12:44 pm
بھارتی الزامات کھیسانی بلی کھمبا نوچے

بھارتی الزامات کھیسانی بلی کھمبا نوچے

12:44 pm

(گزشتہ سے پیوستہ) آج کل گنگا جمنی تہذیب نفرت‘ نفرت‘ اشتعال انگیزی اور گالیاں بن چکی ہے‘ میرا وجدان کہتاہے کہ اگر نریندر مودی مزید چند سال بھارت کا حکمران رہا تو اس کی نفرت اور اشتعال پھیلاتی پالیسیاں بھارتی یکجہتی کو پارہ پارہ کر دیں گی ‘ بھارت میں مٹھی بھر سیکولر ہندوئوں کا گروہ جہاں اسلام اور مسلمانوں سے نفرت کرتا ہے وہاں وہ ہندو شدت پسندی کی بھڑکتی آگ کے سامنے بھی بے بس نظر آرہا ہے‘ ’’کانگرس‘‘ مسلمانوں کی بات تو کرتی ہے مگر صرف ووٹ بٹورنے کی حد تک‘ ان حالات میں نئی دہلی میں نومنی فارٹیرر وزارتی اجلاس میں پاکستان پر لگائے جانے والے الزامات کھیسانی بلی کھمبا نوچے کے مترادف ہے۔ کوئی شک نہیں کہ بھارتی حکومت نے ہندوستانی مسلمانوں اور پاکستان کے خلاف ’’نفرت‘‘ کو ہتھیار کے طور پر استعمال کیا ہے، پاکستان، دین اسلام اور مسلمانوں کے خلاف نفرت اور اشتعال انگیز بیانات، تقریروں، نعرے حکمران جماعت بی جے پی کے عہدیداران سمیت ہر انتہا پسند ہندو لیڈر کی خوراک بن چکے ہیں، نیشنل کرائم ریکارڈ(NCRB) کی ایک رپورٹ کے مطابق 2014ء میں جہاں نفرت اور اشتعال انگیز تقاریر کے 323کیس سامنے آئے تھے، وہیں 2020ء میں یہ تعداد بڑھ کر 1804 کیسز تک پہنچ گئی۔ رواں مہینے بھارتی سپریم کورٹ میں ایک درخواست دائر کی گئی ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ 2014ء کے مقابلے میں نفرت انگیز تقاریر اور اشتعال انگیز بیانات میں پانچ سو فیصد کا اضافہ ہوا ہے، دہلی میں ہونے والے ہندو مسلم فساد کے بعد سرکاری کمیشن نے جو رپورٹ مرتب کی، اس کے مطابق بھی اور گجرات کے سابق آئی اے ایس افسر ’’ہرش مند‘‘ نے ہائی کورٹ کے جسٹس مرلی سے مطالبہ کیا تھا کہ مرکزی وزیر انوراگ ٹھاکر اور دہلی بی جے پی کے لیڈر کپل مشراکے کی نفرت انگیز تقریروں اور مسلمانوں کے خلاف اشتعال انگیز بیانات کی وجہ سے دہلی میں مسلمانوں کے خلاف فسادات کی آگ بھڑکی، جس وقت دہلی میں ہندو بلوائی مسلمانوں کی املاک کو نذر آتش اور جانوں پر حملے کر رہے تھے۔
اس وقت دہلی پولیس اور سیکورٹی فورسز کے دیگر ادارے مسلمانوں کے خلاف ہندو دہشت گردوں کا ساتھ دے رہے تھے۔ بھارت میں مسلمانوں کے خلاف کھلم کھلا نفرت اور اشتعال انگیز تقاریر اور بیانات کے خلاف بھارتی سپریم کورٹ میں شاہین عبداللہ نام کے ایک سائل نے درخواست دائر کی ہے، چند روز قبل اس کی سماعت کرتے ہوئے جسٹس کے ایم جوزف اور جسٹس رشی کیش رائے پر مشتمل دو رکنی بینچ نے اپنی برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ریمارکس دئیے کہ ’’ ہم محسوس کرتے ہیں کہ عدالت پر بنیادی حقوق کی حفاظت اور آئینی اقدار بالخصوص قانون کی حکمرانی اور ملک کے سیکولر جمہوری کردار کے تحفظ کا فرض عائد کیا گیا ہے، جسٹس کے ایم جوزف نے ملک کے ایسے بدترین حالات پر افسردگی کے ساتھ یہ بات کہی کہ ہم کہاں پہنچ گئے ہیں؟ ہم نے مذہب کو کس حد تک گہنا دیا ہے؟ بھارتی سپریم کورٹ کے سابق جسٹس نریمن نے بھی مسلمانوں کے خلاف منافرانہ بیانات تقریروں کا نوٹس لیتے ہوئے کہا تھا کہ آج ملک کی صورتحال یہ ہے کہ ملک کی تیزی سے گرتی معیشت ہو، بے روزگاری ہو، مہنگائی ہو، غرضیکہ ہر محاذ پر تنزلی بڑھتی چلی جارہی ہے جبکہ بی جے پی کے حکومتی عہدیدار، مسلمانوں کے خلاف نفرت پھیلانے میں مصروف ہیں، ملک میں جان بوجھ کر فرقہ وارانہ اشتعال انگیزی کو بڑھاوا دیا جارہا ہے، مسلمانوں کو نسل کشی کی دھمکیاں دی جارہی ہیں، حکمران بھارتیہ جنتا پارٹی اور اس کی ہمنوا پارٹیاں پورے ملک میں جس طرح سے فرقہ وارانہ کشیدگی کو ہوا دے رہی ہیں، اس سے ملکی سالمیت کو خطرات لاحق ہوچکے ہیں۔‘‘ آر ایس ایس، بجرنگ دل، وشوا ہندو پریشد رام سینا، ہندو میراٹھ سینا، اکھنڈ بھارت سمیتی وغیرہ جیسی ہندو دہشت گرد تنظیموں کے سینکڑوں لیڈران اور لاکھوں کارکنان مستقل بنیادوں پر مسلمانوں کے خلاف مسلسل جنگی ماحول پیدا کئے ہوئے ہیں۔ اقلیتوں کے خلاف نفرت، حقارت اور اشتعال انگیزی کے اس ماحول میں نریندر مودی تخت دہلی کو اپنے لئے زیادہ محفوظ تصور کرتا ہے، حالانکہ ہندو شدت پسندی کی یہ بھڑکتی آگ اگر پورے بھارت میں پھیلے گی تو ’’تخت دہلی‘‘ بھی اس آگ کی لپیٹ میں ضرور آئے گا، لیکن جب دلوں پہ مہر اور آنکھوں پر پردہ پڑ جائے تو پھر نریندر مودی جیسے موذی ملکوں کی تباہی کا سبب بن جاتے ہیں۔ اوصاف کے ایک معزز قاری نے بدھ کی صبح موبائل کال کرکے جہاں ’’ بھارتی الزامات کھسیانی بلی کھمبا نوچے‘‘ کے عنوان سے شائع ہونے والے میرے کالم سے اتفاق کیا، وہاں یہ سوال بھی اٹھائے کہ انڈیا کی سرزمین پر فرقہ وارانہ کشیدگی کو جس طرح سے ہوا دی جارہی ہے، کیا پاکستان کی سرزمین پر یہ سب کچھ نہیں ہو رہا؟ اس خاکسار نے اوصاف کے محترم قاری کے ان سوالات کے جواب میں عرض کیا کہ پاکستانی قوم میں بھی بہت سی کمزوریاں پائی جاتی ہیں، بے شک شیعہ، سنی اختلافات بھی موجود ہیں ۔ سیاسی نفرتیں بھی پہلے سے بڑھ چکی ہیں لیکن اس سب کے باوجود پاکستان میں اقلیتوں کے ساتھ معاملات ہوں، یا مختلف فرقوں کے درمیان آپسی تعلق اور رابطے انڈیا کے مقابلے میں صرف بہتر ہی نہیں بلکہ بہت ہی بہتر ہیں، پاکستان میں ہندو، سکھ، قادیانی، پارسی حتیٰ کہ یہودی بھی رہتے ہیں اگر کبھی، کبھار کسی اقلیتی برادری اور اکثریتی مسلمانوں کے کسی گروہ میں تصادم ہو بھی جائے تو اس تصادم اور دشمنی کو روکنے کے لئے سب سے پہلے علماء کرام میدان میں اترتے ہیں۔

تازہ ترین خبریں

کون سے قیدیوں کی سزائوں میں کمی کافیصلہ کیاگیا ہے،تفصیلات اس خبر میں

کون سے قیدیوں کی سزائوں میں کمی کافیصلہ کیاگیا ہے،تفصیلات اس خبر میں

فیصل واؤڈا کے حوالے سے الیکشن کمیشن کا بڑافیصلہ ،تفصیل جانئے اس خبر میں

فیصل واؤڈا کے حوالے سے الیکشن کمیشن کا بڑافیصلہ ،تفصیل جانئے اس خبر میں

افغانستان میں پاکستان کے سفارتی عملے کی حفاظت انتہائی اہمیت کی حامل ہے،وزیرخارجہ

افغانستان میں پاکستان کے سفارتی عملے کی حفاظت انتہائی اہمیت کی حامل ہے،وزیرخارجہ

انگلینڈ کے خلاف ملتان ٹیسٹ کیلئے قومی ٹیم میں 2 سے 3 تبدیلیوں کا امکان

انگلینڈ کے خلاف ملتان ٹیسٹ کیلئے قومی ٹیم میں 2 سے 3 تبدیلیوں کا امکان

خیبرپختونخوا میں پینشن کا بوجھ آنیوالے دنوں میں کتنے ارب ہوجائیگا؟تفصیل اس خبر میں

خیبرپختونخوا میں پینشن کا بوجھ آنیوالے دنوں میں کتنے ارب ہوجائیگا؟تفصیل اس خبر میں

برطانوی اخبار نے شہباز شریف سے معافی کیوں مانگ لی؟جانئے اس خبر میں

برطانوی اخبار نے شہباز شریف سے معافی کیوں مانگ لی؟جانئے اس خبر میں

وفاقی وزیرنے عمران خان کو قانون کے کٹہرے میں لانے کا مطالبہ کردیا

وفاقی وزیرنے عمران خان کو قانون کے کٹہرے میں لانے کا مطالبہ کردیا

تحریک انصاف کے رہنما کا اتحادی جماعت ق لیگ کے حوالے سے بڑا بیان سامنے آگیا

تحریک انصاف کے رہنما کا اتحادی جماعت ق لیگ کے حوالے سے بڑا بیان سامنے آگیا

امریکاکاپاکستان کے حوالے سے ایک اور بڑابیان سامنے آگیا

امریکاکاپاکستان کے حوالے سے ایک اور بڑابیان سامنے آگیا

ایک اوربھارتی اداکارہ نے اسلام کی خاطر شوبز کو خیر باد کہہ دیا

ایک اوربھارتی اداکارہ نے اسلام کی خاطر شوبز کو خیر باد کہہ دیا

انگلینڈ کیخلاف دوسرے ٹیسٹ سے قبل پاکستان ٹیم کوبڑا دھچکا

انگلینڈ کیخلاف دوسرے ٹیسٹ سے قبل پاکستان ٹیم کوبڑا دھچکا

وفاقی کابینہ کااجلاس جاری،ایجنڈا کیاہے؟تفصیل اس خبر میں 

وفاقی کابینہ کااجلاس جاری،ایجنڈا کیاہے؟تفصیل اس خبر میں 

کس ملک کا سیکورٹی گارڈ اپنی فٹبال ٹیم کی جیت کیلئے دعائیں مانگتارہا؟

کس ملک کا سیکورٹی گارڈ اپنی فٹبال ٹیم کی جیت کیلئے دعائیں مانگتارہا؟

اہم ترین شہر کے بازار سے ایک ساتھ 10موٹرسائیکلیں چوری،جانئے اس خبر میں

اہم ترین شہر کے بازار سے ایک ساتھ 10موٹرسائیکلیں چوری،جانئے اس خبر میں