’’ہارے بھی توبازی مات نہیں‘‘

’’ہارے بھی توبازی مات نہیں‘‘

4 days ago.

باوجوداس کے کہ آپ اپنے اندرایک جزیرہ ہیں لیکن یہ جزیرہ انسانوں کی دنیامیں آباداوران کے درمیان واقع ہے۔کسی نے کہاہے کہ ہم فکرمند نہیں ہوں گے تو بھوکے مرجائیں گے،اوراگرفکر کرتے رہیں گے توپاگل خانے میں جاکرفوت ہوجائیں گے۔زندگی ان دنوں اس قدرمشکل ہوگئی ہے کہ ہمیں ڈھنگ سے فکرکرنا بھی نہیں آتا۔ہم دشمن حملہ آوروں کی فکرکرتے رہیں گے اوراپنے پڑوسی کی کارکے نیچے آکردب کرمرجائیں گے۔ہم ہوائی جہازکے کریش سے خوفزدہ رہیں گے اورسیڑھی سے گرکرفوت ہوجائیں گے۔ہم دوسروں سے ورزش نہ کرنے کی شکائت کرتے رہیں گے اورگھر کے سامنے لگے ہوئے لیٹربکس میں خط ڈالنے کیلئے گیراج سے کارنکالیں گے۔ہم فکرمندی کے فن سے بھی ناآشنا ہو گئے ہیں اورہم صحیح فکرکرنابھی بھول گئے ہیں۔ فکر کرنا ایک اچھی بات ہے اوراس سے بہت سے کام سنور جاتے ہیں۔بچے پل جاتے ہیں،گھرچلتے ہیں، دفتر کا نظام قائم ہوتاہے، بزرگوں کی نگہداشت ہوتی ہے۔ فکرمندی ایک صحت مند اقدام ہے،یہ کام کرنے پراکساتی ہے،لیکن سب سے ضروری فکراپنی روح کی ہونی چاہئے اورسب سے اہم فیصلہ یہ ہونا چاہئے کہ ہم اپناابد کہاں گزاررہے ہیں اورکیسا گزاررہے ہیں۔یہ سوچناچاہئے کہ اگرہمیں ساری دنیاکی دولت مل جائے اورہماری روح میں گھاٹاپڑجائے،توپھریہ کیساسوداہے؟  

افغان بھارتی آبی سازش

افغان بھارتی آبی سازش

6 days ago.

نئی دہلی کابل کوایک ایسے ڈیم کیلئے فنڈفراہم کررہاہے جس کے ذریعے وہ پاکستان کی جانب پانی کے بہاکوکم کرناچاہتاہے۔اس پروجیکٹ سے ممکنہ طورپر ایک نئی خلفشارکاآغاز ہو سکتا ہے۔افغانستان کے اکثر علاقوں کواس وقت فصل کی کاشت کیلئے مطلوبہ بارش اور برفباری میں60فیصدکمی کاسامناہے۔کابل کو آبادی میں تیزرفتاراضافہ،شدیدخشک سالی اور ماحولیاتی تبدیلیوں کی وجہ سے نئے آبی منصوبوں کی فوری ضرورت ہے لیکن سیاسی اعتبار سے اس منصوبہ کی تکمیل آسان نہیں۔ پاکستان  اورافغانستان کاسرحدی علاقہ انتہائی پیچیدہ اور تنازعات سے پرہے۔دونوں ملکوں کے درمیان باہمی اختلافات کوحل کرنے کا کو ئی قانونی فریم بھی موجود نہیں۔اس سب کے باوجود ضلع چہارآسیاب اوردریائے کابل کے سنگم پر شہتوت ڈیم کی تعمیرکاجلدآغازہونےوالاہے۔اس ڈیم میں146 ملین کیوبک میٹرپانی ذخیرہ کرنے کی گنجائش موجودہوگی ،جس سے کابل کے20لاکھ افراد مستفید ہوں گے اور 4000ہیکٹررقبے کوسیراب کیاجاسکے گا۔اس ڈیم سے کابل کے مضافات میں واقع ایک نئے شہردیہہ سبزکوپینے کاپانی میسرآئے گااورکئی دہائیوں پرمحیط تباہ کن جنگ کے بعد افغانستان ہا ئیڈ رو پاور سے اپنی معیشت کوبجلی فراہم کرنے کے قابل ہوسکے گالیکن اس منصوبے سے خدشہ ہے کہ دریائے کابل کے بہامیں تبدیلی کی وجہ سے پاکستان کے زیریں علاقوں کوپانی کی کمی کاسامناہوگا۔ معتبرذرائع کے مطابق شہتوت اوردیگرزیرغورڈیم کی تکمیل سے پاکستان کو 17،16 فیصد تک پانی کی کمی کاسامنا ہوسکتاہے۔ 

ہم سب مجرم ہیں

ہم سب مجرم ہیں

14 days ago.

ہاں حالات توخراب ہیں،بہت خراب ‘ لیکن کیوں ہیں؟میں نہیں جانتا، سوچتا ضرورہوں اورمیں اس نتیجے پرپہنچا ہوں کہ میں اصل نہیں ہوں جعلی ہوں۔ایک کشتی کی بجائے بہت سی کشتیوں میں سوارہوں۔ایک راستہ چھوڑکربہت سے راستوں پرگامزن ہوں۔ ادھورااورنامکمل ہوں میں۔میں اپنا اعتماد کھوبیٹھاہوں اورسہاروں کی تلاش میں ہوں۔میں اتناتوجانتاہی ہوں کہ بیساکھیوں سے میں چل تولوں گالیکن دوڑنہیں سکوں گاپھربھی بیساکھیوں کاسہارا...!میں گلے اورشکوے شکائت کرنے والابن گیاہوں‘مجھے یہ نہیں ملا، میں وہ نہیں پاسکا،ہائے اس سماج نے تومجھے کچھ نہیں دیا،میرے راستے کی دیواربن گیا ہے۔میں خودترسی کا شکارہوں،میں چاہتا ہوں کہ ہرکوئی مجھ پرترس کھائے،میں بہت بیچارہ ہوں،میراکوئی نہیں۔میں تنہاہوں،مجھے ڈس رہی میری اداسی‘ ہائے میں مرگیا ،ہائے میں کیاکروں، میں مجسم ہائے ہوں۔میں کیاہوں،میں کون ہوں مجھے کچھ معلوم نہیں۔ عجیب سے مرض کاشکارہوں میں۔بس کوئی مجھے سہارادے،کوئی میراہاتھ تھامے،کوئی مری بپتاسنے......بس میں اورمیری کاچکر۔میں اس گرداب میں پھنس گیاہوں اورنکلنے کی کوشش کی بجائے اس میں غوطے کھارہاہوں۔میں حقائق سے آنکھیں چراکرخواب میں گم ہوں۔ہرشے بس مری دسترس میں ہوجبکہ میں جانتاہوں کہ میں کن کہہ کرفیکون نہیں دیکھ سکتا،پھر بھی...!  

امریکہ السیسی سے بیزار

امریکہ السیسی سے بیزار

19 days ago.

کچھ تومعاملہ یہ ہے کہ درون خانہ سیاست الجھ گئی ہے،کچھ یہ بات بھی ہے کہ مشرق وسطیٰ کی سیاست نے تھکادیاہے اورپھریوں بھی ہے کہ عرب اتحادیوں کا سیاسی ومعاشرتی استحکام مقصودہے،اس لیے واشنگٹن نے مصرپرتوجہ دینابہت حدتک ترک کردیاہے۔ امریکہ کے دیرینہ حلیف اورعرب دنیا میں آبادی کے لحاظ سے سب سے بڑے ملک میں کچھ ایساہورہا ہے جوحسنی مبارک کے دورمیں بھی نہیں ہوا۔ عبدالفتاح السیسی ملک کومطلق العنان طرزِحکومت کی طرف اِس طور دھکیل رہے ہیں جس کی نظیرنہیں ملتی۔اس عمل میں جنرل السیسی خطے کوایک بارپھرعدم استحکام کی طرف دھکیل رہے ہیں۔2013ء میں منتخب صدرمحمد مرسی اوران کی حکومت کاتختہ الٹ کرصدربننے کے بعدالسیسی نے ایک ایساآئین نافذکیاجس میں بنیادی حقوق کی بہت حد تک ضمانت فراہم کی گئی تھی اور ساتھ ہی ساتھ صدر کے اختیارات پرتھوڑی سی قدغن لگانے کی کوشش بھی کی گئی تھی۔عبدالفتاح السیسی اوران کے ساتھیوں نے دعویٰ کیا کہ آئین میں ترامیم کے ذریعے اورحکومتی اقدامات کے توسط سے جمہوریت کومکمل بحال کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔حقیقت یہ ہے کہ چندبرسوں کے دوران السیسی نے آئین پرعمل سے گریزکیاہے ، زیادہ سے زیادہ طاقت اپنی ذات میں مرتکزکرنے کی کوشش کی ہے۔ اخوان کے خلاف شدید کریک ڈاون جاری رہاہے اور حکومت کے کسی بھی اقدام کے خلاف آوازبلند کرنے والوں کو خاموش کرنے میں کوئی قباحت محسوس نہیں کی گئی۔   

امریکی استثنیٰ بیکار

امریکی استثنیٰ بیکار

26 days ago.

ایران کومزیدبیلسٹک میزائل تجربات سے روکنے کیلئے امریکی طیارہ برداربحری بیڑے جان سی سٹینس کی خلیج آمدسے امکان ہے کہ چاہ بہاربندرگاہ کو امریکی پابندیوں سے استثنیٰ دلانے کی بھارتی امیدیں دم توڑجائیں گی۔اس بندرگاہ نے وسط ایشیائی ریاستوں اوربھارت کے مربوط معاشی روابط میں معاون کا کرداراداکرناتھا۔ یہ بحری  بیڑہ ایسے وقت خلیج پہنچا جب ٹرمپ انتظامیہ 2015کی نیوکلیئرمعاہدہ سے علیحدگی کے بعد ایران پرسخت معاشی پابندیاں عائدکرنے کے بعد ایرانی قومی فوج کودہشتگرد قراردے چکی ہے،جس سے ممکنہ فوجی محاذآرائی کا خطرہ بہت بڑھ چکا ہے۔ بیڑے کی دوماہ کیلئے آمد کے ساتھ ہی چاہ بہارمیں پاسداران انقلاب کے ہیڈ کوارٹرپرخودکش حملہ ہوا جس میں 2   افرادہلاک 40زخمی ہوئے۔سعودی اور ایرانی ذرائع ابلاغ کے مطابق ایرانی سنی جہادی گروپ انصارالفرقان نے حملے کی ذمہ داری قبول کی،ایران دعوی کرتاہے کہ اس گروپ کوسعودی عرب کے علاوہ امریکااوراسرائیل کی حمایت حاصل ہے۔

 ایمان کاتقاضہ اوراسرائیل

ایمان کاتقاضہ اوراسرائیل

29 days ago.

یہ شیطان ہے جواپنے دوستوں سے ڈراتاہے،تم ان سے نہ ڈرواگرتم ایمان رکھتے ہوتوصرف مجھ سے ڈرو (آل عمران175:)۔اس دل میں صرف ایک خوف سماسکتاہے،اللہ کا خوف یاپھردنیاکاخوف، اورجواللہ سے ڈرتاہے ،ساری دنیااس سے ڈرتی ہے لیکن جودنیاسے ڈرتاہے تووہ ساری عمربزدلی ،تذلیل اوررسوائی کاسامناکرناپڑتا ہے ۔حالیہ پاک بھارت جھڑپ میں اسرائیل کے اشتراک کے بعداب ہمارے ہاں لبرل حواس باختہ ہوکریہ راگ الاپ رہے ہیں کہ اسرائیل سے تعلقات استوارکرنے میں کیاحرج ہے‘ کم ازکم ایک دشمن توکم ہوجائے گا۔اسرائیل ،امریکاسے دوستی کاپل بن جائے گا،ہن برسے گا،بھلے ایمان کوگھن لگ جائے اس کی پرواہ ہی کب ہے۔ان کے پاس ایمان کی رمق بچی ہی کہاں ہے ورنہ جن یہودیوں پراللہ نے ذلت اورمسکنت کی چادرڈال کر دنیائے عالم میں ذلیل وخوارکیا،ان سے ہاتھ ملانے کی بات کرنااللہ کے عذاب میں شراکت کے سوااورکچھ نہیں جوقیامت تک یہودیوں پر نازل ہوتارہے گااوراب تو فائنل راؤنڈ ہے۔ جنرل محمدضیاء الحق نے 1981ء میں خوب کہاتھاکہ اگراسرائیل سے یہودیت کونکال لیا جائے تووہ ملک ختم ہوجائے گااوراسی طرح پاکستان سے اسلام نکال دیاجائے تو پاکستان ختم ہوجائے گا۔

کشمیر کی ڈیمو گرافی تبدیل کرنے کی بھارتی سازش

کشمیر کی ڈیمو گرافی تبدیل کرنے کی بھارتی سازش

a month ago.

 مودی ایک جلسے میں  برملااعتراف کرچکاہے کہ پاکستان اس کے دماغ پر بری طرح سوارہے جس نے اس کی رات کی نیندوں کوبھی حرام کردیاہے ۔ جب سے بھارتی متعصب ہندوبنئے حکمران جماعت نے ہوس اقتدارسے مجبور ہو کر نہتے کشمیریوں کے خون سے ہولی کھیلنے اورپاکستان کونشانہ بناکرانتخابی مہم آگے بڑھانے کی حکمت عملی اپنائی ہے ،مودی اوراس کے حواریوں کی وجہ سے پورے بھارت کوہزیمت کا سامنا کرنا پڑ رہاہے۔نہتے کشمیریوں پرتاریخ کے بدترین مظالم اور پاکستان کے خلاف نت نئی عیارانہ چالوں کانتیجہ اس کے سواکچھ نہیں نکل رہاکہ ہرقدم پربھارت کیلئے ہزیمت،رسوائی اوربدنامی کاخاصا سامان ان کے گلے میںپڑچکاہے جبکہ خودمودی جس نے اپنی مکارانہ سوچ کوبروئے کارلاتے ہوئے پاکستان کیلئے وقتاًفوقتاگڑھے کھودے تھے،اب وہ خودانہی گڑھوں میں اس بری طرح گررہاہے کہ آنے والے بھارتی نیتاؤں کیلئے بھی ایک سبق کادرجہ اختیارکرگیاہے کہ پاکستان کے خلاف چلی جانے والی چالیں الٹی بھی پڑسکتی ہیں۔ مودی کی حالیہ دنوں سے بھارت کے اندرہی نہیں عالمی سطح پربھی جوجگ ہنسائی ہورہی ہے اوربھارت کا جو دہشت گردانہ اورجھوٹاچہرہ سامنے آیاہے اس کاتاثربدلنے کیلئے  بھارت کوطویل عرصہ لگ سکتا ہے۔   

افغان عبوری حکومت کاقیام؟

افغان عبوری حکومت کاقیام؟

a month ago.

اسرائیل اورامر یکہ کی شہ پرحالیہ بھارتی جارحیت کے جواب میں خوفناک سازش کے بے نقاب ہوجانے پرننگرہارکے امریکی فوجی اڈے پرطالبان کے خوفناک حملے میں امریکہ اوراسرائیل کاجوناقابل تلافی نقصان ہواہے، عالمی میڈیاکے مطابق پچھلے سات سال میں اس قدرہزیمت نہیں اٹھانی پڑی اوراب امریکی انخلاء کیلئے انتہائی عجلت میں ہیں۔ امریکہ اس حملے میں ہونے والے بھاری نقصان کاغصہ افغان حکومت پرنکال رہاہے جس کیلئے امریکہ نے اشرف غنی حکومت کے سلامتی کے مشیرکوفوری ہٹانے کی ہدائت کردی ہے۔ دوسری جانب افغانستان میں امریکی سفیرنے پہلی باراعتراف کیاہے کہ وہ افغانستان کے اندرونی معاملات کے حوالے سے افغان طالبان کے ساتھ بات چیت نہیں کررہے ہیں بلکہ افغان طالبان ایک عبوری حکومت کیلئے مہم چلارہے ہیں جس کی طالبان نے سختی سے تردید کی ہے جبکہ سابق افغان حکومت کے سابق صدر حامدکرزئی نے عمران خان کوافغانستان میں مداخلت سے بازرہنے کاانتباہ کیاہے۔  

خودمختارکشمیرکی سازش

خودمختارکشمیرکی سازش

a month ago.

27فروری کومودی نے امریکہ واسرائیل کی بھرپورمددسے جس جارحیت کاآغازکیا،اس سے اگلے ہی دن ان تمام پاکستان دشمن قوتوں کوپاکستانی کی دفاعی اورجوابی حملے  نے سب کو نہ صرف ششدر کردیا بلکہ سب کوپتہ چل گیاکہ پاکستان بھارت سے کہیں زیادہ مضبوط ہے اوراس واقعے کے بعد بھارت کو عالمی جگ ہنسائی کااوررسوائی کاسامناالگ کرناپڑا مگرسوال یہ ہے کہ بھارت نے یہ جنگ کیوں چھیڑی۔کیامودی کے موذی پن نے اپنے انتخابات جیتنے کیلئے اس خطے کی تباہی کیلئے یہ خطرناک قدم اٹھایایااورکچھ بھی اس کے ساتھ بین الاقوامی بساط پرہے۔کسی بھی کھیل یاکاروائی کے پیچھے یہ دیکھا جاتاہے کہ اس کاکس کوکیافائدہ ہوا؟پاک بھارت جھڑپوں کے فائدے کی بات کریں توبات یہ بنتی ہے کہ نقصان فریقین کاہوااورفائدہـ امریکہ کاہوا۔ جنگ کے دعوؤںکی اوٹ میں قصر سفید کے فرعون ٹرمپ کابیان آیاکہ جلدہی پاکستان وبھارت سے اچھی خبرکی امید ہے اوراس طرح یہ اچھی خبردنیاکو موصول ہوئی کہ پاکستان نے الدعوہ فلاح انسانیت جیسی رفاعی تنظیم کے فنڈز منجمدکرکے ان پرپابندی کانوٹیفکیشن جاری کردیا۔ کالعدم تنظیموں کوایک مرتبہ پھرکالعدم قراردیکرانہی دشمنوں کوخوش کرنے کاپیغام دے دیاگیاہے۔