11:59 am
فتنے کی سرکوبی

فتنے کی سرکوبی

11:59 am

امیرتیمورایک شاندارجنگجواورداناشخص تھا۔اس کی سوانح پڑھ کراحساس ہوتاہے کہ اپنے تمام ترمظالم اورشخصی کمزوریوں کے باوجودوہ ایک غیرمعمولی شخص تھا۔امیرتیمورکامشہورقول ہے کہ کمزوری یاطاقت کوئی الگ شے نہیں۔مخالف کی کمزوریاں کسی شخص کو طاقتوربنادیتی ہیں۔اسی طرح اس کی اپنی کمزوری دشمن کو طاقتوربناتی ہے۔تیمورنے اپنی سوانح میں ایک دلچسپ قصہ لکھا کہ ایک بارمیں نے ایک نہایت حسین لڑکی کواپنی دلہن بنایا۔ شادی کے بعدمیں کوئی سال بھرگھرمیں رہا۔میری زندگی کایہ واحدحصہ ہے جب کسی معرکے میں حصہ نہیں لیا۔ایک دن ناشتہ کرنے کے بعداپنے کمرے میں کھالوں کے نرم بسترپرلیٹا ہواتھا،میری نظردیوارسے لٹکی تلوار پرپڑی۔یہ تلوارمیں نے خاص طورپرکئی دھاتوں کے امتزاج سے بنوائی تھی جوہلکی ہونے کے ساتھ نہایت تیزدھارتھی ۔ مجھے خیال آیاکہ کہیں اسے زنگ نہ لگ گیاہو۔جب اسے اتارکرمیان سے نکالا تومجھے وہ خاصی بھاری لگی۔میں حیران ہوا کہ تلواررکھے رکھے بھاری کیسے ہوگئی؟پھراچانک ہی مجھے احساس ہواکہ میں اتناعرصہ ورزش اورعسکری مشق نہ کرنے سے کمزورہوگیاہوں۔میں نے اسی دن اپنے اہل خانہ کو سمرقند بھیج دیااورلشکرکولے کراگلے معرکے کے لئے روانہ ہوگیا۔ امیرتیمور منگولوں سے نفرت کرتاتھا۔وہ خودکو چنگیزخان سے بڑاسالارگردانتاتھامگروہ منگول قائدکے ایک قول کوہمیشہ دہراتا تھا کہ سپاہی کے سامنے صرف ایک ہی راستہ ہے۔بہادری،جرات اوردلیری کاراستہ، جسے مضبوط عزم ہی سے عبور کیاجاسکتاہے۔
ارضِ وطن میں جاری سیاسی ابتری کی طرف نگاہ دوڑائیں تومعلوم ہوتاہے کہ سیاست میں صبر،حوصلہ اورمعاملہ فہمی جیسی صفات معدوم ہوگئی ہیں اورسیاستدان کے جارحانہ رویوں نے گلی کوچوں تک بارودی سرنگیں بچھاکراپنے اپنے مفادات کی تکمیل کے لئے بربادی کے مناظرتیارکرلئے ہیں۔عمران خان کے وہم وگمان میں نہیں تھاکہ ان کے خلاف عدم اعتمادکی تحریک اس طرح کامیاب ہوجائے گی کہ ان کی اپنی جماعت کے بیشتر اراکین کے علاوہ ان کے اتحادی ان کاساتھ چھوڑجائیں گے بلکہ وہ عوامی جلسوں میں میں یہ دعویٰ کرتے رہے کہ وہ اللہ کاشکراداکرتے ہیں کہ ان کے خلاف یہ تحریک پیش ہوئی اوراب وہ ایک ہی بال سے تمام وکٹیں اڑادیں گے لیکن باوجودان کے یہ تمام دعوے ایک بڑھک کے سوا کچھ ثابت نہ ہوسکے اورپارلیمنٹ میں تحریک عدم اعتمادکی کامیابی کے بعدانہیں جاناپڑالیکن وہ ابھی تک اپنی اس شکست کوتسلیم کرنے کے لئے بالکل تیارنہیں اورملک میںحقیقی آزدی کے نام پرمظاہروں کاپروگرام ترتیب دے چکے ہیں۔اسی سیاسی ابتری کوہمارے دشمن پاکستان کے خلاف استعمال کرنے کے لئے دندنارہے ہیں۔
26اپریل2002 ء کوکراچی یونیورسٹی کے احاطے میں بلوچ انتہا پسند تنظیم بلوچ لبریشن آرمی کے مجیدبریگیڈکی ایک خاتون خودکش حملہ آورشاری بلوچ عرف برمش اپنے جسم سے ایک طاقتوربم باندھ کرچینی مرکزکے قریب اس وین سے جاٹکرائی جس میں تین چینی اساتذہ سمیت کم ازکم چارافراد ہلاک اورچارشدیدزخمی ہوگئے۔یہ پہلی مرتبہ ہے کہ تنظیم کی جانب سے خاتون خودکش حملہ آورکااستعمال کیاگیا۔ کراچی یونیورسٹی حملے میں ملوث خاتون خودکش حملہ آورشاری بلوچ عرف برمش 2014ء میں علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی سے بی ایڈ کی تعلیم مکمل کی جبکہ 2015ء میں بلوچستان یونیورسٹی سے زولوجی میں ایم ایس سی کررکھی تھی۔ بلوچستان کے ضلع تربت کے علاقے نظر آبادکی رہائشی شاری بلوچ ضلع تربت ہی میں شعبہ تعلیم سے بھی وابستہ اورگورنمنٹ گرلزمڈل سکول کلاتک میں استادکے فرائض انجام دے رہی تھی۔ان کے شوہرڈاکٹرہیبتان بشیربلوچ ایک ڈینٹسٹ ہیں۔شاری بلوچ دو بچوں کی ماں تھی اوراس کے دونوں بچے تقریباپانچ سال تک کی عمر کے ہیں۔
شاری بلوچ چاربہنیں اورتین بھائی ہیں اورسب ہی تعلیم یافتہ ہیں۔شاری بلوچ تنظیم کی جانب سے منعقدہ احتجاجی مظاہروں میں رضاکارانہ طورپرحصہ لیتی تھی مگراس کے پاس کسی تنظیم کاکوئی عہدہ نہیں تھا۔ کالعدم تنظیم بلوچ سٹوڈنٹ آرگنائزیشن بی ایس اوآزاد کے ایک رکن کے مطابق شاری بلوچ گزشتہ دوبرسوں سے مجیدبریگیڈ کا حصہ تھی۔اس تنظیم کا دعویٰ ہے کہ مجیدبریگیڈمیں اس وقت کثیرتعداد میں بلوچ خواتین بطورخودکش حملہ آورشامل ہیں۔شاری بلوچ کے رشتہ دارکے مطابق نے شاری کے خاندان میں کوئی بھی شخص جبری گمشدگی یاسکیورٹی اہلکاروں کے ہاتھوں ہلاک نہیں ہوا لہٰذایہ تاثرکہ اس نے ایساکسی ذاتی بدلے کے لئے کیا،درست نہیں۔شاری بلوچ بظاہرایک پرسکون اور خوشگوار زندگی گزاررہی تھی۔بظاہریہ یقین کرنامشکل ہے کہ مذکورہ خاتون ایک خودکش بمبارتھی۔شاری بلوچ کے رشتہ داراوراہل علاقہ کے مطابق ان کے خاندان کے دیگرافرادمختلف سرکاری عہدوں پر فائزہیں جن میں اس کے والداوربھائی شامل ہیں۔ کالعدم تنظیم کے مطابق شاری بلوچ چھ ماہ پہلے بلوچستان کے علاقے کیچ سے کراچی منتقل ہوئی اورڈیڑھ ماہ پہلے بہن کی شادی میں شرکت کے لئے کیچ گئی تھی۔ خاندانی ذرائع اس بارے میں لا علم ہیں کہ شاری بلوچ کب کالعدم تنظیم سے منسلک ہوئی اوراس نے یہ قدم کیوں اٹھایاتاہم اس واقعے کے بعدشاری بلوچ کے شوہربھی اپنی ڈیوٹی سے غائب ہے اوراس کا فون مسلسل بندہے۔
کراچی یونیورسٹی میں خودکش حملہ کرنے والی شاری بلوچ نے یہ اقدام کیوں اٹھایاتاحال کوئی واضح مؤقف سامنے نہیں آیا ہے۔تحقیقاتی ادارے کسی بریک تھروتک تونہیں پہنچے تاہم حکام کاکہناہے کہ تحقیقات اطمینان بخش حدتک جاری ہیں تاہم اس واقعہ کی جڑوں تک پہنچنے کے لئے یہ جانناضروری ہے کہ آخرایک تعلیم یافتہ خاتون جودوکمسن بچیوں کی ماں اورمستحکم مالی پوزیشن کی حامل تھی،جس کاساراخاندان تعلیم یافتہ اورسرکاری ملازمتوں سے استفادہ کررہے ہیں،اس نے یہ راستہ کیوں اختیارکیا؟
 اس حملے کے بعدسے شاری بلوچ کے شوہرڈاکٹرہیبتان بشیر نے اعتراف کیاہے کہ وہ جانتا تھاکہ شاری دوسال سے زائد عرصہ قبل وہ مجیدبرگیڈمیں فدائی کے طورپراپنانام دے چکی تھی،اس فیصلے پر پہنچنے کے بعدجب اس نے اپنی بیوی شاری بلوچ سے دریافت کیاتھاکہ ’’کیایہ ایک شعوری فیصلہ ہے یا جذباتی؟ ‘‘تواس نے کہاکہ’’خودکوقربان کرنے سے بھی کیا کوئی بڑاشعور ہو سکتا ہے‘‘تومیں نے اس کے فیصلے کااحترام کیا۔۔۔۔‘‘شاری بلوچ کے شوہرڈاکٹر ہیبتان بشیر نے اعتراف کیاکہ شاری بلوچ کے اس اقدام سے ایک دوروز قبل اس کی شاری سے ملاقات ہوئی تھی،اس کے علم میں تھاکہ وہ یہ قدم اٹھانے والی ہے لیکن کب اورکہاں،وہ اس سے لاعلم تھا۔ ڈاکٹربلوچ کے مطابق آخری وقت وہ(شاری بلوچ )کہہ رہی تھی کہ اب ہم ابدی طورپرایک دوسرے میں جذب ہونے والے ہیں۔ 
(جاری ہے)

تازہ ترین خبریں

پنجاب اور کے پی میں آج بھی دھند کا راج، موٹر وے مختلف مقامات پر ٹریفک کیلئے بند

پنجاب اور کے پی میں آج بھی دھند کا راج، موٹر وے مختلف مقامات پر ٹریفک کیلئے بند

چینی پھرمہنگی۔۔فی کلوقیمت میں کتنااضافہ ہوگیا،غربت کی چکی میں پسی عوام کےلیے بری خبرآگئی

چینی پھرمہنگی۔۔فی کلوقیمت میں کتنااضافہ ہوگیا،غربت کی چکی میں پسی عوام کےلیے بری خبرآگئی

اکلوتی اولاد کے انتقال کے بعد اہلیہ دماغی مریضہ بن گئیں ۔۔ ان مشہور شخصیات کے بچوں کے ساتھ پیش آئے حادثات جس سے ان کی زندگی بد ل گئی

اکلوتی اولاد کے انتقال کے بعد اہلیہ دماغی مریضہ بن گئیں ۔۔ ان مشہور شخصیات کے بچوں کے ساتھ پیش آئے حادثات جس سے ان کی زندگی بد ل گئی

پیپلزپارٹی نہ ایم کیوایم ۔۔۔کراچی کااگلامیئرکس جماعت سے ہوگا،بڑادعویٰ کردیاگیا

پیپلزپارٹی نہ ایم کیوایم ۔۔۔کراچی کااگلامیئرکس جماعت سے ہوگا،بڑادعویٰ کردیاگیا

پڑھائی تمہارے بس کی نہیں تم کھیتی باڑی کرو، کھیتوں سے مائیکرو سافٹ تک پہنچ جانے والا نوجوان جس نے اپنی زندگی خود بدلی

پڑھائی تمہارے بس کی نہیں تم کھیتی باڑی کرو، کھیتوں سے مائیکرو سافٹ تک پہنچ جانے والا نوجوان جس نے اپنی زندگی خود بدلی

تحریک انصاف کی طرف سے استعفوں کاسلسلہ شروع ،پہل کس نے کردی ،سیاسی میدان میں ہلچل مچادینے والی خبرآگئی

تحریک انصاف کی طرف سے استعفوں کاسلسلہ شروع ،پہل کس نے کردی ،سیاسی میدان میں ہلچل مچادینے والی خبرآگئی

 اس ایک چیز کا روزانہ کھانے سے قبل استعمال آپ کو بیماریوں سے لڑنے کی طاقت کیسے فراہم کرتا ہے؟ جانیں

اس ایک چیز کا روزانہ کھانے سے قبل استعمال آپ کو بیماریوں سے لڑنے کی طاقت کیسے فراہم کرتا ہے؟ جانیں

قبر سے چپٹ کر رو رہی تھی ۔۔ مالک کی وفادار بلی، جو اس کی تدفین کے بعد بھی قبر سے نہ ہٹی

قبر سے چپٹ کر رو رہی تھی ۔۔ مالک کی وفادار بلی، جو اس کی تدفین کے بعد بھی قبر سے نہ ہٹی

جنرل باجوہ کو ایکسٹینشن دینے کا فیصلہ غلط تھا، سب پشیمان ہیں: اسد قیصرنے حیران کن بات کہہ دی

جنرل باجوہ کو ایکسٹینشن دینے کا فیصلہ غلط تھا، سب پشیمان ہیں: اسد قیصرنے حیران کن بات کہہ دی

ارشد شریف قتل کیس : چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے بڑااقدام اٹھالیا

ارشد شریف قتل کیس : چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے بڑااقدام اٹھالیا

آخری وقت میں بھی بیڈ نہیں دیا، اسپتال میں دوسرے مریض کے ساتھ لٹا دیا گیا ۔۔ انتقال سے پہلے افضال احمد نے بولنا کیوں بند کر دیا تھا؟

آخری وقت میں بھی بیڈ نہیں دیا، اسپتال میں دوسرے مریض کے ساتھ لٹا دیا گیا ۔۔ انتقال سے پہلے افضال احمد نے بولنا کیوں بند کر دیا تھا؟

اپوزیشن کی عدم اعتماد اور گورنر راج کی باتیں گیدڑ بھبکیاں ثابت ہوں گی،پرویز الٰہی

اپوزیشن کی عدم اعتماد اور گورنر راج کی باتیں گیدڑ بھبکیاں ثابت ہوں گی،پرویز الٰہی

جوڑے آسمان پر بنتے ہیں، تقدیر نے شادی سے گیارہ سال قبل ہی ان کو ایک تصویر میں کیسے ملا دیا؟ حیرت انگیز اتفاق

جوڑے آسمان پر بنتے ہیں، تقدیر نے شادی سے گیارہ سال قبل ہی ان کو ایک تصویر میں کیسے ملا دیا؟ حیرت انگیز اتفاق

نوجوان ساری عمر جس کو اپنا ہیرو سمجھتا رہا اسی کے بارے میں 40 سال بعد ایسا انکشاف کہ پیروں تلے زمین نکل گئی

نوجوان ساری عمر جس کو اپنا ہیرو سمجھتا رہا اسی کے بارے میں 40 سال بعد ایسا انکشاف کہ پیروں تلے زمین نکل گئی