04:27 pm
تیسری عالمی جنگ انسانیت کی دہلیز پر

تیسری عالمی جنگ انسانیت کی دہلیز پر

04:27 pm

(گزشتہ سے پیوستہ)
چین کے خلاف بنائے ہوئے اتحادیوں کواڈ یعنی چوکور و رباعی،سی فریقی اتحاد مثلث (اوکس)کہتے ہیں۔ ان دونوں اتحادیوں کا کوئی مرکز ثقل نہیں ہے یعنی بغیر دفاتر کے ذہنوں میں رقص کر رہے ہیں۔عالمی تناظر میں پہلی اور متوقع سرد جنگ کا موازنہ کر لیا جائے تاکہ  حالات سمجھنے میں آسانی ہو  جائے۔دنیا میں پہلی سرد جنگ دوسری جنگ عظیم کے بعد شروع ہوئی تھی۔یہ جنگ روس اور امریکہ کے مابین مشترکہ طور پر جنگ میں فاتح ہونے کے  شاخسانہ تھی،دونوں عظیم مالک نے دنیا کو عملی طور پر دو حصوں میں تقسیم کر لیا تھا چند ممالک ایسے تھے جو فریقین کے درمیان بفر  سٹیٹ  کا کردار ادا کرتے تھے۔ روس اور امریکہ نے اپنے اپنے حلقہ اثر کو قائم کر لیا تھا۔ مخاصمت و مقابلے کی فضا ہر دائرہ فکر عمل میں موجود تھی۔ دونوں بڑی قوتوں کے درمیان اصل رسہ کشی کا میدان یورپ میں لگا جو برلن کی دیوار گرنے سے سرد جنگ کا ماحول اختتام  پذیر ہوا،عالمی جنگ کے بعد مشرقی یورپ کے ممالک  پولینڈ،مشرقی، جرمنی،چیکو سلواکیہ،ہنگری، روس کے زیر تسلط  گئے۔
امریکہ اور باقی یورپ کو خطرہ تھا کہ روس کا اقتصادی نظام پذیرائی نہ حاصل کر لے۔ان حالات کو پیش نظر  رکھتے ہوئے صدر ٹرمین  نے مارشل پلان کے ذریعہ مغربی یورپ کی اقتصادی بحالی کے لئے  بھرپور حصہ لیا۔امریکہ مدد نے یورپی ممالک کو ممنون احسان بنا لیا اور اس مالی تعاون  نے نیٹو کی تشکیل و تعمیر میں اہم کردار ادا کیا ہے،امریکہ کے مد مقابل روس نے وارسا  پیکٹ کے نام پر عسکری اتحاد قائم  کر لیا۔دونوں ممالک کے درمیان تنا اور شدید مقابلے کا جنون طاری رہا۔  1979ء  سوویت افواج نے افغانستان پر حملہ کر دیا 1962ء میں کیوبا میں میزائل بحران سب اسی سرد جنگ کے نتائج  تھے،یہ جنگ بنیادی طور پر جیو پولیٹیکل نوعیت کی جنگ تھی۔دنیا پھر ایک اور قسم کی سرد  جنگ کے دو راہے پر کھڑی ہے،یہ جنگ اپنی نوعیت اور کیفیت کے اعتبار سے اس سے قدرے مختلف ہے یہ جنگ جیو اکنامک ہے۔معاشی مفادات کا حصول اس جنگ کا مقصد وحید ہے، اب جنگوں کی نوعیت بدل گئی ہے اب دوسرے ممالک پر  قبضہ کی بجائے معاشی بالا دستی حاصل کرنا جنگوں کا اولین مقصد بن گیا ہے،اس  جنگ میں ٹیکنالوجی نے بنیادی کردار ادا کرنا ہے،جو  قوم ٹیکنالوجی میں برتری حاصل کر لے گی وہی قوم اقتصادی میدان میں فاتح ٹھہرے گی۔چین  کی  ہوواے کمپنی پر امریکہ کافی عرصے سے شک کر رہا ہے کہ اس نے ٹیکنالوجی کو ایران منتقل کر دیا ہے،کواڈ کی  موجودگی میں سہ فریقی اتحاد کی تشکیل نے بھارتیوں کو اپنی  اوقات یاد دلا دی ہے۔ انڈیا کے سابق سیکرٹری خارجہ مسز نرو پانا رائو  نے ثلاثی اتحاد کو رباعی(0کواڈ)اتحاد کی پیٹھ میں سٹریِٹجک  چھرا  گھوپنے کے مترادف قرار دیا ہے۔امریکہ نے اپنی عسکری حکمت عملی میں بنیادی تبدیلی کا آغاز کر دیا ہے امریکہ کی خواہش ہے کہ تمام محاذزوں کی بجائے صرف چین کے خلاف ہی محاذ قائم کیا جائے اس لئے امریکہ باقی محاذوں سے  اپنا بوریا بستر گول کر رہا ہے افغانستان سے امریکہ اور نیٹو فوجوں کا بعجلت انخلاء بھی  اس لئے ممکن ہو سکا ہے۔اس جنگ میں آپ کو تیزی نظر نہیں آرہی ہے کیونکہ پہلی سرد جنگ میں دونوں بڑے ممالک کے فوجی اڈے دنیا بھر میں پھیلے ہو ئے تھے۔ اس لئے دونوں ممالک ہر محاز پر آمنے سامنے عملی طور چوکس اور نبرد آزما تھے،چین کا صرف ایک اڈہ جبوتی میں ہے،پہلی سرد  جنگ میں  مغربی یورپ  دل  و جان سے امریکہ کے ساتھ تھا۔موجودہ کولڈ وار میں یورپ، انڈیا،جاپان مکمل طور امریکہ کے ساتھ نہیں ہیں۔کم و پیش سب ممالک  کے چین کے ساتھ تجارتی تعلقات ہیں۔خود امریکہ بھی چین کا تیسرا  بڑا تجارتی پارٹنر ہے، امریکہ  نے جنگوں پر  بے دریغ خرچ کرکے یہ سبق حاصل کیا ہے کہ بیرون جنگوں کی وجہ سے امریکہ داخلی مسائل کا شکار ہو گیا ہے۔صدر بائیڈن  نے اعلان کیا ہے کہ ایک ہزار ارب ڈالر تک انفراسٹرکچر  کی تعمیر و مرمت پر خرچ کیا جائے گا۔امید واثق  ہے کہ امریکہ اگلے دو عشروں تک اپنے  اندرونی مسائل کے حل پر اپنی توانائیاں خرچ کرے گا۔ امریکہ کی کوشش ہو گی کہ دوسرے ممالک کو استعمال کرتے ہوئے چین کے خلاف محاذ کو گرم رکھے۔انڈیا  چین کا بڑا تجارتی پارٹنر ہے انڈیا والے اپنے مفادات کے حوالے سے بڑے کایان  ہیں،ہزاروں سالوں کی ماتحت رہنے کی دانش کے وارث ہیں،وہ امریکہ کی ہلہ شیری  کو سمجھتے ہیں امریکہ سے مفادات حاصل کرنے کے لئے چین کا ہوا  کھڑا کر رکھا ہے. بھارت نے روس سے بھی 8.40   ارب ڈالر کا S-44   ائیر  ڈیفنس  سسٹم حاصل کرنے کا معاہدہ کیا ہوا ہے امریکہ اس پر بھی ناراض ہے لیکن بھارت اسی سال اس سسٹم کو حاصل کر لے گا۔بظاہر دنیا جنگ کے دہانے پر نظر آ رہی ہے لیکن یہ جنگ  اقتصادی جنگ ہو گی توپ و تفنگ  کی جنگ قصہ پارینہ بن چکی ہے۔

تازہ ترین خبریں

لاہور کے سکولوں میں ماحولیاتی مسائل پر اضافی کلاسیں لگائی جائیں ، لاہور ہائیکورٹ کا حکم

لاہور کے سکولوں میں ماحولیاتی مسائل پر اضافی کلاسیں لگائی جائیں ، لاہور ہائیکورٹ کا حکم

پاکستان  ہی میرے لیے سب کچھ ہے، نگراں وزیراعظم انوارالحق کاکڑ کا بیان سامنے آ گیا 

پاکستان  ہی میرے لیے سب کچھ ہے، نگراں وزیراعظم انوارالحق کاکڑ کا بیان سامنے آ گیا 

پی ٹی آئی کا 3 مارچ کو انٹرا پارٹی الیکشن کرانے کا اعلان، شیڈول بھی جاری کر دیا گیا 

پی ٹی آئی کا 3 مارچ کو انٹرا پارٹی الیکشن کرانے کا اعلان، شیڈول بھی جاری کر دیا گیا 

پنجاب یونیورسٹی میں تصادم، 9 طلباء زخمی،تفصیلات جانیں خبر میں 

پنجاب یونیورسٹی میں تصادم، 9 طلباء زخمی،تفصیلات جانیں خبر میں 

رمضان ریلیف پیکج آج وفاقی کابینہ میں پیش،دیکھیں تفصیل 

رمضان ریلیف پیکج آج وفاقی کابینہ میں پیش،دیکھیں تفصیل 

 مجھ پر پولیس نے تشدد کیا،خواجہ آصف نے پولیس کے ساتھ مل کر ٹھپے لگائے، ریحانہ ڈار کے انکشافات

مجھ پر پولیس نے تشدد کیا،خواجہ آصف نے پولیس کے ساتھ مل کر ٹھپے لگائے، ریحانہ ڈار کے انکشافات

آئی ایم ایف کے 26 میں سے 25 اہداف پر عمل درآمد مکمل ہو گیا

آئی ایم ایف کے 26 میں سے 25 اہداف پر عمل درآمد مکمل ہو گیا

سنی اتحاد کونسل کی مخصوص نشستوں کی درخواست، الیکشن کمیشن کا اہم اجلاس طلب  کر لیا  گیا

سنی اتحاد کونسل کی مخصوص نشستوں کی درخواست، الیکشن کمیشن کا اہم اجلاس طلب کر لیا گیا

صدر اور وزیراعظم کے نام فائنل ہونے کے بعد آئینی عہدوں کے لیے لابنگ کا آغاز

صدر اور وزیراعظم کے نام فائنل ہونے کے بعد آئینی عہدوں کے لیے لابنگ کا آغاز

 اللہ تعالیٰ مجھے اپنی مخلوق کی بہترین انداز میں خدمت کرنے کی توفیق عطا فرمائے، وزیراعلیٰ پنجاب مریم نواز

اللہ تعالیٰ مجھے اپنی مخلوق کی بہترین انداز میں خدمت کرنے کی توفیق عطا فرمائے، وزیراعلیٰ پنجاب مریم نواز

 موجودہ دورکے ڈرامے تو۔۔۔ سینئر اداکارہ  بشریٰ انصاری  نےاہم معاملے پر کڑی نقید کر ڈالی 

 موجودہ دورکے ڈرامے تو۔۔۔ سینئر اداکارہ  بشریٰ انصاری  نےاہم معاملے پر کڑی نقید کر ڈالی 

کیا واقعی شیخ وقاص اکرم  پی ٹی آئی چھوڑ کر پھر سے ن لیگ میں شامل ہو گئے ہیں ؟ جانیں اس خبر میں 

کیا واقعی شیخ وقاص اکرم  پی ٹی آئی چھوڑ کر پھر سے ن لیگ میں شامل ہو گئے ہیں ؟ جانیں اس خبر میں 

پی ٹی آئی کا 2 ہفتوں میں انٹرا پارٹی الیکشن کرانے کا فیصلہ

پی ٹی آئی کا 2 ہفتوں میں انٹرا پارٹی الیکشن کرانے کا فیصلہ

پی ٹی آئی کے 287 ارکان اسمبلی سنی اتحاد کونسل میں شامل ، دیکھیں تفصیل 

پی ٹی آئی کے 287 ارکان اسمبلی سنی اتحاد کونسل میں شامل ، دیکھیں تفصیل