01:01 pm
’’خادم قرآن‘‘ کی تعلیمی، فلاحی خدمات کا اعتراف؟

’’خادم قرآن‘‘ کی تعلیمی، فلاحی خدمات کا اعتراف؟

01:01 pm

’’ہم مردہ پرست قوم ہیں‘‘ بچپن سے سنے ہوئے اس جملے کو پیر کی شام اس وقت عملاً غلط ثابت ہوتے دیکھا کہ جب یہ خاکسار مین یونیورسٹی روڈ گلشن اقبال کراچی میں منعقدہ اس تقریب میں پہنچا کہ جو ممتاز ، جید عالم دین، ماہر تعلیم اور انسانیت کی فلاح کے لئے خدمات سرانجام دینے والی معروف سماجی شخصیت حضرت مولانا عبدالوحید کی قرآنی، تعلیمی، اسلامی اور انسانیت کے لئے خدمات کے اعتراف میں کراچی کے شہریوں نے منعقد کی تھی۔
وہی انسان زندہ دل تصور کیا جاتا ہے کہ جو اپنے ’’محسن‘‘ کو کبھی نہ بھولے، بزرگوارم اقبال احمد فاروقی، سید عارف علی اور ان کے دیگر ساتھیوں نے ادارہ معارف، القرآن کے بانی صرف گلشن اقبال یا کراچی ہی نہیں بلکہ جن کی تعلیمی اور فلاحی خدمات گلگت بلتستان سے لے کر بلوچستان، کے پی کے اور کشمیر کے پہاڑوں تک پھیلی ہوئی ہیں کی تعلیمی، انسانی، فلاحی خدمات کا اعتراف کرکے یہ بات ثابت کر دی کہ وہ مردہ پرست یا محسن کش نہیں، بلکہ قوم کے بچوں کے محسنوں کے احسانات کو یاد رکھنے والے ہیں۔ تقریب سادہ، مذہبی رنگ میں رنگی ہوئی سینکڑوں عام و خاص افراد پر مشتمل تھی، اس تقریب کی خاص بات کراچی کی بزنس کمیونٹی کی ممتاز شخصیات، ادارہ معارف القرآن، جامع مسجد آمنہ اور اس کے تحت ملک بھر میں جاری فلاحی منصوبوں کے لئے روز اول سے چندہ دینے والی چیدہ چیدہ شخصیات بھی موجود تھیں، میرے دوست مولانا عبدالوحید کو چاہنے والوں نے القابات تو بہت سے دئیے لیکن میری پسند ان کو ملک کے جید اور اکابر علماء کی طرف سے ملنے والا وہ لقب ہے کہ جو عوامی پروگراموں کے اشتہارات میں اکثر ان کے نام ساتھ لکھا جاتا ہے اور وہ ہے ’’خادم قرآن‘‘ صرف ملک پاکستان ہی نہیں بلکہ انٹرنیشنل سطح پر بھی ان کی قرآنی خدمات کے اعتراف میں ملک کے ممتاز اور اکابر علماء ان کو ’’خادم قرآن‘‘ قرار دیتے ہیں۔ ان کو پاکستان میں ’’مسابقات حفظ قرآن‘‘ کا بانی بھی تصور کیا جاتا ہے، اکابرین اُمت اور جید علماء کرام کی طرف سے ’’خادم قرآن‘‘ کا اعزاز مل جانا کئی حکومتی ستارہ امتیازوں اور گولڈ میڈلز سے بہتر ہے، انہوں نے ادارہ معارف القرآن کی بنیاد 1992ء میں رکھی تھی، اس ادارے میں دینی، دنیاوی تعلیم کو ان کے خلوص اور للہیت نے یوں چار چاند لگائے کہ ان گزرے 30سالوں میں یہاں پانچ ہزار سے زائد اعلیٰ معیار کے حفاظ کرام تیار ہوچکے ہیں، جبکہ سات سو طلباء و طالبات سائنس کے ساتھ میٹرک تک اپنی تعلیم مکمل کرچکے ہیں، طلباء و طالبات کی صرف خالی خولی تعلیم ہی نہیں بلکہ خاص طور پر ان کی تربیت بھی کی جاتی ہے۔ کراچی ابوالحسن اصفحانی روڈ پر واقع ایک چھوٹی سی مسجد سے شروع کیا جانے والا ادارہ آج ملک بھر میں اپنے چھ مراکز اور 170قرآنی مکاتب اور بے شمار فلاحی خدمات کی وجہ سے ’’مینارہ نور‘‘ بن چکا ہے روزنامہ اوصاف کے چیف ایڈیٹر محترم مہتاب خان اکثر اپنی گفتگو میں یہ جملہ کہتے ہیں کہ ’’ادارے‘‘ بنانا آسان کام نہیں ہے، لیکن جب ادارے بن جاتے ہیں تو پھر وہ انسانوں کی بھلائی کے کام آتے ہیں۔ مولانا عبدالوحید کے ادارہ معارف القرآن نے اگر قوم کے ہزاروں نونہال بچوں اور بچیوں کے دل و دماغ میں قرآن شمع کو روشن کیا تو یہ اللہ کا ان پر خاص فضل و کرم نہیں تو پھر کیا ہے؟ ادارہ معارف القرآن کے اس کارنامے کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا کہ جب 2005ء میں آنے والے زلزلے نے کشمیر میں قیامت برپا کر دی تھی، یہ خاکسار زلزلے کے وہ ابتدائی دو ماہ مظفرآباد میں زلزلہ زدگان کی خدمت کے لئے موجود رہا، وہ انسانی المیہ اس خاکسار نے بہت قریب سے دیکھ رکھا ہے۔شائد ایسے ہی کسی حادثے کو دیکھ کر شاعر نے کہا تھا: روش روش، چمن چمن یہاں لہو وہاں لہو بتائوں کیا یہ حادثہ کہاں کہاں گزر گیا خزاں کے پہلو میں توڑتی دم حسین بہاروں کو میں نے دیکھا تڑپتے بچوں کو میں نے دیکھا، سسکتی مائوں کی گودیوں میں بہرحال ان قیامت خیز لمحات میں کشمیر کے متاثرہ خاندانوں کے بچوں کو کراچی لا کر صرف شاندار رہائشی سہولیات، علاج، معالجہ اور مکمل کفالت ہی نہیں بلکہ ان کی دینی و دنیاوی اعلیٰ تعلیم کا بھی خوب خیال رکھا، چنانچہ 2005ء کے وہی زلزلہ زدہ بچے، آج مختلف شہروں میں علماء، اساتذہ بن کر نہ صرف تعلیمی خدمات سرانجام دے رہے ہیں بلکہ بے سہارا انسانوں کا سہارا بننے کے لئے مولانا عبدالوحید کے دست و بازو بھی بنے ہوئے ہیں۔ مولانا عبدالوحید نے یتیم بچوں کی کفالت، تربیت اور ان کی دینی و دنیاوی تعلیم کا جو سلسلہ شروع کر رکھا ہے، وہ بھی اپنی مثال آپ ہے، مسجد کے ہال میں نونہال بچوں کے ساتھ بیٹھ کر سورہ یٰسین کی تلاوت کرنا اور کبھی درود پاک اور دیگر تسبیحات کی محفلیں جمانا ان کو سب سے زیادہ محبوب ہے، وہ کہتے ہیں کہ ان بچوں کے اٹھے ہوئے ننھے منے ہاتھوں پر رب کو بھی پیار آجاتا ہے، میں ان بچوں کو اپنی دعائوں میں شریک کرکے اپنے اللہ کریم کو منانے کی کوشش کرتا ہوں، میرا اللہ بڑا غفور الرحیم ہے۔ دینی، تعلیمی خدمات کے ساتھ ساتھ پسماندہ علاقوں میں رفاہی خدمات میں بھی وہ صف اول پہ ہیں۔ بلوچستان، تھرپارکر سے لے کر آزادکشمیر تک پانی کی فراہمی، مکاتب قرآنی اور تعمیر مساجد ان کی رففاہی سرگرمیوں کا حصہ ہیں، حالیہ سیلاب کے موقع پر سیلاب زدگان کے لئے ان کی خدمات انتہائی قابل تحسین ہیں، ایک ایسا انسان کہ جس کی دینی، تعلیمی، تربیتی اور فلاحی خدمات کا اک زمانہ معترف ہو، اگر دوست احباب، علماء اور ڈونرز مل کر اسے خراج تحسین پیش کرنے کے لئے اجتماعی تقریب منعقد کرتے ہیں تو یہ اس لحاظ سے ایک مبارک عمل ہے کیونکہ دیے سے ہی دیا جلا کرتا ہے، اللہ کرے کہ ان کی یہ اچھی صفات دوسروں تک بھی منتقل ہوں۔آمین (جاری ہے)

تازہ ترین خبریں

امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے چیف الیکشن کمشنر سے قوم سے معافی مانگنے اور مستعفی ہونے کا مطالبہ کردیا

امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے چیف الیکشن کمشنر سے قوم سے معافی مانگنے اور مستعفی ہونے کا مطالبہ کردیا

اڈیالہ جیل میں قیدی کے قتل سے متعلق جیل حکام کیجانب سے بیان جاری 

اڈیالہ جیل میں قیدی کے قتل سے متعلق جیل حکام کیجانب سے بیان جاری 

 وکرم سنگھ پرپاکستان کے لیے جاسوسی کا الزام ، بھارتی فوج نے گرفتار کر لیا

 وکرم سنگھ پرپاکستان کے لیے جاسوسی کا الزام ، بھارتی فوج نے گرفتار کر لیا

عمران خان اسمبلی پہنچ گئے؟سوشل میڈیا پر وائرل ویڈیوز نے تہلکہ مچا دیا ،دیکھیں

عمران خان اسمبلی پہنچ گئے؟سوشل میڈیا پر وائرل ویڈیوز نے تہلکہ مچا دیا ،دیکھیں

سی ڈی اے کی جانب سے دارالحکومت میں پانی کی قلت کو پورا کرنے کے لیے کام تیز 

سی ڈی اے کی جانب سے دارالحکومت میں پانی کی قلت کو پورا کرنے کے لیے کام تیز 

بلوچستان اسمبلی، عبدالخالق اچکزئی اسپیکر اور غزالہ گولہ ڈپٹی اسپیکر منتخب ہوگئے

بلوچستان اسمبلی، عبدالخالق اچکزئی اسپیکر اور غزالہ گولہ ڈپٹی اسپیکر منتخب ہوگئے

مسلم لیگ ن اور جے یو آئی کےسینیٹر ز سینیٹ نشستوں سےمستعفیٰ 

مسلم لیگ ن اور جے یو آئی کےسینیٹر ز سینیٹ نشستوں سےمستعفیٰ 

یوسف رضا گیلانی نے سینیٹ کی نشست سے استعفیٰ دے دیا

یوسف رضا گیلانی نے سینیٹ کی نشست سے استعفیٰ دے دیا

صدر نے منتخب ایم این ایز کی حلف برداری سے چند گھنٹے قبل قومی اسمبلی کا اجلاس طلب کر لیا 

صدر نے منتخب ایم این ایز کی حلف برداری سے چند گھنٹے قبل قومی اسمبلی کا اجلاس طلب کر لیا 

  کسی بھی  احتجاج کی اجازت نہیں، وفاقی دارالحکومت میں دفعہ 144 نافذ العمل، سیکیورٹی الرٹ جاری

کسی بھی احتجاج کی اجازت نہیں، وفاقی دارالحکومت میں دفعہ 144 نافذ العمل، سیکیورٹی الرٹ جاری

اسپیکر و ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی کے الیکشن کا شیڈول تبدیل، کب ہو گا ؟ دیکھیں خبر میں

اسپیکر و ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی کے الیکشن کا شیڈول تبدیل، کب ہو گا ؟ دیکھیں خبر میں

 جعلی مشروبات تیارکرنے والی مشہور برانڈ کی فیکٹری پر چھاپہ،خوفناک انکشافات

 جعلی مشروبات تیارکرنے والی مشہور برانڈ کی فیکٹری پر چھاپہ،خوفناک انکشافات

58 فیصد پاکستانیوں کیجانب سے 8 فروری کا  پولنگ کاعمل کو شفاف قرار، سروے رپورٹ دیکھیں

58 فیصد پاکستانیوں کیجانب سے 8 فروری کا  پولنگ کاعمل کو شفاف قرار، سروے رپورٹ دیکھیں

پاور ڈویژن نے بجلی ترسیل کیلئے ترکی کا ماڈل اپنانے کا فیصلہ کر لیا 

پاور ڈویژن نے بجلی ترسیل کیلئے ترکی کا ماڈل اپنانے کا فیصلہ کر لیا