12:01 pm
امریکہ پاکستان سے کیا چاہتا ہے؟

امریکہ پاکستان سے کیا چاہتا ہے؟

12:01 pm

 (گزشتہ سے پیوستہ)
جناب وزیر اعظم! مجھے ان عرب مجاہدین سے زیادہ پاکستان کی فکر ہے۔ انہیں آپ مجاہدین کہیں یا دہشت گرد کا خطاب دیں، ان کی خدمات اور مشن میں اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا اور وہ جہاں آنجہانی سوویت یونین اور ڈاکٹر نجیب اللہ کی گولیوں کا نشانہ بنتے رہے ہیں وہاں امریکہ اور اس کی حواری حکومتوں کی گولیاں بھی ان کے سینوں میں اس سے بڑا سوراخ نہیں کر سکیں گی۔ وہ تو ایمان اور جہاد کے جذبات سے سرشار ہیں، آزمائش کی اس بھٹی میں کندن بن کر نکلیں گے۔ لیکن تاریخ کے اتنے بڑے اسٹیج پر پاکستان کے سینے کو ’’احسان فراموشی‘‘ اور ’’محسن کشی’’ کے جن تمغوں سے مزین کیا جا رہا ہے، غلاظت کی ان بدنما اور بدبودار داغوں سے ہمارے سینوں کو کون صاف کرے گا؟
جناب وزیر اعظم! آپ نے عرب مجاہدین کے خلاف اس کاروائی کا مقصد یہ بتایا ہے کہ اس سے امریکی تاثر کا ازالہ ہوگا اور آپ کو یہ بریفنگ بھی شاید متعلقہ اداروں کی رپورٹوں کے ذریعے دی گئی ہے، لیکن اس غلط فہمی سے بھی آپ جس قدر جلد نجات حاصل کر سکیں ملک و قوم کے مفاد میں ہو گا۔ اس لیے کہ امریکی تاثرات اور حکومت کی خواہشات صرف ’’عرب مجاہدین‘‘ کو پشاور سے نکالنے تک محدود نہیں ہیں بلکہ اب تک پاکستان سے امریکہ کے جو مطالبات اور تقاضے بین الاقوامی پریس کے ریکارڈ میں آچکے ہیں، ان کی فہرست بڑی لمبی ہے جن میں سے چند ایک کا ذکر یہاں مناسب خیال کرتا ہوں:
امریکہ بہادر کا مطالبہ ہے کہ پاکستان اپنے ایٹمی پروگرام کو امریکہ کی مقرر کردہ حدود میں واپس لے جائے اور دفاعی مقاصد کے لیے ایٹمی توانائی کے حصول کے جائز حق سے کلی طور پر دستبردار ہونے کا اعلان کرے۔
 امریکہ چاہتا ہے کہ اسلامی جمہوری پاکستان کا اسلامی تشخص ختم کر کے اسے ایک سیکولر جمہوریہ کی حیثیت دی جائے۔
امریکہ کی خواہش ہے کہ پاکستان میں نفاذ اسلام کے عمل کو ختم کر دیا جائے، نفاذ اسلام کی جدوجہد کرنے والی جماعتوں کو فرقہ وارانہ قرار دے کر خلاف قانون قرار دے دیا جائے اور قادیانیوں کے بارے میں آئینی اور قانونی اقدامات کو واپس لیا جائے۔
امریکہ کا پاکستان سے تقاضا ہے کہ وہ کشمیر کے بارے میں اپنے موقف میں لچک پیدا کرے تاکہ وادی کشمیر کو ایک خودمختار ملک قرار دے کر وہاں امریکہ کا ایک بڑا فوجی اڈہ قائم کیا جا سکے جو چین، جاپان، بھارت، پاکستان اور وسطی ایشیا کے درمیان امریکی مفادات و مقاصد کا نگہبان ہو۔
امریکہ کی مرضی یہ ہے کہ پاکستان اپنا پورا اثر و رسوخ افغانستان میں ایک مستحکم اور نظریاتی اسلامی حکومت کے قیام کو روکنے کے لیے استعمال کرے، اور افغانستان میں خانہ جنگی اور انتشار کی فضا قائم رکھنے کے لیے اسلام آباد مسلسل کردار ادا کرتا رہے۔
امریکہ بہادر کی منشا یہ ہے کہ وسطی ایشیا کی نو آزاد مسلم ریاستوں کو امریکہ کے زیر اثر لانے کے لیے پاکستان ایک وفادار ایجنٹ کا کردار ادا کرے۔
امریکہ بہادر مشرق وسطٰی کے مختلف ممالک میں ابھرتی ہوئی اسلامی تحریکات کو اس خطہ میں اپنے مفادات اور اسرائیل کے مستقبل کے لیے خطرہ محسوس کرتا ہے، اور اس کی تمنا یہ ہے کہ ان تحریکات کو سبوتاژ کرنے اور کچلنے کے لیے پاکستان اس خطہ کی امریکہ نواز حکومتوں کے ساتھ بھرپور تعاون کرے۔
جناب وزیر اعظم! یہ امریکی خواہشات اور تاثرات کا ایک سرسری خاکہ ہے اور ان تمام خواہشات کی تکمیل کر کے ہی آپ امریکہ بہادر سے یہ توقع کر سکتے ہیں کہ وہ پاکستان کو ’’دہشت گرد‘‘ ملک قرار دینے کی دھمکی پر نظرثانی کرے، ورنہ ان میں سے کسی ایک مسئلہ پر آپ کا اڑ جانا پاکستان کو دہشت گرد ملک قرار دلوانے کے لیے کافی ہے۔ جبکہ ان تمام تاثرات کے ازالہ کے بعد بھی اس امر کی ضمانت نہیں ہے کہ امریکی وزارت خارجہ کا جنوبی ایشیا ڈیسک اس وقت تک پاکستان کے حوالہ سے امریکی خواہشات و تاثرات کی ایک نئی فہرست تیار نہیں کر چکا ہوگا۔
اس لیے اگر آپ کی حکومت نے ’’امریکہ کے تاثرات کے ازالہ‘‘ کی مہم کا بیڑا اٹھایا ہے تو میری آپ سے گزارش ہے کہ اس کی آخری حد تک کا بھی ابھی سے تعین کر لیں۔ کیونکہ ایک سیاسی کارکن کی حیثیت سے میرا تجربہ یہ کہتا ہے کہ پاکستان کی رائے عامہ ان حقائق سے پوری طرح باخبر نہ ہونے کے باعث ابھی تک گومگو کی کیفیت میں ہے۔ لیکن یہ کیفیت زیادہ دیر تک قائم نہیں رہے گی اور رائے عامہ کے بیدار ہونے پر آپ پیچھے کی طرف مڑ کر دیکھیں گے تو آگے جانے کے ساتھ ساتھ پیچھے ہٹنے کے دروازے بھی آپ پر بند ہوچکے ہوں گے، اور آپ کی حکومت اپنی امریکہ نواز پالیسیوں کے ساتھ ’’عبرت سرائے دہر ہے اور ہم ہیں دوستو!‘‘ کا مصداق بن چکی ہوگی۔
جناب وزیر اعظم! مجھے احساس ہے کہ اپنے جذبات کے ہاتھوں مجبور ہونے کی وجہ سے انداز بیان کو تلخی کی آمیزش سے محفوظ نہیں رکھ سکا۔ اس پر آنجناب سے معذرت خواہ ہوں اور ایک بار پھر یہ استدعا کرتا ہوں کہ ایک باشعور مسلمان اور محب وطن پاکستانی کی حیثیت سے ان حقائق کا جائزہ لیں اور ایسے کسی اقدام سے گریز کریں جو کہ انجام کار آپ کے لیے، پاکستان کے لیے، اور پاکستانی قوم کے لے بے وقاری اور بدنامی کا باعث ثابت ہو، بے حد شکریہ۔‘‘

تازہ ترین خبریں

حلقہ این اے 118 میں عمران خان کے کاغذات نامزدگی چیلنج

حلقہ این اے 118 میں عمران خان کے کاغذات نامزدگی چیلنج

کپتان نے شہباز گل کے حوالے سے کیاکہاتھااورکس اہم ترین وزیرنےا ن کی بات کی تردیدکردی

کپتان نے شہباز گل کے حوالے سے کیاکہاتھااورکس اہم ترین وزیرنےا ن کی بات کی تردیدکردی

جشن آزادی کی تقریب  میں ایسی بے حیائی ہوئی کہ میں نے ٹوپی اتار کر آنکھوں پر ہاتھ رکھ لی

جشن آزادی کی تقریب میں ایسی بے حیائی ہوئی کہ میں نے ٹوپی اتار کر آنکھوں پر ہاتھ رکھ لی

عمران  کے کراچی آنے سےپیپلز پارٹی کی کا نپیں ٹانگناشروع ہوگئیں ،زرداری صاحب اب آپ نے گھبرانانہیں ،فواد چوہدری

عمران کے کراچی آنے سےپیپلز پارٹی کی کا نپیں ٹانگناشروع ہوگئیں ،زرداری صاحب اب آپ نے گھبرانانہیں ،فواد چوہدری

 کینسر سے انتقال کرنے والے ہاشم رضا نے موت سے چند دن پہلے معافی مانگتے ہوئے کیا خواہش کی تھی؟

کینسر سے انتقال کرنے والے ہاشم رضا نے موت سے چند دن پہلے معافی مانگتے ہوئے کیا خواہش کی تھی؟

اگر حکومت کی کوئی مجبوری ہے تومیں اس فیصلے میں شامل نہیں ،نواز شریف کی پیٹرول کی قیمت میں اضافے کے فیصلے کی سخت مخالفت

اگر حکومت کی کوئی مجبوری ہے تومیں اس فیصلے میں شامل نہیں ،نواز شریف کی پیٹرول کی قیمت میں اضافے کے فیصلے کی سخت مخالفت

۔۔ یہ کس مشہور شخصیت کی تصویر ہے جسے ان کے قریبی لوگ بھی نہیں پہچان پاتے؟

۔۔ یہ کس مشہور شخصیت کی تصویر ہے جسے ان کے قریبی لوگ بھی نہیں پہچان پاتے؟

۔ شادی کے 2 سال بعد بیوی کو نظر آنا بند ہوا تو شوہر نے شریک حیات ساتھ کیا سلوک کیا؟

۔ شادی کے 2 سال بعد بیوی کو نظر آنا بند ہوا تو شوہر نے شریک حیات ساتھ کیا سلوک کیا؟

پنجاب اسمبلی میں نجی قرض پر سود کی پابندی کا بل منظور

پنجاب اسمبلی میں نجی قرض پر سود کی پابندی کا بل منظور

سوناایک مرتبہ پھرمہنگا،فی تولہ قیمت میں کتنااضافہ ہوگیا،شادی کاارادہ کرنے والے افرادکے لیے بری خبرآگئی

سوناایک مرتبہ پھرمہنگا،فی تولہ قیمت میں کتنااضافہ ہوگیا،شادی کاارادہ کرنے والے افرادکے لیے بری خبرآگئی

افسران کی موجیں ختم۔۔۔پنجاب حکومت نے بڑافیصلہ کرلیا

افسران کی موجیں ختم۔۔۔پنجاب حکومت نے بڑافیصلہ کرلیا

’’شہبازگل کو ننگا کرکے مارا گیا‘‘ عمران خان اور پرویز الٰہی آمنے سامنے

’’شہبازگل کو ننگا کرکے مارا گیا‘‘ عمران خان اور پرویز الٰہی آمنے سامنے

روہڑی بائی پاس پر کوچ اُلٹ گئی، خواتین و بچوں سمیت کتنے مسافر جاں بحق ہوگئے ،انتہائی افسوسناک خبرآگئی

روہڑی بائی پاس پر کوچ اُلٹ گئی، خواتین و بچوں سمیت کتنے مسافر جاں بحق ہوگئے ،انتہائی افسوسناک خبرآگئی

ستمبر یا اکتوبر میں وطن واپسی،سابق وزیراعظم میاں نواز شریف لاہورکے بجائے کس شہرکواپنامسکن بنائیں گے

ستمبر یا اکتوبر میں وطن واپسی،سابق وزیراعظم میاں نواز شریف لاہورکے بجائے کس شہرکواپنامسکن بنائیں گے