03:06 pm
جنوبی ایشیا میں مذاہب

جنوبی ایشیا میں مذاہب

03:06 pm

ہندو مت جسے سناتن دھرم (ابدی قانون) بھی کہا جاتا ہے، کی ابتدا کے بارے میں یہ تصور ہے کہ یہ زمان و مکان سے قبل کا ہے، اس کے تقریباً ایک ارب پیروکار ہیں، جو دنیا کی آبادی کے تقریباً 15 فی صد ہیں۔ عیسائیت ( 31فیصد) اور اسلام (23 فیصد) کے بعد ہندومت دنیا میں تیسرا بڑا مذہب ہے۔ اسلام اور عیسائیت کے کے برعکس اسے ایک مشرک مذہب (ایک سے زیادہ خداؤں کی عبادت) سمجھا جاتا ہے جو کسی ایک پیغمبر پر نازل نہیں ہوا، یہ مختلف مقدس متون پر انحصار کرتا ہے، جن میں وید، پران، بھگوت گیتا اور دیگر شامل ہیں۔ تقریباً چار ہزار سالوں میں تشکیل پانے والے ہندو مذہب کو دنیا کا قدیم ترین مذہب سمجھا جاتا ہے۔
92 فی صد ہندو بھارت میں رہتے ہیں جو کہ آبادی کے 80 فی صد کی تشکیل کرتے ہیں۔ نیپال میں بھی ہندو اکثریت (81 فی صد) میں ہیں اور ماریشس میں یہ آبادی کا 49 فی صد ہیں۔ جنوبی ایشیا میں ہندوؤں کی چھوٹی آبادیاں بھوٹان (25 فی صد)، سری لنکا (13 فی صد، تمام تامل)، بنگلہ دیش (9 فی صد) اور پاکستان (1.5 فی صد) میں ہیں۔
''ہندو'' کی اصطلاح فارسی میں انڈس اور سنسکرت میں سندھو سے نکلی ہے۔ یہ قدیم فارسی صحیفوں میں جغرافیائی اصطلاح کے طور پر شروع ہوا۔ سکندر اعظم جب ہندوستان آیا تو اس کی تواریخ میں اس دریا کو یونانی میں ''انڈوئی'' کہا گیا، جس سے یورپی نام انڈین نکلا۔ 711 عیسوی میں سندھ میں مسلمانوں کی آمد کے بعد یہاں کی آبادی کو ''ہندو'' اور ملک کو ''الہند'' کہا گیا۔ لیکن صدیوں تک اس اصطلاح نے ایک سیکولر مفہوم برقرار رکھا، ہندو مت کا بطور مذہب تصور انگریزوں کے یہاں داخل ہونے سے پہلے وجود نہیں رکھتا تھا۔ کچھ علمی مقصد کی وجہ سے، اور کچھ ان کی مجبوری کہ نام اور درجہ بندی الگ الگ ہوں، اور متصورہ مذہبی انتشار کو قابو میں رکھنے کی انگریزوں کی مجبوری نے ہندو ازم کی اصطلاح پیدا کی، اس طرح ہندوستان کے لاتعداد نظام ہائے عقائد اور فرقوں کی ایک عنوان کے تحت تلخیص کی گئی، تاکہ اسے صحیح طریقے سے درج کیا جا سکے۔ شروع میں مختلف عقائد کی باریکیاں معلوم نہیں تھیں۔ ذات پات کے نظام کے ساتھ بھی ایسا ہی ہوا، جو مختلف خطوں میں مختلف شکلوں اور ناموں کا دماغ کو چکرا دینے والے تنوع کا حامل تھا۔ انگریزوں نے ''ترتیب'' لانے اور اسے ایک ''مناسب نظام'' بنانے کی کوشش کی، جس نے ہندوستانی معاشرے میں ذات پات کو مزید مستحکم اور مستقل بنا دیا۔ ورنا اور جاتی کے درمیان فرق پر بھی کئی سالوں تک ان کی توجہ نہیں گئی، حتیٰ کہ آج بھی اصطلاحات کا استعمال کرتے ہوئے مغرب میں بہت سے لوگ اسے سمجھ نہیں پاتے۔ اور اب، ہندو مت کی اصطلاح بہت سے ایسے مختلف سلسلوں اور عقائد کی شاخوں کے لیے ایک چھتری کے طور پر استعمال ہونے والی اصطلاح معلوم ہوتی ہے، جن میں دیوتاؤں کے کردار، وقت، زندگی اور آخرت کی زندگی، نجات اور مذہبی فلسفے کے دیگر اہم اجزا کے بارے میں صرف چند ہی عام مفاہیم مشترک ہیں۔
تقریباً چار ہزار سالوں میں، جب سے ہندوستانی مذاہب کا یہ قدیم ترین مذہب موجود ہے، اس میں کافی حد تک تبدیلی آئی ہے۔ ویدک زمانے میں (جس کا نام ویدوں کی بنیاد پر رکھا گیا) تقریباً 1500 قبل مسیح سے 500 قبل مسیح تک، وادء سندھ کی ثقافت کے ختم ہونے کے بعد، چار وید جو اس وقت تک زبانی طور پر منتقل ہو چکے تھے، لکھے گئے۔ رگ وید، سام وید، یجر وید اور اتھر وید ان آیات پر مشتمل ہیں جن میں عقائد اور رسومات کو بیان کیا گیا ہے اور انھیں ہندو مت کی تمام شاخوں نے فوق الفطری اصل کے طور پر قبول کیا ہے۔ ویدوں میں بیان کیے گئے نظریات، عقائد اور رسومات کو ہندوستان میں خانہ بدوش آریائی قبائل نے متعارف کرایا، جو وسطی ایشیائی میدانوں سے ہندوستان آئے تھے۔ وہ مویشی چرانے والے لوگ تھے اور پہلے شمالی پنجاب میں آباد ہوئے اور پھر وہاں سے گنگا کی وادی میں پھیل گئے۔ ویدک دور کے اختتام پر اپنشد لکھے گئے، یہ فلسفیانہ تحریریں ہیں جو برہما کے تصور کی برتر حیثیت کو ظاہر کرتی ہیں، جو تصور توحید کے قریب آ جاتا ہے اور اس میں تناسخ کا خیال شامل کرتا ہے۔
بعد کے زمانے میں برہما کے اس توحیدی خیال کو دوسرے مختلف دیوتاؤں کے ایک مرکب کے ذریعے بدل دیا گیا۔ رفتہ رفتہ برہما، ایک ایسا دیوتا جس میں کسی بھی خصوصیت اور ذاتی صفات کا فقدان تھا اور جو انسانوں کی پہچان سے باہر تھا، کی جگہ شخصی دیوتاؤں نے لے لی۔ نامعلوم وجوہ کے سبب 200 قبل مسیح تک ویدک دور ختم ہو گیا اور ویدک رسومات نے کچھ اہمیت کھو دی۔ اگرچہ برہمن، جو اکیلے ایسے تھے جنھیں قربانی کرنے اور قربانی کی رسومات کو انجام دینے کی اجازت تھی، بدستور اقتدار میں رہے، لیکن مذہب کی دو سنیاسی شاخوں نے امتیازی حیثیت حاصل کی: جین مت اور بدھ مت۔ یہ دونوں شاخیں اصلاحی تحریکیں تھیں جو وادء گنگا میں غیر آریائی راجاؤں نے شروع کی تھیں۔ جین اور بدھ متوں نے ویدک اپنشدوں سے صرف تناسخ اور کرما کے بارے میں تعلیم کو اپنایا۔ بدھ مت 500 قبل مسیح اور 700 عیسوی کے درمیان حکمران مذہب بن گیا، جین مت بھی ساتھ ساتھ موجود رہا لیکن کبھی حکومت نہیں کی۔ ویدک برہمنیت کی پچھلی شاخیں اور بہت سے مشہور فرقے بدھ مت کے دور میں جاری رہے۔ 700 عیسوی کے بعد سے بدھ مت کی پسپائی کے ساتھ برہمن ازم نے ایک نئی شکل میں اپنی پرانی حیثیت دوبارہ حاصل کر لی۔ برہمن نے اپنا اثر و رسوخ بڑھا دیا، بچپن کی شادی، بیوہ کو جلانا (ستی)، اچھوت اور ذات پات کی تقسیم سامنے آ گئی۔ یوں مقامی فرقوں کے ایک اکٹھ نے قیادت سنبھالی اور فرقہ واریت پھیل گئی۔
( جاری ہے )

تازہ ترین خبریں

پاکستانی لٹے گئے۔۔ ایک ہی دن میں عوام کے 3کھرب روپے سے زائد ڈوب گئے، بڑے بڑےبزنس مین کنگال ،

پاکستانی لٹے گئے۔۔ ایک ہی دن میں عوام کے 3کھرب روپے سے زائد ڈوب گئے، بڑے بڑےبزنس مین کنگال ،

دسمبر میں کب کہاں اور کتنی بارش متوقع ہے؟موسمیاتی ادارے نے پیشنگوئی کر دی

دسمبر میں کب کہاں اور کتنی بارش متوقع ہے؟موسمیاتی ادارے نے پیشنگوئی کر دی

اعتزاز احسن شریف خاندان پر پھٹ پڑے،نواز شریف کو ریلیف ملنے کا بھانڈا پھوڑ دیا

اعتزاز احسن شریف خاندان پر پھٹ پڑے،نواز شریف کو ریلیف ملنے کا بھانڈا پھوڑ دیا

خراب معاشی صورتحال پر وزیر خزانہ کو عہدے سے ہٹادیاگیا، نیا وزیر ِ خزانہ تعینات

خراب معاشی صورتحال پر وزیر خزانہ کو عہدے سے ہٹادیاگیا، نیا وزیر ِ خزانہ تعینات

چھٹیاں ہی چھٹیاں ۔۔ حکومت نے ایک بار پھر تعلیمی ادارےبند کرنے کا اعلان کردیا،والدین اور بچوں کے لیے بڑی خبر

چھٹیاں ہی چھٹیاں ۔۔ حکومت نے ایک بار پھر تعلیمی ادارےبند کرنے کا اعلان کردیا،والدین اور بچوں کے لیے بڑی خبر

لوگوں کی تکلیف برداشت نہیں کر سکتے اس لیے۔۔۔ وزیراعظم عمران خان نے عوام کیلئے شاندار اعلان کردیا،عوام خوش ،اپوزیشن کی صفوں میں افسردگی

لوگوں کی تکلیف برداشت نہیں کر سکتے اس لیے۔۔۔ وزیراعظم عمران خان نے عوام کیلئے شاندار اعلان کردیا،عوام خوش ،اپوزیشن کی صفوں میں افسردگی

چیتا کلاس روم میں گھس گیا۔۔ حملے میں طالب علم زخمی۔۔ افسوسناک واقعہ کہاں پیش آیا ،دیکھیں ویڈیو

چیتا کلاس روم میں گھس گیا۔۔ حملے میں طالب علم زخمی۔۔ افسوسناک واقعہ کہاں پیش آیا ،دیکھیں ویڈیو

خطرناک ترین وائرس یہاں بھی پہنچ گیا۔۔اومی کرون کے پہلے کیس کی تصدیق ،ہر طرف خوف کے سائے

خطرناک ترین وائرس یہاں بھی پہنچ گیا۔۔اومی کرون کے پہلے کیس کی تصدیق ،ہر طرف خوف کے سائے

این اے 133 میں ن لیگ کو بڑا جھٹکا لگ گیا، متعدد رہنما پیپلز پارٹی میں شامل

این اے 133 میں ن لیگ کو بڑا جھٹکا لگ گیا، متعدد رہنما پیپلز پارٹی میں شامل

چینی کی قیمت میں 70 روپے فی کلو تک کی کمی۔۔انتہائی سستی ہو گئی

چینی کی قیمت میں 70 روپے فی کلو تک کی کمی۔۔انتہائی سستی ہو گئی

تبدیلی کا ایک اور شاخسانہ،ملک بھر میں یوٹیلیٹی اسٹورز بند۔۔عوام سے سستے راشن کی سہولت بھی چھین لی گئی

تبدیلی کا ایک اور شاخسانہ،ملک بھر میں یوٹیلیٹی اسٹورز بند۔۔عوام سے سستے راشن کی سہولت بھی چھین لی گئی

نوازشریف پاکستان واپس آئیں گے اور ملک کے چوتھی بار وزیراعظم بنیں گے، لائیو پروگرام میں بڑا دعویٰ کر دیا گیا

نوازشریف پاکستان واپس آئیں گے اور ملک کے چوتھی بار وزیراعظم بنیں گے، لائیو پروگرام میں بڑا دعویٰ کر دیا گیا

خطرناک ترین دفان نے سر اٹھا لیا ۔۔ بارشیں اور برفباری تو کچھ نہیں،آئندہ کچھ دنوں میں کیا  تباہ پھرنےوالی ہے؟محکمہ موسمیات نے خطرناک الرٹ جا

خطرناک ترین دفان نے سر اٹھا لیا ۔۔ بارشیں اور برفباری تو کچھ نہیں،آئندہ کچھ دنوں میں کیا تباہ پھرنےوالی ہے؟محکمہ موسمیات نے خطرناک الرٹ جا

نئی آفت نے پاکستان کو گھیر لیا۔۔ خبر دار گھروں سے باہر نہ نکلیں ،پاکستانیوں کیلئے الرٹ جاری کردیاگیا

نئی آفت نے پاکستان کو گھیر لیا۔۔ خبر دار گھروں سے باہر نہ نکلیں ،پاکستانیوں کیلئے الرٹ جاری کردیاگیا