12:16 pm
متوازی نئے لیگی وژن و فکر کی طرف واپسی

متوازی نئے لیگی وژن و فکر کی طرف واپسی

12:16 pm

میں تو ابتدائے زندگی سے ہی علم و فکر کی دنیا کا آدمی تھا۔ پھر حالات مجھے دھکیل کر ایسی مسلم لیگی سیاست میں لے آئے جس کا صدر محمد خان جونیجو تھا‘ مگر پارلیمنٹ میں
میں تو ابتدائے زندگی سے ہی علم و فکر کی دنیا کا آدمی تھا۔ پھر حالات مجھے دھکیل کر ایسی مسلم لیگی سیاست میں لے آئے جس کا صدر محمد خان جونیجو تھا‘ مگر پارلیمنٹ میں عملاً چلے جانا ممکن نہ تھا۔ جب پی ڈی ایف میں تھا‘ تو دل میں خواہش پیدا ہوئی کہ علم و فکر کی دنیا میں واپس لوٹ جائوں۔ وزیراعظم بے نظیر بھٹو اور چوہدری حامد ناصر چٹھہ نے باہمی طور پر طے کیا‘ کہ مجھے چیئرمین اسلامی نظریاتی کونسل بنا دیا جائے۔ احمد نگر سے مجھے چوہدری حامد ناصر چٹھہ نے فون کرکے اطلاع دی اور خاموش رہنے کو کہا مگر اللہ کو منظور تھا کہ میں علم و فکر کی دنیا میں واپس نہ لوٹ سکوں لہٰذا اقبال احمد خان سامنے آگئے۔
میں نے جنرل پرویز مشرف کے عہد انقلاب میں فعال کالم نگار کے طور پر تبدیلی کے حق میں کالم لکھے تھے‘ جنرل راشد قریشی نے چائے پیش کرتے ہوئے پوچھا کیا چاہتے ہیں؟ میں نے کہا پروٹوکول نہیں صرف کالم نگاری اور بس۔ اس سے بہت پہلے احسن اقبال نے اور اس سے ذرا پہلے میر ظفر اللہ جمالی نے کوشش اور خواہش کی کہ مجھے  اسلامی نظریاتی کونسل دے دی جائے۔ وزیراعظم نواز شریف سے احسن اقبال نے یہ اس لئے آسانی سے منوالیا کہ ناشتے کی میز پر نواز شریف کو سینیٹر میر ظفر اللہ جما لی بھی یہ بات کہہ چکے تھے ‘ مگر اللہ تعالیٰ کو اب بھی میری علم و فکر وادی میں واپسی منظور  نہ تھی لہٰذا احسن اقبال کی کوشش کے باوجود راجہ ظفر الحق اس معاملے میں دیوار چین بن گئے۔ مگر جب میر ظفر اللہ جمالی خود وزیراعظم بنے تو انہوں نے مجھے چیئرمین بناکر سمری صدر جنرل مشر ف کو بھجوا دی۔ مگر صدر مشرف کے ارد گرد کے افراد نے شور مچا دیا کہ پروفیسر شہباز شریف کو ہیرو بناتے کالم لکھتا ہے لہٰذا اسے سرکاری پروٹوکول نہیں لینے دیا جائے گا۔ میں خاموش اور یہ سارا کچھ دیکھتا رہا۔ تاہم  میں نے ردعمل میں نہ آنے کا فیصلہ کیا حالانکہ میں بھی ان لوگوں میں سے تھا جنہوں نے میاں اظہر اور مسلم لیگیوں کو اکسایا تھا کہ وہ نئی مسلم لیگ بنائیں۔ فو ج سے تعلقات مضبوط بنائیں۔ ایک دن بغیر شناسائی صبح9 بجے ازخود چوہدری پرویز الٰہی سے جاکر ملا‘ اسلام آباد والے گھر میں‘ یہ کہا راجہ ظفر الحق سے کیوں ملتے ہو؟ اقتدار سامنے ہے‘ نئی مسلم لیگ کا تصور میں لیے پھرتا ہوں۔ نواز کو چھوڑو‘ جنرلز کی حمایت کرو‘ اقتدار پائو گے  ‘ اور یوں چوہدری پھر کھل کر سامنے آگئے مگر میں پھر عملاً پیچھے رہ گیا‘ اب سچ مچ جو نئی مسلم لیگ بن رہی تھی‘  مشاہد حسین ‘ بار بار کہتے رہے اس کا منصب لے لو‘ میں نہ نہ کہتا رہا۔ پھر سلیم سیف اللہ سمجھاتے رہے کہ منصب لے لو۔
مگر میں مسکرا کر انکار کرتارہا۔ میں چٹھہ سے کبھی کبھی ناراض ہو جاتا تھا مگر انہوں نے کوشش کی کہ مجھے سینیٹر بنوا دیا جائے۔  صدر آصف زدار ی کو اخلاقی شکست دینے کے لئے تجویز ہوا  د وستوں میں کہ پروفیسر کو اسلام آباد میں مشاہد حسین سید اور انور سیف اللہ کے مقابل سامنے لایا جائے۔ چٹھہ ذاتی طور پر دبائو ڈالتا رہا مگر میں مصلے پر بیٹھا استخارے کرتا رہا اور بالآخر مشاہد کو پیغام بھیج دیا تم مسلم لیگی ہو ‘ میں بھی‘ میں تمہارے مقابل نہیں آرہا لہٰذا تم بلامقابلہ سینیٹر بن جائو گے اور چٹھہ مجھ سے روٹھ گیا۔
خدا کی شان‘ پرویز رشید سے نظریاتی اختلاف کے باوجود مجھے اس سے محبت رہی ہے کہ وہ سیلف میڈ بائیں بازو کا ہے۔ اس نے کوشش کی کہ مجھے بطور ممبر نظریاتی کونسل میں لایا جائے کہ وہ عملاً اس وقت وزیر قانون تھا‘ بیرسٹر ظفر اللہ خان نے مجھے فون کیا کہ اسنا د تعلیم بھجوائیں۔ میں نے بھجوا دیں مگر اچانک نواز شریف چلے گئے اور شاہد خاقان وزیراعظم بن گئے‘  خورشید ندیم جو بیرسٹر ظفر اللہ خان کے ساتھ پروگرام کرتے تھے‘ انہوں نے مجھے بتایا کہ تمہارا نام تو لسٹ میں تھا مگر پھر کیوں نکال کر پیر آف دیول شریف کا نام آگیا؟ میں نے۔ صرف اتنا کہا شاہد خاقان عباسی کو ووٹوں کی ضرورت ہوتی ہے میری نہیں۔
اب خدا کی شان دیکھیں وہی شخص ملک کا وزیراعظم ہے جسے کبھی  ’’نئی امید‘‘ اور نیا ’’مرکز امید‘‘ جامد فکر کے نواز شریف کی جگہ متحرک و فعال بتا کر متبادل قیادت کا شہباز شریف ‘ دھڑا دھڑ کالم لکھتا تھا۔ ایک قومی اخبار کے ایڈیٹر کی اجازت سے یہ کالم ان کے اخبار میں شائع ہوتے تھے یا اوصاف میں۔ میں نے کتنی ہی زیادہ محنت کی اس شخص کے لئے ‘صرف اس شخص کو واپس لانے کے لئے ‘ نیا وزیر اعلیٰ پنجاب بنوانے کے لئے؟میں نے کتنی فکری کاوشیں کیں؟ جنرلز کو بھی صرف اس شخص کی خاطر ناراض کیا   حالانکہ اس سے میری صرف ایک ملاقات  تھی اور وہ بھی  سرور  پیلس جدہ میںشام 19 جنوری2003 ء کو۔ آج وہ ماشاء اللہ ملک کا ایسا وزیراعظم ہے جسے اسٹیبلشمنٹ نے خود یہ منصب بخشا ہے اور اس کے بیٹے کو خود وزیر اعلیٰ پنجاب بنوایا ہے۔ مگر میں آج اس ماضی کے محبوب اور معشوق کے ساتھ ہرگز نہیں ہوں میں اسے اصل‘ حقیقی خوشبو دینے والا گلاب کا پھول ماننے سے انکار کرتے ہوئے اسے کاغذی پھول کی کاغذی لیگ کا صدر اور وزیراعظم کہتا ہوں۔ اب میں  کبھی بھی علم و فکر کی وادی میں  واپس جاکر عملی سیاست سے بھاگ جانے کی کوشش نہیں کروں گا بلکہ انشاء اللہ فکری طور پر نئی حقیقی مسلم لیگ کے تصور پر مبنی کالموں کے ذریعے خود اسے ‘ اس کے ناکارہ مسلم لیگی تشخص کو ‘ قارونی خزانوں پر مبنی موجودہ اقتدار کو ریت کا ڈھیر بنانے کی فکری روش اپنائوں گا۔ بڑھاپے میں شائد  مجھے حقیقی مسلم لیگی قوم پرستانہ تصور کو پھر سے اجاگر کرنا ہوگا۔ پھر سے وہی فکری سیاسی جدوجہد کرنا ہوگی جو جونیجو کی وفات کے بعد میں نے چوہدری حامد ناصر چٹھہ کے ہمرکاب ہوکر نواز شریف مخالف اپنائی تھی۔ اہل دعا‘ اہل دل‘ میرے ناتواں جسم میں مفقود توانائی کی واپسی کی  دعا فرمائیں۔ چمن اجڑ چکا ہے۔ دیکھتے ہیں  کہ یہ ناتواں جسم‘ کمزور صحت رکھتا مسلم لیگ فکر کا نظریاتی‘ حامل کہاں تک تنہا‘ متبادل مسلم لیگی وژن کو سامنے لاسکتا ہے کہ میں تو صرف جگنو ہوں۔
میرا عمران خان سے ماضی میں کبھی ذاتی تعلق تھا نہ مستقبل میں ہوگا۔ میں کبھی بھی  تحریک انصاف کا آدمی تھانہ کبھی ہوسکتاہوں۔ مگر میں متوازی‘ متبادل مسلم لیگی آواز کل بھی تھا آج بھی  ہوں۔ پہلے کچھ مواقع سامنے آنے پر خود پیچھے  ہٹ جاتا تھا مگر اب میں ازخود سامنے آرہا ہوں‘ شریف اشرافیہ کے ایسے غیر اخلاقی متکبر لیگی اتحاد اقتدار کے مدمقابل جو میری نظر میں محض کاغذی پھول ہیں اور قارونی دولت کی زرخرید سیاست و حمایت ہے۔
کیسا دلچسپ معاملہ ہے کہ جب میں جدہ میں مقیم شہباز شریف کی واپسی کے لئے حکمران جرنیلوں پر اپنے کالموں کے ذریعے دبائو ڈالے ہوئے تھا‘ تو میری حالت آج کی طرح بہت کمزور ہی تھی۔ لاہور سے لیگی افراد مجھے اکثر فون پر شکریہ ادا کرتے کہ میں ان کے لئے شہباز شریف کو متبادل‘ نئی امید اور نئی زندگی کی شمع جلا رہا ہوں۔ مگر کسی کو کیاپتہ کہ میں یہ شمع‘ یہ نئی امید‘ یہ نئی لیگ بنیاد ‘ اپنے خو ن جگر سے ‘ دل و دماغ کی عرق ریزی سے اور کتنے ہی اللہ سے مدد  و رہنمائی مانگتے استخاروں کے سبب‘ نوافل و اذکار کے سبب جلا رہا تھا اور میرے افراد خانہ کس کرب ناک زندگی میں دن رات ایک کیے ہوئے تھے۔ اللہ تعالیٰ ہی قادر مطلق ہے وہی جانتا ہے کہ مجھے بار بار کی خواہش کے باوجود کیوں واپس وادی علم و فکر میں نہ جانے دیا تھا۔ انشاء اللہ نئی حقیقی قوم پرست مسلم لیگ کو نئے انداز‘ نئے اطوار کے ساتھ ‘ پہلے فکری طور پر تعمیر کریں گے پھر بلڈنگ بھی بن

تازہ ترین خبریں

عمران خان کی نااہلی کا فیصلہ چیف الیکشن کمشنر کو موصول ہوگیا، نااہلی پکی ، کپتان نے فائنل اننگز کھیلنےکیلئے کمر کس لی

عمران خان کی نااہلی کا فیصلہ چیف الیکشن کمشنر کو موصول ہوگیا، نااہلی پکی ، کپتان نے فائنل اننگز کھیلنےکیلئے کمر کس لی

’’استاد پھر استاد ہوتا ہے ‘‘

’’استاد پھر استاد ہوتا ہے ‘‘

اصل خبرتو اب سامنے آئی ، نواز شریف پاکستان واپس کیوں آرہے ہیں ؟ جاوید لطیف نے بتا دیا

اصل خبرتو اب سامنے آئی ، نواز شریف پاکستان واپس کیوں آرہے ہیں ؟ جاوید لطیف نے بتا دیا

 آنکھیں بے انتہا طاقتور! نبی کریم ﷺ نے پاکستان میں ملنے انتہائی سستی مگر بے حد فائدہ مند سبزی حضرت علی ؓ کو کھانے کا حکم دیا

آنکھیں بے انتہا طاقتور! نبی کریم ﷺ نے پاکستان میں ملنے انتہائی سستی مگر بے حد فائدہ مند سبزی حضرت علی ؓ کو کھانے کا حکم دیا

’’یہ تو میری منہ بولی بہن ہے ‘‘

’’یہ تو میری منہ بولی بہن ہے ‘‘

اسلام آباد کا گھیراؤ۔۔۔ تحریک انصاف کی شہر اقتدار کو چاروں طرف سے بند کرنے کی دھمکی

اسلام آباد کا گھیراؤ۔۔۔ تحریک انصاف کی شہر اقتدار کو چاروں طرف سے بند کرنے کی دھمکی

پٹرول مہنگا گاڑیاں سستی ۔۔ قیمتوں میں بڑی کمی۔ ۔۔ خریداروں کاشورومز پررش۔۔ پاکستانیوں کیلئے بڑی خوشخبری

پٹرول مہنگا گاڑیاں سستی ۔۔ قیمتوں میں بڑی کمی۔ ۔۔ خریداروں کاشورومز پررش۔۔ پاکستانیوں کیلئے بڑی خوشخبری

بڑی خبر۔۔۔وزیر اعظم شہباز شریف نےملک میں ہنگامی بنیادوں پر بڑافیصلہ کر لیا

بڑی خبر۔۔۔وزیر اعظم شہباز شریف نےملک میں ہنگامی بنیادوں پر بڑافیصلہ کر لیا

ڈالر کی قیمت کی گیئر لگ گئے

ڈالر کی قیمت کی گیئر لگ گئے

شام کی بڑی خبر ، ہر پندرہ دن بعد پٹرول کی قیمت بڑھانے والے مفتاح اسماعیل نے عوام کو ایسی خوشخبری سنا دی کہ پاکستانی جھوم اٹھے

شام کی بڑی خبر ، ہر پندرہ دن بعد پٹرول کی قیمت بڑھانے والے مفتاح اسماعیل نے عوام کو ایسی خوشخبری سنا دی کہ پاکستانی جھوم اٹھے

پٹرول کی قیمت بڑھانےپر مریم نواز اور نواز شریف کے بعد عظمیٰ بخاری کے بھی مفتاح اسماعیل پر طنزیہ وار

پٹرول کی قیمت بڑھانےپر مریم نواز اور نواز شریف کے بعد عظمیٰ بخاری کے بھی مفتاح اسماعیل پر طنزیہ وار

آئی ایم ایف کی شرط پربہت بڑی پابندی ختم ہو گئی، عوام کیلئے بڑی خوشخبری

آئی ایم ایف کی شرط پربہت بڑی پابندی ختم ہو گئی، عوام کیلئے بڑی خوشخبری

کپتان کا دورہ کراچی بھی ملتوی اور کل ہونے والا جلسہ بھی منسوخ ہو گیا ۔۔۔ وجہ کیا رہی۔۔۔۔

کپتان کا دورہ کراچی بھی ملتوی اور کل ہونے والا جلسہ بھی منسوخ ہو گیا ۔۔۔ وجہ کیا رہی۔۔۔۔

پاکستانی گانا چین کے سکولوں میں بھی گائے جانے لگے۔۔۔چینی ٹیچر نے کلاس میں کونسا پاکستانی گا ناخوب صورت انداز میں گنگنا کر سب کو حیران کر دیا

پاکستانی گانا چین کے سکولوں میں بھی گائے جانے لگے۔۔۔چینی ٹیچر نے کلاس میں کونسا پاکستانی گا ناخوب صورت انداز میں گنگنا کر سب کو حیران کر دیا