12:04 pm
خواتین سیلف گرومنگ کی طرف توجہ دے رہی ہیں

خواتین سیلف گرومنگ کی طرف توجہ دے رہی ہیں

12:04 pm

زمانہ قدیم سے ہی عورت اپنے بناؤ سنگھار ،سجنے سنورنے پر خصوصی توجہ دیتی رہی ہے کیونکہ یہ اس کی جبلت کا حصہ ہے۔اس کا مقصد پر کشش اور حسین دکھائی دینا ہے۔لیکن جوں جوں عمر گزرتی ہے اُس کی خوبصورتی میں فرق آنا شروع ہو جاتاہے۔لہٰذا وہ ہر ممکن کوشش کرتی ہے کہ جوان نظر آئے اس کے لئے وہ کئی جتن بھی کرتی ہے۔ گھریلو دیسی ٹوٹکوں سے لیکر بیوٹی پارلرز اور جدید سائنسی طریقے سب اپنائے جاتے ہیں۔ بناؤ سنگھار کی تاریخ بھی اتنی ہی پرانی ہے جتنی خود انسان کی مگر یہ عصر حاضر کا کمال ہے کہ نین نقش تبدیل کرنے کے مواقع بھی پیدا ہو گئے ہیں۔اگر آپ کی ناک چپٹی یاکوئی اور نقص ہے تو آپ اپنی خواہش کے عین مطابق تراش خراش کرواسکتی ہی۔آپ ہونٹوں کو بھی حسین بنوا سکتی ہیں،ڈھلکی جلد چاہے چہرے کی ہو گردن یا پیٹ سب ٹھیک کیا جا سکتاہے۔
لائپو سکشن کے ذریعے پیٹ کی چربی نکلوا کر سلم اور اسمارٹ بنا جا سکتاہے،گنجاپن دور کرنے سمیت اپنی ظاہری خوبصورتی میں واضع تبدیلیاں کروائی جاسکتی ہیں۔ان تبدیلیوں کو پلاسٹک یا کاسمیٹک سر جری کا نام دیا گیا ہے ۔یہ وہ صنعت ہے جسے گزشتہ دس سال کے دوران کافی عروج حاصل ہوا ہے۔صرف خواتین ہی نہیں اب تو مرد حضرات بھی اپنے اوپر خصوصی توجہ دینے لگے ہیں اور تمام جدید طریقوں سے فائدہ بھی اٹھا رہے ہیں۔

اس سلسلے میں پاکستان کی پہلی اور واحد خاتون کو الیفائیڈ ماہر پلاسٹک،کاسمیٹکس،ہینڈ اور ری کنسٹرکٹیو سرجن ڈاکٹر نبیہہ رحمان سے خصوصی انفارمیشن حاصل کی گئی جو نذر قارئین ہے۔وہ کہتی ہیں کہ خوبصورت نظر آنا ہر انسان کی فطری خواہش ہوتی ہے اور یہ انکا حق بھی ہے لہٰذا اب خواتین سیلف گرومنگ کی طرف بہت توجہ دے رہی ہیں۔تاہم ان کا کہنا ہے کہ اس شعبے میں موجود عطائیوں سے ہو شیار رہیں۔
لوگ اس شعبے میں مہارت اور باقاعدہ کوالیفیکیشن کے بغیر کلینکس چلا رہے ہیں جس کے خطر ناک نتائج سامنے آسکتے ہیں اور آبھی رہے ہیں۔
ڈاکٹر نبیہہ مزید کہتی ہیں کہ بازار میں رنگ گورا کرنے والی کریمیں خاص کر گھٹیا کریمیں انتہائی مضر ہیں کیونکہ ان سے جلد بہت حساس ہو جاتی ہے۔رنگ گورا کرنے والے جب ان کریموں کو لگا کر دھوپ میں جاتے ہیں تو ان کی جلد جل جاتی ہے۔
چھائیاں پڑ جاتی ہیں اور سب سے بڑھ کر یہ کہ وقت سے پہلے چہرے پر بوڑھے ہونے کے اثرات نمایاں ہو نا شروع ہو جاتے ہیں۔
وہ کہتی ہیں کہ ان کریموں میں اسٹیرائیڈز ہوتے ہیں جس سے جلد پتلی ہو جاتی ہے۔انہوں نے بتایا کہ لندن میں تو رنگ گورا کرنے والی کریموں پر مکمل پابندی عائد ہو چکی ہے۔البتہ جلد کو بہتر کرنے کے لئے بہت سے ٹریٹمنٹس آگئے ہیں جس سے آپ کی جلد فریش ،صحت مند ہونے کے ساتھ بڑھاپے کے اثرات کو دیر سے آنے دیتی ہے۔
ڈاکٹر نبیہہ کہتی ہیں گزشتہ پندر سالوں میں کاسمیٹکس سر جری کا رجحان بہت بڑھ گیا ہے ٹریننگ نہیں ہے مشین لگا کر لوگ کام شروع کر دیتے ہیں وہ سمجھتے ہیں کہ وہ اسکن اسپشلسٹ بن گئے ہیں دراصل اب یہ ایک بزنس بن گیا ہے اس لئے میں لوگوں سے کہنا چاہتی ہوں کہ اسکن یا سیلف گرومنگ کرواتے وقت وہ ڈاکٹر،ماہر جلد کی کوالیفیکیشن ضرور چیک کریں صرف اشتہار دیکھ کر ٹریٹمنٹ کروانا درست نہیں۔

ڈاکٹر نبیہہ بتاتی ہیں کہ سر جیکل اور نون سر جیکل دو طرح کے اسکن ٹریٹمنٹ ہوتے ہیں سرجیکل ٹریٹمنٹ صرف پلاسٹک سرجن ہی کر سکتاہے ٹرینڈ پلاسٹک سرجن پاکستان میں بہت کم ہے۔سرجیکل میں فیشل کنٹورنگ،رائینو پلاسٹی،ٹھوڑی یا یا گالوں کو خوبصورت بنانا ،چہرہ ،گردن،آنکھیں،بھنویں ،باڈی کنٹورنگ ،جلد کو خوشنما اور سنوارنا ،وغیرہ شامل ہے جبکہ نان سر جیکل ٹریمنٹ میں فلرز،بوٹوکس،لپ انجیکشن،لیزر فیشل،لیزر کنٹورنگ،وغیرہ شامل ہے تاہم یہ ڈاکٹر نے طے کرنا ہے کہ کس مریض کو کس ٹریٹمنٹ کی ضرورت ہے۔

سر جیکل یا نان سر جیکل ٹریٹمنٹ میں سائیڈ ایفیکٹس کے حوالے سے ڈاکٹر نبیہہ کا کہنا تھا کہ اگر آپ کسی نان ٹرینڈ ڈاکٹر یا عطائی کے پاس جائیں گے تو 100فیصد مسئلہ ہو گا اور اگر آپ کو الیفائیڈ اسکن اسپیشلسٹ کے پاس جائیں گے تو اس کے یقینا اچھے نتائج سامنے آئیں گے۔تھریڈ لفٹ ،فلرز اور بوٹوکس میں ایسی کوئی چیز نہیں جو آپ کو نقصان دے ۔بلکہ کو لچن جو انسانی جلد میں موجود ہوتاہے۔
عمر بڑھنے کے ساتھ کم ہوتا جاتاہے۔بوٹوکس اسے بنانے میں مدد کرتے ہیں،اسی طرح فلزر میں ہائیلونوریک ایسڈ ہوتاہے جو جلد کو فریش کر دیتاہے ڈاکٹر نبیہہ رحمان کا کہنا تھا کہ سیلف گرومنگ کے لئے لیزر ٹیکنالوجی کا استعمال بھی بہت عام ہورہا ہے لیزر بھی کئی اقسام کے ہیں۔لیزر ٹریٹمنٹ کے حوالے سے ڈاکٹر نبیہہ نے بتایا کہ لیزر کا سب سے زیادہ استعمال غیر ضروری بالوں کو کم کرنے کے لئے کیا جاتاہے لیکن اس سے بال بالکل ختم نہیں بہت کم ہو جاتے ہیں۔

اس کے علاوہ لیزر اسکن ٹائیٹ کرنے کیل مہاسوں اور جلے ہوئے نشانات دور کرنے،فائن لائنز اور اسکن پیلنگ کے لئے کیا جاتاہے۔ڈاکٹر نبیہہ نے بتایا کہ جلد کو تروتازہ بنانے کے لئے پی آر پی یا پروٹین رچ پلازما تھراپی بہت ایڈوانس ٹریٹمنٹ ہے جس میں مریض کے خون ہی میں سے گروتھ فیکٹر نکال کر اسکن میں انجیکٹ کیا جاتاہے جس سے جلد فریش ہوتی جاتی ہے۔
یہ بالوں کی گروتھ میں بھی بہت مدد کرتاہے۔ان کا کہنا تھا کہ سیلف گرومنگ کی صنعت بہت تیزی سے ترقی کر رہی ہے آئے دن نئی نئی سرجیکل ٹیکنیکس متعارف ہو رہی ہیں۔ان ٹریمنٹس سے آپ اپنی عمر کوکئی سال پیچھے دھکیل سکتے ہیں۔
ڈاکٹر نبیہہ کا کہنا تھا کہ چہرے کے ساتھ جسم کو بھی مختلف ٹریٹمنٹس سے خوبصورت اور اسمارٹ بنایا جا سکتاہے۔بچوں کی پیدائش کے بعد پیٹ ڈھلک جانا یا جسم میں چربی کی زیادتی ،وزن کم کرنے کے ساتھ دیگر کئی طریقے موجود ہیں جن سے اپنے آپ کو فٹ رکھا جا سکتاہے انہوں نے کہا کہ آجکل رنگ گورا کرنے کے انجیکشن بھی لگوائے جا رہے ہیں لیکن وہ ان کے حق میں نہیں۔
انجیکشنز کو زیادہ تعداد میں لگوانا پڑتاہے جو جگر پر اثر انداز ہوتے ہیں۔ ڈاکٹر نبیہہ نے کہا کہ خواتین کو مشورہ دوں گی کہ سردی ہو یا گرمی سن بلاک ضرور استعمال کریں۔اس سے پیلمنٹیشن اور پری میچور ایجنگ سے بچا جا سکتاہے۔اس کے علاوہ صحت مند اور متوازن غذا کا استعمال کریں،سٹرس فروٹس جیسے کینو،مالٹا ،گریپ فروٹ لیموں میں وٹامن سی ہوتاہے جو جلد کے لئے بہت فائدے مند ہے۔
پانی بہت پئیں ،ورزش ضرور کریں۔ لیموں کو جلد پر لگا بھی سکتے ہیں۔جلد کو ہائڈریٹ رکھنے کے لئے اچھے موسچرائزر کا استعمال کریں۔ موئسچرائزر اور کریمیں کمپنی کی استعمال کریں کیونکہ اچھی کمپنیاں ریسرچ کے بعد اپنی مصنوعات بازار میں لاتی ہیں ۔ڈاکٹر نبیہہ کا کہنا تھاکہ خواتین کپڑوں اور میک اپ پر اتنا خرچ کرتی ہیں تھوڑے پیسے خرچ کرکے وہ اپنی عمر کو کئی سال پیچھے دھکیل سکتی ہیں۔