12:41 pm
پیارے عوام اور اگلی نسلوں کی فکر میںمبتلا حکمران

پیارے عوام اور اگلی نسلوں کی فکر میںمبتلا حکمران

12:41 pm

یااللہ خیر ’’سب دا بھلا تے سب دی خیر‘‘ اپنے وزیراعظم عمران خان کہتے ہیں کہ ’’وہ اگلے الیکشن کی نہیں ، بلکہ آنے والی نسلوں کا سوچتے ہیں، پانچ سال بعد جب ہماری کارکردگی کا گراف آئے گا تو اپوزیشن کی دوکانیں بندہو جائیں گی، جہاں حکمران کرپٹ وہ ملک ترقی نہیں کرتے، ہم نے اپنے تین برسوں میں ن لیگ سے زیادہ سڑکیں بنائیں، عالمی بینک کی رپورٹ کے مطابق پاکستان میں غربت میں کمی آئی ہے،دس نئے ڈیم بنائیں گے‘‘ وزیراعظم کا یہ بیان اس بات کی عکاسی  کر رہا ہے کہ پوری قوم اللہ سے معافی مانگے، اجتماعی توبہ کرے، اپنے گناہوں پر ندامت کے اشک بہائے، کیونکہ بقول عمران خان جہاں حکمران کرپٹ ہوں… وہ ملک ترقی نہیں کرتے، اب صادق اور امین حکمران ہونے کے باوجود اگر پاکستان ترقی نہیں کر پارہا تو اس میں وزیراعظم کا کیا قصور ہے؟ عمران کی ’’سچائی‘‘ اور ’’امانت داری‘‘ تو عدالتی سند یافتہ ہے،پاکستان کے عوام کو کچھ اپنے اعمال کی طر ف توجہ دینی چاہیے … جس کو دیکھو وہ اپنا غصہ ’’وزیراعظم‘‘ اور ان کی حکومت پر نکالنے کی کوشش کرتا ہے۔


خدا کے بندو! تمہیں تو اس بات پر پروردگار کا شکر اداکرنا چاہیے کہ اس نے تمہیں عمران خان جیسا وزیراعظم دیا کہ جس نے اپنے 5 سالہ دور حکومت کے ابتدائی تین سالوں میں ہی سڑکیں بھی نواز شریف کے 5 سالہ دور اقتدار کی سڑکوں سے زیادہ بنائیں، جس طرح آج پاکستانی قوم کا بچہ بچہ حکومت کی ’’اعلیٰ ترین‘‘ کارکردگی سے متاثر ہوکر ’’وزیراعظم‘‘ کے گن گا رہا ہے …  اسی طرح جب یہ حکومت  اپنے5سال مکمل کرلے گی تو اس کی کارکردگی کا گراف دیکھ کر اپوزیشن کی دوکانیں بھی بند ہو جائیں گی۔ ان شاء اللہ
ہنسنا بالکل منع ہے ، میں کوئی مخولیا باتیں نہیں لکھ رہا ، کیا اس زمینی حقیقت سے انکار ممکن ہے کہ حکومت کی تین سالہ ’’اعلیٰ کارکردگی‘‘ کی وجہ سے آج کل کارخانے، فیکٹریاں اور صنعتیں بند ہونے کے قریب ہیں،5 سال بعد حکومت کی ’’اعلیٰ ترین کارکردگی‘‘ دیکھ کر اگر اپوزیشن کی دوکانیں بند ہوتی ہیں تو ہوتی رہیں … ہمارا اس سے کیا لینا دینا، ہم تو لکھیں گے کہ پیارے عوام!تمہیں اس بات پر اللہ کا شکر اداکرنا چاہیے کہ اللہ نے تمہیں ایسا  حکمران دیا کہ جس کو تمہاری اگلی نسلوں کی بھی فکر ہے، یہ حکمران جس طرح تمہارا دھیان رکھ رہا ہے ، بالکل اسی طرح یہ تمہاری اگلی نسلوں کا بھی دھیان رکھے گا، مگر تم  گھبرانا نہیں، پیارے عوام!خوشیاں منائو، غربت میں کمی واقع ہوگئی ہے اور مہنگائی حکومت نہیں کر رہی ، بلکہ مہنگائی کا سیلاب باہر سے آرہا ہے، اب باہر سے آنے والے مہنگائی کے سیلاب کے سامنے بند باندھنے کے لئے ضروری ہے کہ عوام لنگوٹے کس کر ،کیساں اور کدالیں تھامے مہنگائی کے سیلاب کے سامنے سینہ تان کر کھڑے ہو جائیں، یا پھر مہنگائی کا سیلاب اگر رکنے میں نہیں آرہا تو عوام کو چاہیے کہ وہ ضرورت کی اشیاء منہ مانگے داموں خریدنا شروع کر دیں۔
’’مہنگائی‘‘ کی شدت کو کم کرنے کے لئے اس حکومتی فارمولے پر بھی عمل کرلیا جائے  تو بہت مفید ہوسکتا ہے کہ جب مہنگائی کی وجہ سے عوام کو مرچیں زیادہ تنگ کرنا شروع کر دیں تو وہ منہ رائے ونڈ جاتی امراء اور بلاول ہائوس کی طرف کرکے … جی بھر کر چور چور ، ڈاکو ڈاکو ، لٹیرے ، لیٹرے  کے نعرے لگالیا کریں، اس سے مہنگائی والی مرچوں میں کمی  محسوس ہونے لگے گی، یہ جدید اور ڈیجیٹل دور ہے  ، اگر آج نومبر2021 ء میں ریلوے کا بیڑہ غرق ہورہا ہے تو اس میں خواجہ سعدرفیق کا ہاتھ ہے، اگر آج ڈالر178 روپے کو بھی کراس کررہا ہے تو اسحاق ’’ڈالر‘‘ مطلب یہ کہ ’’ڈار‘‘ کا قصور ہے، اگر ملک میں آج لاقانونیت کا دور دورہ ہے تو اس میں چودھری نثار او ر احسن اقبال کا قصور ہے۔
اگر پٹرول کی قیمتوں میں اضافہ ہو رہاہے تو ن لیگی سابق وفاقی وزیر پٹرولیم شاہد خاقان عباسی کا قصور ہے، اگر آج ٹماٹر  دوسو روپے کلو  ، چینی150 روپے کلو، مرغی کا گوشت490 روپے کلو، بکرے کا گوشت 13 سو روپے کلو بک رہا ہے ، ادویات وغیرہ کی قیمتوں کو آگ لگی ہوئی ہے تو یہ سارا قصور ’’نواز شریف‘‘ کا ہے، اگر آج ملک کسی بھی حالت میں چلنا تو درکنار، رینگ بھی نہیں رہا ، ملکی ترقی کی گاڑی آئی ایم ایف کے کیچڑ میں جاپھنسی ہے تو اس میں سارا قصور آصف علی زرداری  کا ہے، کیوں؟ اس لئے کہ نواز، زرداری کرپٹ تھے، انہوں نے جائیدادیں بنائیں، ان کی اولادیں اور کاروبار، بینک بیلنس سب کچھ باہر ہے ، نواز ، زرداری جب اس ملک کے حکمران تھے تب ملک کسی نہ کسی انداز میں آج سے کئی گنا بہتر چل رہا تھا۔
اس خاکسار کا ارادہ تو افغانستان کی تازہ ترین صورتحال پر کالم لکھنے کا تھا، مگر وزیراعظم کے تازہ ترین خطاب نے میری ساری توجہ اپنی جانب کھینچ لی، یقینا غربت کم ہوئی ہوگی، پاک سرزمین پر نہ سہی، مریخ سیارے پر ہی سہی  ، پر غربت تو کم ہوئی نا۔
چلیں اگر غربت کم نہ ہوئی تو مہنگائی کی شدت کی وجہ سے ’’غریب‘‘ خودبخود کم ہونا شروع ہو جائیں گے، جو سمجھتے ہیں کہ پاکستان ترقی نہیں کر رہا ، وہ سمجھتے رہیں … اب نہیں تو اگلے بیس تیس سالوں میں پاکستان ترقی ضرور کرے گا، کان کھول کر سن لو،30سال بعد جب پاکستان ’’ترقی‘‘ کی سیڑھیاں چڑھ رہاہوگا، تب بھی حکومت عمران خان ہی کی ہوگی، جلنے والوں کا منہ کالا، پیار ے عوام! ہر حکمران کو تم سے پیار رہا ہے، ذوالفقار علی بھٹو سے لے کر نواز شریف تک … سب ہی عوام کی محبت میں تڑپتے پھڑکتے رہے، لیکن عمران خان پہلا حکمران ہے کہ جسے تمہاری اگلی نسلوں کی بھی فکر ہے ، اے عوام! تم اپنی فکر آپ کرو ، اپنے مسائل خود حل کرو، مہنگائی کا علاج خود تلاش کرو، ملک کو ترقی کی را ہ پر ڈالنے کی فکر خود کرو، ملک میں جاری لاقانونیت کو ختم کرنے کی فکر خود کرو ، کیونکہ شاعر مشرق نے بھی فرمایا تھا کہ
خدا نے آج تک اس قوم کی حالت نہیں بدلی
نہ ہو جس کو خیال آپ اپنی حالت کے بدلنے کا
باقی رہ گئیں اگلی نسلیں، تو انہیں عمران خان پر چھوڑ دو، عمران خان تمہاری  اگلی نسلوں کا رکھوالا ہے ، اور تم اگلی نسلوں کی ’’فکر‘‘ سے ہٹا کر اس کی توجہ آج کے مسائل کے حل کی طرف بھٹکانا چاہتے ہو، حکومت کی کارکردگی کا گراف آہستہ آہستہ بلند ہوتا جارہاہے، جب عمران خان حکومت کے 5  سال مکمل ہو جائیں گے تو اعلیٰ ترین کارکردگی کا گراف اس قدر بلند ہو جائے گا کہ پھر بے خود ہوکر عوام  گنگنانے پر مجبور ہو جائیں گے کہ
خودی کو کر بلند اتنا کہ ہر تقدیر سے پہلے
خدا بندے سے خود پوچھے بتا تیری رضا کیا ہے؟

 

تازہ ترین خبریں

ویلکم ٹو پی ٹی آئی ۔۔اداکارہ لیلیٰ زبیری پی ٹی آئی وومن ونگ کی رکن بن گئیں

ویلکم ٹو پی ٹی آئی ۔۔اداکارہ لیلیٰ زبیری پی ٹی آئی وومن ونگ کی رکن بن گئیں

پورا ہفتہ بارشیں، آئندہ سات دن کہاں کہاں برسات ہو گی؟ تفصیلی پیشنگوئی آگئی

پورا ہفتہ بارشیں، آئندہ سات دن کہاں کہاں برسات ہو گی؟ تفصیلی پیشنگوئی آگئی

عمران خان کا تگڑا سیاسی یارکر، پیپلزپارٹی رہنما کی وکٹ اڑا لی

عمران خان کا تگڑا سیاسی یارکر، پیپلزپارٹی رہنما کی وکٹ اڑا لی

اے این پی کی حکومت سے علیحدگی، امیر حیدر خان ہوتی نے اعلان کر دیا

اے این پی کی حکومت سے علیحدگی، امیر حیدر خان ہوتی نے اعلان کر دیا

کیا آپکا اب بھی آرمی چیف سے رابطہ ہے؟ صحافی کے سوال پر عمران خان کا حیران کن ردِ عمل

کیا آپکا اب بھی آرمی چیف سے رابطہ ہے؟ صحافی کے سوال پر عمران خان کا حیران کن ردِ عمل

اوگرا نے کتنے روپے پیٹرول کی قیمت بڑھانے کی تجویز دی تھی؟ تہلکہ خیز انکشاف

اوگرا نے کتنے روپے پیٹرول کی قیمت بڑھانے کی تجویز دی تھی؟ تہلکہ خیز انکشاف

عنقریب صدر مملکت شہباز شریف کو اعتماد کا ووٹ لینےکا کہیں گے، شیخ رشید کی پیش گوئی

عنقریب صدر مملکت شہباز شریف کو اعتماد کا ووٹ لینےکا کہیں گے، شیخ رشید کی پیش گوئی

"  وزیر اعلیٰ پنجاب کے معاملے پر منصور علی خان نے دونوں پارٹیوں کو مشورہ دے دیا، ایسا کیوں کہا ؟ جانیں 

" وزیر اعلیٰ پنجاب کے معاملے پر منصور علی خان نے دونوں پارٹیوں کو مشورہ دے دیا، ایسا کیوں کہا ؟ جانیں 

شاہ محمود اشارے دے رہے ہیں کہ اگلی مرتبہ مجھے وزیراعلی بنایا جائے،سینئر صحافی ہارون الرشید نے بڑی خبر بریک کر دی

شاہ محمود اشارے دے رہے ہیں کہ اگلی مرتبہ مجھے وزیراعلی بنایا جائے،سینئر صحافی ہارون الرشید نے بڑی خبر بریک کر دی

لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کے بعد پنجاب اسمبلی میں نمبر گیم کیا ہے ؟جانیں مکمل تفصیلات

لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کے بعد پنجاب اسمبلی میں نمبر گیم کیا ہے ؟جانیں مکمل تفصیلات

ملک میں ذی الحج کا چاند نظر آ گیا، عید الاضحی 10 جولائی کو منائی جائے گی

ملک میں ذی الحج کا چاند نظر آ گیا، عید الاضحی 10 جولائی کو منائی جائے گی

حکومت کی عوام پر پھر سے پیٹرول بم گرانے کی تیاری ،پانچ دس روپے نہیں بلکہ کتنے روپے اضافہ ہونے والا ہے ؟ جانیں 

حکومت کی عوام پر پھر سے پیٹرول بم گرانے کی تیاری ،پانچ دس روپے نہیں بلکہ کتنے روپے اضافہ ہونے والا ہے ؟ جانیں 

ہماری زبان بندی اور ہاتھ باندھ کر کہتے الیکشن جیت کر دکھاؤ،نئے الیکشن کیلئے24 گھنٹے سے بھی کم وقت دیا گیا،ق لیگ پھٹ پڑی

ہماری زبان بندی اور ہاتھ باندھ کر کہتے الیکشن جیت کر دکھاؤ،نئے الیکشن کیلئے24 گھنٹے سے بھی کم وقت دیا گیا،ق لیگ پھٹ پڑی

پرویز مشرف اس وقت پاکستان میں موجود ہیںمیرے ایک جاننے والے ڈاکٹر مل کر آئے ہیں ،وہ کس حال میں ہیں ؟ 

پرویز مشرف اس وقت پاکستان میں موجود ہیںمیرے ایک جاننے والے ڈاکٹر مل کر آئے ہیں ،وہ کس حال میں ہیں ؟