12:58 pm
اتحادی ناراض، حکومت لرزگئی، وزراء کی سیاست پر پابندی

اتحادی ناراض، حکومت لرزگئی، وزراء کی سیاست پر پابندی

12:58 pm

٭نئے انتخابات کا امکان، اتحادی الگ ہو رہے ہیںO عمران خاں سیاست سے لاتعلقی، وزرا کے بیانات پر پابندی، صرف مہنگائی پر بات ہو گیO امریکہ، قطر میں افغانستان کے لئے سفارتی مرکز قائمO افغانستان کی درخواست پر وزیراعظم کی بھارتی گندم کو پاکستان سے گزرنے کی اجازت کا امکانO بھارت: سپریم کورٹ توہین عدالت پر فوج اور حکومت پر شدید برہم، حکومت اور فوج کی معافیO یورپ کے ساتھ ملکوں میں کرونا پھر تیز، ہالینڈ مکمل لاک ڈائون، ہنگامے، پولیس سے سخت تصادمO گیس، صرف تین وقت تھوڑی سی ملے گیO شہباز شریف، قائم علی شاہ، فواد حسن کے نام پھر ای سی ایل میں۔
٭شدید مہنگائی اور ہر شعبے میں ناکامی و نااہلی پر حکومت کے تمام اتحادیوں ایم کیو ایم، ق لیگ، جی ڈی اے کی حکومت سے سخت ناراضی اور علیحدگی کے امکانات، حکومت خود وزیراعظم عمران خاں کی بوکھلاہٹ، عجلت میں کچن کابینہ (چند خاص وزراء) کا اجلاس بلا لیا۔ وزیروںکو ہدائت کی کہ سیاست پر کوئی بات نہیں کریں گے، صرف مہنگائی پر بات ہو گی! حیرت کہ مہنگائی تو تین برسوں سے جاری ہے اس دوران 300 فیصد بڑھ گئی، وزیراعظم نے کوئی نوٹس نہیں لیا، صبح اٹھتے ہی قوم اور اپوزیشن کو اخلاقیات کا درس شروع ہوتا جو رات تک جاری رہتا۔ حاشیہ نشین وزارتی کارندے دن بھر قوم کو سمجھاتے رہتے کہ وزیراعظم کو مہنگائی کا علم ہو گیا ہے۔ وزیراعظم کے لئے افغانستان کے عوام کی حالت زار پر ہمدردی زیادہ اہم تھی۔ دن بھر یہی ورد جاری رہتا، ساتھ میں بڑبڑاہٹ بھی کہ بھارت اور بنگلہ دیش میں پٹرول زیادہ مہنگا ہے (ان ملکوں کی فی کس آمدنی پاکستان سے تین گناتک زیادہ ہے) اور جب آسمانوں کو چھوتی جان لیوا مہنگائی (پینا ڈول تین دنوں میں 20 روپے سے 35 روپے تک مہنگی!) نے بھوکے ننگے بے روزگار عوام کا کچومر نکال دیا اور تمام ساتھی اتحادیوںنے الگ الگ حکومت سے لاتعلقی کا اظہار کیا اور حکومت کا ساتھ چھوڑنے کی خبریں عام ہونے لگیں تو حالات نے غفلت کی گہری نیند والے وزیراعظم کو جھنجوڑ کر اٹھایا کہ حضور بہت ہو گئی، تمام ساتھی علیحدگی کے لئے بوریا بستر باندھ رہے ہیں تو وزیراعظم نے گھبرا کر آنکھیں کھولیں اور الٹے سیدھے مشورے دینے والے اردگرد کے قریب ترین چوبداروں کا ہنگامی اجلاس بلا کر انہیں تین سالہ دور والی 40 ویں یا شائد 50 ویں بار کی تلقین دہرائی کہ مہنگائی دور کرنے والی تقریریں پھر سے شروع کر دیں۔ اور…اور جب وزیراعظم کچن کابینہ کو بھاشن دے رہے تھے تو وزارت محکمہ شماریات نے خوش خبری سنائی کہ مختلف سبزیوں اور دالوں کی قیمتوں میں کمی ہوئی ہے ۔لہسن کی قیمت میں 12  پیسے کلو کمی!! موجودہ قیمت 300 روپے کلو!
٭کالم بہت طویل اور بور ہو رہا ہے۔ آیئے بھارت میں ایک تماشا دیکھیں۔ اس سے پہلے یہ خبر ذہن میں رکھئے کہ پاکستان میں سپریم کورٹ نے سات ماہ قبل صوبوں میں بلدیات کی بحالی کا حکم دیا تھا اور وزیراعظم اور اس کے ’’جی سَر، یَس سَر‘‘ تونسوی وزیراعلیٰ بزدار نے رعونت اور اپنی ’لازوال‘ حکمرانی کے اظہار کے لئے سپریم کورٹ کے اس حکم کو اٹھا کر کسی الماری میں بند کر دیا اور بلدیات کی بحالی سے صاف انکارکر دیا۔ سپریم کورٹ اس معاملہ کا جائزہ لے رہی تھی کہ نئی حکم عدولی سامنے آ گئی۔ سات ماہ پہلے سپریم کورٹ نے سانحہ پشاور کے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کا حکم دیا۔ اس کے ساتھ ہی وزیراعظم نے اسی حاکمانہ رعونت کا مظاہرہ کیا اور سارا وقت قوم کی اصلاحی تبلیغ میں گزار دیا۔عدالتی حکم منہ دیکھتا رہا۔ سپریم کورٹ پہلے ہی حکم عدولیوں پر برہم تھی، اس نئی صورت کا سپریم کورٹ نے سخت نوٹس لیا اور وزیراعظم کو فوراً طلب کرلیا تو بدحواسی کے عالم میں وزیراعظم عدالت میں پیش ہو گئے۔ اس پر وزارتی لائوڈ سپیکرڈھول بجانے لگے کہ دیکھا وزیراعظم کی قانون پسندی! سپریم کورٹ نے بلایا تو فوراً پیش ہو گئے۔ قانون کی سربلندی کا بھونپو بجانے والے ڈولی بردار کہاروں نے یہ نہ بتایا کہ سپریم کورٹ نے اسی طرح وزیراعظم نوازشریف اور یوسف رضا گیلانی کو بھی بلایا تھا اور ان دونوں کو بھاگتے ہوئے عدالت کو سلامی دینا پڑی تھی!! اور پھر ان کے ساتھ کیا بیتی؟
٭معذرت کہ دو سطروں کی بات اتنی پھیل گئی۔ میں تو پردہ سکرین پر بھارتی حکومت اور فوج کی ایسی ہی دلچسپ داستان سنانے والا تھا۔ یہ ٹائمز آف انڈیا اور ہندوستان ٹائمز وغیرہ بھارتی میڈیا کی زبانی سنئے: چند ماہ پہلے بھارت کی سپریم کورٹ میں بھارتی فوج میں مختلف حیثیتوں میں کام کرنے والی بہت سی لڑکیوںنے فوجی کمیشن میں افسری (لیفٹیننٹ وغیرہ) کے لئے امتحان دیا۔ فوجی حکام نے 71 لڑکیوں کو امتحان اور انٹرویو میں پاس کر دیا مگر کمیشن دینے سے انکار کر دیا۔ یہ لڑکیاں سپریم کورٹ میں چلی گئیں۔ سپریم کورٹ نے حکم دیا کہ امتحان اور انٹرویو میں کامیاب ان تمام لڑکیوں کو فوج میں کمیشن دیا جائے۔ اس حکم پر کوئی عمل نہ ہوا۔ سپریم کورٹ سخت برہم ہو گئی اور وزیراعظم، وزیردفاع اور آرمی چیف کو توہین عدالت کا سخت نوٹس بھیج دیا۔ سرکاری وکیل عدالت میں پیش ہوئے اور بتایا کہ یہ معاملہ عدالت میں پہلی پیشی سے پہلے 71 میں سے 39 لڑکیوں کو کمیشن دے دیا تھا، اب عدالت کے نوٹس پر مزید 11 لڑکیوں کو بھی کمیشن دے دیا ہے۔ باقی 21 لڑکیوں کو فنی وجوہ کی بنا پر یہ عہدہ نہیں دیا جا سکتا۔ اس پر چیف جسٹس اور دوسرے جج شدید برہم ہو گئے۔ چیف جسٹس کے سخت ریمارکس کہ ’’کان کھول کر سنو کہ فوج کے پاس بے پناہ اختیارات کی سپریم اتھارٹی موجود ہوگی، ہوتی رہے مگر یاد رکھو! سپریم کورٹ ملک کی تمام اتھارٹیوں اور حاکمیت سے بالاتر ادارہ ہے، اس کے حکم کی عدم تعمیل پر سخت کارروائی ہو گی۔ چیف جسٹس نے سرکاری وکیلوں سے کہا کہ تم لوگ یہ ساری دلیلیں پہلے بھی تفصیل سے دے چکے ہو، اب پھر انہیں دہرا رہے ہو۔ سپریم کورٹ کے فیصلے اس طرح نہیں بدل سکتے۔ سابق فیصلہ برقرار ہے۔ حکومت اور فوج نے سپریم کورٹ کی سخت توہین کی ہے ٹھہرو اب میں فیصلہ لکھواتا ہوں۔ چیف جسٹس نے فیصلہ لکھوانا شروع کر دیا۔ ابھی دو پیرے لکھے تھے کہ سرکاری وکیل بدحواس ہو گئے۔ اٹارنی جنرل نے چیف جسٹس سے درخواست کی کہ جناب صرف چند منٹ کی مہلت دیجئے، میں اُوپر بات کرکے بتاتا ہوں۔ چیف جسٹس نے فیصلہ روک دیا۔ چند منٹوں بعد سرکاری وکیل بھاگتے ہوئے اور عرض کیا کہ تمام 71 لڑکیوں کو کمیشن دیا جا رہا ہے، چند دنوں میں ساری کارروائی مکمل ہو جائے گی، حکومت اور فوج عدالت سے معافی کی طلب گار ہے!! بھارتی میڈیا کے مطابق سپریم کورٹ کا ادھورا فیصلہ مکمل ہو جاتا تو وزیراعظم پوری کابینہ سمیت اور آرمی چیف شام تک گھروں میں پہنچ جاتے۔ میڈیا کے مطابق گزشتہ روز حکومت اور فوج کی بوکھلاہٹ دیکھنے والی تھی!‘‘…قارئین کرام! دونوں طرف کی حکومتوں کی عدالت کے سامنے ڈھیر ہونے کی کہانی کا ایک ہی نتیجہ نکلتا ہے کہانی یوں ہے کہ ایک گائوں میں پٹواری نتھا سنگھ بہت نقد رشوت لیتا تھا۔ لوگوں کی شکائت پراسے تبدیل کرکے پریم سنگھ کو پٹواری لگا دیا گیا۔ وہ نقد کے ساتھ مویشیوں کی رشوت مانگتا تھا۔ اوپر کے حکام نے لوگوں سے حال پوچھا تو انہوں نے کہا کہ ’’حضور! نتھا سنگھ اینڈ پریم سنگ، وَن اینڈ دی سیم تِھنگ!‘‘ (ایک ہی چیز ہیں)۔
٭اسلام آباد کا دورہ کرنے والے افغان وزیرخارجہ امیر متقی نے کہا ہے کہ ’’کوئی ملک ہماری حکومت کو تسلیم ہی نہیں کر رہا، ہمیں سمجھ میں نہیں آ رہا کہ کیا کریں؟‘‘۔ کتنا منافقانہ بیان ہے! تم لوگ اپنے ہوائی اڈے پر افغانستان آنے جانے والی پاکستان کی واحد ایئرلائنز پی آئی اے، کے کنٹری منیجر کو گرفتار کر کے مجبور کرتے ہو کہ طیارہ کے کرائے تمہارے حکم کے مطابق وصول کئے جائیں۔ تمہارے طالبان پی آئی اے کے اہلکاروں کو ان کے منہ پر گالیاں دیتے ہیں، طیارہ روک لیتے ہیں… تم، افغان لوگوں کو ذرا سی بات پر سرعام پھانسیاں دے رہے ہو، طالبات کے سکول کالج نہیں کھلنے دیتے…کسی قانون کے بغیر پاکستانیوں سمیت درجنوں افراد جیلوں میںبند پڑے ہیں، اپنی حکومت میں طالبان کے سوا کسی دوسرے طبقے کو شریک نہیں کر رہے۔ دنیا تمہیں سمجھا رہی ہے کہ حکومت میں دوسروں کو بھی شریک کرو! تم20 سال والی اسی ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کر رہے ہو، اور کہہ رہے ہو کہ سمجھ میں نہیں آ رہا، ہمیں تسلیم کیوں نہیں کیا جا رہا؟!

تازہ ترین خبریں

حمزہ شہباز سے ملاقات کے بعد لوگ نظرانداز کرنے لگے:گولڈن مین کا شکوہ

حمزہ شہباز سے ملاقات کے بعد لوگ نظرانداز کرنے لگے:گولڈن مین کا شکوہ

گاڑی مالکان کے لیے خوشخبری، ٹیکس میں بڑی کمی کردی گئی

گاڑی مالکان کے لیے خوشخبری، ٹیکس میں بڑی کمی کردی گئی

اہم شخصیت کا استعفیٰ منظور، بڑی خبر آگئی

اہم شخصیت کا استعفیٰ منظور، بڑی خبر آگئی

سونے کی قیمت میں بڑا اضافہ۔ صارفین پریشان

سونے کی قیمت میں بڑا اضافہ۔ صارفین پریشان

وفاقی وزیر خورشید شاہ عالمی وبا کورونا وائرس کا شکار ،حالت کیسی ہے ،تفصیلات جانیں اس خبرمیں

وفاقی وزیر خورشید شاہ عالمی وبا کورونا وائرس کا شکار ،حالت کیسی ہے ،تفصیلات جانیں اس خبرمیں

2 گروہوں کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ،کتنے افرادجان سے ہاتھ دھوبیٹھے ،پنجاب کے بڑے شہر سے انتہائی افسوسناک خبرآگئی

2 گروہوں کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ،کتنے افرادجان سے ہاتھ دھوبیٹھے ،پنجاب کے بڑے شہر سے انتہائی افسوسناک خبرآگئی

اسرائیل نے دنیابھرکے امن پسند ممالک کے لیے خطرے کی گھنٹی بجادی ،خوفناک ہتھیار تیار

اسرائیل نے دنیابھرکے امن پسند ممالک کے لیے خطرے کی گھنٹی بجادی ،خوفناک ہتھیار تیار

عمران خان نفرت کا سوداگر، اداروں کو مخالفین کیخلاف استعمال کیا، خواجہ آصف

عمران خان نفرت کا سوداگر، اداروں کو مخالفین کیخلاف استعمال کیا، خواجہ آصف

پہلے ہمارے پاس تبدیلی کے لئے بڑے چکر لگتے تھے، اور ہماری شکلیں بھی اچھی لگتی تھیں

پہلے ہمارے پاس تبدیلی کے لئے بڑے چکر لگتے تھے، اور ہماری شکلیں بھی اچھی لگتی تھیں

جے یو آئی (ف) کا ’زرداری بھگاؤ سندھ بچاؤ‘ تحریک شروع کرنے کا اعلان

جے یو آئی (ف) کا ’زرداری بھگاؤ سندھ بچاؤ‘ تحریک شروع کرنے کا اعلان

پاکستان تحریک انصاف کا ایسااقدام جس سے حکومت کےلیے خطرے کی گھنٹی بج گئی

پاکستان تحریک انصاف کا ایسااقدام جس سے حکومت کےلیے خطرے کی گھنٹی بج گئی

ایازصادق نے دھمکی دی، کیا وہ باپ کے گھر سے فنڈز لاتے ہیں،جماعت اسلامی کے رکن اسمبلی وفاقی وزیرپربرس پڑے

ایازصادق نے دھمکی دی، کیا وہ باپ کے گھر سے فنڈز لاتے ہیں،جماعت اسلامی کے رکن اسمبلی وفاقی وزیرپربرس پڑے

اسحاق ڈار کی وطن واپسی ، وزیر خزانہ بنائے جانے کا امکان، نجی ٹی وی کا دعویٰ

اسحاق ڈار کی وطن واپسی ، وزیر خزانہ بنائے جانے کا امکان، نجی ٹی وی کا دعویٰ

بیوی سے پوچھے بغیردوسری شادی کرنے والے شوہر کو ایک اور مصیبت نے گھیر لیا

بیوی سے پوچھے بغیردوسری شادی کرنے والے شوہر کو ایک اور مصیبت نے گھیر لیا