12:39 pm
چین اور امریکہ دوستی کی راہ پر؟

چین اور امریکہ دوستی کی راہ پر؟

12:39 pm

منگل کے روز یعنی16نومبر کو چین اور امریکہ کے صدور کے مابین ورچوئل ملاقات ہوئی ہے۔ جس میں چینی صدرزی چن پنگ اور امریکہ کے صدر جو بائیڈن نے اپنے اپنے قومی مفادات کی روشنی میںبات چیت کی ہے۔ اس بات چیت میں جومسئلہ اس وقت ان دونوںملکوں کے مابین کشیدگی کا باعث بنا ہوا ہے‘ وہ تائیوان کا مسئلہ ہے‘ تائیوان چینی صدر کے مطابق چین کا ہمیشہ حصہ رہاہے جبکہ امریکہ کاموقف ہے کہ تائیون ایک آزاد ملک ہے جس کو چین کی کمیونسٹ پارٹی اپنی جدوجہد کے دوران اپنی سرحدوںمیں شامل کرنے سے قاصر رہی تھی۔ واضح رہے کہ ابھی حال ہی میں امریکہ نے تائیوان کو جدید نوعیت کا بھاری اسلحہ فراہم کیا ہے جس پر چین کو نہ صرف اعتراض ہے بلکہ امریکہ سے اس سلسلے میں احتجاج بھی کیاہے۔ اس اہم مسئلہ کے پس منظر میں چینی صدر اور امریکی صدر ملاقات کرکے اس مسئلہ کو حل کرنے کی کوشش کررہے ہیں‘ تاہم اس حقیقت کااعتراف کرناضروری ہے کہ تائیوان کے بیشتر صنعتکاروں اور تاجروںکاانحصار چین پرہے جبکہ تین ہزار سے زائد تائیوان کے معروف بزنس مین چین میں نہ صرف اپنا سرمایہ لگاچکے ہیںبلکہ مستقل بنیادوں پر کام بھی کررہے ہیں۔


اگرچہ امریکہ تائیوان کو چین کا حصہ تسلیم نہیں کرتاہے‘ بلکہ اس کو ایک آزاد ملک تسلیم کرتاہے‘ جیسا کہ میں نے بالائی سطور میں لکھاہے‘ لیکن امریکہ تائیوان کو فوجی اعتبار سے طاقتور بناناچاہ رہاہے تاکہ چین اپنی فوج کے ذریعہ یلغار کرکے اس پر قبضہ نہ کرسکے۔ لیکن امریکہ کو شاید اس حقیقت کاعلم نہیں ہے کہ چین آئندہ برسوں میں کسی بھی ملک کے خلاف جارحانہ عزائم نہیں رکھتاہے‘بشمول تائیوان کے لیکن امریکہ کواس بات کاخدشہ ہے کہ چین موقع پاتے ہی تائیوان کو اپنی سرحدوں کاحصہ بنالے گا۔ جیسا کہ چین نے ہانگ کانگ اورمیکائو کے سلسلے میں کیاتھا۔ لیکن ان دونوں علاقوں کو چین میں شامل کرنے کے لئے چین نے کسی قسم کی فوجی یلغار نہیں کی تھی بلکہ برطانیہ سے مکالمے کے بعد چین نے ہانگ کانگ اور میکائو کو حاصل کیاتھا۔ نیز یہ بھی ایک حقیقت ہے کہ ہانگ کانگ کا معاشی نظام خالصتاً سرمایہ دارانہ ہے یعنی ایک ملک اور دونظام(چین اور ہانگ کانگ) تاہم کبھی کبھی ہانگ کانگ میں آزادی اظہار کے سلسلے میں مظاہرے ہوتے رہتے ہیں جس میں نوجوانوں کی اکثریت شامل ہوتی ہے‘ چین کا اس سلسلے میں موقف ہے کہ ہانگ کانگ میں نام نہاد جمہوری تحریک بیرونی طاقتوں کے اشارے پر شروع کی جاتی ہے‘ (اشارہ سی آئی کی طرف ہے) لیکن چین نے ان مظاہروں کے خلاف طاقت یاتشدد کا راستہ اختیار نہیں کیا بلکہ ان سے مکالمے کے ذریعے قائل کرنے کی کوشش کی ہے تاکہ ان مظاہروں سے ہانگ کانگ کی علاقائی حیثیت متاثر نہ ہوسکے اور جو عناصر ایسا کرنے کی کوشش کررہے ہیں‘انہیں شکست اور مایوسی کاسامنا کرنا پڑے گا۔
 دوسرا مسئلہ جو امریکہ اور چین کے درمیان تلخی کا باعث بنا ہوا ہے وہ سائوتھ چائنا سی کامسئلہ ہے۔ اس سمندری راہداری پر بھی چین کا دعویٰ ہے بلکہ ناقابل تردیدحقیقت یہ ہے کہ چین کی سمندری تجارت کا انحصار سائوتھ چائنا سی پر ہے‘جبکہ علاقے کے دیگرممالک(امریکہ کے دوست فلپائن ‘ بھارت وغیرہ) بھی اس علاقے پر تجارت کے پس منظر میں اپنادعویٰ رکھتے ہیں‘ چنانچہ یہ دونوں مسائل تائیوان اور سائوتھ چائنا سی ان دونوں صدور کے درمیان بات چیت کاضرور ی حصہ ہیں۔ ظاہرہے کہ یہ دونوں مسائل انتہائی پیچیدہ ہیں‘ ان کے حل ہونے میں خاصی دیرلگ سکتی ہے‘ خصوصیت کے ساتھ تائیوان کے مسئلہ پر جس کو امریکہ ایک آزاد اور خودمختار ملک تصور کرتاہے جبکہ چین اس کو اپنا حصہ قرار دے رہاہے۔ بہرحال چین کے صدر  زی چن پنگ اور امریکی صدر جو بائیڈن کے درمیان ورچوئل ملاقات دنیا بھر کے لئے خوشی واظہار کاباعث بن رہی ہے۔ کیونکہ اگر دنیا کی ان دو بڑی اکانومی کے درمیان بات چیت کے ذریعے کوئی خوشگوار نتیجہ نکل سکتاہے تو اس کے اثرات پوری دنیا پر مرتب ہوں گے۔ خصوصیت کے ساتھ ترقی پذیر ممالک کے لئے اس بات چیت کے نتائج ان کی معاشی وسماجی ترقی کی راہ میں حوصلہ مند ثابت ہوسکتی ہے ۔مزید برآں پاکستان چین اور امریکہ کے مابین دوستی سے بہت زیادہ مستفید ہوسکتاہے۔ خصوصاً سی پیک کے حوالے سے پاکستان کی خواہش ہے کہ امریکہ سی پیک کے تحت قائم ہونے والے اکنامک زون میں سرمایہ کاری کرے تاکہ ان دونوں ممالک کے مابین معاشی وسیاسی ‘ دوستی کے حوالے سے استحکام پیدا ہوسکے اور ان کے درمیان  جنگ کرنے کاتاثر زائل ہوسکے۔ پاکستان امریکہ کے ساتھ اپنے تعلقات میں بھی بہتری چاہتاہے۔ خصوصیت کے ساتھ افغانستان میں طالبان کی حکومت قائم ہونے کے بعد اگرچہ امریکہ افغانستان کی نئی سیاسی حکومت سے زیادہ خوش نہیں ہے لیکن وہ پاکستان کے ذریعہ  افغانستان کی مالی مدد کرناچاہتاہے تاکہ اس وقت یہاں محرومی ‘بھوک وافلاس کے جوبادل منڈلارہے ہیں ان کاخاتمہ ہوسکے اور افغانستان عالمی سطح پر اپناکردار ادا کرسکے۔ چین اور امریکہ کے درمیان دوستی کی جانب نیاسفر  سیاسی ومعاشی ترقی کی راہ میں ہوا کے ایک خوشگوار جھونکے سے کم نہیں ہوگا۔

 

تازہ ترین خبریں

ڈالر کی قدر بڑھنے سے  ملک میں مہنگائی کا طوفان  آئے گا ، شوکت ترین

ڈالر کی قدر بڑھنے سے ملک میں مہنگائی کا طوفان آئے گا ، شوکت ترین

ملک کو تباہ کرنے والوں کا محاسبہ انتہائی ضروری ہے ، اسحاق ڈار نے تجویز دیدی

ملک کو تباہ کرنے والوں کا محاسبہ انتہائی ضروری ہے ، اسحاق ڈار نے تجویز دیدی

صوبے، پاکستان ریلوے کی زمین  واپس کریں،خواجہ سعد رفیق کی اپیل

صوبے، پاکستان ریلوے کی زمین واپس کریں،خواجہ سعد رفیق کی اپیل

فواد کی پیشی پر پولیس اہلکاروں سے کوئی تکرار نہیں ہوئی ،حبہ چوہدری کا بیان آگیا

فواد کی پیشی پر پولیس اہلکاروں سے کوئی تکرار نہیں ہوئی ،حبہ چوہدری کا بیان آگیا

بھارتی اداکار انو کپور کو سینے میں شدید تکلیف ، اسپتال داخل

بھارتی اداکار انو کپور کو سینے میں شدید تکلیف ، اسپتال داخل

آئی ایم ایف  معاہدہ  اسی ہفتے طے پا جائے گا، جلد  مشکل حالات سے باہر نکلیں گے، شہباز شریف

آئی ایم ایف معاہدہ اسی ہفتے طے پا جائے گا، جلد مشکل حالات سے باہر نکلیں گے، شہباز شریف

پرویز الٰہی کا فیصل چوہدری کوفون، فواد کی گرفتاری سے متعلق بیان پر معذرت کرلی

پرویز الٰہی کا فیصل چوہدری کوفون، فواد کی گرفتاری سے متعلق بیان پر معذرت کرلی

وزیراعظم شہبازشریف نے گرین لائن ٹرین سروس کا افتتاح کردیا

وزیراعظم شہبازشریف نے گرین لائن ٹرین سروس کا افتتاح کردیا

مفتاح اسماعیل نے بھی فواد چوہدری گرفتاری کی مخالفت کردی

مفتاح اسماعیل نے بھی فواد چوہدری گرفتاری کی مخالفت کردی

لال حویلی کو آج ہی واگزار کرایا جائے گا،ڈپٹی ایڈمنسٹریٹر وقف املاک بورڈ

لال حویلی کو آج ہی واگزار کرایا جائے گا،ڈپٹی ایڈمنسٹریٹر وقف املاک بورڈ

آصف  زرداری نے عمران خان کو قتل کرنے کی سازش کر رکھی ہے ،ثبوت موجود ہیں، شیخ رشید

آصف زرداری نے عمران خان کو قتل کرنے کی سازش کر رکھی ہے ،ثبوت موجود ہیں، شیخ رشید

نگراں وزیراعلیٰ پنجاب کو  کام سے روکا جائے ، پی ٹی آئی نے تعیناتی سپریم کورٹ میں چیلنج  کردی

نگراں وزیراعلیٰ پنجاب کو کام سے روکا جائے ، پی ٹی آئی نے تعیناتی سپریم کورٹ میں چیلنج کردی

فرخ حبیب کیخلاف مقدمہ درج، ایف آئی آر کو بہت ہی ماٹھی کہانی  قرار دیدیا

فرخ حبیب کیخلاف مقدمہ درج، ایف آئی آر کو بہت ہی ماٹھی کہانی قرار دیدیا

بتائیں کس قانون کے تحت عمران خان کو گرفتار کیا جائے گا؟  اسد عمر 

بتائیں کس قانون کے تحت عمران خان کو گرفتار کیا جائے گا؟  اسد عمر