02:01 pm
دوستوںکاچناؤ

دوستوںکاچناؤ

02:01 pm

موجودہ دورمیں پاکستان اورروس مختلف عالمی مسائل کے پرامن حل اورعالمی قانون کی بالادستی کوقائم کرنے جیسے مقاصدپریکساں خارجہ پالیسی مقاصدرکھتے ہیں-دونوں ممالک موجودہ بین الاقوامی نظام کوتبدیل کرنے کیلئے یکطرفہ طاقت، غیرقانونی نقل وحرکت کے خلاف ہیں-دونوں ممالک ایٹمی ہتھیاروں کی حفاظت اوران کوکم کرنے کیلئے مسلسل دوسری ایٹمی طاقتوں کے تعاون کے منتظرہیں-دونوں ممالک افغانستان اورعلاقائی استحکام کیلئے تعاون پرمتفق ہیں-مزیدبرآں عالمی طاقتوں کے اقوام متحدہ کے پلیٹ فارم اورآئے دن پاکستان پربے بنیادالزامات کے باوجودروس پاکستان کی دہشتگردی کے خلاف قابلِ تحسین کوششوں کامعترف ہے۔عصرِ حاضرکے تقاضوں کے مطابق دونوں نے ایک دوسرے کے ساتھ تعاون بڑھانے پرزوردیاہے جوکہ علاقائی استحکام کیلئے روشن مستقبل کی نویدہے-روس پاکستان کے بڑے بڑے منصوبوں جیساکہ ایران-پاکستان گیس پائپ لائن، پاکستان سٹیل مل کومزیدترقی دینا، ٹیکسلامیں ہیوی مکینکل کمپلیکس کی بہتری،گڈوومظفرگڑھ پاورپلانٹس کی ترقی،تھرکول پراجیکٹس،تاجکستان سے بجلی کے ترسیل کے منصوبے کاسا (سنٹرل ایشیا۔سائوتھ ایشیا 1000)،گیس کے منصوبے ٹاپی،ترکمنستان۔ افغانستان۔پاکستان۔انڈیا)اورسی پیک کے تحت اورکئی منصوبوں میں سرمایہ داری کرنے کاارادہ رکھتا ہے۔روس پاکستان کواپنی تیارکردہ مصنوعات برآمدکرنے کی نظرسے دیکھتا ہے جبکہ پاکستان اپنی موجودہ توانائی بحران کیلئے روس کے توانائی کے شعبہ سے فائدہ اٹھاناچاہتاہے-اس بات کااعادہ خودروسی صدرنے شنگھائی تعاون تنظیم کے اجلاس میں بھی کیاکہ وہ پاکستان کے معاشی وتوانائی منصوبوں میں پاکستان کی مدد کرے گا۔
کئی سفارتکاراس بات پریقین رکھتے ہیں کہ روس وسطی ایشیامیں اپنے معاشی ودفاعی مقاصدکے حصول اورداعش کی انتقامی کاروائیوں،شدت پسندی ودہشتگردی کے خاتمے کیلئے پاکستان کے ساتھ تعلقات استوارکرناچاہتاہے۔ دفاعی شعبہ میں روس نے پاکستان کودہشتگردی کے خلاف جنگ میں جدیدہتھیارفراہم کیے ہیں-عالمی جنگوں میں اپنے ہتھیارسے معیشیت مضبوط بنانے والوں کی پاکستان کودفاعی آلات وہتھیاربیچنے کی عدم دلچسپی نے پاکستان کومجبوراًاپنے دفاع کومضبوط کرنے کی خاطرروس کی طرف دیکھنے پرمجبورکیاہے-  روس پاکستان کی اہمیت کوبہت بہترطریقہ سے سمجھتاہے تودفاعی تعاون علاقائی عدم استحکام کوختم کرنے میں کافی مددکرے گا-ہمارے سابقہ عالمی شراکت داروں کاروّیہ تو اس حدتک ہتک آمیزہوچکاہے کہ پاکستان کی امن پسندی کوکمزوری سمجھ کرپاکستان کومجرم کے طورپرپیش کیاجارہاہے یہ تو ویسے ہی ہے جیسے الٹاچورکوتوال کوڈانٹے ۔روس کے پاس سلامتی کونسل میں ویٹوکی طاقت ہے اورشنگھائی تعاون تنظیم میں بھی اہمیت کاحامل ہے جِس سے پاکستان روس کے تعاون سے دونوں فورمزپہ پاکستان دشمنوں کی ہرسرزہ سرائیوں کابھرپور جواب دے سکتاہے-پاکستان اورروس کے دفاعی تعلقات اِس تناظرمیں بھی اہم ہیں کہ امریکابھارت کوروس اورچائنہ کے مقابلے میں بطورایک علاقائی طاقت کے دیکھناچاہتاہے جوکہ خطے کی سا  لمیت کیلئے ایک خطرہ ہے اور بھارت کے موجودہ آرمی چیف کے جنگی جنونیت میں ڈوبے بیاناتاس کاثبوت ہیں۔ 
عالمگیریت کے دورمیں ہرملک خصوصاپاکستان ہرعلاقائی وبین الاقوامی ملک سے تمام باہمی کشیدگیوں کوختم کرکے بہترتعلقات کا خواہاں ہے-ایسے عالم میں جِس میں معیشیت سیاست میں اپنانمایاں اثرورسوخ رکھتی ہے-پاکستان کیلئے اِس سے بڑھ کرکیاہوگااگروہ روس،چین،امریکا، یورپین یونین،افریقا،مشرقِ وسطی اوروسطی ایشیا کے ساتھ بہترمعاشی تعلقات مزیدمضبوط کرنے کیلئے ہرموقع کا فائدہ اٹھائے-روس،یورپ کے ساتھ چلنے والے مسائل کریمیاویوکرائن کی وجہ سے سمندری تجارت پرپابندیوں کاشکارہے جس کی وجہ سے گوادرروس کے گرم پانیوں تک پہنچنے کیلئے بہترین موقعہ ہے جوروس کوپابندیوں کے باوجود تاریخی سلک روڈاورسی پیک سے گوادرکے ذریعے دنیاکی معاشی ترقی میں اپناکردارادا
کر سکے گا۔یہ پالیسی پاکستان کیلئے کسی عظیم معجزانہ انعام سے کم نہ ہو گی جِس سے نہ صرف پاکستان میں تجارتی سرگرمیوں بلکہ زراعت وچھوٹے کاروباروں میں کافی فائدہ ہوگا۔ اگرچہ پاکستان اورروس کے درمیان تعلقات کی بہتری کے کئی مواقع ہیں مگران کے درمیان حائل کافی رکاوٹیں اورمشکلات بھی ہیں سب سے پہلی مشکل بھارت کی شکل میں ہے کیونکہ مسئلہ کشمیراوردوسرے باہمی مسائل اوراعتمادکی کمی دونوں کے درمیان تعلقات میں رکاوٹیں ہیں-دونوں ممالک کے درمیان کشیدگی عالمی ماحول کوسردجنگ میں رکھے ہوئے ہے جہاں عالمی طاقتیں جنوبی ایشیا کی سیاست پراثراندازہونے کی کوشش کرتی ہیں جِس سے کوئی بھی مثبت منصوبہ بھی شکوک وشبہات کی نگاہ سے دیکھاجاتاہے۔ 
دوسری بڑی مشکل امریکاکی صورت میں ہے-پاکستان،روس قربتوں نے عالمی طاقت کوپریشان کردیاہے-سردجنگ کی جنگ ایک نیارخ اختیارکرکے دوبارہ بھڑک سکتی ہے- جنگ،میدان،مقاصد،کھلاڑی،طریقہِ جنگ سب وہی ہیں بس تبدیل ہونی ہیں توسابقہ دوستیاں ودشمنیاں-موجودہ حالات اوربھارت، امریکا تعلقات،پاکستان اورروس کے تعلقات کیلئے موزوں فریم ورک ہے مگرناقدین اِس کوبھی اپنے خلاف ایک پراپیگنڈہ کے طورپراستعمال کررہے ہیں-مشرقِ وسطی میں ابھرنے والے تین بڑے مسائل،شام یمن اور قطرپرپاکستان کی غیرجانبدار پالیسی اورغیرجانبدارانہ مؤقف پرپہلے ہی عرب دنیامیں تشویش پائی جاتی ہے اورپاکستان پرسعودی عرب  اوراس کے حلیفوں کامسلسل دباؤہے۔
پاکستان اور روس تمام مشکلات اوررکاوٹوں کے باوجودباہمی تعاون بڑھانے پریقین رکھتے ہیںجس کیلئے چندسفارشات پرعملدرٓمدضروری ہے۔
 (1)دونوں ممالک کوافغانستان میں جلدامن کاورٓبادکاری کیلئے اپنی اپنی ذمہ داریوں کاتعین کرتے ہوئے مل کردہشتگردی کے خاتمے کیلئے معلومات کے تبادلے کیلئے ایک ادارہ قائم کرناہوگا۔
(2)پاکستان کوروس کی سرمایہ کاری حاصل کرنے کیلئے ایک محفوظ اورمعیشیت دوست ماحول مہیاکرنے کیلئے عوامی رابطے کیلئے مؤثر پروگرام شروع کرناہوگا۔
 (3)دونوں ممالک کوبیلنس آف پاوراورکسی بھی قسم کی جارحیت کے فوری جواب کیلئے دفاعی شعبے ، اورسپیس ٹیکنالوجی میں تعاون کرنے کی اشد ضرورت ہے۔ 
(4)علاقائی اوربین الاقوامی دوستوں کواعتماد میں لیکرہراس پراپیگنڈہ کاجواب دیناہوگاجوان تعلقات کوعالمی وعلاقائی امن کیلئے خطرہ قرار دیتاہے۔
(5)سفارت کاری کے ذریعے عالمی مسائل کے حل پیش کرنے کیلئے  میڈیاکے باہمی تعلقات کوپروان چڑھانے میں اپنامثبت کرداراداکرناہوگا۔
پاک روس تعلقات کی تاریخ ان واقعات سے بھری پڑی ہے جِن میں کتنے ہی مفید مواقع گنوادیے گئے-دونوں ممالک ماضی کو بھلاکر نئی شروعات کاآغازکریں تاکہ ترقی واستحکام کی نئی سے نئی منزلیں طے کی جاسکیں-اپنی اپنی خارجہ پالیسی کے مقاصد کودوبارہ دیکھنے اوراپنے دوستوں کاچناؤکرناہوگا-تیزی سے بدلتی عالمی سیاست میں کوئی بھی ملک نہ توتنہارہ سکتاہے اورنہ ہی صرف ایک عالمی طاقت کے سہارے ترقی کرسکتاہے- اس کیلئے کثیرالجہتی نظام پرانحصار کرناہوگاجِس میں ادارے مضبوط اورعالمی قانون کی پاسداری کی جائے ۔ 

تازہ ترین خبریں

عنقریب صدر مملکت شہباز شریف کو اعتماد کا ووٹ لینےکا کہیں گے، شیخ رشید کی پیش گوئی

عنقریب صدر مملکت شہباز شریف کو اعتماد کا ووٹ لینےکا کہیں گے، شیخ رشید کی پیش گوئی

"  وزیر اعلیٰ پنجاب کے معاملے پر منصور علی خان نے دونوں پارٹیوں کو مشورہ دے دیا، ایسا کیوں کہا ؟ جانیں 

" وزیر اعلیٰ پنجاب کے معاملے پر منصور علی خان نے دونوں پارٹیوں کو مشورہ دے دیا، ایسا کیوں کہا ؟ جانیں 

شاہ محمود اشارے دے رہے ہیں کہ اگلی مرتبہ مجھے وزیراعلی بنایا جائے،سینئر صحافی ہارون الرشید نے بڑی خبر بریک کر دی

شاہ محمود اشارے دے رہے ہیں کہ اگلی مرتبہ مجھے وزیراعلی بنایا جائے،سینئر صحافی ہارون الرشید نے بڑی خبر بریک کر دی

لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کے بعد پنجاب اسمبلی میں نمبر گیم کیا ہے ؟جانیں مکمل تفصیلات

لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کے بعد پنجاب اسمبلی میں نمبر گیم کیا ہے ؟جانیں مکمل تفصیلات

ملک میں ذی الحج کا چاند نظر آ گیا، عید الاضحی 10 جولائی کو منائی جائے گی

ملک میں ذی الحج کا چاند نظر آ گیا، عید الاضحی 10 جولائی کو منائی جائے گی

حکومت کی عوام پر پھر سے پیٹرول بم گرانے کی تیاری ،پانچ دس روپے نہیں بلکہ کتنے روپے اضافہ ہونے والا ہے ؟ جانیں 

حکومت کی عوام پر پھر سے پیٹرول بم گرانے کی تیاری ،پانچ دس روپے نہیں بلکہ کتنے روپے اضافہ ہونے والا ہے ؟ جانیں 

ہماری زبان بندی اور ہاتھ باندھ کر کہتے الیکشن جیت کر دکھاؤ،نئے الیکشن کیلئے24 گھنٹے سے بھی کم وقت دیا گیا،ق لیگ پھٹ پڑی

ہماری زبان بندی اور ہاتھ باندھ کر کہتے الیکشن جیت کر دکھاؤ،نئے الیکشن کیلئے24 گھنٹے سے بھی کم وقت دیا گیا،ق لیگ پھٹ پڑی

پرویز مشرف اس وقت پاکستان میں موجود ہیںمیرے ایک جاننے والے ڈاکٹر مل کر آئے ہیں ،وہ کس حال میں ہیں ؟ 

پرویز مشرف اس وقت پاکستان میں موجود ہیںمیرے ایک جاننے والے ڈاکٹر مل کر آئے ہیں ،وہ کس حال میں ہیں ؟ 

محکمہ موسمیات نے 2سے 5جولائی موسلا دھار بارشوں کی پیشنگوئی کر دی

محکمہ موسمیات نے 2سے 5جولائی موسلا دھار بارشوں کی پیشنگوئی کر دی

وزیراعلیٰ پنجاب کے دوبارہ انتخاب میں جیت کس کی ہو گی؟بڑا دعویٰ کر دیا گیا

وزیراعلیٰ پنجاب کے دوبارہ انتخاب میں جیت کس کی ہو گی؟بڑا دعویٰ کر دیا گیا

اپنے ارکان کو ہوٹل میں ٹھہرایا جائے ، وزیراعلیٰ پنجاب کے انتخاب کیلئے مسلم لیگ (ن) نے حکمت عملی طے کرلی

اپنے ارکان کو ہوٹل میں ٹھہرایا جائے ، وزیراعلیٰ پنجاب کے انتخاب کیلئے مسلم لیگ (ن) نے حکمت عملی طے کرلی

’روسی صدر خاتون ہوتے تو جنگ نہ کرتے‘: برطانوی وزیراعظم کے بیان پر پیوٹن کا جواب آگیا

’روسی صدر خاتون ہوتے تو جنگ نہ کرتے‘: برطانوی وزیراعظم کے بیان پر پیوٹن کا جواب آگیا

' خلیل الرحمان قمر نے دانیہ شاہ کو عامر لیاقت کی موت کا ذمہ دار قرار دیتے دانیہ کو کھری کھری سنا دیں 

' خلیل الرحمان قمر نے دانیہ شاہ کو عامر لیاقت کی موت کا ذمہ دار قرار دیتے دانیہ کو کھری کھری سنا دیں 

’خان صاحب ہم ٹینکوں کے آگے بھی لیٹ جائیں گے، آپ حکم کریں‘  عمران خان کو کارکن نے یہ بات کہی تو انہوں نے کیا جواب دیا؟ دلچسپ خبر

’خان صاحب ہم ٹینکوں کے آگے بھی لیٹ جائیں گے، آپ حکم کریں‘ عمران خان کو کارکن نے یہ بات کہی تو انہوں نے کیا جواب دیا؟ دلچسپ خبر