01:04 pm
ضمنی و بلدیاتی انتخابات کے لئے فوج طلب

ضمنی و بلدیاتی انتخابات کے لئے فوج طلب

01:04 pm

٭پنجاب سندھ ضمنی انتخابات میں فوج طلب O سری لنکا، دیوالیہ، پٹرول ختم، دو ہفتے کے لئے ہر قسم کا کاروبار آمدورفت بندO صدر پاکستان: احتساب کے بعد نیب کا ترمیمی بل بھی واپسO ڈالر 215 روپے، خطرناک صورت حالO پاکستان، طوفانی بارشیں، بھارت میں 30 افراد ہلاکO 30... رکنی سعودی تاجروں کا دورہO بلوچستان اسمبلی بجٹ اجلاس وزیراعلیٰ کی عدم حاضری اجلاس ملتوی O وزیراعظم، مقدمات میں حاضری مُستقل معافOآئی ایم ایف پروگرام بحالO سندھ حکومت، اپوزیشن پارٹیاں، بلدیاتی انتخابات کی مخالفتO بھارت، فوجی بھرتی کے خلاف ہنگامے، 600 ٹرینیں بند، کِثیر گرفتاریاں O عمران خان کی جان کو خطرہ، دہشت گرد نے راولپنڈی میں گھر لے لیا!! سی ٹی ڈی کی رپورٹ۔
٭الیکشن کمیشن نے پنجاب اور سندھ میں بلدیاتی ضمنی انتخابات کے لئے فوج طلب کر لی ہے۔ یہ کوئی نئی بات نہیں۔ انتخابات کے مواقع پر فوج ہمیشہ طلب کی جاتی ہے۔ لاکھوں، کروڑوں ووٹروں سے پولیس نہیں نمٹ سکتی۔ کراچی میں چند روز قبل ایک ضمنی الیکشن کے موقع پرجو خونریز فسادات ہوئے اور بدامنی پھیلی، خود پولیس والے بھی زخمی ہو گئے، اس کے پیش نظر فوج کو بلانا ضروری ہو گیا ہے مگر تحریک انصاف نے عجیب مسئلہ بنا رکھا ہے کہ اس کی قیادت الیکشن کمشن اور انتخابات میں فوج کی موجودگی کو قبول نہیں کرتی تو پھر انتخابات کیسے ہوں گے، کون کرائے گا؟ یہی نہیں، تحریک انصاف ایک طرف اقتدار سے اپنی محرومی کو فوج کے ذمے لگا رہی ہے، دوسری طرف اسی فوج سے مطالبہ کر رہی ہے کہ موجودہ حکومت کو فارغ کر کے انتخابات کرائے! ایسے مطالبات محض سیاسی ہوتے ہیں ورنہ یہ تو بتایاجائے کہ انتخابات کرانے کے لئے کیا اقوام متحدہ یا نیٹوکی ٹیمیں آئیں گی؟ پاکستان کے انتخابات میں نصف سے زیادہ آبادی کے کروڑوں ووٹر ووٹ ڈالتے ہیں، انہیں کیسے ہینڈل کیا جا سکے گا؟ نعرے لگانے کی بات اور ہے۔ اسی الیکشن کمیشن اور ’’کسی غیر مرئی قوت‘‘ نے تحریک انصاف کو حکومت دلائی۔ عمران خان نے کنٹینر پر کھڑے ہو کر نعرہ لگایا کہ فلاں دن رات کے وقت امپائر کی انگلی اُٹھ جائے گی یعنی ن لیگ کی حکومت آئوٹ، تحریک انصاف اِن!!۔ اب تخت سے اتر کر تختے پر آئے ہیں تو صبح شام شور مچایا جا رہا ہے ’’مجھے کیوں نکالا‘‘ یہی نعرہ نواز شریف نے لگانا شروع کیا، وہ تو ’’رِزق‘‘ کے چند لقمے مل جانے پر خاموش ہو گئے اور انہیں تخت سے دھکیلنے والا اب خود نعرہ زن ہے کہ ’’مجھے کیوں نکالا؟‘‘ طُرفہ تماشا کہ اسی فوج سے اپیلیں کی جا رہی ہیںکہ شہباز شریف کی حکومت کو ہٹا کر نئے انتخابات کرائے جائیں! ظاہر کیا جا رہا ہے کہ کسی طرف سے انتخابات میں دو تہائی کامیابی کی ضمانت مل چکی ہو گی مگر عالم یہ ہے کہ ڈسکہ اور نوشہرہ کے ضمنی انتخابات بری طرح ہارنے کے بعد اب کراچی کے ضمنی انتخابات میں حصہ ہی نہیں لیا۔ ’’گھر میں نہیں دانے، اماں چلیں بُھنانے‘‘!! اب دن کی روشنی کی بجائے رات کے اندھیرے میں اپنے کارکنوں سے مظاہرے!! تحریک انصاف بلا شبہ اب بھی ملک کی بہت طاقت ور اور بااثر جماعت ہے، اسے دانش مندانہ طور پر منظم کیا جائے، ہوش مندی اور توازن کے ساتھ قیادت کی جائے تو بڑے موثر انداز میں آگے بڑھ سکتی ہے! مگر توازن؟؟۔ ہر روز اٹھتے بیٹھتے سرعام الیکشن کمیشن اور فوج کے خلاف تقریریں!! خان صاحب!! ملک بھر میں اسمبلیوں کی 1110 نشستوں کا ایک ایک کر کے جائزہ لیں، کوئی پارٹی بھی دو تہائی یا بھاری اکثریت تو کیا، سنگل پارٹی کی حیثیت سے قومی اسمبلی کی محض 172 سادہ نشستیں حاصل کرنے کی پوزیشن میں دکھائی نہیں دے رہی! بلکہ ممکن ہے کہ پارٹیاں پہلے والی تعداد بھی کم کر بیٹھیں!! ٭صدر مملکت عارف علوی (ماہر دندان ساز) کو شہباز حکومت کی طرف سے پارلیمنٹ کے منظور کردہ احتساب اورنیب کے دو ترمیمی بل صدارتی دستخطوں کے لئے بھیجے گئے۔ صدر صاحب نے آئین کا سہارا لے کر اپنے اختیارات کے تحت ان دونوں بلوں کو نظر ثانی کے لئے حکومت کو واپس بھیج دیا۔ یہ محض ایک اختیار کی نمائش تھی ورنہ ووہی بل نظرثانی کے بعد صدر کے دستخطوںکے بغیر خود بخود قانون بن جائیں گے۔ اب تک بن بھی گئے ہوں! پھر صدر صاحب کے اس ’کارِ بے خیر‘ سے کیا حاصل ہوا؟؟ صدر عارف علوی تحریک انصاف میں عمران خان کے قریبی ساتھی رہے ہیں، کراچی میں ان کا ایک بیرونی فرم کے تعاون سے چلنے والا دانتوں کا اعلیٰ معیار کا کلینک چل رہا ہے۔ دانت کا مسئلہ حل ہونے میں مہینوں لگ جاتے ہیں، ہر پیشی پر بھاری فیس!! بُری بات کہ بات دوسری طرف چلی گئی! مسئلہ تو وفاداری کا ہے۔ وفاداری اور وہ بھی بشرط استواری!! ’’ہم نے تو وفاداری کی رسمیں نبھا دیں ساری…قدموں پہ دل، دماغ اور سر رکھ دیئے!‘‘… زندہ باد جناب صدر صاحب! ٭پہلے شدید خشک سالی کی شکائت کرتے تھے (’خشک سالی‘ کی اصطلاح تبدیل ہونی چاہئے) اب طوفانی بارشوں اور سیلاب سے بچائو کی اپیلیں کی جا رہی ہیں!! قدرت کا اپنا نظام ہے۔بہت پہلے زمین پر تیل سے چلنے والی گاڑیاں اور طیارے نہیں ہوتے تھے، اب کروڑوں، اربوں، موٹر کاریں، موٹر سائیکل اور روزانہ ہزاروں طیارے براہ راست فضا کو شدید آلودہ کر رہے ہیں۔ گاڑیوں کی تعداد بڑھتی جا رہی ہے ان کے باقاعدہ لائسنس جاری ہوتے ہیں، ساتھ ہی فضائی آلودگی کارونا بھی رویا جاتا ہے۔ پھر قدرت مشتعل کیوں نہ ہو؟؟ ہماری سرکاری دیانت داری کا عالم کہ سگریٹ کی ہر ڈبیا پر لکھا ہوتا ہے ’’تمباکو نوشی صحت کے لئے مُہلک ہے‘‘ اور پھر ان سگریٹوں کو کھلے عام فروخت کی جانے کی اجازت بھی دے دی جاتی ہے!! زہر پلا کر زہرکے خلاف باتیں!! طُرفہ تماشا! ٭فیس بک پر ایک عزیز نے مشہور جرمن سکالر خاتون این میری شِمل کا بڑی محبت سے ذکرکیا ہے۔ این میری شمل بہت بڑی عالم خاتون تھیں، انگریزی، جرمن، فارسی، عربی اور اُردو کی زبان و ادب پر عبور رکھنے والی عظیم خاتون تھیں۔ اسلامی تہذیب و تحقیق پر ڈاکٹریٹ کی ڈگری حاصل کی اُردو میں اقبالیات اور غالبیات پر گہری تحقیق کی۔ پاکستان میں آ کر نہائت صاف، شُستہ زبان میںلیکچر دیئے۔ میں نے بہت سے لیکچر سنے۔ این میری شمل 7 اپریل 1922ء کو جرمنی میں پیدا ہوئیں اور 26 جنوری 2003ء کو 82 برس کی عمر میں جرمنی میں ہی وفات پائی۔ جنرل ضیاء الحق کے دور میں بہت دفعہ پاکستان آئیں انہیں حکومت پاکستان نے ’’ستارہ امتیاز‘‘ پھر پاکستان کا سب سے بڑا سول علمی ادبی ایوارڈ ’’ہلال پاکستان‘‘ دیا!! ضیاء الحق کے دور میں لاہور میں نہر پر مال روڈ والے پل سے لے کر جیل روڈ کے پل تک ایک طرف کنارے کی سڑک کا نام این میری شِمل روڈ اور دوسرے کنارے کی سڑک کو گوئٹے روڈ کا نام دیا گیا۔ دونوں سڑکوں پر ان دو بڑے ناموں کی تختیاں لگ گئیں۔ این میری شمل نے اپنے ہاتھوں سے اپنی سڑک کا فیتہ کاٹا…اور اب ذرا دل تھام کر پڑھئے۔ بعد میں آنے والی ایک حکومت نے یہ دونوں تختیاں اُتروا دیں اور ان دونوں کے نام غائب کر دیئے گئے۔ میں نے بہت دفعہ احتجاج کیا۔ کوئی فرق نہ پڑا۔ ایک بڑے افسر نے رعونت کے ساتھ کہا کہ غیر ملکی افراد کی پلیٹیں نہیں لگائی جا سکتیں۔ میں نے کہا کہ شمل نے اسلامی تہذیب پر بہت عالمانہ تحقیق کی اور ڈاکٹری کی ڈگری حاصل کی تھی اور یہ کہ ہماری تمام یونیورسٹیوں میں ارسطو، افلاطون، سقراط، بقراط، نٹشے اور گوئٹے پڑھائے جا رہے ہیں۔ ان صاحب نے کیا جواب دیا کہ ان کا بھی حل نکال لیا جائے گا!! غالب نے ایسے ہی نہیں کہا تھا کہ ’’حیران ہوں، دِل کو روئوں یا پیٹوں جگر کو میں!‘‘

تازہ ترین خبریں

اسپیکرپنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی کوایک اوربڑاجھٹکالگ گیا

اسپیکرپنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی کوایک اوربڑاجھٹکالگ گیا

پنجاب میں 6 نئے اضلاع بنانے کی تجاویز ۔۔کون کون سی تحصیلوں کوضلع کادرجہ دیاجائے گا،بڑی خبرآگئی

پنجاب میں 6 نئے اضلاع بنانے کی تجاویز ۔۔کون کون سی تحصیلوں کوضلع کادرجہ دیاجائے گا،بڑی خبرآگئی

کسے پتہ تھا کہ بڑی بڑی آنکھوں والا یہ معصوم سا بچہ بڑا ہو کر پاکستان کی مشہور شخصیت بنے گا،یہ بچہ کون ہے،

کسے پتہ تھا کہ بڑی بڑی آنکھوں والا یہ معصوم سا بچہ بڑا ہو کر پاکستان کی مشہور شخصیت بنے گا،یہ بچہ کون ہے،

پاکستان میں حکومت کی تبدیلی ،چین نے بھی اپنا موقف دیدیا

پاکستان میں حکومت کی تبدیلی ،چین نے بھی اپنا موقف دیدیا

کتنے فیصد پاکستانی جلد انتخابات چاہتے ہیں؟ سروے رپورٹ میں حیران کن نتائج سامنے آگئے

کتنے فیصد پاکستانی جلد انتخابات چاہتے ہیں؟ سروے رپورٹ میں حیران کن نتائج سامنے آگئے

کرپٹوکمپنی کوبڑاجھٹکا۔۔کتنے کروڑ ڈالرکی ڈیجیٹل چوری ہوگئی ،جان کرآپ کے ہوش اڑ جائیں گے

کرپٹوکمپنی کوبڑاجھٹکا۔۔کتنے کروڑ ڈالرکی ڈیجیٹل چوری ہوگئی ،جان کرآپ کے ہوش اڑ جائیں گے

یوٹیلیٹی اسٹورز پر اشیاءکی خریداری ،عوام کی بڑی مشکل حل کردی گئی

یوٹیلیٹی اسٹورز پر اشیاءکی خریداری ،عوام کی بڑی مشکل حل کردی گئی

سیکیورٹی فورسز کی کارروائی، فائرنگ کے تبادلے میں کتنے دہشتگرد ہلاک ہوگئے ،بڑ ی خبرآگئی

سیکیورٹی فورسز کی کارروائی، فائرنگ کے تبادلے میں کتنے دہشتگرد ہلاک ہوگئے ،بڑ ی خبرآگئی

صبرکرومجھے گجرات آنے دوپھر۔۔۔۔چوہدری شجاعت نے اپنے بھائی وجاہت حسین کی تقریر کو بیہودہ قرار دے دیا

صبرکرومجھے گجرات آنے دوپھر۔۔۔۔چوہدری شجاعت نے اپنے بھائی وجاہت حسین کی تقریر کو بیہودہ قرار دے دیا

ملک کے معاشی حالات میں بہتری کب آنا شروع ہوگی؟وفاقی وزیر خرم دستگیرنے بڑادعویٰ کردیا

ملک کے معاشی حالات میں بہتری کب آنا شروع ہوگی؟وفاقی وزیر خرم دستگیرنے بڑادعویٰ کردیا

پاکستانی طلبہ کیلئے خوشخبری، برطانیہ نے بڑا اعلان کردیا

پاکستانی طلبہ کیلئے خوشخبری، برطانیہ نے بڑا اعلان کردیا

چوہدری شجاعت حسین کے بیٹے نے زرداری سے کتنے ڈالر مانگے چوہدری وجاہت حسین کا انکشاف،ہرکوئی ہکا بکا رہ گیا

چوہدری شجاعت حسین کے بیٹے نے زرداری سے کتنے ڈالر مانگے چوہدری وجاہت حسین کا انکشاف،ہرکوئی ہکا بکا رہ گیا

چوہدری خاندان میں اختلافات ختم کرانے کی کوششیں،چودھری خاندان میں 5 ملاقاتوں کا انکشاف

چوہدری خاندان میں اختلافات ختم کرانے کی کوششیں،چودھری خاندان میں 5 ملاقاتوں کا انکشاف

حکومتی اور اتحادی جماعتوں میں اختلافات شدت اختیار کر گئے وزیر اعظم شہبازشریف سر پکڑ کر بیٹھ گئے

حکومتی اور اتحادی جماعتوں میں اختلافات شدت اختیار کر گئے وزیر اعظم شہبازشریف سر پکڑ کر بیٹھ گئے