01:11 pm
ایف اے ٹی ایف کی صلیب اور پاکستان کی خوش بختی

ایف اے ٹی ایف کی صلیب اور پاکستان کی خوش بختی

01:11 pm

اہل پاکستان کیلئے انتہائی مسرت اور خوشی کی خبر ہے کہ پاکستان نے ایف اے ٹی ایف کے خوفناک شکنجے سے نکلنے کیلئے تمام مطلوبہ شرائط پوری کر لی ہیں۔پاکستان تحریک انصاف کو اس بات کاکریڈٹ لینے سے کوئی ادارہ یا سیاسی جماعت روکنے کی پوزیشن میں نہیں ہے۔موجودہ دور کی برسر اقتدار جماعتوں نے قانون سازی کے دوران پارلیمان کے اجلاس کابائیکاٹ کر دیا تھا جب تحریک انصاف اور اس کی اتحادی جماعتیں اس سلسلے میں قانون سازی کے مرحلے سے گزر رہی تھیں۔مستقبل قریب میں اکتوبر تک ٹیکنکل مراحل مکمل ہونے پر گرے لسٹ سے نکال دیا جائے گا۔ہمارے لئے ایک بلین ڈالر کا سوال ہے کہ پاکستان کو بہترین جغرافیائی محل وقوع اور جوہری طاقت ہونے کے باوجود بار بار گرے لسٹ میں کیوں ڈال دیا جاتا ہے۔پاکستان کو فروری 2008 ء میں گرے لسٹ میں شامل کیا گیا تھا جب پرویز مشرف جیسا وفادار حکمران پاکستان کے تمام اختیارات کا تنہا مالک تھا جو امریکہ کے اشارہ آبرو کاہمیشہ منتظر رہتا تھا۔
پاکستان پیپلز پارٹی کو یہ معاملہ ورثے میں ملا تھا اور پاکستان کو2010 ء میں اس عفریت سے نجات مل گئی تھی۔مگر دوبارہ 2012ء کو پاکستان کو گرے لسٹ میں شامل کر لیا گیا تھا۔2013 ء میں جب پاکستان مسلم لیگ برسر اقتدار آئی تو اسے بھی یہ عفریت وارثت میں قبول کرنی پڑی تھی۔بین الاقوامی حالات پاکستان کے حق میں سازگار ہونے پر 2015 ء میں پاکستان کو گرے لسٹ سے نکال دیا گیا تھا۔2013 ء سے 2018 ء تک ایف اے ٹی ایف کی خواہشات کے مطابق نواز شریف حکومت مطلوبہ قانون سازی کرنے میں پیش رفت کرنے سے قاصر رہی۔ 2018 ء میں نگران حکومت کے دور میں پاکستان کو مطلوبہ اقدامات نہ اٹھانے کی پاداش میں گرے لسٹ میں ڈال دیا گیا تھا۔2018 ء میں جب عمران خان برسر اقتدار آئے تو عمران خان نے حوصلے اور جرات کا مظاہرہ کرتے ہوئے ایف اے ٹی ایف کی شرائط کے مطابق قانون سازی کرکے پاکستان کو گرے لسٹ سے نکالنے کیلئے سو فیصد حالات سازگار کر دیئے تھے۔پاکستان پیپلز پارٹی اور پاکستان مسلم لیگ پاکستان کو گرے لسٹ سے نکالنے کا کریڈٹ لے رہی ہیں۔عوام کا حافظہ اتنا کمزور نہیں ہے کہ عمران خان کے دورمیں جب ایف اے ٹی ایف سے نکلنے کیلئے بنیادی قانون سازی ہو رہی تھی موجودہ حکومت کی مرکزی پارٹیاں قانون سازی کاحصہ بننے کیلئے احتساب ایکٹ میں 36 ترامیم لے کر قائمہ کمیٹی میں آ گئی تھیں۔ ملک بھر کی تمام سیاسی جماعتیں اس بات پر فخر کر سکتی ہیں کہ پاکستان گرے لسٹ سے نکلنے کے بہت قریب ہے۔پاکستان کے عسکری اور سول اداروں کو اس بات کا کریڈٹ جاتا ہے سب کی اجتماعی کوششوں کے نتیجے میں عمران خان کی حکومت کے دور میں مطلوبہ قانون سازی ممکن ہوسکی ہے۔ پاکستان کی خوش بختی ہے کہ ایف اے ٹی ایف کے اندرونی حالات میں پاکستان کیلئے مثبت تبدیلی واقع ہو گئی تھی۔اس دفعہ اجلاس جرمنی منعقد ہوا تھا۔ جرمنی پاکستان کے حوالے سے نرم گوشہ رکھتا ہے۔ جرمنی کے وزیر خارجہ نے حال ہی میں پاکستان کے دورے کے درمیان حوصلہ افزاء اشارے دیئے تھے۔پاکستانیوں کو امید ہو گئی تھی کہ جرمنی ہمیں گرے لسٹ سے نکالنے کیلئے اپنا مثبت اور جاندار کردار ادا کرے گا۔اٹلی ایف اے ٹی ایف کی تنظیم کا شریک چیئرمین بن چکا ہے اٹلی اس حوالے سے پاکستان کے حوالے سے انتہائی متحرک تھا۔برطانیہ کے بعد اٹلی میں سب سے زیادہ پاکستانی مقیم ہیں۔پاکستان اور اٹلی کی بین الاقوامیں ہم آہنگی پائی جاتی ہے۔اٹلی کے وزیراعظم نے پاکستان کے وزیر اعظم کو تحریری پیغام بھجوایا ہے اس میں مشترکہ مفادات کاحوالہ موجود ہے۔ان کا اشارہ پاکستان اٹلی کافی کلب کی طرف ہے جس میں طے کیا گیا ہے کہ سلامتی کونسل کی مستقل ممبر شپ کو بڑھنے نہ دیا جائے۔ اس سوچ کی پیروی میں اٹلی پاکستان کی ایف اے ٹی ایف کے حوالے مدد کرنے کا کرنے کا خواہش مند تھا۔اس سلسلے کو آگے بڑھانے کیلئے اٹلی نے پاکستان کے دفتر خارجہ سے رابطہ بھی کر رکھا تھا۔ اس سلسلے اٹلی نے بھر پور کردار ادا کیا ہے۔ امریکی رویہ اپنے مفادات کے تابع پاکستان کیلئے مناسب رہا ہے۔امریکہ کی خواہش ہے افغانستان کے معاملات سے صرف نظر کرتے ہوئے پاکستان سے شراکت داری کو مشترکہ مفادات کی بنا پر آگے پیش رفت کی جائے۔امریکہ پاکستان سے درآمدات اضافہ قبول کرنے کیلئے ذہنی طور پر تیار بیٹھا ہے پاکستان میں امریکہ کے موجودہ سفیر اس سلسلے میں کافی سرگرم ہیں ۔پاکستان کی برآمدات گزشتہ سال پارچہ جات کی مد میں 4.4 بلین ڈالر تھیں جس میں اضافہ کرنے کی کافی گنجائش موجود ہے۔پاکستان میں مقیم اٹلی ‘ جرمنی اور امریکہ کے سفراء پاکستان کے حق میں مثبت خیالات اور معلومات رکھتے ہیں۔ بھارت کی اندرونی سیاست کی تشویشناک صورتحال سے مکمل آگہی رکھتے ہیں۔مودی حکومت جو مسلمانوں کے ساتھ جو ظالمانہ سلوک روا رکھ رہی ہے اس سے عالمی رائے عامہ میں تشویش اور نا پسندیدگی دیکھنے میں آرہی ہے۔ان تمام عوامل نے اجتماعی طور پر پاکستان کو گرے لسٹ سے نکالنے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔یہ سوال ابھی جواب طلب ہے کہ پاکستان کو بار بار گرے لسٹ میں کیوں شامل کیا جاتا ہے۔اس کا جواب سوائے ہماری نا عاقبت اندیشی کے اور کچھ نہیں کہا جاسکتا ہے اگر پاکستان کے تمام ادارے پوری یکسو اور ایمانداری کے ساتھ یہ بات تسلیم کرلیں کہ آئین نے جو فرائض و حقوق ان کو تفویض کئے ہیں وہی صرف ان کادائرہ کار ہے تو ایسے حالات سے بچاجا سکتا ہے اور آئندہ آنے والی نسلیں اس کا ازالہ کرنے سے قاصر رہیں گی۔ لوگوں کو یہ خوشخبری سنائی جا رہی ہے کہ پاکستان فنانشل ٹاسک فورس سے نکلنے جا رہا ہے۔ اور پاکستان کا عالمی مالیاتی فنڈ سے سٹاف لیول ایگریمنٹ ہوگا اور پاکستان ڈ یفالٹ ہونے سے بچ جائے گا۔ چند ہفتوں کے اندر اندر موجودہ حکومت نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 85 سے 110 روپے فی لٹر اضافہ کر دیا ہے۔بجلی اور گیس کے نرخوں میں بے محابا اضافہ کر دیاگیا ہے۔پاکستان میں ڈالر 208 روپے سے تجاوز کر چکا ہے۔مہنگائی کے طوفان بلا خیز نے سب کو پریشان کردیا ہے۔عوام کی زندگی اجیرن ہو گئی ہے۔موجودہ حکومت نے جو آئی ایم کی زیر ہدایت جو بجٹ کی رونمائی کی ہے۔آ ئی ایم ایف کے کرتا دھرتا اس سے مکمل طور پر خوش نہیں ہیں۔پٹرولیم کی قیمتوں میں نا قابل برداشت اضافے کے باوجود اصرار کر رہا ہے کہ پٹرولیم لیوی کا بم بھی فی الفور چلا دیا جائے۔بجٹ کے بعد روپے کی قدر میں کمی واقع ہوئی ہے اور اسٹاک مارکیٹ میں 1000پوانٹ یعنی دو فیصد کمی واقع ہو ئی ہے۔ پاکستان کے عوام آج تک سختیاں برداشت کرتے چلے آرہے ہیں۔حکومتوں کے پالتو دانشوروں سے عوام زیادہ حقائق کے قریب ہوتے ہیں اب وقت آگیا ہے حکمران اور بالائی طبقات رضاکارانہ طور پر اس ناگوار بوجھ کے بڑے حصہ دار بنیں۔ پاکستان کے عوام وطن عزیز پر قربان ہونے کیلئے ہمیشہ تیار رہتے ہیں۔ جن لوگوں نے اس ملک اس نہج تک پہنچایا ہے انہیں کم از کم اب اس بات کا ادراک کر لینا چاہیے کہ عوام اب مزید بوجھ برداشت کرنے کیلئے قطعی طور پر تیار نہیں ہیں۔اگر موجودہ حکومت آئی ایم ایف کی شرائط کو پورے کرتے ہوئے آئی ایم ایف پیکیج حاصل بھی کر لیتی ہے تو پاکستان پر ڈیفالٹ کا خطرہ عارضی طور ٹل جائے گا۔ آئی ایم ایف کا پروگرام پاکستان کو سنبھلنے کا موقعہ فراہم کرتا ہے۔ڈیفالٹ ہونے سے پہلے ہمیں اپنے لچھن درست کرنے ہوں گے۔

تازہ ترین خبریں

حکومت نےتاجر برادری کو بڑی خوشخبری سنا دی

حکومت نےتاجر برادری کو بڑی خوشخبری سنا دی

سبق یاد نہ کرنے پراستاد نے طالبعلم کے ہاتھ پر ڈرل مشین چلادی

سبق یاد نہ کرنے پراستاد نے طالبعلم کے ہاتھ پر ڈرل مشین چلادی

آذربائیجان نےپاکستان کو خوشخبری سنا دی

آذربائیجان نےپاکستان کو خوشخبری سنا دی

فیفاورلڈ کپ ،سعودی ٹیم کے مداحوں کےلیے بری خبرآگئی،اہم ترین کھلاڑی ٹورنامنٹ سےباہر

فیفاورلڈ کپ ،سعودی ٹیم کے مداحوں کےلیے بری خبرآگئی،اہم ترین کھلاڑی ٹورنامنٹ سےباہر

ارشد شریف کالیپ ٹاپ پاس ہے یانہیں ؟مراد سعید نے بتادیا

ارشد شریف کالیپ ٹاپ پاس ہے یانہیں ؟مراد سعید نے بتادیا

پاکستانی نوجوان بھارتی کھلاڑی کو شکست دے کر ایشین اسکریبل چیمپئن بن گئے

پاکستانی نوجوان بھارتی کھلاڑی کو شکست دے کر ایشین اسکریبل چیمپئن بن گئے

رمیز راجہ کے ورلڈکپ میں شرکت نہ کرنے کے بیان پر بھارتی وزیر کھیل کا ردعمل سامنے آ گیا

رمیز راجہ کے ورلڈکپ میں شرکت نہ کرنے کے بیان پر بھارتی وزیر کھیل کا ردعمل سامنے آ گیا

خضدار اور چاغی میں ٹریفک حادثات،قبائلی رہنماء سمیت کتنے افرادجاں بحق ہوگئے ،انتہائی افسوسناک خبرآگئی

خضدار اور چاغی میں ٹریفک حادثات،قبائلی رہنماء سمیت کتنے افرادجاں بحق ہوگئے ،انتہائی افسوسناک خبرآگئی

ہیلی کاپٹر گر کرتباہ ،کتنے افراد ہلاک ہوگئے ،انتہائی افسوسناک خبرآگئی

ہیلی کاپٹر گر کرتباہ ،کتنے افراد ہلاک ہوگئے ،انتہائی افسوسناک خبرآگئی

جیپ گہری کھائی میں جا گری،ایک ہی خاندان کی کتنی خواتین جاں بحق ہوگئیں ،انتہائی افسوسناک خبرآگئی

جیپ گہری کھائی میں جا گری،ایک ہی خاندان کی کتنی خواتین جاں بحق ہوگئیں ،انتہائی افسوسناک خبرآگئی

پیٹرولیم ڈویژن نے پاکستانی عوام کو اچھی خبر سنادی 

پیٹرولیم ڈویژن نے پاکستانی عوام کو اچھی خبر سنادی 

امریکانے پاکستان کا خزانہ، پاکستان کو واپس کر دیا

امریکانے پاکستان کا خزانہ، پاکستان کو واپس کر دیا

تمام ارکان اسمبلی چھوڑنے کے لیے تیار ۔۔۔پنجاب کے بعد ایک اورصوبے کی اسمبلی سے بڑی خبرآگئی

تمام ارکان اسمبلی چھوڑنے کے لیے تیار ۔۔۔پنجاب کے بعد ایک اورصوبے کی اسمبلی سے بڑی خبرآگئی

حجاب پہنے پر گھر والے ڈر جاتے ہیں ۔۔ 17 سال کی عمر میں اسلام قبول کرنے والی لڑکی، جس کے والدین غیر مسلم ہیں

حجاب پہنے پر گھر والے ڈر جاتے ہیں ۔۔ 17 سال کی عمر میں اسلام قبول کرنے والی لڑکی، جس کے والدین غیر مسلم ہیں