنے  لگے ،قیمتوں میں فرق دیکھیں اس خبر میں

یوٹیلٹی سٹورز اشیاء ضروریہ عام مارکیٹ سے بھی مہنگے داموں فروخت کرنے لگے ،قیمتوں میں فرق دیکھیں اس خبر میں

مریم نواز اچھی اور قابل وزیراعلیٰ ثابت ہوں گی،ن لیگی قائد نواز شریف کا دعویٰ 

مریم نواز اچھی اور قابل وزیراعلیٰ ثابت ہوں گی،ن لیگی قائد نواز شریف کا دعویٰ 

ملک میں صدارتی الیکشن کس تاریخ  کو ہونیوالے ہیں ؟دیکھیں خبرمیں

ملک میں صدارتی الیکشن کس تاریخ کو ہونیوالے ہیں ؟دیکھیں خبرمیں

سندھ اسمبلی کے باہر سیاسی جماعتوں کا احتجاج، کارکنان گرفتار،ٹریفک نظام درہم پرہم 

سندھ اسمبلی کے باہر سیاسی جماعتوں کا احتجاج، کارکنان گرفتار،ٹریفک نظام درہم پرہم 

سندھ اسمبلی کے نومنتخب ارکان نے حلف اٹھا لیا،کراچی میں ایک ماہ کے لیے دفعہ 144 نافذ،دیکھیں خبر

سندھ اسمبلی کے نومنتخب ارکان نے حلف اٹھا لیا،کراچی میں ایک ماہ کے لیے دفعہ 144 نافذ،دیکھیں خبر

راولپنڈی، گیس لیکج کے باعث   خوفناک دھماکہ، تفصیل جانیں

راولپنڈی، گیس لیکج کے باعث خوفناک دھماکہ، تفصیل جانیں

پابندی کے باوجود میں بسنت منانے پر  سینکڑوں افراد کو گرفتارکر لیا گیا ،دیکھیں تفصیل 

پابندی کے باوجود میں بسنت منانے پر  سینکڑوں افراد کو گرفتارکر لیا گیا ،دیکھیں تفصیل 

الیکشن کمیشن کی جانب سے قومی اسمبلی کے لیے تازہ ترین پارٹی پوزیشنز شیئر کر دیں گئیں 

الیکشن کمیشن کی جانب سے قومی اسمبلی کے لیے تازہ ترین پارٹی پوزیشنز شیئر کر دیں گئیں 

حمزہ شہباز کو مرکز میں رکھنے کا فیصلہ کر لیا گیا ،دیکھیں تفصیل 

حمزہ شہباز کو مرکز میں رکھنے کا فیصلہ کر لیا گیا ،دیکھیں تفصیل 

تعلیمی اداروں میں26 فروری کو تعطیل کا اعلان، نوٹیفکیشن جاری،تفصیل خبر میں

تعلیمی اداروں میں26 فروری کو تعطیل کا اعلان، نوٹیفکیشن جاری،تفصیل خبر میں