07:04 am
راس الخیمہ: لڑکی کو جنسی تعلقات کے لیے مجبور کرنے والا شخص پولیس کی گرفت میں آ گیا

راس الخیمہ: لڑکی کو جنسی تعلقات کے لیے مجبور کرنے والا شخص پولیس کی گرفت میں آ گیا

07:04 am

راس الخیمہ: پولیس نے ایک اماراتی شخص کو نوجوان لڑکی کو جنسی عمل کے لیے مجبور کرنے، فحش تصویریں بھیجنے اور اُس کی مرضی کے بغیر اُس سے سوشل میڈیا اکاؤنٹ پر رابطہ کرنے کے الزام میں گرفتار کر لیا ہے۔ استغاثہ کی جانب سے بتایا گیا کہ ملزم نے لڑکی سے واٹس ایپ نمبر پر رابطہ کیا اور اُسے مجبور کرتا رہا کہ وہ اُس کے ساتھ ناجائز جنسی تعلقات اُستوار کرے، ملزم نے اُسے یہ ترغیب بھی دی کہ اُس نے راس الخیمہ کے ایک ہوٹل میں ا س مقصد کے لیے کمرہ بھی بُک کروا لیا ہے۔ملزم اُسے اس کام کے لیے بار بار مجبور کرتا رہا، لڑکی کے ذہن کو جنسی عمل کی طرف مائل کرنے کی خاطر ملز م نے اُسے بار بار فحش تصاویر بھی بھیجیں۔ متاثرہ لڑکی کچھ عرصہ تک تو اُسے برداشت کرتی رہی، مگر جب ملزم اپنی حرکتوں سے باز نہ آیا تو پولیس میں اُس کے خلاف رپورٹ درج کرا دی اور ملزم کی جانب سے بھیجے گئے پیغامات اور فحش تصاویر بھی بطور ثبوت پیش کر دیں۔
تاہم ملزم کے وکیل نے عدالت میں یہ مٴوقف اختیار کیا کہ اُس کے موٴکل اور مُدعی لڑکی کے درمیان چار پانچ ماہ سے واٹس ایپ پر رابطہ تھا۔ایسا کہنا بالکل غلط ہے کہ ملزم نے لڑکی کی مرضی کے خلاف اُس سے واٹس ایپ پر رابطہ بنا رکھا تھا۔ دُوسری اہم بات یہ ہے کہ ملزم نے لڑکی سے جنسی عمل کے لیے کسی بھی ہوٹل میں کوئی کمرہ نہیں بُک کروایا تھا ۔ ان دونوں کے درمیان پیغامات اور تصاویر کے تبادلے میں دونوں کی مرضی شامل ہوتی تھی۔

تازہ ترین خبریں