01:51 pm
بڑے کیس کابڑافیصلہ

بڑے کیس کابڑافیصلہ

01:51 pm

ممنوعہ فنڈنگ کایہ کیس2014ء سے الیکشن کمیشن میں زیرسماعت تھا۔الیکشن کمیشن کی جانب سے یہ فیصلہ 21جون کومحفوظ کیا گیا تھا اور اب چیف الیکشن کمشنرسکندرسلطان راجاکی سربراہی میں نثاراحمداورشاہ محمدجتوئی پرمشتمل تین رکنی بینچ نے ممنوعہ فنڈنگ کیس کے اپنے فیصلے میں کہاہے کہ عمران خان پربیرونِ ملک سے ممنوعہ فنڈز لینے کے الزامات ثابت ہو گئے ہیں اور سٹیٹ بینک سے حاصل کردہ ڈیٹااوردیگرریکارڈکی بناپرعمران خان کا فنڈنگ کے حوالے سے2008ء سے2013ء تک دیاگیابیان حلفی جھوٹاہے۔ الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی کواس کیلئے اپریل2018ء سے دسمبر 2021ء تک کاوقت دیاگیاتاہم پارٹی اپنے فنڈنگ کے ذرائع چھپاتی رہی۔پی ٹی آئی نے34انفرادی اور351غیر ملکی کمپنیوں اور اداروں سے فنڈنگ وصول کی۔پی ٹی آئی نے کمیشن کے سامنے صرف آٹھ اکائونٹس کی ملکیت کوتسلیم کیاہے جبکہ اس نے 13 اکائونٹس کو نامعلوم قراردیتے ہوئے اظہارِلاتعلقی کیاہے ۔ کمیشن کے مطابق سٹیٹ بینک سے حاصل کردہ ڈیٹا کے مطابق پی ٹی آئی نے جن اکائونٹس سے لاتعلقی کا اظہارکیاوہ پی ٹی آئی کی سینئرصوبائی اورمرکزی قیادت اورعہدیداروں نے کھولے اورچلائے تھے۔ پی ٹی آئی نے سینئرپارٹی قیادت کے زیرِانتظام تین مزید اکائونٹس کوچھپایا۔کمیشن کے مطابق پی ٹی آئی کی جانب سے ان16بینک اکاؤنٹس کوچھپانا آئین کی شق(13)17کی خلاف ورزی ہے۔اس حوالے سے پی ٹی آئی کواظہارِوجوہ کانوٹس جاری کیا ہے کہ کیوں نہ یہ ممنوعہ فنڈزضبط کرلیے جائیں۔ تحریکِ انصاف نے اس فیصلے کوعدالت میں چیلنج کرنے کااعلان بھی کردیاہے۔
یادرہے کہ الیکشن کمیشن کی طرف سے اس پر کارروائی شروع ہونے سے پہلے ہی پاکستان تحریک انصاف کی قیادت نے یہ معاملہ مختلف اوقات میں چھ مرتبہ اسلام آباد ہائی کورٹ میں لے کرگئی اوریہ مؤقف اپنایاگیاکہ الیکشن کمیشن کے پاس کسی جماعت کے اکاؤنٹس کی جانچ پڑتال کا قانوناً اختیارہی نہیں۔تحریک انصاف نے اس مقدمے میں نومختلف پیٹیشنز دائر کیں اورنو ہی وکیل بدلے جبکہ الیکشن کمیشن نے متعددمرتبہ ممنوعہ فنڈنگ کیس کی تفصیلات بھی خفیہ رکھنے کی استدعاکی۔ایک مرتبہ حکم امتناع ملنے کے بعد جب اسلام آباد ہائیکورٹ نے مزیدحکم امتناع دینے سے انکارکیاتوپھر اس معاملے کی تحقیقات کرنے والی سکروٹنی کمیٹی کے دائرہ اختیارکوتحریک انصاف کی طرف سے چیلنج کیاگیااورکمیٹی کو اپنا کام کرنے سے روکنے کیلئے بھی حکم امتناع حاصل کرنے کی درخواست دی گئی۔باربارحکم امتناع کی درخواستیں دائرکرنے پرپاکستان تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی فرخ حبیب کاموقف تھاکہ کسی سیاسی جماعت کودستیاب قانونی آپشن استعمال کرنے سے نہیں روکاجاسکتا۔ یہاں میں یہ واضح کردوں کہ پاکستان مسلم لیگ نوازکے رہنماحنیف عباسی نے جب موجودہ وزیراعظم عمران خان کی اہلیت کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیاتھاتواس کے ساتھ ایک متفرق درخواست پی ٹی آئی کوملنے والے مبینہ ممنوعہ فنڈزکے حوالے سے بھی دی گئی تھی اوراسی درخواست پرفیصلہ سناتے ہوئے سپریم کورٹ نے2016 ء میں فیصلہ دیاتھاکہ سیاسی جماعتوں کی فنڈنگزکی تحقیقات کااختیارالیکشن کمیشن کے پاس ہے۔ سپریم کورٹ نے الیکشن کمیشن کو 2009ء سے 2013ء کے دوران تحریک انصاف کو موصول ہونے والے فنڈزکی جانچ پڑتال کاحکم بھی دیا تھااورپاکستان تحریک انصاف کی ممنوعہ فنڈنگز کے حوالے سے تحقیقات کیلئے مارچ 2018ء میں الیکشن کمیشن کے ڈائریکٹرجنرل لاکی سربراہی میں ایک تین رکنی کمیٹی تشکیل دی تھی۔آڈیٹرجنرل آف پاکستان اوروزارت خزانہ کاایک نمائندہ بھی اس سکروٹنی کمیٹی کاحصہ تھا۔ تحریک انصاف کے بانی رکن اکبرایس بابر اس مقدمے کولگ بھگ ساڑھے سات برس قبل اس وقت کمیشن کے سامنے لے کرآئے جب وہ اندرونی اختلافات کی وجہ سے پارٹی اور اعلیٰ قیادت سے دورہوئے۔اس معاملے پردیگرسیاسی جماعتیں ابتدائی کچھ عرصہ توخاموش رہیں مگرجیسے جیسے عمران خان نے مخالف سیاسی جماعتوں کو اپنا ہدف بنانا شروع کیاتواِن جماعتوں کی قیادت کی طرف سے بھی یہ مطالبات سامنے آنے لگے کہ تحریک انصاف کو بیرون ملک سے حاصل ہونے والی فنڈنگ کاحساب کتاب ہونا چاہیے۔گذشتہ برسوں کے دوران پی ٹی آئی الیکشن کمیشن کواس مقدمے میں کوئی حتمی فیصلہ سنانے سے روکنے کیلئے متحرک نظرآئی۔ چند ماہ قبل اسلام آباد ہائی کورٹ کے ایک رکنی بینچ نے جب الیکشن کمیشن کو 30 روزمیں ممنوعہ فنڈنگ کیس کافیصلہ سنانے کاپابندکیا تو تحریک انصاف نے اس فیصلے کے خلاف عدالت سے رجوع کرتے ہوئے موقف اختیارکیاتھاکہ ان کے ساتھ امتیازی سلوک ہورہاہے جبکہ دیگر سیاسی جماعتوں کے خلاف بھی اسی نوعیت کے کیسزالیکشن کمیشن میں زیرالتوا ہیں مگرکسی دوسری سیاسی جماعت کے حوالے سے عدالت نے الیکشن کمیشن کو فیصلہ سنانے کا پابندنہیں کیاہے۔ اس کیس پرسماعت کے بعد اسلام آباد ہائی کورٹ نے الیکشن کمیشن کو 30 روز میں پی ٹی آئی کی ممنوعہ فنڈنگ کا فیصلہ کرنے سے متعلق سنگل بینچ کا فیصلہ معطل کرتے ہوئے الیکشن کمیشن کو تمام سیاسی جماعتوں کے ساتھ ایک جیساسلوک کرنے سے متعلق بھی(پی ٹی آئی)کی درخواست پر نوٹس جاری کردیا۔عمران خان اوران کی جماعت گذشتہ چھ برس سے یہدعویٰ کرتے آئے ہیں کہ ان کی جماعت نے ممنوعہ ذرائع سے فنڈزحاصل نہیں کیے بلکہ تمام حاصل ہونے والے فنڈزکی دستاویزات موجودہیں۔ اپنے خلاف تحریک عدم اعتمادکی کامیابی سے چندروزقبل ایک نجی ٹی وی چینل کودیئے گئے انٹرویومیں عمران خان نے دعویٰ کیاتھاکہ دوملکوں نے انھیں عام انتخابات میں مالی معاونت فراہم کرنے کی پیشکش کی جوانہوں نے قبول نہیں کی تھی۔عمران خان نے ان دوملکوں کے نام یہ کہہ کرنہیں بتائے کہ ان کے نام بتانے سے پاکستان کے ان ملکوں کے ساتھ تعلقات خراب ہوجائیں گے۔ الیکشن کمیشن میں دائر اپنی درخواست میں اکبر ایس بابرنے الزام عائدکیاتھاکہ پاکستان تحریک انصاف نے بیرون ممالک میں مقیم پاکستانیوں کے علاوہ غیرملکیوں سے فنڈزحاصل کیے، جس کی پاکستانی قانون اجازت نہیں دیتاجبکہ اکبر ایس بابرنے دعویٰ کیاتھاکہ مبینہ طورپر ممنوعہ ذرائع سے پارٹی کوملنے والے فنڈزکامعاملہ انہوں نے2011ء میں پہلی مرتبہ پارٹی کے چیئرمین عمران خان کے سامنے اٹھایاتھااوریہ درخواست کی تھی کہ پارٹی کے ایک اوررکن جسٹس ریٹائرڈ وجیہہ الدین کی سربراہی میں ایک کمیٹی تشکیل دی جائے جواس معاملے کودیکھے لیکن اس پر عمران خان کی طرف سے کوئی کارروائی نہ ہونے کی بنا پروہ یہ معاملہ الیکشن کمیشن میں لے کرگئے۔(جاری ہے)

تازہ ترین خبریں

حلقہ این اے 118 میں عمران خان کے کاغذات نامزدگی چیلنج

حلقہ این اے 118 میں عمران خان کے کاغذات نامزدگی چیلنج

کپتان نے شہباز گل کے حوالے سے کیاکہاتھااورکس اہم ترین وزیرنےا ن کی بات کی تردیدکردی

کپتان نے شہباز گل کے حوالے سے کیاکہاتھااورکس اہم ترین وزیرنےا ن کی بات کی تردیدکردی

جشن آزادی کی تقریب  میں ایسی بے حیائی ہوئی کہ میں نے ٹوپی اتار کر آنکھوں پر ہاتھ رکھ لی

جشن آزادی کی تقریب میں ایسی بے حیائی ہوئی کہ میں نے ٹوپی اتار کر آنکھوں پر ہاتھ رکھ لی

عمران  کے کراچی آنے سےپیپلز پارٹی کی کا نپیں ٹانگناشروع ہوگئیں ،زرداری صاحب اب آپ نے گھبرانانہیں ،فواد چوہدری

عمران کے کراچی آنے سےپیپلز پارٹی کی کا نپیں ٹانگناشروع ہوگئیں ،زرداری صاحب اب آپ نے گھبرانانہیں ،فواد چوہدری

 کینسر سے انتقال کرنے والے ہاشم رضا نے موت سے چند دن پہلے معافی مانگتے ہوئے کیا خواہش کی تھی؟

کینسر سے انتقال کرنے والے ہاشم رضا نے موت سے چند دن پہلے معافی مانگتے ہوئے کیا خواہش کی تھی؟

اگر حکومت کی کوئی مجبوری ہے تومیں اس فیصلے میں شامل نہیں ،نواز شریف کی پیٹرول کی قیمت میں اضافے کے فیصلے کی سخت مخالفت

اگر حکومت کی کوئی مجبوری ہے تومیں اس فیصلے میں شامل نہیں ،نواز شریف کی پیٹرول کی قیمت میں اضافے کے فیصلے کی سخت مخالفت

۔۔ یہ کس مشہور شخصیت کی تصویر ہے جسے ان کے قریبی لوگ بھی نہیں پہچان پاتے؟

۔۔ یہ کس مشہور شخصیت کی تصویر ہے جسے ان کے قریبی لوگ بھی نہیں پہچان پاتے؟

۔ شادی کے 2 سال بعد بیوی کو نظر آنا بند ہوا تو شوہر نے شریک حیات ساتھ کیا سلوک کیا؟

۔ شادی کے 2 سال بعد بیوی کو نظر آنا بند ہوا تو شوہر نے شریک حیات ساتھ کیا سلوک کیا؟

پنجاب اسمبلی میں نجی قرض پر سود کی پابندی کا بل منظور

پنجاب اسمبلی میں نجی قرض پر سود کی پابندی کا بل منظور

سوناایک مرتبہ پھرمہنگا،فی تولہ قیمت میں کتنااضافہ ہوگیا،شادی کاارادہ کرنے والے افرادکے لیے بری خبرآگئی

سوناایک مرتبہ پھرمہنگا،فی تولہ قیمت میں کتنااضافہ ہوگیا،شادی کاارادہ کرنے والے افرادکے لیے بری خبرآگئی

افسران کی موجیں ختم۔۔۔پنجاب حکومت نے بڑافیصلہ کرلیا

افسران کی موجیں ختم۔۔۔پنجاب حکومت نے بڑافیصلہ کرلیا

’’شہبازگل کو ننگا کرکے مارا گیا‘‘ عمران خان اور پرویز الٰہی آمنے سامنے

’’شہبازگل کو ننگا کرکے مارا گیا‘‘ عمران خان اور پرویز الٰہی آمنے سامنے

روہڑی بائی پاس پر کوچ اُلٹ گئی، خواتین و بچوں سمیت کتنے مسافر جاں بحق ہوگئے ،انتہائی افسوسناک خبرآگئی

روہڑی بائی پاس پر کوچ اُلٹ گئی، خواتین و بچوں سمیت کتنے مسافر جاں بحق ہوگئے ،انتہائی افسوسناک خبرآگئی

ستمبر یا اکتوبر میں وطن واپسی،سابق وزیراعظم میاں نواز شریف لاہورکے بجائے کس شہرکواپنامسکن بنائیں گے

ستمبر یا اکتوبر میں وطن واپسی،سابق وزیراعظم میاں نواز شریف لاہورکے بجائے کس شہرکواپنامسکن بنائیں گے