12:01 pm
امریکی خط پر کمیشن، فوج سے مداخلت کی اپیلیں

امریکی خط پر کمیشن، فوج سے مداخلت کی اپیلیں

12:01 pm

٭امریکی خط کی تحقیقات کے لئے کمیشن کے قیام کا اعلان! پی ٹی آئی نے مسترد کر دیاO آئی ایم ایف کا سابق ملازم، سٹیٹ بینک کا نیا گورنرO 6 مئی، عمران خان اور مریم نواز کے جلسےOعمران کے متعدد خفیہ اکائونٹس ملے ہیں، وزیراطلاعاتO روس سے سستے تیل کا معاہدہ منسوخ، کئی گنا مہنگا خرید لیا، ساری سب سڈیاں ختم، ڈیزل 170 روپے لٹر کے اضافہ کا امکان ہے، وزیرخزانہ مفتاح اسماعیلO فرح خان کو دبئی سے لایا جائے گا، عمران کے دور میں 32 کروڑ سے 89 کروڑ بنا لئے، سرکاری اعلانO ’’فضل الرحمان کو صدر بنائیں گے‘‘ عبدالغفور حیدریO گورنر پنجاب کاہائی کورٹ کے جج کے خلاف ریفرنس بھیجنے کا اعلان۔
٭جمہوریت جو بھی کچھ ہے مگر قومی غیرت، خود داری اور خود مختاری کی کِس ظالمانہ انداز میں دھجیاں اڑائی جا رہی ہیں!! سابق وزیر شیریں مزاری نے اقوام متحدہ کے چار مختلف شعبوں کو چار الگ الگ خطوط میں اپیل کی ہے کہ پاکستان میں مداخلت کر کے موجودہ حکومت کو ختم کیا جائے۔ عمران خان نے ایک متنازعہ امریکی خط کو مسئلہ بنا رکھا ہے کہ اس کی حکومت کو ہٹانے کے لئے امریکہ نے سازش کی ہے اوراب خود عمران خان کی قریبی معتمد وزیر شیریں مزاری اقوام متحدہ کو پاکستان میں مداخلت کی اپیلیں کر رہی ہے۔ عمران خان کا قائم کردہ پنجاب کا گورنر آرمی چیف کو خط لکھ رہا ہے کہ سیاست میں مداخلت کر کے موجودہ حکومت کو ختم کر دیں۔ ایسا ہی خط عمران خان کے للکارے مارنے والے سابق وزیر شیخ رشید نے بھی آرمی چیف کو لکھا ہے کہ اس کی جان کو خطرہ ہے، اس کی حفاظت کی جائے(!!!) اسی شیخ رشید نے واضح اعلان اور اعتراف کیا ہے کہ عمران خان کے لانگ مارچ میں یقینی طور پر خونریزی کا امکان ہے۔
٭دوسری طرف حکومت خود داری اور غیرت وغیرہ کو لپیٹ کر پوری طرح امریکہ کی گود میں بیٹھ گئی ہے، اس کی دو تین مثالیں: عمران خان کی حکومت نے امریکہ کے حکم و سفارشات کو مسترد کر کے روس کا عین اس دن دورہ کیا جس دن روس نے یو کرائن پر چڑھائی کی تھی۔ امریکہ نے عمران خان کو روس جانے پر روکنے کے لئے سخت انتباہ جاری کیا، عمران خان نے اسے نظر انداز کر دیا اور روس جا کر 30 فیصد کم قیمت پر تیل اور گیس خریدنے کا معاہدہ کرلیا۔ یہ دورہ عمران خان کو مہنگا پڑا، جو کچھ ہوا وہ سامنے ہے مگر شہباز شریف کی زیر قیادت صرف 173 ووٹوں کے ساتھ (صرف دو ووٹوں کی اکثریت) قائم ہونے والی، کبھی بھی بحران کا شکار ہونے والی حکومت آتے ہی امریکہ کی گود میں بیٹھ گئی اور اس کے حکم پر اس کے ساتھ سستے تیل اور گیس کا معاہدہ ختم کر کے کئی گنا زیادہ قیمت پر دوسرے ممالک سے تیل اور گیس کی خریداری کے معاہدے کر لئے۔ ایک طرف نئے سرے سے روس کی عداوت مُول لے لی، دوسری طرف عرب ممالک سے تیل گیس کے نئے انتہائی مہنگے اور تباہ کن معاہدوں کے ذریعے ملک کی معیشت کو خطرناک معاشی بحران کی طرف دھکیل دیا ہے۔ سابق حکومت پر جو بھی اعتراضات ہوں مگر مجھے سابق وزیر حماد اظہر کی اس بات سے پورا اتفاق ہے کہ موجودہ حکومت عوام کو بہلانے اور خوش کرنے کے لئے روس کے مقابلہ میں کئی گنا مہنگا تیل اور گیس خرید کر عوام کو مفت قیمت پر فروخت کر رہی ہے۔ یہ سلسلہ چند روز چل سکتا ہے مگر خزانہ اسے زیادہ دیر برداشت نہیں کر سکے گا۔ ان نرخوں پر مستقل خریداری ناممکن ہے، پھر حکومت کو تیل گیس کے نرخوں میں اتنا اضافہ کرنا پڑے گا کہ عوام کچلے جائیں گے۔ بات صرف حماد اظہر کی نہیں خود موجودہ وزیرخزانہ مفتاح اسماعیل نے واضح اعتراف اور اعلان کیا ہے کہ مزید شدید مہنگائی آنے والی ہے، صرف ایک مثال کہ عالمی نرخوں کے مطابق ڈیزل کی فی لٹر قیمت میں 170 روپے (دوبارہ، 170 روپے لٹر) اضافہ ہو سکتا ہے۔
٭کچھ دوسری باتیں، حکومت نے  اور ساتھیوں کے مسلسل واویلا پر امریکی خط کی بنا پر پی ٹی آئی کی حکومت کی برطرفی کا مبینہ سازش کا سراغ لگانے کے لئے ایک سرکاری تحقیقاتی کمیشن کے قیام کے پرانے ڈھونگ کا راستہ اپنایا ہے۔ ملک میں اب تک بے شمار ایسے کمیشن بنے اور غائب ہو گئے۔ نمایاں مثال سابق چیف جسٹس حمود الرحمان کی زیر قیادت مشرقی پاکستان کی علیحدگی کے اسباب دریافت کرنے والے کمیشن کا قیام تھا۔ اسے حالات کے دبائو پر اس وقت کے صدر پاکستان ذوالفقار علی بھٹو نے قائم کیا تھا۔ کمیشن کے ارکان کے ساتھ تقریباً دو سال نہائت محنت سے 200 سے زیادہ فوجی و سول افسروں (یحییٰ خاں اور بھٹو سمیت) اور سیاست دانوں کے بیانات ریکارڈ کئے، پھرایک سال ہزاروں صفحات کے ریکارڈ پر مبنی طویل فیصلہ لکھنے میں لگ گیا…اور…اور اس رپورٹ میں شیخ مجیب الرحمان کے علاوہ ذوالفقار علی بھٹو کو بھی برابر کا ’ملزم‘ قرار دیا۔ اس رپورٹ کی چار کاپیاں تیار کی گئیں۔ بھٹو رپورٹ کو پڑھ کر چکرا گیا۔ تمام رپورٹیں ضبط کرکے سربمہر کر دیں اور ان کی اشاعت پر پابندی لگا دی۔ چند برسوں کے بعد اچانک یہ ساری رپورٹ بھارت کے انگریزی اخبار ہندوستان ٹائمز (روزانہ اشاعت اب 30 لاکھ) میں قسط وار چھپ گئی۔ اب اس کا اُردو ترجمہ بھی مارکیٹ میں عام مل رہا ہے۔ ایک ادبی جریدہ ’الحمرا‘ میں قسط وار چھپ چکی ہے۔ اس کے بعد اور بھی مختلف کمیشن آئے۔ کسی کا کبھی کوئی منطقی نتیجہ سامنے نہ آیا۔ اب شہباز شریف نے بطور وزیراعظم عمران خان  کے الزام والے امریکی خط کے بارے میں مضحکہ خیز کمیشن قائم کرنے کا اعلان کیا ہے۔ اول تو پی ٹی آئی نے اسے تسلیم کرنے سے ہی انکار کر دیا ہے اور مطالبہ کیا ہے کہ سپریم کورٹ کوئی عدالتی کمیشن قائم کرے۔ بالفرض ایسا کمیشن بن بھی گیا تو اس میں امریکہ، اس کی وزارت خارجہ، وزیرخارجہ، وزارت دفاع اور خود صدر بائیڈن کو اہم ترین فریق بنانا پڑے گا۔ پاکستان کی سلامتی کونسل کو بھی گواہ بننا ہو گا اس میں تینوں افواج کے سربراہان کے علاوہ درجنوں بلکہ بیسیوں دوسرے افراد کو بھی بلانا ہو گا۔ لمبی بات ہے۔ یہ قطعی ناممکن ہے؟ کیا امریکی صدر، وزرا اور اعلیٰ فوجی حکام کمیشن کے روبرو پیش ہو سکیں گے؟ بس ایک ڈھونگ رچانا ہے۔ سو رچایا جا رہا ہے۔ نہ نومن تیل ہو گا نہ رادھا ناچے گی! (رادھا ہندواوتار کرشن مہاراج کی رقاص محبوبہ تھی۔ صرف کرشن کے سامنے ناچتی تھی۔ ایک بار علاقے کے مہاراجہ نے اپنی سالگرہ پر ناچنے کا حکم دیا۔ وہ ناچنا قبول نہیں کر سکتی تھی۔ ایک سیانے کی ترکیب پسند آئی۔ مہاراجہ سے کہا کہ سالگرہ پر پورے ملک کی ہر بستی کے ہر مکان پر لاکھوں دیئے جلانے پر رقص ہو سکتا ہے۔ اس کے لئے 9 من تیل چاہئے۔ مہا راجہ یہ مطالبہ پورا نہ کر سکا اور رقص بچ گیا۔
٭آخر میں گورنر پنجاب کا تمسخرانہ اعلان کہ ہائی کورٹ کے چیف جج نے حمزہ شہباز کو اسمبلی کے ذریعے وزیراعلیٰ بنوایا ہے اس کے خلاف گورنر کی طرف سے سپریم جوڈیشل کونسل میں ریفرنس پیش کیا جائے گا۔ گورنر صاحب! کبھی آئین پڑھ لیا کریں۔ ایسا ریفرنس صرف صدر دائر کر سکتا ہے! اور صدر نے اس سے پہلے جسٹس فائز عیسیٰ کے خلاف جو مضحکہ خیز ریفرنس دائر کیا تھا اسے تو خود عمران خان  غلط تسلیم کر چکا ہے! گورنر تو محض ایک عام سرکاری افسر ہوتا ہے۔ اس کی کیا حیثیت کہ ہائی کورٹ کے جج پر ہاتھ ڈال سکے؟
 

تازہ ترین خبریں

سینٹرل سلیکشن بورڈ کا اجلاس 10اگست کوکتنے افسران کو ترقی دی جائیگی،بڑی خبرآگئی

سینٹرل سلیکشن بورڈ کا اجلاس 10اگست کوکتنے افسران کو ترقی دی جائیگی،بڑی خبرآگئی

عوام ہوجائیں تیار۔۔اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے بری خبرسنادی

عوام ہوجائیں تیار۔۔اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے بری خبرسنادی

پاور سیکٹر میں پی ٹی آئی حکومت کا اربوں روپے کا گھپلا بے نقاب

پاور سیکٹر میں پی ٹی آئی حکومت کا اربوں روپے کا گھپلا بے نقاب

لیگی رہنما نذیر چوہان کی ضمانت منظور، پی ٹی آئی رکن اسمبلی نے گلے لگالیا

لیگی رہنما نذیر چوہان کی ضمانت منظور، پی ٹی آئی رکن اسمبلی نے گلے لگالیا

پاکستان کے سب سے بڑے شہرمیں اہم ترین حکومتی شخصیت کوڈاکوئوں نے لوٹ لیا

پاکستان کے سب سے بڑے شہرمیں اہم ترین حکومتی شخصیت کوڈاکوئوں نے لوٹ لیا

پنجاب حکومت کے حلف لینے والے 21 وزرا کو قلم دان تفویض

پنجاب حکومت کے حلف لینے والے 21 وزرا کو قلم دان تفویض

دانیہ کو کچھ ہوا تو ذمہ دار کون ہوگا،دانیہ شاہ کی والدہ نے بڑااعلان کردیا

دانیہ کو کچھ ہوا تو ذمہ دار کون ہوگا،دانیہ شاہ کی والدہ نے بڑااعلان کردیا

سعودی عرب ترقی کی راہ پر گامزن، بڑی خبر آگئی

سعودی عرب ترقی کی راہ پر گامزن، بڑی خبر آگئی

پی ٹی آئی پر پابندی؟ قانونی ٹیم کا حکومت کو محتاط رہنے کا مشورہ

پی ٹی آئی پر پابندی؟ قانونی ٹیم کا حکومت کو محتاط رہنے کا مشورہ

پاکستان کے سب سے بڑے شہرمیں اہم ترین حکومتی شخصیت کوڈاکوئوں نے لوٹ لیا

پاکستان کے سب سے بڑے شہرمیں اہم ترین حکومتی شخصیت کوڈاکوئوں نے لوٹ لیا

10 سال سے پنسل پر دھاگوں سے قرآن بُن رہا ہوں۔۔پولیس والے نے قرآن مجید سے محبت کی انوکھی مثال قائم کردی

10 سال سے پنسل پر دھاگوں سے قرآن بُن رہا ہوں۔۔پولیس والے نے قرآن مجید سے محبت کی انوکھی مثال قائم کردی

وفاق نے وزیراعلیٰ پرویز الہٰی کو خط لکھ دیا

وفاق نے وزیراعلیٰ پرویز الہٰی کو خط لکھ دیا

ایف آئی اے نے اہم شخصیت کو گرفتار کرلیا

ایف آئی اے نے اہم شخصیت کو گرفتار کرلیا

سی اے اے کے ساتھ تنازع، پی ایس او کا تمام ہوائی اڈوں پر ایندھن کی سہولت روکنے کا امکان

سی اے اے کے ساتھ تنازع، پی ایس او کا تمام ہوائی اڈوں پر ایندھن کی سہولت روکنے کا امکان