12:43 pm
معاشرے میں بے چینی

معاشرے میں بے چینی

12:43 pm

پاکستانی معاشرے میں ایسی خباثتیں در آئی ہیں کہ چین اور سکون لٹ گیا ہے جسے دیکھو وہ پریشان نظر آرہا ہے ۔ڈیپریشن نام کی کسی بیماری کا بھلا کبھی نام سنا بھی تھا آج ہر دوسرا شخص کسی نہ کسی پریشانی میں مبتلانظر آرہا ہے ۔سوال گندم ،جواب جوں ملتا ہے۔کیوں اس لئے کہ ہر شخص کو کوئی نہ کوئی ایسا سنگین مسئلہ درپیش ہے جس کا حل اس کے پاس ہے بھی اور نہیں بھی ۔ کمزور دل حضرات زیادہ پریشانی کی وجہ سے تھک ہار کر بیٹھ جاتے ہیں یا پھر نفسیاتی مریض بن جاتے ہیں۔مسائل اسی وقت شروع ہوجاتے ہیں جب آتش جوان ہونے لگتے ہیں ۔ آج کل کی نئی نسل بھئی توبہ!خود کو عقل کل سمجھتے ہیں اور والدین کو قنوطی ۔ جب بھی کسی بات پر روک ٹوک کی جائے تو میاں صاحبزادے کا موڈ بگڑ جاتا ہے ،صرف یہ کہہ دینا کہ بیٹا ہر وقت موبائل فون استعمال نہ کریں، پڑھائی کی طرف بھی توجہ دے لیا کریں ،اسی بات پر پارہ چڑھ جاتا ہے اورپھر سارے گھر کی شامت آجاتی ہے یا پھر بیٹی کو پڑھائی یا گھر داری کا کہا جائے تو ماں کو وہ شکایا ت لگاتی ہیں کہ ابو جی کی شامت آجاتی ہے ۔ کیا کبھی آپ نے غور کیا کہ اس کی بنیادی وجہ کیا ہے ؟
دراصل ہم بچوں کو اوائل عمری میں ہی دینی تعلیمات اور گھر کے اندر دینی ماحول سے آشنا نہیں کرتے ۔نماز پڑھنی ہے تو بچوں کو کہا جاتا ہے کہ دوسرے کمرے میں مت جانا شور مت کرنا،بابا نماز پڑھ رہے ہیں ، بجائے اس کے کہ بچوں کو نماز میں شریک کیا جائے یا اپنے پاس بٹھایا جائے انہیں دور کردیا جاتا ہے۔اسی طرح بچوں کوجب بڑے ہوجائیں توپڑھنے کو وہ مواد نہیں دیا جاتا جس سے ان کی اخلاقی تربیت ہو یا انہیں اپنے دین کے بارے میں رہ نمائی ملے۔ بس بچہ ذرا سا بڑا ہوا تو ناظرہ کے لئے مسجد بھیج دیا یا گھر پر قاری صاحب کا اہتمام کرلیا ۔یہ بھی اچھا ہے لیکن جب تک بچے کی اخلاقی و دینی تربیت نہیں کی جائے گی انہیں واقعات سناکر ان کے دل میں محبت،صلہ رحمی، معاشرتی اقدار ،دینی تعلیمات ، طہارت ،پاکیزگی ،آداب معاشرت اور زندگی کے اوڑھنے بچھونے کے بارے آگاہی نہیں دی جائے گی وہ انٹرنیٹ کی دنیا میں جاکر گم ہوجائیں گے وہی سچ سمجھیں گے اور اسی روش پر چلیں گے جو انہیں وہاں ملے گی اوروہاں کی رنگینیاں اور دلچسپیاں انہیں کہیں کا نہ چھوڑیں گی پھر یہ شکوہ کرنا کہ بچے بڑوں کی بات نہیں مانتے تعلیم پر توجہ نہیں دیتے ،ہمیں زیب نہیں دیتا ۔ دنیا تیز ہے اور بچے خام ذہن کے ،فیصلہ آپ نے کرنا ہے کہ ان کے خالی ذہن کی سلیٹ پر آپ نے کیا تحریر کرنا ہے ۔ بات پریشانی سے شروع ہوئی تھی ہمارے معاشرے میں ایسی ہی کچھ بنیادی وجوہات ہیں جو ہر شخص کو پریشان کئے ہوئے ہیں۔کچھ لوگوں کی طبیعت اس طرح کی ہوتی ہے کہ وہ ہر بات پہ پریشان رہتے ہیں۔ تحقیقات سے پتہ چلتا ہے کہ اس طرح کی طبیعت وراثت میں بھی مل سکتی ہے۔ وہ لوگ بھی جو قدرتی طور پر ہر وقت پریشان نہ رہتے ہوں اگر ان پر بھی مستقل دبائو پڑتا رہے تو وہ بھی گھبراہٹ کا شکار ہوجاتے ہیں۔کبھی گھبراہٹ کی وجہ بہت واضح ہوتی ہے اور جب مسئلہ حل ہوجائے تو یہ گھبراہٹ بھی ختم ہوجاتی ہے لیکن کچھ واقعات اور حالات اتنے تکلیف دہ ہوتے ہیں کہ ان کی وجہ سے پیدا ہونے والی گھبراہٹ واقعات کے ختم ہونے کے طویل عرصے بعد تک جاری رہتی ہے۔ماہرین کا کہنا ہے کہ بعض لوگ بہت زیادہ وقت کے لیے ان گھبراہٹ اور خوف کے احساسات کا شکار رہتے ہیں، انہیں نہیں پتہ ہوتا کہ انہیں کس وجہ سے ہو رہی ہے اور یہ گھبراہٹ کب اور کیسے ختم ہوگی۔ اس پر قابو پانا مشکل ہوتا ہے اور اس سلسلے میں عام طور پر کسی کی مدد کی ضرورت ہوتی ہے۔ اکثر اوقات لوگ اس سلسلے میں مدد نہیں حاصل کرنا چاہتے کیونکہ انھیں یہ لگتا ہے کہ لوگ انھیں پاگل سمجھیں گے جبکہ حقیقت یہ ہے کہ گھبراہٹ اور خوف میں مبتلا لوگ شاذ و نادر ہی کبھی شدید قسم کی دماغی بیماریوں میں مبتلا ہوتے ہیں۔ جتنی جلدی مدد حاصل کی جائے اتنا ہی بہتر ہوگا بجائے اس کے کہ خاموشی سے تکلیف برداشت کی جائے۔ایسے لوگ گھر والوں یا قریبی دوستوں سے بھی بات نہیں کرتے۔ اس کے باوجود یہ صاف ظاہر ہوتا ہے کہ وہ ٹھیک نہیں ہیں۔ وہ چڑچڑے پن کا شکار ہوتے ہیں اور اس کی وجہ سے قریبی افراد سے بحث مباحثہ ہوسکتا ہے۔ دوست اور گھر والے گھبراہٹ کی وجہ سے ہونے والی تکلیف کو سمجھتے ہیں تاہم انہیں یہ تمام پریشانیاں بلا وجہ لگتی ہیں۔یہ ساری خرابیاں انسان کے مقررہ اصولوں سے ہٹ جانے کا نتیجہ بھی ہیں۔ہم مسلمان ہیں تو اسلام نے معاشرے کے ہر فرد پر ان اقلیتوں کے مال ان کی جان ان کی عزت و آبرو کی حفاظت فرض قرار دی ہے۔ ایک اسلامی معاشرہ میں ہر فرد کو رواداری کا مظاہرہ کرنے کا پابند کیا گیا ہے اسی چیز سے کسی معاشرہ میں باہمی احترام پیدا ہوتا ہے۔ اگر ایک گھر میں ایک خاندان میں ایک شہر میں کسی فرد کو تکلیف پہنچے باقی افراد اس تکلیف اور د کھ کو محسوس کر کے ہمدردی اور بھائی چارے کے جذبات کے ساتھ اس مصیبت اور دکھ کو دور کرنے کا فریضہ انجام دیں تو یہی معاشرہ فلاحی معاشرہ بن جائے گا۔ذمہ داری کا احساس ہر انسان کو ہوتا ہے اور انسان ہونے کی حیثیت سے ہم اپنی بیدار زندگی میں اس سے پوری طرح الگ نہیں ہو سکتے، لیکن اس بات سے انکار نہیں کیا جاسکتا کہ ایک شخص کی بہ نسبت دوسرے میں یہ شعور مختلف ہوتا ہے، اور جب ہم ضمیر کی بات کرتے ہیں تو اس سے ہماری مراد چھپا ہواشعور ہوتا ہے، جس کا ہمارے سلوک کو صحیح رخ دینے میں بڑا کردار ہے۔ہمیں دیکھنا ہوگا کہ ہم نے اپنا یہ کردار بھی کبھی ادا کرنے کی کوشش کی ہے نہیں کی تو ابھی کریں۔ یہ درست ہے کہ اس سارے بکھیڑے میں معاشی ناہمواریوں کابھی برا اثر مرتب ہورہا ہے مسابقت ختم ہوتی جارہی ہے سودی نظام معیشت نے ملک کی معاشی شکل بگاڑ دی ہے ۔جب معاشرے میں مالی آسودگی اور خوشحالی نہیں ہوگی تو اس کا نتیجہ معاشرے میں بے چینی کی صورت میں ہی رونما ہوگا ۔کہتے ہیں کہ سرمایہ وہاں ہجرت کرجاتا ہے جہاں سکون ہو ہمارے ہاں تو سکون نہیں رہا اب سرمایہ خواہ وہ دولت کی شکل میں ہے یا صلاحیت کی صورت میں تیزی سے موقع پاکر باہر منتقل ہورہا ہے جہاں ارتکاز ہے ، سکون ہے مجموعی طور پر امن ہے ،ہاں معاشرتی گراوٹ ضرور ہے اس سے دامن خود بچانا پڑتا ہے ،ہمارے معاشرے میں اخلاقی گراوٹ تیزی سے سرایت کررہی ہے ۔ اس کے سامنے ہمیں خود بند باندھنا ہوگا کسی دوسرے نے نہیں۔

تازہ ترین خبریں

کون سے قیدیوں کی سزائوں میں کمی کافیصلہ کیاگیا ہے،تفصیلات اس خبر میں

کون سے قیدیوں کی سزائوں میں کمی کافیصلہ کیاگیا ہے،تفصیلات اس خبر میں

فیصل واؤڈا کے حوالے سے الیکشن کمیشن کا بڑافیصلہ ،تفصیل جانئے اس خبر میں

فیصل واؤڈا کے حوالے سے الیکشن کمیشن کا بڑافیصلہ ،تفصیل جانئے اس خبر میں

افغانستان میں پاکستان کے سفارتی عملے کی حفاظت انتہائی اہمیت کی حامل ہے،وزیرخارجہ

افغانستان میں پاکستان کے سفارتی عملے کی حفاظت انتہائی اہمیت کی حامل ہے،وزیرخارجہ

انگلینڈ کے خلاف ملتان ٹیسٹ کیلئے قومی ٹیم میں 2 سے 3 تبدیلیوں کا امکان

انگلینڈ کے خلاف ملتان ٹیسٹ کیلئے قومی ٹیم میں 2 سے 3 تبدیلیوں کا امکان

خیبرپختونخوا میں پینشن کا بوجھ آنیوالے دنوں میں کتنے ارب ہوجائیگا؟تفصیل اس خبر میں

خیبرپختونخوا میں پینشن کا بوجھ آنیوالے دنوں میں کتنے ارب ہوجائیگا؟تفصیل اس خبر میں

برطانوی اخبار نے شہباز شریف سے معافی کیوں مانگ لی؟جانئے اس خبر میں

برطانوی اخبار نے شہباز شریف سے معافی کیوں مانگ لی؟جانئے اس خبر میں

وفاقی وزیرنے عمران خان کو قانون کے کٹہرے میں لانے کا مطالبہ کردیا

وفاقی وزیرنے عمران خان کو قانون کے کٹہرے میں لانے کا مطالبہ کردیا

تحریک انصاف کے رہنما کا اتحادی جماعت ق لیگ کے حوالے سے بڑا بیان سامنے آگیا

تحریک انصاف کے رہنما کا اتحادی جماعت ق لیگ کے حوالے سے بڑا بیان سامنے آگیا

امریکاکاپاکستان کے حوالے سے ایک اور بڑابیان سامنے آگیا

امریکاکاپاکستان کے حوالے سے ایک اور بڑابیان سامنے آگیا

ایک اوربھارتی اداکارہ نے اسلام کی خاطر شوبز کو خیر باد کہہ دیا

ایک اوربھارتی اداکارہ نے اسلام کی خاطر شوبز کو خیر باد کہہ دیا

انگلینڈ کیخلاف دوسرے ٹیسٹ سے قبل پاکستان ٹیم کوبڑا دھچکا

انگلینڈ کیخلاف دوسرے ٹیسٹ سے قبل پاکستان ٹیم کوبڑا دھچکا

وفاقی کابینہ کااجلاس جاری،ایجنڈا کیاہے؟تفصیل اس خبر میں 

وفاقی کابینہ کااجلاس جاری،ایجنڈا کیاہے؟تفصیل اس خبر میں 

کس ملک کا سیکورٹی گارڈ اپنی فٹبال ٹیم کی جیت کیلئے دعائیں مانگتارہا؟

کس ملک کا سیکورٹی گارڈ اپنی فٹبال ٹیم کی جیت کیلئے دعائیں مانگتارہا؟

اہم ترین شہر کے بازار سے ایک ساتھ 10موٹرسائیکلیں چوری،جانئے اس خبر میں

اہم ترین شہر کے بازار سے ایک ساتھ 10موٹرسائیکلیں چوری،جانئے اس خبر میں