02:14 pm
                     ایف اے ٹی ایف اور موجودہ بجٹ

ایف اے ٹی ایف اور موجودہ بجٹ

02:14 pm

فنانشل ایکشن ٹاسک فورس ایک بین الحکومتی باڈی اور فیصلہ ساز ادارہ ہے۔اس کا قیام 1989ء میں G-7 سربراہی اجلاس کے دوران منی لانڈرنگ اور دہشت گردوں کی سرپرستی کے خلاف پالیسیاں تیار کرنے کے لئے کیا گیا تھا۔ یہ ایک پالیسی ساز ادارہ ہے جو منی لانڈرنگ میں قومی قانون سازی اور ریگولیٹری اصلاحات لانے کے لئے سیاسی عزم پیدا کرنے کے لئے کام کرتا ہے۔اس کا مرکزی سیکرٹریٹ پیرس(فرانس) میں ہے۔یہ معیارات طے کرتا ہے اور ان کے مؤثر نفاذ کو فروغ دیتا ہے۔منی لانڈرنگ سے نمٹنے کے لئے قانونی ریگولیٹری اور آپریشنل اقدامات کرتا ہے۔ بین الاقوامی مالیاتی نظام کو غلط استعمال سے بچانے کے لئے قومی سطح کے خطرات کی نشاندہی کرنے کے لئے کام کرتا ہے۔ پاکستان جون 2018ء سےFATF کی گرے لسٹ میں ہے اور اسے ستمبر 2019ء تک FATF ایکشن پلان پر مکمل عمل درآمد کے لئے کہا گیا تھا۔گرے لسٹ میں پاکستان کی شمولیت کو اس حقیقت سے بھی منسوب کیا جا سکتا ہے کہ ملک کے انسداددہشت گردی کے قوانین ابھی بھی FATF کے معیارات کے مطابق نہیں ہیں اور اقوام ِ متحدہ کی تازہ ترین قرارداد 2462 کے مطابق ہیں
جو دہشت گردوں کی مالی معاونت کو جرم قرار دینے کے لئے تیار ہیں۔FATF فنڈز منجمند کرنے، ہتھیاروں تک رسائی سے انکار اور سفری پابندی کا مطالبہ کرتا ہے۔FATF گرے لسٹ میں ہونے سے آئی ایم ایف، ورلڈ بینک اور دیگر ممالک سے قرضہ حاصل کرنے میں دشواری وغیرہ شامل ہے۔بین الاقوامی تجارت میں کمی اور بین الاقوامی بائیکاٹ رہتا ہے۔پاکستان کی حکومت اور پاک آرمی کے اشتراک سے اس پر کافی حد تک قابو پایا جا چکا ہے۔اب گرے لسٹ سے نکلنے کے لئے اونٹ نکل گیا ہے صرف اس کی دم باقی رہ گئی ہے۔بلاشبہ اس میں پاک آرمی آفیسرز کی ساری ٹیم، وزیراعظم پاکستان میاں شہباز شریف اور وزرائے خارجہ بلاول بھٹو زرداری اور محترمہ حنا ربانی کھر مبارکباد کے مستحق ہیں۔یہاں میں اس بات کا بھی اضافہ کرتا چلوں کہ ہمیں FATF کے شکنجے میں جکڑنے کے لئے ہندوستان نے بھی اہم کردار ادا کیا ہے۔میں اپنے غیر سنجیدہ رویوں پر زیادہ غور کروں تو دل سے اک ہوک سی نکلتی ہے۔میں تحریر کے وقت اپنی بے بسی سے غافل نہیں ہوں۔مجھے اس دہر میں انسانیت کی بے حسی کا بھی احساس ہے۔مجھے معاشرتی ستم ظریفیوں کا بھی ادراک ہے۔مجھے فکر سے خالی مصنوعی اور نمائشی جادوگری کے پیچ و تاب بھی نظر آ رہے ہیں۔مجھے مصنوعی ماحول میں آسروں کے دھوئیں بھی منڈلاتے نظر آ رہے ہیں۔مجھے اپنی سوچ اور فکر کے دائروں کی ہلچل کا انجام طوطی کی آواز نقارخانے میں گم ہوتی نظر آ رہی ہے۔لیکن جو دھڑکن اس مادروطن کے زخم خوردہ لاشے پر آہ و فغاں میں سرگرداں آنسوؤں کا نذرانہ پیش کرنے کی فکر میں بے چین ہے، بے حسی کے عالم میں درد اور تڑپ میں پگھل رہی ہے، روائتی سوچ کے حوالے کرنا اور ڈوبنے کے خدشے سے آنکھیں بند کرنا زندگی دینے والے کی مہربانی سے روگردانی ہوگی۔ہم دنیا کے اس خوبصورت باغ کے مالی ہیں۔اپنا کام اس کی آبیاری ہے۔ نیت پہنچانا اور عمل کرنا ہے۔ہم نہ ہی کارساز ہیں اور نہ مالک کائنات کے امر میں کسی قسم کی جسارت کے حقدار۔ ہم تو محض مجبور ہیں جو خوابوں کی دنیا کو سہارہ بنائے، تڑپنے کی توفیق مانگ رہے ہیں۔دنیا کے ارباب اقتدار کے ایوانوں تک رسائی کے پیچیدہ راستے اپنی آنکھوں سے اوجھل نہیں۔میں خودداری کے آداب سے بھی ناواقف نہیں۔ حاضریوں کے شوق سے اپنی فطرت نا آشنا اور اخلاص کی بھٹی میں سلگتی ہوئی سوچ سب اس راستے کی رکاوٹیں ہیں مگر روشنیوں کے وہ جذبات جو اس وطن کے دکھ درد میں اپنے ساتھی ہیں کبھی خود بخود پھوٹنے پر مجبور کرتے ہیں، کبھی خاموشی کی تلقین کرتے ہیں اور کبھی مصلحتی سوچوں کی ضبط کی توفیق مانگتے ہیں۔مجھے کمرشلا ئزڈ ماحول میں اپنی آہوں کی نارسائی کی فکر نہیں لیکن دم گھٹتے ہوئے آخرت کا سفر بہت بوجھل محسوس ہو رہا ہے۔میں یہ بھی جانتا ہوں کہ کچھ لوگوں کے لئے یہ تحریر معمہ ہو گی، بے چاشنی اور بے ذوق بھی۔لیکن کاروان وطن کے سفر میں پرخطر راستوں کی نشاندہی میں اپنی بساط بھر رہنمائی ضرور کرے گی۔اگرچہ اس میں طنز و مزاح کے چٹکلے نہیں۔اس میں کہانیوں کی چاشنی نہیں۔اس میں دکھ درد کی پوٹلی مسلسل جھٹکے اپنا اثر بڑھاتے جا رہے ہیں۔نہ محفلوں کی رونقوں کا ذکر، نہ دلچسپ واقعات کی جھلک، نہ حوصلہ افزائی کے جمگھٹے، نہ جیت کے آثار اور نہ ہار سے چھٹکارے کی کوئی رمق۔ یہ زندگی کے الجھے اوراق کی ورق گردانی نہیں۔ یہ تو زندگی کے ان بوجھل ابواب کی نشاندہی ہے جو مسلسل چبھن اور ڈراؤنے پہلو کے پس منظر ہیں۔اس میں سنجیدگی کے موڑ ختم ہوتے ہیں نہ کہیں آسائش کی جھلک سے بہار پھوٹتی ہے۔ یہ رونا ہے دکھوں کا۔ یہ قصہ ہے نادانیوں کا۔ یہ بازگشت ہے بے حسیوں کی۔ یہ جھلک ہے اپنے اعمال کی۔ یہ تصویر ہے اپنی سوچوں کی۔ یہ اثرات ہیں اپنی خواہشات و لالچ کے۔ میں یاد رفتہ کو سہارا بنائے اس سفر میں تاریخ انسانی کی گہرائیوں میں جھانکنے کی کوشش کر رہا ہوں۔میں تہذیبوں کی ٹٹول میں حقیقتوں کی تلا ش کا مسافر ہوں۔ مجھے کبھی فتنوں کے گھٹا ٹوپ اندھیرے منزل سے دور لے جانے کی کوشش کرتے ہیں اور کبھی تجسس کی کرن اپنے سفر کی روانیوں میں مددگار ہوتی ہے۔میں اپنی علمی استعداد میں مستند نہیں لیکن یادرفتہ اور تاریخی جھلکیوں کی جو روشنی معاونت کر رہی ہے وہ اس قادر مطلق کی عنایت ہے۔احساسات کا ابال ہے جو روح کی تپش سے پھیلاؤ مانگتا ہے۔ درد کی ٹیس ہے جو خواب غفلت میں جھٹکے دیتی ہے۔ فکر کی اجرت ہے جو فضاؤں میں پھیلاؤ مانگتی ہے۔آخرت کے اندیشے ہیں جو راستے کی طوالت میں گناہوں کے احسا س پرخار بنا رکھے ہیں۔ اس حقیقت سے کسی کو انکار نہیں کہ تیل کی قیمتیں بڑھنے سے تما م چیزوں کی قیمتوں میں اضافہ ہوا۔اس کے بر عکس حکومت نے موجودہ بجٹ میں غریبوں کے اوپر ٹیکسز کے ذریعے بوجھ ڈالنے سے اجتناب کیا ہے۔ٹیکسز کا بوجھ صرف امیروں پر ڈالا گیا ہے۔ پاکستان میں حکومتی سطح پر گزشتہ پونے چار سالوں میں غیر ذمہ داری اور غیر سنجیدگی کی وجہ سے بھی کچھ بد انتظامی ہوئی۔ بہر حال میں تو عوام میں سے ہوں۔ ملک سے محبت بھی ہے اور اس کے ساتھ وفا کرنے کا تہیہ بھی کر رکھا ہے۔وطن کی محبت میں ہم عوام نے کیا کچھ نہیں کیا۔ اس مٹی کی محبت میں ہم آشفتہ سروں نے وہ قرض بھی اتارے ہیں جو واجب ہی نہ تھے

تازہ ترین خبریں

وہ نوجوان لڑکی جس نے وراثت میں ملنے والی 7ہزار کروڑ مالیت کی فرم چلانے سے ہی انکار کردیا

وہ نوجوان لڑکی جس نے وراثت میں ملنے والی 7ہزار کروڑ مالیت کی فرم چلانے سے ہی انکار کردیا

پڑوسی ملک میں انتہائی حیران کن چوری کی واردات، چور سرنگ کھود کر ٹرین کا انجن ہی چرا لے گئے

پڑوسی ملک میں انتہائی حیران کن چوری کی واردات، چور سرنگ کھود کر ٹرین کا انجن ہی چرا لے گئے

دلہن کی انتہائی معصومانہ خواہش جسے پورا کرنے کے لیے پولیس کو بلانا پڑگیا

دلہن کی انتہائی معصومانہ خواہش جسے پورا کرنے کے لیے پولیس کو بلانا پڑگیا

بورہونے کی وجہ سے کمپنی نے اپنے ملازم کو نکال دیا، عدالت کا دروازہ کھٹکھٹایا تو کیا فیصلہ ہوا؟ جانیں

بورہونے کی وجہ سے کمپنی نے اپنے ملازم کو نکال دیا، عدالت کا دروازہ کھٹکھٹایا تو کیا فیصلہ ہوا؟ جانیں

مدینہ سے آئے تو قرآن پاک کا ترجمہ کر لیا ۔۔ کوریا کے اس لیکچرار کے ساتھ کیا ہوا جو یہ دین اسلام کی ہی خدمت میں مصررف ہو گئے

مدینہ سے آئے تو قرآن پاک کا ترجمہ کر لیا ۔۔ کوریا کے اس لیکچرار کے ساتھ کیا ہوا جو یہ دین اسلام کی ہی خدمت میں مصررف ہو گئے

خاتون جج کو آن لائن میٹنگ کے دوران سگریٹ نوشی مہنگی پڑگئی، بڑی سزا مل گئی

خاتون جج کو آن لائن میٹنگ کے دوران سگریٹ نوشی مہنگی پڑگئی، بڑی سزا مل گئی

اسمبلیوں سے استعفوں کا معاملہ ، پی ٹی آئی کے اہم رہنما کا پارٹی چھوڑنے کا عندیہ

اسمبلیوں سے استعفوں کا معاملہ ، پی ٹی آئی کے اہم رہنما کا پارٹی چھوڑنے کا عندیہ

بینکوں میں رقوم رکھوانے والوں کیلئے بڑی خوشخبری آگئی

بینکوں میں رقوم رکھوانے والوں کیلئے بڑی خوشخبری آگئی

یکم سے چاردسمبرتک چھٹیاں۔۔سرکاری ملازمین کی توموجیں لگ گئیں

یکم سے چاردسمبرتک چھٹیاں۔۔سرکاری ملازمین کی توموجیں لگ گئیں

حکمراں اتحاد کےلیے بری خبر۔۔پی ٹی آئی نے پنجاب اور کے پی اسمبلی تحلیل کرنے کی توثیق کردی

حکمراں اتحاد کےلیے بری خبر۔۔پی ٹی آئی نے پنجاب اور کے پی اسمبلی تحلیل کرنے کی توثیق کردی

کریتی سینن بالی وڈ کے کس معروف اداکار کو ڈیٹ کر رہی ہیں؟ ورون دھون نے بتا دیا

کریتی سینن بالی وڈ کے کس معروف اداکار کو ڈیٹ کر رہی ہیں؟ ورون دھون نے بتا دیا

’تحریک عدم اعتماد کا جسے شوق وہ لے آئے‘

’تحریک عدم اعتماد کا جسے شوق وہ لے آئے‘

ہم آخری حد تک جائیں گے ،اسمبلیاں تحلیل کرنے کے کپتان کے اعلان کے بعد ن لیگ بھی میدان میں آگئی

ہم آخری حد تک جائیں گے ،اسمبلیاں تحلیل کرنے کے کپتان کے اعلان کے بعد ن لیگ بھی میدان میں آگئی

سیلاب متاثرین سے متعلق بین اسٹوکس کے اعلان پر وزیراعظم شہباز شریف بھی بول پڑے،کیاکہا،جانیں

سیلاب متاثرین سے متعلق بین اسٹوکس کے اعلان پر وزیراعظم شہباز شریف بھی بول پڑے،کیاکہا،جانیں