03:03 pm
جس کی لاٹھی اس کی بھینس !

جس کی لاٹھی اس کی بھینس !

03:03 pm

  دلچسپ بات یہ ہے کہ اپریل میں سعد رضوی کی گرفتاری کسی مقدمے میں نہیں کی گئی بلکہ ان کو امن وامان میں خلل ڈالنے کے پیش نظر 16 ایم پی او کے تحت حراست میں لیا گیاتھا۔لاہور ہائی کورٹ نے سعد رضوی کے خاندان کی درخواست پر حکومتی نظربندی کے احکامات معطل کرتے ہوئے رہا کرنے کا حکم دیا تھا البتہ اس عدالتی حکم میں یہ بھی کہا گیا کہ سعد رضوی اگر کسی اور مقدمے میں مطلوب نہیں تو انہیں رہا کر دیا جائے۔حکومت نے سعد رضوی کو ان کے خلاف درج دیگر 98 مقدمات میں گرفتار کرنے کی بجائے ہائی کورٹ کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کر دیا۔سپریم کورٹ نے ہائی کورٹ کا فیصلہ معطل کرتے ہوئے ہائی کورٹ کو ہی نظر بندی سے متعلق کیس دوبارہ سننے کا حکم صادر کیا۔حکومت نے انہیں کسی مقدمے میں گرفتار کیا ہی نہیں تھاوہ تو محض ایک ڈی سی کے حکم نامے کے تحت نظر بند  تھے۔  اکتیس اکتوبر کو وفاقی حکومت کے خلاف سراپا احتجاج ٹی ایل پی اور حکومت کے مابین انتشار کو ختم کرنے کے لیے معاہدہ ہوا  تھا جس میں ٹی ایل پی کی جانب سے مفتی منیب الرحمان نے بطور ضامن معاہدے کے لیے کردار ادا کیا۔ حکومت کی جانب سے شاہ محمود قریشی، اسد قیصر، علی محمد خان نے معاہدے پر دستخط کیے تھے۔
اس معاہدے کی رو سے یہ فیصلہ کیا گیا تھا کہ ٹی ایل پی آئندہ کسی لانگ مارچ یا دھرنے سے گریز کرے گی اوریہ کہ آئندہ بطور سیاسی جماعت قومی دھارے میں شریک ہوگی اور اس کو کالعدم جماعتوں کی فہرست سے بھی نکال دیا جائے گا۔معاہدے کے مطابق طے پایا تھا کہ حکومت کالعدم ٹی ایل پی کے گرفتار کارکنوں کو رہا کردے گی جس پر عمل درآمد کرتے ہوئے حکومت نے اس جماعت کے ہزاروں کارکنوںکو جنہیں دہشت گردی سمیت سنگین مقدمات کا سامنا  تھا،کو رہا کیا گیا۔ ان کارکنوں نے مقدمات میں حکومت کی طرف سے کوئی اعتراض نہیں کیا گیا یوں انہیں ریلیف ملا اور وہ رہائی پاگئے۔بعد ازاں حکومت نے تحریک لبیک پاکستان، سعد رضوی اور اس جماعت کے دیگر 487 کارکنوں کے نام فورتھ شیڈول سے خارج کر کے شناختی کارڈز اور بینک اکانٹس بحال کردیے تھے۔اسی حوالے سے حکومت پنجاب کی جانب سے سربراہ تحریک لبیک پاکستان سعد رضوی سمیت دیگر کارکنوں کے خلاف کم و بیش چالیس  مقدمات واپس لینے کا فیصلہ کیا گیا تھاحکومت  اور آرمی چیف کی کوششیں رنگ لائیں جن کے نتیجے میں معاہدہ ہوا تھا۔ دو دن قبل یہ اطلاعات سامنے آئیں تھیں کہ ٹی ایل پی کے سربراہ سعد رضوی کی رہائی کے معاملے پر اہم اجلاس چند روز میں طلب کیے جانے کا امکان ہے۔ دوسری جانب ترجمان ٹی ایل پی کا کہنا تھا کہ سعد رضوی کچھ دیر بعد ٹی ایل پی مرکز چوک یتیم خانہ پہنچیں گے۔ سعد رضوی کو پہلی بار اپریل 2021  ء میں ایک ماہ کے لیے نظربند کیا گیا تھا۔ سعد رضوی کو ڈی سی کے حکم پر نظربند کیا گیا تھا۔ نظربندی کے دوران سعد رضوی کا نام فورتھ شیڈول میں بھی شامل کرلیا گیا تھا۔
حکومت، ٹی ایل پی معاہدہ،کاکریڈٹ مولانا بشیر فاروقی نے  آرمی چیف کو دیا تھا اور سابق چیئرمین رویت ہلال کمیٹی  مفتی منیب الرحمان نے آرمی چیف کے ساتھ اس حوالے سے فیصلہ کن اور نتیجہ خیز ملاقات کی تھی۔حکومت اور تحریک لبیک پاکستان کے معاملے پر بنائی گئی مذاکراتی کمیٹی کے رکن مولانا بشیر فاروقی نے کہا تھا کہا کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ طاقت کے استعمال کے حق میں نہیں تھے۔انہوں نے مذاکرات پر زور دیا۔ حکومت اور کالعدم ٹی ایل پی کے درمیان جو معاہدہ ہوا اس میں ہزار فیصدکردار آرمی چیف کا تھا۔ وہ اس مسئلے کا خون خرابے کے بغیر پرامن حل چاہتے تھے اور وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی جن کا اس سارے معاملے میں اہم کر دارر تھا انہوں نے کہاتھا کہ امن اور بہتری کا راستہ تلاش کیا گیا کیونکہ انتشار میں پاکستان کا کوئی فائدہ نہیں اور بعض قوتیں چاہتی تھیں کہ ایک بار پھر خون بہے، تماشہ لگے عوام کو مسائل درپیش ہوں حکومت کی مشکلات بڑھیں اور اپوزیشن جو ساڑھے تین سال میں کچھ نہیں کرسکی وہ ہوجائے اور حکومت چلتی بنے۔حکومت کے ساتھ طے پانے والا معاہدہ کسی کی فتح یا شکست نہیں بلکہ اسلام اور پاکستان کی فتح تھی۔ اب جبکہ مولاناسعد رضوی کی رہائی عمل میں آچکی ہے تو اس جماعت کو قانون کے دائرے میں رہتے ہوئے اپنا سیاسی کردار ادا کرنا ہوگا ۔رہائی کے اس عمل کو بعض عناصر منفی انداز میں لے رہے ہیں اور وہ نہیں چاہتے کہ کوئی بھی معاملہ خوش اسلوبی سے طے پاسکے کیونکہ ملک میں امن پاکستان کے دشمنوں کو ایک آنکھ نہیں بھاتا اور وہ چاہتے ہیں کہ وطن عزیز میں ہر وقت کوئی نہ کوئی ایسا معاملہ چلتا رہے جس سے بیرونی دنیا کو یہ تاثر جائے کہ پاکستان میں اندرونی طور پرشدید خلفشار ہے اور یہ ملک نہ تو سرمایہ کاری کا ابل ہے اور نہ  ہی سیاحت کے لائق، اس سے ملک دشمن عناصر خواہ وہ ملک کے اندر ہیں یا باہر سے بیٹھ کر ان عناصر کی ڈوریاں ہلارہے ہیں وہ اپنے مکروہ عزائم کی تکمیل چاہتے ہیں۔ پاکستان میں دینی جماعتیں جو کہ سیاسی میدان میں بھی سر گرم عمل ہیں ان کا ہمیشہ اقتدار میں ساتھ رہا ہے اور انہوں نے معروف سیاسی جماعتوں کیساتھ معاہدے کرکے چند گنی چنی نشستوں پر  ہی قناعت کی ہے تاہم ٹی ایل پی کا معاملہ اس کے برعکس ہے اور اس کی قیادت اور کارکن متحد ہیں اوروہ ملک میں اسلامی نظام کا عملی اور حقیقی معنوں میں   نفاذ چاہتے ہیں۔




 

تازہ ترین خبریں

`` ون ڈے اور ٹی ٹونٹی رینکنگ میں بابراعظم کونسی پوزیشن پر آگئے ؟آئی سی سی نے تازہ ترین رینکنگ جاری کر دی

`` ون ڈے اور ٹی ٹونٹی رینکنگ میں بابراعظم کونسی پوزیشن پر آگئے ؟آئی سی سی نے تازہ ترین رینکنگ جاری کر دی

واٹس ایپ نے صارفین کی سہولت کیلئے ایک اور شاندار فیچر متعارف کروا دیا

واٹس ایپ نے صارفین کی سہولت کیلئے ایک اور شاندار فیچر متعارف کروا دیا

آئندہ چوبیس گھنٹوں کا موسم کیسا رہے گا؟ محکمہ موسمیات نے ٹھنڈی ٹھنڈی پیشنگوئی کر دی

آئندہ چوبیس گھنٹوں کا موسم کیسا رہے گا؟ محکمہ موسمیات نے ٹھنڈی ٹھنڈی پیشنگوئی کر دی

یوکرین پر حملہ کیا تو ایک بھی روسی فوجی واپس اپنے ملک نہیں جائیگا، بڑے ملک نے روس کو وارننگ دیدی

یوکرین پر حملہ کیا تو ایک بھی روسی فوجی واپس اپنے ملک نہیں جائیگا، بڑے ملک نے روس کو وارننگ دیدی

شہزا د اکبر کی جگہ کس کو تعینات کیا جائیگا؟ پانچ اہم نام سامنے آگئے

شہزا د اکبر کی جگہ کس کو تعینات کیا جائیگا؟ پانچ اہم نام سامنے آگئے

گھر میں بچے اکیلے ہیں،شاہد آفریدی نے بائیو سیکیور ببل سے باہر نکلنے کی درخواست کردی

گھر میں بچے اکیلے ہیں،شاہد آفریدی نے بائیو سیکیور ببل سے باہر نکلنے کی درخواست کردی

مزیدکتنا عرصہ قیمتیں نیچے نہ آنے کاامکان ہے ؟  وزیر خزانہ شوکت ترین نے پریشان کن خبر سنا دی

مزیدکتنا عرصہ قیمتیں نیچے نہ آنے کاامکان ہے ؟ وزیر خزانہ شوکت ترین نے پریشان کن خبر سنا دی

جب ہم ملتان یا لاہور تک پہنچیں گے تو عمران خان اپنے وزن سے گر جائے گا، پی ڈی ایم رہنما کا دعویٰ

جب ہم ملتان یا لاہور تک پہنچیں گے تو عمران خان اپنے وزن سے گر جائے گا، پی ڈی ایم رہنما کا دعویٰ

ٹویٹر پر شہری کا طنز، جمائمہ خان نے کھری کھری سناتے ہوئےپاکستان زندہ باد کا نعرہ لگا دیا

ٹویٹر پر شہری کا طنز، جمائمہ خان نے کھری کھری سناتے ہوئےپاکستان زندہ باد کا نعرہ لگا دیا

غریب کیلئے دو وقت کی روٹی کا حصول بھی مشکل ہو گیا، آٹے کی فی کلو قیمت میں ہوشربا اضافہ

غریب کیلئے دو وقت کی روٹی کا حصول بھی مشکل ہو گیا، آٹے کی فی کلو قیمت میں ہوشربا اضافہ

میٹرک اور انٹرمیڈیٹ کے امتحانات سے متعلق نئی پالیسی کا اعلان کر دیا گیا

میٹرک اور انٹرمیڈیٹ کے امتحانات سے متعلق نئی پالیسی کا اعلان کر دیا گیا

کرپشن میں اضافہ ، ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل کی رپورٹ آنے کے بعد وزیراعظم عمران خان  سےاستعفے کا مطالبہ

کرپشن میں اضافہ ، ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل کی رپورٹ آنے کے بعد وزیراعظم عمران خان سےاستعفے کا مطالبہ

کتنے حکومتی اراکین ن لیگ میں شامل ہونے کو تیار ہیں؟ دعوے نے ہلچل مچادی

کتنے حکومتی اراکین ن لیگ میں شامل ہونے کو تیار ہیں؟ دعوے نے ہلچل مچادی

موبائل سگنل اور سڑکیں بند۔۔وفاقی وزیر داخلہ نے بڑا اعلان کر دیا

موبائل سگنل اور سڑکیں بند۔۔وفاقی وزیر داخلہ نے بڑا اعلان کر دیا