08:18 am
اسلام میں خواتین

اسلام میں خواتین

08:18 am

اسلام میں عورتمسلم خواتین (عربی: مسلمات مسلمہ، واحد مسلمة مسلمہ) کے تجربات مختلف سماج کے درمیان وسیع پیمانے پر مختلف ھوتے ہیں۔ ایک ہی وقت میں، ان کا مسلمان ہونا ایک مشترکہ عنصر ہوتا ہے جو ان کی زندگی مختلف سطحوں پر اثر انداز کرتا ہے اور انہیں ان کی عام شناخت دیتا ہے جو ان کے درمیان وسیع ثقافتی، سماجی اور اقتصادی اختلافات کو مٹانے کی خدمت کر تا ہے۔
 
اسلامی تاریخ کے دوران عورتوں کی سماجی اور روحانی حیثیتت کوجن چیزوں نے اثر انداز ں کیا ہے اُن میں اسلام کا مقدس متن، قرآن، حدیث، سنت رسول صلی اللہ علیہِ و سلم ، اجما ع ، قانون سازی میں اتفاق را ئے ،قیاس، ایک جیسے حالات میں قانون کا قیاس کرنا، فتویٰ،، مذہبی نظریات یا قانون کے نقطہ نظر کے بارے میں غیر پابند رائے یا فیصلے، شامل ہیں۔ ا ضافی طور پر اسلام سے قبل کی ثقافت، سیکولر قوانین،جو کے جب تک وہ شریعت کے خلاف نہ ہوں قبول کیے جاتے ہیں،مذہبی حکام بشمول حکومتی ا دا رے جیسےانڈونیشیا علما کونسل اور ترکی کی دیانت اور روحانی اساتذہ خاص طور پر اسلامی روحانیت یا تصوف میں نمایاں ہیں۔ اُن میں سے کئی- بشمول اُن میں سب سے مقبول ابن عربی نے اپنے مضامین میں اسلام میں نسائی اصول کے استعفی اہمیت کو واضح کیا ہے۔ درج شدہ ذرائع کی کس طرح تشریح کی جاتی ہے اس میں خاصہ ا ختلاف ہے - دونوں سنی و شیعہ- جو مسلمانوں میں تقریباً نبّے فیصد ہیں- اور نظریاتی بنیاد پرست، خاص طور پر وہابیت یا سلفیت - جو تقریباً نو فیصد پر مشتمل ہیں۔خاص طور پر وہابی و سلفی ماہرین صوفیانہ نظریات کو مسترد کرتے ہیں۔ ان ا ختلافت کا بہت گہرا اثر ہوتا ہے کہ ایک فرقہ میں عورت کو کس طرح دیکھا جا تا ہے۔ اس کے برعکس، اسلامی آرتھوڈوکس کے اندر، قائم شدہ فقہی اسکول اور تصوف دونوں ہی کسی حد تک مؤثر ہیں۔